بھٹکل میں سواریوں کی  من چاہی پارکنگ پرمحکمہ پولس نے لگایا روک؛ سواریوں کو کیا جائے گا لاک؛ قانون کی خلاف ورزی پر جرمانہ لازمی

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 3rd September 2018, 9:59 PM | ساحلی خبریں | اسپیشل رپورٹس |

بھٹکل:3/ستمبر(ایس اؤ نیوز) اترکنڑا ضلع میں بھٹکل جتنی تیز رفتاری کے ساتھ  ترقی کی طرف گامزن ہے اس کے ساتھ ساتھ کئی مسائل بھی جنم لے رہے ہیں، ان میں ایک طرف گنجان  ٹرافک  کا مسئلہ بڑھتا ہی جارہا ہے تو  دوسری طرف پارکنگ کی کہانی الگ ہے۔ اس دوران محکمہ پولس نے ٹرافک نظام میں بہتری لانے کے لئے  بیک وقت کئی محاذوں پر عملی اقدامات کرنے شروع کردئیے ہیں۔ اس سلسلےمیں خاص کر ضوابط کی خلاف ورزی کرتے ہوئے جدھر چاہے ادھر پارکنگ کئے جانے پر سواریوں کو لاک کرکے جرمانہ عائد کیا جارہا ہے۔ پولس ذرائع نے بتایا کہ غلط پارکنگ کرنے پر  پہلی بار سواری کو لاک کرنے  پر سو روپیہ جرمانہ عائد کیا جائے گا، دوسری بار پکڑے جانے کی صورت میں تین سو روپیہ جرمانہ عائد کیا جائے گا۔

خیال رہے کہ بنگلور اور ممبئی جیسے بڑے بڑے شہروں میں غلط پارکنگ کرنے کی صورت میں ٹریفک پولس کی گاڑی فوری جائے وقوع پر پہنچ کر پارک کی ہوگئی سواریوں کو ہی اُٹھاکر لے جاتی ہے ۔ اسکوٹر یا  بائک ہوتو ان سواریوں کو  پولس کی گاڑی میں ٹھونس دیا جاتا ہے، جس سے ان سواریوں کو بھی   شدید نقصان پہنچنے کا خدشہ رہتا ہے، مگر بھٹکل میں بائک ہو یا کار، غلط پارکنگ کرنے کی صورت میں وہیں پر گاڑیوں کو لاک کردیا جاتا ہے۔ پورے ضلع شمالی کینرا میں  بھٹکل ایسا شہر ہے جہاں یہ  لاک سسٹم شروع  کیا گیا ہے۔

تعلقہ کے مین روڈ کے کناروں پر سواریوں کی پارکنگ کو لے کر 2015 میں اُس وقت کے ڈی وائی ایس پی ائیپا کی رہنمائی میں اصول وضوابط نافذ کئے  تھے، جس کے تحت ہفتہ کے تین دن روڈ کے ایک کنارے پارکنگ کرنی ہوتی ہے اور ہفتہ کے چار دن  روڈ کے دوسرے کنارے پارکنگ کرنا لازمی ہے۔ 

کیپٹن ائیپّا کے ٹرانسفر کے بعد  آج ضوابط جانے دیجئے اصول کی اطلاع دینے والے بورڈس کا رنگ بھی پھیکا ہوگیا۔جس  کے بعد  شہر کے مین روڈ پر من چاہی پارکنگ شروع ہوگئی ۔حالات اتنے سنگین ہوگئے کہ صبح اور شام کے اوقات میں مین روڈ، ماری کٹہ سے سواری لے کر گزرنا ہی محال ہوگیا۔ منڈلی ،الویکوڑی کی طرف جانے والی بسوں کے ڈرائیوروں کی پریشانی بیان کے باہر ہے۔

مگر اب بھٹکل ڈی وائی ایس پی ویلنٹائن ڈیسوزا نے حالات کودیکھتے ہوئے پورے محکمہ کے ساتھ میدان میں عملی اقدامات شروع کر دئیے ہیں۔ پہلے مرحلے میں شہر کے مین روڈ کے کناروں پر من چاہی پارک کی گئی سواریوں کو پولس لاک کرکے جرمانہ عائد کررہی ہے۔ پولس کے عملی اقدام کو دیکھتے ہوئے عوام بیدار ہوکر ضوابط کی پابندی کرنے لگے ہیں۔اسی طرح سواروں کےلئے ہیلمٹ لازمی قرار دینے کے بعد ہیلمٹ کی چیکنگ بھی شہر کے مختلف جگہوں پر کی جارہی ہے اور سختی کے ساتھ انہیں ہیلمٹ کی پابندی کرنےکا حکم دیتے ہوئے جرمانہ لگایا جارہاہے۔ اسی طرح  ون وے کے متعلق بھی کارروائی جاری ہے۔ ساحل آن لائن سے فون پر گفتگو کرتے ہوئے ڈی وائی ایس پی ویلنٹائن ڈیسوزا نے  بتایا کہ اس سلسلےمیں 4 ماہ پہلے ہی ہم نے مرچنٹ اسوسی ایشن کے عہدیداران کے ساتھ ایک نشست کا انعقاد کرتے ہوئے پارکنگ، ون وے وغیرہ کے متعلق گفتگو کی تھی اور وہاں کچھ فیصلے لئے گئے تھے جس کو اب نافذ کیاجارہاہے۔ 

ڈی وائی ایس پی نے بتایا کہ بھٹکل  نیشنل ہائی وے پر کم عمر لڑکے  بغیر لائسنس تیز رفتاری کے ساتھ بائک ڈرائیونگ کرنے کی شکایتیں ملی ہیں، اب آئندہ ہائی وے پر بھی چیکنگ تیز کی جائے گی اور اس دوران  کم عمر لڑکے ڈرائیونگ کرتے ہوئے پکڑے جاتے ہیں تو اُس  صورت میں اُن کے والدین کے خلاف معاملات درج کئے جائیں گے۔ انہوں نے والدین پر زور دیا کہ وہ بچوں کے ہاتھوں میں گاڑیاں نہ دیں۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل: نوجوان اپنی ذمہ داریوں کو سمجھیں اور وقت کا صحیح استعمال کریں : ڈاکٹر سریش نایک

دی نیوانگلش پی یو کالج میں منعقدہ پارلیمنٹ نامی ایک پروگرام کا افتتاح کرتے  ہوئے بھٹکل ایجوکیشن  کے صدر ڈاکٹر سریش نایک نے نوجوانوں سے اپیل کی کہ وہ اپنی ذمہ داریوں کا شعور رکھتے ہوئے اوقات کا صحیح استعمال کریں اور  ملک کی تعمیر اور اس کی ترقی میں  اپنا رول ادا کریں۔  انہوں نے ...

اترکنڑا ضلع کے سبھی پولس تھانوں میں ہر ماہ کی دوسری اتوار کو ’یوم دلت‘ منایاجائے : ڈی سی ہریش کمار

پسماندہ طبقات وذات والوں کے مسائل اور شکایات کو حل کرنے کے لئے ہر ماہ  کی دوسری اتوار کو سبھی پولس تھانوں میں ’’ یومِ دلت ‘‘ منانے کے لئے منصوبہ تشکیل دینے اترکنڑاڈی سی ڈاکٹر ہریش کمار نے پولس محکمہ کو  ہدایات جاری کی ہیں۔

کاسرگوڈ میں جانور لے جانے کے الزام میں دو لوگوں پر حملہ؛ بجرنگ دل کارکنوں کے خلاف معاملات درج کرنے پر مینگلور کے قریب وٹلا اور بنٹوال میں بسوں پر پتھراو

پڑوسی ریاست کیرالہ کے  کاسرگوڈ میں جانور لے جانے کے الزام میں دو لوگوں پر حملہ اور لوٹ مار کی وارداتوں کے بعد پولس نے جب  بجرنگ دل کارکنوں کے خلاف معاملات درج کئے  تو  مینگلور کے قریب  وٹلا اور بنٹوال  میں  بسوں پر پتھراو اور توڑ پھوڑ کی واردات پیش آئی ہے۔ پتھراو میں   نو ...

بھٹکل میں 110 کے وی اسٹیشن کے قیام سے ہی بجلی کا مسئلہ حل ہونے کی توقع؛ کیا ہیسکام کو عوامی تعاون ملے گا ؟

بھٹکل میں رمضان کے آخری دنوں میں بجلی کی کٹوتی سے جو پریشانیاں ہورہی تھی، سمجھا جارہا تھا کہ  عین عید کے  دن  بعض نوجوانوں کے  احتجاج کے بعد  اُس میں کمی واقع ہوگی اور مسئلہ حل ہوجائے گا، مگر  عید الفطر کے بعد بھی  بجلی کی کٹوتی یا انکھ مچولیوں کا سلسلہ ہنوز جاری ہے اور عوام ...

بھٹکل تعلقہ اسپتال میں ضروری سہولتیں تو موجود ہیں مگر خالی عہدوں پر نہیں ہورہا ہے تقرر

جدید قسم کا انٹینسیو کیئر یونٹ (آئی سی یو)، ایمرجنسی علاج کا شعبہ،مریضوں کے لئے عمدہ ’اسپیشل رومس‘ کی سہولت کے ساتھ بھٹکل کے سرکاری اسپتال کو ایک نیا روپ دیا گیا ہے۔لیکن یہاں اگر کوئی چیز نہیں بدلی ہے تو یہاں پر خالی پڑی ہوئی اسامیوں کی بھرتی کا مسئلہ ہے۔ 

آر ایس ایس کی طرح کوئی مسلم تنظیم کیوں نہیں؟ از: ڈاکٹر سید فاضل حسین پرویز

مسٹر نریندر مودی کی تاریخ ساز کامیابی پر بحث جاری ہے۔ کامیابی کا سب کو یقین تھا مگر اتنی بھاری اکثریت سے وہ دوبارہ برسر اقتدار آئیں گے اس کا شاید کسی کو اندازہ نہیں تھا۔ دنیا چڑھتے سورج کی پجاری ہے۔ کل ٹائم میگزین نے ٹائٹل اسٹوری مودی پر دی تھی جس کی سرخی تھی ”India’s Divider in Chief“۔

خود کا حلق سوکھ رہا ہے، مگر دوسروں کو پانی فراہم کرنے میں مصروف ہیں بھٹکل مسلم یوتھ فیڈریشن کے نوجوان؛ ایسے تمام نوجوانوں کو سلام !!

ایک طرف شدت کی گرمی اور دوسری طرف رمضان کا مبارک مہینہ  ۔ حلق سوکھ رہا ہے، دوپہر ہونے تک ہاتھ پیر ڈھیلے پڑجاتے ہیں،    لیکن ان   نوجوانوں کی طرف دیکھئے، جو صبح سے لے کر شام تک مسلسل شہر کے مختلف علاقوں میں پہنچ کر گھر گھر پانی سپلائی کرنے میں لگے ہوئے ہیں۔ انہیں  نہ تھکن کا ...

مودی جی کا پرگیہ سنگھ ٹھاکور سے لاتعلقی ظاہر کرنا ایسا ہی ہے جیسے پاکستان کا دہشت گردی سے ۔۔۔۔ دکن ہیرالڈ میں شائع    ایک فکر انگیز مضمون

 وزیر اعظم نریندرا مودی کا کہنا ہے کہ وہ مہاتما گاندھی کے قاتل ناتھو رام گوڈسے کو دیش بھکت قرار دیتے ہوئے ”باپو کی بے عزتی“ کرنے کے معاملے پر پرگیہ ٹھاکورکو”کبھی بھی معاف نہیں کرسکیں گے۔“امیت شاہ کہتے ہیں کہ پرگیہ ٹھاکور نے جو کچھ کہا ہے(اور یونین اسکلس منسٹر اننت کمار ہیگڈے ...

بلقیس بانو کیس۔ انصاف کی جدوجہد کا ایک سنگ میل ......... آز: ایڈووکیٹ ابوبکرسباق سبحانی

سترہ سال کی ایک لمبی اور طویل عدالتی جدوجہد کے بعد بلقیس بانو کو ہمارے ملک کی عدالت عالیہ سے انصاف حاصل کرنے میں فتح حاصل ہوئی جس فتح کا اعلان کرتے ہوئے عدالت عالیہ (سپریم کورٹ آف انڈیا) نے گجرات سرکار کو حکم دیا کہ وہ بلقیس بانو کو پچاس لاکھ روپے معاوضہ کے ساتھ ساتھ سرکاری نوکری ...