اترکنڑا ضلع میں سماج کی ابتر حالت پیش کرتے عصمت دری کےمعاملات : رشتہ داروں سےہی معصوم ، نابالغ لڑکیوں کی ناموس خطرےمیں

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 23rd March 2021, 9:27 PM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے | ریاستی خبریں | اسپیشل رپورٹس |

کاروار:23؍مارچ  (ایس اؤ نیوز)اترکنڑاضلع میں سال 2020میں 40اور رواں سال شروع کے تین مہینوں میں 11عصمت دری سمیت پوکسو کے معاملات درج ہوئےہیں۔ یہاں  قابل ِ تشویش بات یہ ہے کہ ان میں کئی معاملات خاندان کے اندر کے ہیں اور زیادہ تر نابالغ لڑکیوں کے قریبی رشتہ داروں کے ذریعے ہی  عصمت دری کے واقعات  پیش آئےہیں۔

ناسمجھ، نابالغ ، معصوم کم عمر لڑکیوں کے ساتھ جسمانی تعلقات پیدا کرتے ہوئے انہیں حاملہ کرنے والوں میں  چیچیرا بھائی، بھابھی کا بھائی ، ماموں زاد بھائی، چاچا  اور ماما کے رشتہ دار،  بھائی یا قریبی  رشتہ داروں  کا دوست، بوائی فرینڈ  وغیرہ  جیسے افراد   ہی عصمت دری میں ملوث پائے گئے ہیں ،  جو سماج و معاشرے کی ابتر حالات کو پیش کر رہے ہیں۔  ایک دومعاملات میں خود باپ  پر بھی عصمت دری کئے جانے کا الزام  لگایا گیا ہے۔اس طرح کے تشویشناک معاملات کو دیکھتے ہوئے  لوگ سوال کررہے ہیں کہ  کیا ایسے معاشرے کو بدنام کرنے والے معاملات ختم ہونگے ؟، اس سوال کا حل تلا ش کرنے کے لئے معاشرہ ، سرکار، والدین، سرپرست، اسکول  اور رضاکار تنظیموں کو متحدہ طورپر کوشش کرنا ضروری ہوگیا ہے۔

اگر ایک معصوم ، نابالغ لڑکی خود اپنے خاندان کے اندر، رشتہ داروں کے درمیان ہی محفوظ نہیں ہے  اور  گھر کے اندر ہی ایسے ابتر حالات ہیں تو  یہ کسی  بہتر سماج کے لئے اچھی علامت  نہیں ہے ۔ اس معاملےمیں ذمہ داران  کو سنجیدگی سے غور کرنا ہوگا اور نتیجہ خیزسماجی تبدیلی کے لئے کام کرنا لازمی ہے۔ اس سلسلےمیں سماجی سطح پر بیداری پیدا کرنا بھی  اشد ضروری ہے۔

دیری سے پتہ چلنا :زیادہ تر نابالغ لڑکیاں اپنے قریبی رشتہ داروں ، بوائی فرینڈ سے عصمت دری کا شکار ہوتےہیں  مگر اس میں زیادہ تر  معاملات کا پتہ  حاملہ ہونےکے بعد چلتاہے کہ  کس سے ناجائز تعلقات کی بناپر یہ سب ہواہے، ایسے میں  پاس پڑوس کے لوگوں کی طرف سے   یا پھر   جب  متاثرہ لڑکی کے والدین شکایت درج کرتےہیں تو ہی  ایسے گندے کرتوتوں  کا پتہ چلتاہے۔

عصمت دری کی وجہ سے حاملہ ہونے کا تین مہینےمیں پتہ چلتاہے تو ڈاکٹرس متعلقہ کمیٹی کی منظوری سے اسقاط حمل کراتےہیں۔ لیکن بعض معاملات میں 8مہینےکے بعد حاملہ ہونے کاپتہ چلتاہے تو ڈاکٹروں کے لئے بھی مسئلہ بن جاتاہے۔ چھوٹی عمر میں ابارشن کرنا ان کی جسمانی بڑھوتری پر سنگین اثرات مرتب ہونےکا خطرہ بھی ہوتاہے۔ اصل مسئلہ اس وقت ہوتا ہے جب قریبی رشتہ داروں سے عصمت دری ہونے والے معاملات میں عزت  اور بدنامی کے خوف سے شکایت درج نہیں ہوتے یا کچھ لوگ تاخیر سے درج کراتے ہیں۔

موبائیل سے آفت:موجودہ دور میں موبائیل کاحدسے زیادہ استعمال کیا جارہاہے۔ سوشیل میڈیا کے ذریعے ایک دوسرے  سے رابطہ کرنا آسان ہوگیاہے۔ کم قیمت پرملنے والے ڈیٹا، انٹرنٹ کنکشن سے فحش ویب سائٹوں کا  جال پھیلا ہوا ہے جس سے نابالغ لڑکے لڑکیاں جسمانی تعلقات کی طرف چلے جاتےہیں۔ دوسری طرف ناخواندگی کا ماحول بھی اس کے لئے ایک وجہ ہونے کی بات کہی جارہی ہے۔

ایسے معاملات میں کریمس کی پوکسو معاملات کی ماہر ڈاکٹر مہا لکشمی کرلواڑ کا کہنا ہے کہ  دن بدن پوکسو معاملات میں اضافہ ہونا خطرے کی گھنٹی ہے۔ جون 2020کے بعد کریمس میں 19معاملات درج ہوئے ہیں۔ اطمینان کی بات یہ ہے کہ ایسے معاملات دب نہیں جاتےہیں بلکہ ظاہر ہوتے ہیں ۔ ان کا کہنا ہےکہ ایسے معاملات کے انسداد کے لئے لڑکیوں کو سیکس کی تعلیم دینا ضروری ہے۔ والدین کو چاہئے کہ وہ روزانہ اپنے بچوں سے اس معاملے میں بات کریں۔ رابطہ میں رہیں۔ بچوں کو نظر انداز نہ کریں۔ 

110معاملات درج :ضلع اترکنڑا میں سال 2019میں 36عصمت دری کے معاملات سمیت پوکسو کے تحت کیس درج ہوئے ہیں۔ 41ملزموں کی گرفتاری ہوئی ہے تو دیگر 13پوکسو معاملات میں بھی 13ملزموں کی گرفتاری ہوئی ہے۔ سال 2020میں 40عصمت دری معاملات کے ساتھ پوکسو کے کیس بھی درج ہوئے ہیں۔ 41ملزموں کی گرفتاری ہوئی ہے دیگر میں پوکسو کے تحت 6ملزمان کو گرفتارکیاگیا ہے۔ سال 2021کے 19مارچ تک 11عصمت دری معاملات کےعلاوہ پوکسو کے کیس درج ہوئےہیں جس میں 13ملزموں کو گرفتارکرلیاگیا ہے تو 4پوکسو معاملات میں 4افراد کو گرفتار کیاگیاہے۔

 

ایک نظر اس پر بھی

اُڈپی: کورونا کو لے کر بسوں پر سماجی فاصلہ برقرار نہ رکھنے پر ڈپٹی کمشنر نے بسوں پر سے طلبہ کو اُتارا، عوام کی طرف سے زبردست تنقید

کوویڈ کے رہنما اُصولوں پر عمل نہ کرنے کے خلاف مہم چلاتے ہوئے اُڈپی ڈپٹی کمشنر نے آج منگل کو جب  مسافروں سےبھری ایک بس کو روک کر مسافروں کو نیچے اُتارا تو کئی طلبہ و طالبات بھی اس کی زد میں آگئے، جنہوں نے  ڈی سی کے اس اقدام کی جم کر مخالفت کی ، اس تعلق سے ایک  وڈیو بھی سوشل میڈیا ...

گوکرن کے مہابلیشور مندر کے متعلق سپریم کورٹ کا اہم فیصلہ : مندرکی نگرانی کے لئے کمیٹی تشکیل دینے کا حکم

ترکنڑاضلع کے ہندؤوں کے مشہورو تاریخی مذہبی مقام گوکرن کی مہابلیشور مندر کے تعلق سے سپریم کورٹ نے حکم دیا ہے کہ  ریاستی حکومت  مندر کے انتظامی امور کو رام چندر پور مٹھ سے واپس لے۔ یاد رہے کہ  پچھلی بی جے پی کی حکومت نے گوکرن کے مہابلیشور مندر کی انتظامیہ اور نگرانی رام چندر ...

اُڈپی ضلع کے کوڈؤر کی جامعہ مسجد کی زمین پر غیرقانونی سرگرمیوں کا الزام: اے پی سی آر کی جانب سے انسانی حقوق کمیشن میں شکایت درج

کوڈؤور کلمات مسجد کی رجسٹرڈ زمین پر زور زبردستی داخل ہوکر غیر قانونی سرگرمیوں کو انجام دیا گیا ہے اور مسجد آنے والوں کو رکاوٹ پیدا کرنے کے متعلق اے پی سی آر اُڈپی نے 15اپریل کو کرناٹکا حقوق انسانی کمیشن میں شکایت درج کی ہے۔

بھٹکل تنظیم اور بھٹکل میونسپل صدر نے لیا کووِڈ ٹیکہ؛ بھٹکل میں کورونا ٹیکہ لگانے کے معاملے میں مسلمان پیچھے، آگے بڑھ کر ٹیکہ لینے کی ضرورت

آج منگل کو  بھٹکل کے قومی سماجی ادارہ مجلس اصلاح وتنظیم کےصدر جناب ایس ایم پرویز اور بھٹکل میونسپالٹی کے صدر جناب قاسمجی پرویز نے  سرکاری اسپتال پہنچ کر کووڈ ٹیکہ لگوایا  اور مسلمانوں پر زور دیا کہ کوویڈ سےمحفوظ رہنے کے لئے  تمام لوگوں کو کووڈ ٹیکہ لگوانا ضروری ہے۔ انہوں نے ...

بھٹکل ناگ بن کمپاونڈ معاملہ میں نیا موڑ ؛  نامعلوم افراد کے خلاف تحصیلدار نے درج کروائی شکایت۔ آخر یہ کیا کھیل کھیلا جا رہا ہے؟ (اسپیشل رپورٹ : ڈاکٹر محمد حنیف شباب)

پچھلے چند دنوں سے بھٹکل کے مین روڈ پر واقع 'ناگ بَن' یا 'ناگر کٹّے' کا معاملہ شہر میں بحث کا موضوع بنا ہے اور خاص کر کنڑا اخبارات کی سرخیوں میں نمایاں رہا ہے۔ جبکہ کنڑا سوشیل میڈیا میں  مسلم فرقہ اور ان کے مرکزی ادارہ تنظیم کو نشانہ بنانے کا سلسلہ بھی جاری ہے۔

مینگلور کے قریب کڈبا میں دو نوجوان ندی میں ڈوب کر جاں بحق

مینگلور سے قریب  85 کلو میٹر دور کڈبا تعلقہ کے اِچیلم پانڈے کی ایک ندی میں غرق ہوکر دو نوجوان جاں بحق ہوگئے جن کی نعشیں ندی سے برآمد کرلی گئی ہیں۔ حادثہ پیر کی شام کو پیش آیا جب یہ دونوں ندی میں نہانے کےلئے اُترے تھے۔

اُڈپی ضلع کے کوڈؤر کی جامعہ مسجد کی زمین پر غیرقانونی سرگرمیوں کا الزام: اے پی سی آر کی جانب سے انسانی حقوق کمیشن میں شکایت درج

کوڈؤور کلمات مسجد کی رجسٹرڈ زمین پر زور زبردستی داخل ہوکر غیر قانونی سرگرمیوں کو انجام دیا گیا ہے اور مسجد آنے والوں کو رکاوٹ پیدا کرنے کے متعلق اے پی سی آر اُڈپی نے 15اپریل کو کرناٹکا حقوق انسانی کمیشن میں شکایت درج کی ہے۔

بھٹکل تنظیم اور بھٹکل میونسپل صدر نے لیا کووِڈ ٹیکہ؛ بھٹکل میں کورونا ٹیکہ لگانے کے معاملے میں مسلمان پیچھے، آگے بڑھ کر ٹیکہ لینے کی ضرورت

آج منگل کو  بھٹکل کے قومی سماجی ادارہ مجلس اصلاح وتنظیم کےصدر جناب ایس ایم پرویز اور بھٹکل میونسپالٹی کے صدر جناب قاسمجی پرویز نے  سرکاری اسپتال پہنچ کر کووڈ ٹیکہ لگوایا  اور مسلمانوں پر زور دیا کہ کوویڈ سےمحفوظ رہنے کے لئے  تمام لوگوں کو کووڈ ٹیکہ لگوانا ضروری ہے۔ انہوں نے ...

مینگلور کے قریب کڈبا میں دو نوجوان ندی میں ڈوب کر جاں بحق

مینگلور سے قریب  85 کلو میٹر دور کڈبا تعلقہ کے اِچیلم پانڈے کی ایک ندی میں غرق ہوکر دو نوجوان جاں بحق ہوگئے جن کی نعشیں ندی سے برآمد کرلی گئی ہیں۔ حادثہ پیر کی شام کو پیش آیا جب یہ دونوں ندی میں نہانے کےلئے اُترے تھے۔

مدھیہ پردیش میں کووڈ کا قہر، 30 اپریل تک کورونا کرفیو کا نفاذ

مدھیہ پردیش میں حکومت کی تمام کوششوں کے باوجود کورونا کا قہرجاری ہے۔ ریاست میں کورونا کے ایکٹو مریضوں کی تعداد جہاں اڑسٹھ ہزار کو تجاوز کر گئی ہیں وہیں پچھلے چوبیس گھنٹےمیں ریاست میں کورونا کے بارہ ہزار دو سو اڑتالیس نئے معاملے درج کئے گئے ہیں ۔

گوکرن کے مہابلیشور مندر کے متعلق سپریم کورٹ کا اہم فیصلہ : مندرکی نگرانی کے لئے کمیٹی تشکیل دینے کا حکم

ترکنڑاضلع کے ہندؤوں کے مشہورو تاریخی مذہبی مقام گوکرن کی مہابلیشور مندر کے تعلق سے سپریم کورٹ نے حکم دیا ہے کہ  ریاستی حکومت  مندر کے انتظامی امور کو رام چندر پور مٹھ سے واپس لے۔ یاد رہے کہ  پچھلی بی جے پی کی حکومت نے گوکرن کے مہابلیشور مندر کی انتظامیہ اور نگرانی رام چندر ...

لاک ڈاؤن کی بجائے دفعہ 144 نافذ کی جائے : سی ایم ابراہیم| کورونا سے شہید ہونے والے مسلمانوں کی تدفین کیلئے علاحدہ جگہ دی جائے : ضمیر احمد خان 

کورونا سے شہید ہونے والے مسلم طبقے کے افراد کی تدفینکے لئے علاحدہ جگہ دی جائے ۔رکن اسمبلی ضمیر احمد خان نے  ودھان سودھا میں ہوئی بنگلورو کے اراکین اسمبلی،اراکین پارلیمان کی میٹنگ میں یہ مطالبہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ ہر ایک رکن اسمبلی کے لئے 25 کووڈ بیڈ اسپتالوں میں ریزرو کئے ...

کرناٹک میں لاک ڈاؤن ضروری نہیں، نائٹ کرفیو کے اوقات میں تبدیلی نہیں، دفعہ 144 نافذ کریں؛ ریاستی حکومت کو اپوزیشن کے مشورے 

بنگلورو میں کووڈ۔ 19 معاملات تیزی سے بڑنے کے سبب  وزیر اعلیٰ  یڈیورپا، بنگلورو کے وزراء، اراکین پارلیمان اور اراکین اسمبلی کے ساتھ ویڈیو کانفرنس منعقد کی گئی۔  جس میں حکومت کو مشورہ دیا گیا کہ لاک ڈاؤن نافذ نہ  کر یں ،اسپتالوں میں کووڈ بستروں کی قلت دور  کریں۔مہلوکین کی آخری ...

کرناٹک میں کورونا کی دہشت کا ایک اور ریکارڈ ، تقریباً 20 ؍ ہزار متاثر ، بنگلورو میں لاک ڈاؤن یا سخت امتناعی احکامات ؟

اتوارکے روز کرناٹک میں کورونا نے اپنا خوفناک ترین رخ پیش کیا اور اب تک متاثرین کی تعداد کا ایک نیا ریکارڈ سامنے آیا ریاست بھر میں 7 6 0 9 1 تازه معاملات سامنے آئے ۔ 81 لوگوں کی موت واقع ہوئی ہے۔

بھٹکل: ریاست میں کورونا کے بڑھتے معاملات سےپریشان طلبہ نے پیر سے شروع ہونے والے امتحانات منسوخ کرنے ٹوئیٹر پر چلائی مہم

کورونا کی دوسری لہر میں  بڑھتے کیسس کے دوران ایک طرف  میٹرک اور سکینڈ پی یوسی کے امتحانات ملتوی اور منسوخ کئے جارہےہیں تو وہیں دوسری طرف ویشویشوریا ٹیکنالوجیکل یونیورسٹی (وی ٹی یو) کے تحت آنے والی کالجس میں کل  پیر سے فرسٹ سیمسٹر کے امتحانات شروع ہورہےہیں۔

بھٹکل ناگ بن کمپاونڈ معاملہ میں نیا موڑ ؛  نامعلوم افراد کے خلاف تحصیلدار نے درج کروائی شکایت۔ آخر یہ کیا کھیل کھیلا جا رہا ہے؟ (اسپیشل رپورٹ : ڈاکٹر محمد حنیف شباب)

پچھلے چند دنوں سے بھٹکل کے مین روڈ پر واقع 'ناگ بَن' یا 'ناگر کٹّے' کا معاملہ شہر میں بحث کا موضوع بنا ہے اور خاص کر کنڑا اخبارات کی سرخیوں میں نمایاں رہا ہے۔ جبکہ کنڑا سوشیل میڈیا میں  مسلم فرقہ اور ان کے مرکزی ادارہ تنظیم کو نشانہ بنانے کا سلسلہ بھی جاری ہے۔

 کیا شمالی کینرا میں کانگریس پارٹی کی اندرونی گروہ بندی ختم ہوگئی ؟

ضلع شمالی کینرا کو ایک زمانہ میں پورری ریاست کے اندر کانگریس کا سب سے بڑا گڑھ مانا جاتا تھا، لیکن آج ضلع میں کانگریس پارٹی کا وجود ہی ختم ہوتا نظر آرہا ہے، کیونکہ ضلع کی چھ اسمبلی سیٹوں میں سے صرف ہلیال ڈانڈیلی حلقہ چھوڑیں تو بقیہ پانچوں سیٹوں کے علاوہ پارلیمان کی ایک سیٹ پر بی ...

منگلورو: قانونی پابندی کے باوجود دستیاب ہیں ویڈیو گیمس. نئی نسل ہو رہی ہے برباد۔ ماہرین کا خیال

ویڈیو گیم میں ہار جیت کے مسئلہ پر منگلورو میں ایک نوعمر لڑکے کے ہاتھوں دوسرے کم عمر لڑکے عاکف کے قتل کے بعد ویڈیو گیمس اور خاص کر پبجی کا موضوع پھر سے گرما گیا ہے اور کئی ماہرین نے ان ویڈیو گیمس کو نئی نسل کے لئے تباہ کن قرار دیا ہے۔

انکولہ : کون کھیل رہا ہے 'چور پولیس' کا کھیل؟ ایڈیشنل ایس پی پر جان لیوا حملہ ۔ غنڈوں پر درج نہیں ہوا اقدامِ قتل کا کیس!

دو دن پہلے انکولہ تعلقہ کے ہٹّی کیری ٹول گیٹ پر ہنگامہ آرائی کرنے اور ایک پولیس آفیسر پر حملہ کی کوشش کیے جانے کی رپورٹ میڈیا میں آئی تھی۔ اور یہ بھی بتایا گیا تھا کہ پولیس نے  ہنگامہ کرنے والوں کی خوب دھلائی کی ہے اور ان پر پولیس آفیسر کو اپنے فرائض انجام دینے سے روکنے کا کیس ...