بھٹکل میں وائی ایم ایس اے کے زیراہتمام بھٹکل ٹرافی کرکٹ ٹورنامنٹ میں اسداللہ کی شاندار جیت؛ لائن کو فائنل میں ہوئی شکست

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 21st January 2018, 9:25 PM | ساحلی خبریں | اسپورٹس |

بھٹکل 21/ جنوری (ایس او نیوز)  ینگ مسلم  سروس اسوسی ایشن المعروف وائی ایم ایس اے کے  زیراہتمام بھٹکل ٹرافی کرکٹ ٹورنامنٹ کے فائنل میں آج اسداللہ نے ایک سخت اور بے حد سنسنی خیز مقابلے  میں  لائن کو پانچ وکٹوں سے شکست دیتے ہوئے ٹرافی اپنے نام کرلی، جس کے ساتھ ہی 28 ڈسمبر کو شروع ہونے والا یہ ٹورنامنٹ آج کامیابی کے ساتھ اختتام کو پہنچ گیا۔

ٹورنامنٹ میں کئی میچس بے حد سنسنی خیز رہے جس میں آخری اوور کی آخری گیند پر تک  میچ کا انحصار ٹکا رہا،  جس طرح آج کا فائنل مقابلہ بے حد سخت اور دلچسپ رہا، اسی طرح سیمی فائنل مقابلے بھی دیکھنے سے تعلق رکھتے تھے۔

آج بھٹکل تعلقہ اسٹڈیم  المعروف  وائی ایم ایس اے میدان میں کھیلا گیا اسداللہ اور لائن کے درمیان فائنل مقابلہ اتنا دلچسپ رہا کہ ابتداء سے ہی پورا میچ لائن کے حق میں جاتا ہوا نظر آرہا تھا، مگر اسداللہ کے کھلاڑیوں نے ناممکن کو ممکن بناکر شکست کو جیت میں تبدیل کرنے میں کامیاب ہوگئے۔

بھٹکل کی مضبوط سمجھی جانے والی لائن ٹیم نے ٹوس جیت کر آج صبح پہلے بلے بازی کرنے کا فیصلہ کیا۔ فصیر گنگائولی کے 46، نسیم  اسرمتا کے  37 اور انس مُلا کے  ناٹ آوٹ 36 رنوں کی بدولت لائن نے اسداللہ کے سامنے جیت کے لئے 173 رنوں کا اچھا  نشانہ دیا۔

اسداللہ کے بلے باز جب میدان میں اُترے  تو پہلے ہی اوور کی تیسری گیند پرلائن کے تیز گیند باز آنس مُلا نے  آوف اور پھر پانچویں  گیند پر مفضال کو پویلین بھیج دیا۔  بناء کوئی رن بنائے جب دو بلے باز آوٹ ہوئے تو آنس مُلا نے اپنے دوسرے اوور یعنی میچ کے تیسرے اوور میں زید کو بھی واپس  بھیج  کر میچ میں سنسنی پیدا کردی۔ ایسا لگ رہا تھا کہ تین کھلاڑیوں کے ایک ساتھ آوٹ ہونے سے پورے ٹیم دبائو میں آجائے گی۔ مگر  ایسے میں  ریتیش بھٹکل اور اسجد  حیدر میدان میں اُترے اور دونوں نے بناء کسی دبائو کے لائن گیندبازوں کی بائولنگ پر دھلائی  شروع کردی، ان دونوں نے میچ کو ایسی گرفت میں لیا کہ لائن کے کھلاڑیوں کے لئے یہ دونوں بلے باز درد سر بن گئے۔رتیش نے دو چھکوں اور آٹھ چوکوں کی مدد سے صرف 37 گیندوں پر 55 رن بنائے، جبکہ اسجد نے دو چھکوں اور پانچ چوکوں کی مدد سے صرف 54 گیندوں پر ناٹ آوٹ  80 رن بنا ڈالے۔ان دونوں نے چوتھے وکٹ کی ساجھے داری  میں 81 رن بنائے اور اپنی ٹیم کو مشکلات سے نکالتے ہوئے جیت کی راہ ہموار کی۔

آخری اوور میں اسداللہ کو جیت کے لئے آٹھ رنوں کی ضرورت تھی جس کے دوران  عُزیر نے پہلی ہی گیند پر چھکا لگاتے ہوئے  اپنی ٹیم کو  دبائو سے باہر نکالنے میں کامیاب ہوگئے، بعد میں آسانی کے ساتھ دو رن بناکر  ٹیم کو شاندار کامیابی سے ہمکنار کردیا۔

خیال رہے کہ ٹورنامنٹ میں منکی اور مرڈیشور سمیت بھٹکل کی جملہ 32 ٹیموں نے حصہ لیا تھا جس میں سے لائن، اسداللہ، انفا اور آزاد ٹیمیں سیمی فائنل تک پہنچنے میں کامیاب ہوئیں۔ پہلے سیمی فائنل میں لائن نے آزاد کو ٹورنامنٹ سے باہر کیا تو دوسرے سیمی فائنل میں اسداللہ نے انفا کو چاروں شانے چت کردیا۔ 

اسداللہ کو بھٹکل ٹرافی کے ساتھ  66,666 روپیہ  نقد انعام  اور رنرزآپ لائن کو  44,444 روپیہ  نقدانعام   سے نوازا گیا۔ فائنل میں بہترین کھیل کا مظاہرہ پیش کرنے پر اسجد کو مین آف دی فائنل کے خطاب سے نوزا گیا۔ انہوں نے 80 رن بنانے کے ساتھ ساتھ  بہترین گیندبازی کرتے ہوئے چار اووروں میں 26 رن دے کر ایک وکٹ بھی حاصل کی تھی۔رتیش بھٹکل، اکراما موٹیا ودیگر بہترین کھیل  پیش کرنے والے کھلاڑیوں کو بھی انعامات سے نوازا گیا۔ منکی این ایس اے ٹیم کو بیسٹ ڈسپلین ٹیم کے خطاب سے نوازا گیا۔

فائنل تقریب میں کرناٹکا اسپورٹس اتھاریٹی کے نائب صدر میر روشن علی، بھٹکل کے رکن اسمبلی منکال وئیدیا، مجلس اصلاح و تنظیم بھٹکل کے جنرل سکریٹری محی الدین الطاف کھروری، بھٹکل مسلم یوتھ فیڈریشن کے صدر امتیاز اُدیاور، سکریٹری نصیف خلیفہ،  وائی ایم ایس اے کے ذمہ داران  میں عتیق الرحمن مُنیری،  عبدالمُجیب، سٹی میڈیکل اقبال سمیت کافی لوگ موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

ملپے سے گم شدہ ماہی گیر کشتی معاملہ میں نیا موڑ: نیوی کے افسران نے مانا کہ جنگی جہاز سے ہواتھا کشتی کا تصادم

مہاراشٹرا میں سندھو درگ کے قریب سمندر میں ماہی گیری کے دوران مچھیروں سمیت لاپتہ ہونے والی کشتی ’سوورنا تریبھوجا‘ کے تعلق سے اب ایک نیا موڑ سامنے آیا ہے اور تحقیقاتی افسران کو یقین ہوگیا ہے کہ اس ماہی گیر کشتی کی ٹکر بحریہ کے ایک جنگی جہاز’آئی این ایس کوچی‘ سے ہوئی اور ماہی ...

کاروار بوٹ حادثہ: زندہ بچنے والوں نے کیا حیرت انگیز انکشاف قریب سے گذرنے والی بوٹوں سے لوگ فوٹوز کھینچتے رہے، مدد نہیں کی؛ حادثے کی وجوہات پر ایک نظر

کاروار ساحل سمندر میں پانچ کیلو میٹر کی دوری پر واقع جزیرہ کورم گڑھ پر سالانہ ہندو مذہبی تہوار منانے کے لئے زائرین کو لے جانے والی ایک کشتی ڈوبنے کا جو حادثہ پیش آیا ہے اس کے تعلق سے کچھ حقائق اور کچھ متضاد باتیں سامنے آرہی ہیں۔ سب سے چونکا دینے والی بات یہ ہے کہ کشتی جب  اُلٹ ...

دارالعلوم اسلامیہ عربیہ تلوجہ میں علمائے شوافع کی جانب سے فقہی سمینار کا انعقاد ؛ علماء فقہائے شوافع نے حقیقتاً حدیث اور فقہ میں بہت نمایاں کام کیاہے: خالد سیف اللہ رحمانی 

بروز سنیچر 19؍ جنوری مجمع الامام الشافعی العالمی کی جانب سے دو روزہ پہلے فقہی سمینار کا آغاز کیا گیا اس سمینار کا افتتاحی جلسہ صبح 10؍ بجے جامعہ دارالعلوم اسلامیہ عربیہ تلوجہ ممبئی میں منعقد کیا گیا

بھٹکل: ریاست کے مشہور سد گنگامٹھ کے شری کمار سوامی جی کی وفات پر رابطہ ملت اترکنڑا کا اظہار تعزیت

ریاست کے قدآور ، معروف سد گنگا مٹھ کے شری کمار سوامی جی کے دارِ فانی سے کوچ کر جانے پر رابطہ ملت اترکنڑا ضلع کے عہدیداران نے اظہار تعزیت کرتے ہوئے کہا ہے کہ سوامی جی ملک کی ایک قوت کی مانند تھے۔

گنگولی کے آراٹے ندی میں غرق ہوکر لاپتہ ہونے والے ماہی گیر کی نعش آج برآمد

یہاں آراٹے ندی میں غرق ہوکر کل رات ایک ماہی گیر لاپتہ ہوگیا تھا، جس کی نعش آج متعلقہ ندی سے برآمد کرلی گئی ہے۔ ماہی گیر کی شناخت آراٹے کڑین باگل کے رہنے والے  کرشنا موگویرا (50) کی حیثیت سے کی گئی ہے۔

کنداپور میں ہوئی چوری کی واردات کے بعد پولس نے گھر میں نوکری کرنے والے میاں بیوی کوکیا گرفتار

کنداور دیہات کے سٹپاڑی کے ایک گھرمیں ہوئی  چوری کے معاملے میں کنداپور دیہی پولس نے فوری کارروائی کرتے ہوئے اسی گھر میں کام کرنےو الے میاں بیوی کو صرف دو دنوں میں ہی گرفتار کر کے معاملے کو حل کرنے میں کامیابی حاصل کرلی  ہے۔

دبئی میں بی پی ایل کرکٹ ٹورنامنٹ کا 15 مارچ سے ہوگا شاندار آغاز؛5جنوری سے ہوگا ٹیموں کا اندراج، وزٹ ویزا پردبئی میں موجود کھلاڑیوں کے لئے بھی سنہرا موقع

دبئی میں بھٹکل پریمئیر لیگ  المعروف  بی پی ایل کرکٹ کا آٹھواں ٹورنامنٹ  مورخہ 15 مارچ 2019 ؁ سے شروع ہوگا، البتہ بی پی ایل کے لئے ٹیموں کا اندراج 3/ جنوری سے شروع ہوگا۔ اس بات کی اطلاع  ٹورنامنٹ کے کمشنر    جوکاکوشمس الدین ضیاء نے دی۔

ہندوستان کی اعلی درجے کی بولنگ کا سامنا کرنے میں ناکام رہے: ٹم پین

ہندوستان کے خلاف ملبورن کرکٹ گراؤنڈ پر شکست کے بعد آسٹریلیا کے کپتان ٹم پین نے قبول کیا کہ ان کے بلے باز اسٹیو سمتھ اور ڈیوڈ وارنر کی غیر موجودگی میں مہمان ٹیم کے انتہائی عمدہ بولنگ حملے کا سامنا کرنے میں ناکام رہے۔