کینرا مسلم خلیج کونسل نے کیا بھٹکل اسمبلی حلقہ میں کانگریس کی حمایت کا اعلان؛ کیا بھٹکل تنظیم بھی کانگریس کے حق میں سنائے گی فیصلہ ؟

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 1st April 2018, 3:14 AM | ساحلی خبریں | خلیجی خبریں |

جدہ یکم اپریل (ایس او نیوز) خلیجی ممالک میں قائم بھٹکل اور شراوتی پٹری کی 29 جماعتوں پر مشتمل کینرا مسلم خلیج کونسل نے جمعہ کومنعقدہ اہم اجلاس میں اس بات کا فیصلہ کیا ہے کہ آنے والے اسمبلی انتخابات میں کانگریس کی مکمل حمایت کی جائے اور کانگریس اُمیدوار کی جیت کو یقینی بنانے کے لئے ہرممکن تعاؤن فراہم کیاجائے۔ اس بات کی اطلاع کینرا مسلم خلیج کونسل کے صدر جناب عبدالقادر باشہ رکن الدین نے دی۔اجلاس کے اختتام کے بعد ساحل آن لائن سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ پوری ریاست کرناٹک میں کانگریس کی حمایت کرنے کی باتیں سامنے آرہی ہیں، جس کو دیکھتے ہوئے ہماری کانفرنس میں بھی یہ بات کھل کر سامنے آئی کہ کانگریس کی ہی حمایت کی جانی چاہئے، مگر اُس سے پہلے بھٹکل تنظیم کے ذریعے کانگریس کے ذمہ داروں کے ساتھ تبادلہ خیال کیاجانا ضروری قرار دیا گیا ہے کہ ہمیں آگے چل کر کس طرح کا تعاؤن حکومت سے حاصل کرنا ہے ، اور کن کن مسائل کے حل کی طرف توجہ دینی ہے،  یہ تمام باتیں اگر پہلے ہی طئے ہوجائیں تو ہمیں اپنے مسائل حل کرنے میں آسانی ہوگی۔ انہوں نے بتایا کہ اجلاس میں تقریبا سبھی29 جماعتوں کے مندوبین شریک ہوئے تھے اور متفقہ طور پر اس بات کا فیصلہ لیا گیا کہ اس بار کانگریس کے ہاتھ کومضبوط کیا جانا چاہئے انہوں نے بتایا کہ اس کے لئے خلیج کی جماعتوں کی طرف سے جو بھی تعاؤن درکار ہوگا ہم نے فراہم کرنے کا فیصلہ کیا  ہے۔

جناب عبدالقادر باشہ نے بتایا کہ کینرا مسلم خلیج کونسل کے فیصلے کو دیکھتے ہوئے اب تنظیم کو بھی چاہے کہ وہ بھی ان جماعتوں کے موقف کو دیکھتے ہوئے اپنا فیصلہ سنائیں۔ یہ پوچھے جانے پر کہ اگر تنظیم میں کانگریس کے حق میں فیصلہ نہیں ہوتاتو کینرا مسلم خلیج کونسل کا موقف کیا ہوگا تو انہوں نے جواب دیا کہ کینرا مسلم خلیج کونسل میں 29 جماعتیں شامل ہیں اور بھٹکل سمیت اطراف کی سبھی جماعتوں کا موقف ایک ہی ہے تو پھر تنظیم کا موقف کینرا مسلم خلیج کونسل کے موقف سے الگ ہونے کا سوال ہی پیدا نہیں ہوتا ۔ اس موقع پر قائد قوم جناب ایس ایم سید خلیل الرحمن صاحب بھی موجود تھے، جنہوں نے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ سبھی 29 جماعتوں نے متفقہ طور پر اس بات کا فیصلہ کیا ہے کہ اس بار کانگریس کے حق میں حمایت کی جانی چاہئے، ایسے میں تنظیم کا فیصلہ الگ کیسے ہوسکتا ہے ۔ جناب ایس ایم خلیل الرحمن نے بتایا کہ اس تعلق سے وہ خود بھی کانگریس ذمہ داران سے فون پر بات چیت کریں گے اور کانگریس کی طرف سے اُمیدوار کا اعلان ہونے پر اُمیدوار کو تنظیم دفتر جاکر تنظیم کے ذمہ داران سے تبادلہ خیال کرنے کی بھی درخواست کریں گے۔

خیال رہے کہ کینرا مسلم خلیج کونسل میں خلیج میں قائم بھٹکل کی دس جماعتوں کے بشمول مرڈیشور، منکی، ولکی، ہیرانگڈی، سمسی،اُپنّی، کُروا کے ساتھ ساتھ شیرور، بیندور اور گنگولی کی جماعتیں بھی شامل ہیں۔

واضح  رہے کہ اس سے پہلے سوشیل میڈیا کے ذریعے اس طرح کی خبریں عام ہورہی تھی کہ بھٹکل اسمبلی حلقہ کے مرڈیشور، منکی ، ولکی اور شراوتی پٹریوں کی مقامی جماعتوں نے بھی کانگریس کے حق میں ہی حمایت کرنے کا فیصلہ کیا ہے، ایسے میں کینرا مسلم خلیج کونسل کا فیصلہ بھی کانگریس کے حق میں ہی سامنے آگیا ہے۔  اب یہ دیکھنا بے حد اہم اور دلچسپ ہوگا کہ آیا بھٹکل کا سب سے بڑا  اور طاقتور سمجھا جانے والا قومی اور سماجی ادارہ مجلس اصلاح و تنظیم  بھی کانگریس کی ہی حمایت کرنے کا اعلان کرے گا  ؟

ایک نظر اس پر بھی

کاروار:بس کے ذریعے غیرقانونی سپلائی کی جارہی شراب ضبط :دوخواتین پولس کی تحویل میں

کے ایس آرٹی سی بس میں غیر قانونی طورپر شراب سپلائی کے دوران چھاپہ مار کر ڈی سی بی پولس نے 20ہزار روپئے مالیت کی شراب ضبط کرلی ہے اور دو خاتون ملزموں کو گرفتارکرکے کیس درج کرلینے کا واقعہ پیش آیاہے۔

اُڈپی میں دستور بچاؤ ،ملک بچاؤ اجلاس : اقلیتوں کو منصوبہ بند طریقے سے کچلنے کی سازش کی جارہی ہے: پرکاش رائی کا خطاب

اکثریت بہت ہی منصوبہ بند سازش کے ذریعے اقلیت کو کچلنے کی کوشش کررہی ہے،ایسی گہری فریبی سازشیں ہورہی ہیں کہ شرفاء تصور بھی نہیں کرسکتے،آج ایسے فریبی بہت بڑے انسان بن گئے ہیں۔دستور کو تشکیل دینےو الے ڈاکٹر امبیڈکر کی مورتی کو زنجیروں کو جکڑ کر رکھا گیا ہے۔ مشہور فلمی ایکٹر ...

بحرین : 24 شیعہ افراد کو دہشت گرد گروپ تشکیل دینے پر جیل کی سزائیں ، شہریت منسوخ

بحرین میں ایک عدالت نے 24 شیعہ افراد کو ایک دہشت گرد گروپ تشکیل دینے اور تخریبی سرگرمیوں میں ملوث ہونے کے الزامات میں قصور وار قرار دے کر مختلف مدت کی قید کی سزائیں سنائی ہے اور ان تمام کی بحرین کی شہریت منسوخ کردی ہے۔

عسیر میں چیک پوسٹ پر فائرنگ سے چار سعودی سیکیورٹی اہلکار شہید

سعودی عرب میں علاقے عسیر میں چیک پوسٹ پر فائرنگ کے نتیجے میں چار سکیورٹی اہلکار شہید اور متعدد زخمی ہو گئے ہیں۔ حملے کے وقت پانچ اہلکار ڈیوٹی انجام دے رہے تھے۔ فائرنگ سے تین اہلکار موقع پر جبکہ چوتھا ہسپتال منتقلی کے دوران جام شہادت نوش کر گیا۔

سعودی سیکیورٹی اہلکاروں کو شہید کرنے والا مجرم کون تھا 

سعودی عرب کے صوبے عسیر میں جمعرات کے روز ایک چیک پوسٹ پر فائرنگ کے واقعے میں چار سکیورٹی اہل کار شہید اور متعدد زخمی ہو گئے۔ اس مجرمانہ کارروائی میں شریک افراد میں 34 سالہ بندر الشہری بھی شامل تھا جو سعودی شہری دفاع کا اہل کار تھا۔ الشہری سکیورٹی فورسز کی جوابی فائرنگ کے نتیجے ...