بھٹکل سنڈے مارکیٹ: بیوپاریوں کا سڑک پر قبضہ - ٹریفک کے لئے بڑا مسئلہ 

Source: S.O. News Service | Published on 2nd April 2024, 11:14 PM | ساحلی خبریں | اسپیشل رپورٹس |

بھٹکل ،2/ اپریل (ایس او نیوز) شہر بڑا ہو یا چھوٹا قصبہ ہفتہ واری مارکیٹ عوام کی ایک اہم ضرورت ہوتی ہے، جہاں آس پاس کے گاوں، قریوں سے آنے والے کسانوں کو مناسب داموں پر روزمرہ ضرورت کی چیزیں اور خاص کرکے ترکاری ، پھل فروٹ جیسی زرعی پیدوار فروخت کرنے اور عوام کو سستے داموں پر اسے خریدنے کا ایک اچھا موقع ملتا ہے اور یہ سلسلہ پرانے زمانے سے چلا آ رہا ہے ۔
    
بھٹکل میں یہ ہفتہ واری، سنڈے یا سنتے مارکیٹ  پہلے قدیم بس اسٹینڈ کے پاس مچھلی مارکیٹ سے متصل  اُس جگہ پر لگتی تھی جہاں اِس وقت مرغی اور ترکاری کی باضابطہ دکانیں موجود ہیں ۔ پھر شہر جیسے جیسے پھیلتا گیا اور آبادی بڑھتی گئی یہ مارکیٹ بہت چھوٹی پڑ گئی تو سرکاری ہاسپٹل کے قریب میدان میں سنڈے مارکیٹ کو منتقل کیا گیا ۔ وہاں پر کسانوں اور کاروباریوں کو پختہ شیڈس بنا کر دئے گئے تا کہ وہ اطمینان سے اپنا بیوپار کر سکیں اور عوام بھی یکسوئی سے خریداری کر سکیں ۔ 
    
لیکن اب بھٹکل کی یہ سنڈے مارکیٹ قریبی دیہاتوں اور قصبوں سے آنے والے کسانوں کے بجائے بڑے بیوپاریوں کا اڈہ بن کر رہ گئی ہے جو سنیچر کی شام سے ہی مارکیٹ کے شیڈس اور کھلے احاطے پر اپنا قبضہ جما لیتے ہیں اور اس کا نتیجہ یہ ہوتا ہے کہ صبح سویرے قریبی دیہاتوں سے آنے والے کسان اپنا مال فروخت کرنے کے لئے مارکیٹ سے باہر سڑک کو اپنا ٹھکانہ بنانے پر مجبور ہو جاتے ہیں ۔ اس کے علاوہ گاوں گاوں پھرنے والے جو بیوپاری ہوتے ہیں ان کی موٹر گاڑیاں بھی سڑک پر لگی رہتی ہیں اور کچھ بیوپاری تو موٹر گاڑیوں کو دکانوں کے طور پر استعمال کرتے ہوئے سڑک پر اپنا کاروبار چلاتے ہیں۔


    
ایسی حالت میں ایک طرف عوام کو خریداری کے لئے مارکیٹ تک جانے آنے میں تکلیف ہوتی ہے تو دوسری طرف اسی سڑک پر موجود سرکاری اسپتال تک جانے کا راستہ بھی بند ہو جاتا ہے ۔ دو پہیہ گاڑیوں تک کی آمد و رفت میں دشواری ہوتی ہے ۔ اسپتال جانے والوں کو شمس الدین سرکل سے ساگر روڈ کا راستہ اپنانا پڑتا ہے ۔ جبکہ اندرونی سڑک پر مرغیوں کی گاڑیاں، سوکھی مچھلی اور دوسرے چھوٹے موٹے بیوپاریوں کی دکانوں کا سلسلہ اتنا لمبا ہوتا ہے وہ انجمن کالج کراس سے آگے نکلتا ہوا نیشنل ہائی وے کے کنارے تک پہنچ جاتا ہے ۔ اس وجہ سے نیشنل ہائی وے کی ٹریفک بھی بری طرح متاثر ہوتی ہے ۔ 
    
سنڈے مارکیٹ کی موجودہ حالت کو دیکھتے ہوئے عوام مطالبہ کر رہے ہیں کہ پولیس اور دیگر بلدیہ کے افسران کو اس مسئلہ پر فوری توجہ دینی چاہیے اور سنڈے مارکیٹ کے بیوپاریوں اور کسانوں کو مارکیٹ کمپاونڈ کے اندر ہی محدود رکھنے کا انتظام کرنا چاہیے ۔ یا پھر اس مارکیٹ کو یہاں سے ہٹا کر کسی دوسرے وسیع میدان میں منتقل کرنا چاہیے جہاں بڑے پیمانے پر کسانوں اور بیوپاریوں کے لئے کاروبار کرنے کا موقع رہے اور وہاں ضروری بنیادی سہولتیں بھی فراہم ہوں ۔ 

ایک نظر اس پر بھی

ماہی گیر تنظیموں کا متفقہ فیصلہ - کاسرکوڈ میں تجارتی بندرگاہ کے خلاف ہوگی قانونی جد و جہد

) شہر کے سینٹ جوزیف ہال میں ماہی گیر تنظیموں کی جوائنٹ ایکشن کمیٹی اور کراولی ماہی گیر مزدوروں کی تنظیم کا مشترکہ اجلاس منعقد ہوا جس میں کاسرکوڈ میں مجوزہ نجی تجارتی بندرگاہ کی تعمیر کے خلاف تنظیمی اور قانونی طریقے سے جد وجہد کرنے کا فیصلہ کیا گیا ۔

بھٹکل میں ووٹر بیداری مہم؛ سرکاری افسران نے طلبہ کے ساتھ نکالی ریلی؛ سو فیصد ووٹنگ کویقینی بنانے کی کوششیں

بھٹکل میں  صد فیصد ووٹنگ کا ٹارگٹ لے کر   اُترکنڑاضلعی انتظامیہ،  ضلع پنچایت، بھٹکل تعلقہ انتظامیہ اور تعلقہ پنچایت کے زیراہتمام  بھٹکل کے سرکاری آفسران  نے کالج طلبہ کو ساتھ لے کر  ووٹنگ بیداری مہم  کے تحت شاندار ریلی نکالی اور عوام پر زور دیا کہ وہ  کسی بھی صورت میں اپنی ...

بھٹکل میں مسلم رپورٹروں کی طرف سے غیر مسلم رپورٹروں کوپیش کی گئی عید الفطر کی مٹھائیاں

ورکنگ جرنلسٹ اسوسی ایشن   بھٹکل  کے مسلم رپورٹروں کی طرف سے بھٹکل کے غیر مسلم رپورٹروں کو عید الفطر کی مناسبت سے مٹھائیاں تقسیم کی گئیں اور اُنہیں عید کے تعلق سے  معلومات فراہم کی گئیں۔

نئی زندگی چاہتا ہے بھٹکل کا صدیوں پرانا 'جمبور مٹھ تالاب'

بھٹکل کے اسار کیری، سونارکیری، بندر روڈ، ڈارنٹا سمیت کئی دیگر علاقوں کے لئے قدیم زمانے سے پینے اور استعمال کے صاف ستھرے پانی کا ایک اہم ذریعہ رہنے والے 'جمبور مٹھ تالاب' میں کچرے اور مٹی کے ڈھیر کی وجہ سے پانی کی مقدار بالکل کم ہوتی جا رہی ہے اور افسران کی بے توجہی کی وجہ سے پانی ...

بڑھتی نفرت کم ہوتی جمہوریت  ........ ڈاکٹر مظفر حسین غزالی

ملک میں عام انتخابات کی تاریخوں کا اعلان ہونے والا ہے ۔ انتخابی کمیشن الیکشن کی تاریخوں کے اعلان سے قبل تیاریوں میں مصروف ہے ۔ ملک میں کتنے ووٹرز ہیں، پچھلی بار سے اس بار کتنے نئے ووٹرز شامل ہوئے، نوجوان ووٹرز کی تعداد کتنی ہے، ایسے تمام اعداد و شمار آرہے ہیں ۔ سیاسی جماعتیں ...

مالی فراڈ کا نیا گھوٹالہ : "پِگ بُوچرنگ" - گزشتہ ایک سال میں 66 فیصد ہندوستانی ہوئے فریب کاری کا شکار۔۔۔۔۔۔۔(ایک تحقیقاتی رپورٹ)

ایکسپوژر مینجمنٹ کمپنی 'ٹینیبل' نے ایک نئی رپورٹ جاری کی ہے جس میں یہ انکشاف کیا گیا ہے کہ پچھلے سال تقریباً دو تہائی (66 فیصد) ہندوستانی افراد آن لائن ڈیٹنگ یا رومانس اسکینڈل کا شکار ہوئے ہیں، جن میں سے 81 فیصد کو مالی نقصان کا سامنا کرنا پڑا ہے۔

مسلمان ہونا اب اس ملک میں گناہ ہے۔۔۔۔۔۔۔۔از: ظفر آغا

انہدام اب ایک ’فیشن‘ بنتا جا رہا ہے۔ یہ ہم نہیں کہہ رہے بلکہ یہ مدھیہ پردیش ہائی کورٹ کا بیان ہے۔ بے شک مکان ہو یا دوکان ہو، ان کو بلڈوزر کے ذریعہ ڈھا دینا اب بی جے پی حکومت کے لیے ایک فیشن بن چکا ہے۔ لیکن عموماً اس فیشن کا نشانہ مسلم اقلیتی طبقہ ہی بنتا ہے۔ اس کی تازہ ترین مثال ...

کیا وزیرمنکال وئیدیا اندھوں کے شہر میں آئینے بیچ رہے ہیں ؟ بھٹکل کے مسلمان قابل ستائش ۔۔۔۔۔ (کراولی منجاو کی خصوصی رپورٹ)

ضلع نگراں کاروزیر منکال وئیدیا کا کہنا ہے کہ کاروار میں ہر سال منعقد ہونےو الے کراولی اتسوا میں دیری اس لئے ہورہی ہے کہ  وزیرا علیٰ کا وقت طئے نہیں ہورہاہے۔ جب کہ  ضلع نگراں کار وزیر اس سے پہلے بھی آئی آر بی شاہراہ کی جدوجہد کےلئے عوامی تعاون حاصل نہیں ہونے کا بہانہ بتاتے ہوئے ...