رقم خرچ کرکے چاند کی سیرکرنا اب ہوگیا ممکن؛ جاپان کا ارب پتی چاند کے چکر لگانے والا پہلا بزنس مین ہوگا

Source: S.O. News Service | By INS India | Published on 18th September 2018, 8:22 PM | عالمی خبریں | سائنس و ٹیکنالوجی |

دبئی 18/ستمبر (ایس او نیوز) اب پیسہ دے کر کوئی بھی شخص چاند کا چکر لگا سکتا ہے، جی ہاں!  بی بی سی کی ایک رپورٹ پر بھروسہ کریں تو   42 سالہ جاپانی   "یوساکا مائیزاوا " اب پہلا شخص ہوگا جو اپنی رقم خرچ کرکے  چاند کی سیر کرے گا۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ یوساکا جاپان کا ایک مشہور   کاروباری شخصیت اور فیشن ٹائیکون ہے اور اس کا شمار  ارب پتیوں میں ہوتا ہے.۔ یوساکا نے ا سپیس ایکس کے راکٹ کے ذریعے چاند پر جانے کا اعلان کیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق یوساکا  ،  پرائیویٹ راکٹ کے ذریعے  چاند کا  چکر لگانے والا    پہلا بزنس مین  ہوگا  جو پرائیویٹ طور پر چاند کا سفر کرے گا۔

بی بی سی کی رپورٹ  کے مطابق ان کی سواری بی ایف آر، یعنی ’بگ فیلکن راکٹ‘ ہو گی، جس کی رونمائی ایلون مسک نے 2016 میں کی تھی۔ یہ ناسا کے اپولو 17 مشن کے بعد پہلا موقع ہو گا کہ کوئی انسان چاند تک جائے گا۔

ایلون مسک نے بتایا کہ  جاپانی شخص یوساکا   نے اُن کی راکٹ پر  چاند پر جانے کا ارادہ ظاہر کیا ہے۔ ایلون مسک کیکمپنی کے مطابق یہ مہم ’ان عام لوگوں کے لیے ایک اہم پیش رفت ہے جن کے لیے خلا تک رسائی ایک خواب ہے۔‘

اب تک چاند پر صرف 24 انسانوں نے تین اپالو مشنز کے ذریعے قدم رکھا ہے اور وہ سب امریکی تھے۔

یہ بات واضح نہیں کہ یہ مشن کب لانچ کیا جائے گا، اور جس راکٹ کی ذریعے جاپانی بزنس مین   کو چاند کی سیرکرائی جائے گی  وہ راکٹ  کب تک تیار ہوگی۔

خیال رہے کہ سنہ 2017 میں ایلون مسک نے اعلان کیا تھا کہ وہ دو سواریوں کو پیسوں کے عوض چاند کے مدار کا چکر لگوائیں گے اور یہ مشن 2018 میں جائے گا۔اس وقت سپیس ایکس کا خیال تھا کہ وہ اس مقصد کے لیے اپنا طاقتور 146فیلکن ہیوی145 راکٹ اور 146ڈریگن145 خلائی جہاز کا   استعمال کرے گا۔

لیکن اس سال فروری میں ایلون مسک نے کہا کہ انسانوں کو مدار میں بھیجنے کے لیے سپیس ایکس 146بی ایف آر145 پر ہی انحصار کرے گایہ راکٹ کبھی اڑا نہیں ہے، لیکن جاری کردہ تکنیکی معلومات کے مطابق راکٹ کی اونچائی 106 میٹر اور قطر نو میٹر ہے۔اس کے مقابلے میں 146فیلکن ہیوی145،  70 میٹر اونچا ہے۔ اس کے کور میں دو راکٹ نصب ہیں، جن کا انفرادی قطر 3.6 میٹر ہے۔
 

ایک نظر اس پر بھی

ایران سے زائرین کے واپسی معاملہ پر سپریم کورٹ نے کیا اطمینان کا اظہار

سپریم کورٹ نے ایران کے شہر قم میں پھنسے ہندوستانی شیعہ زائرین کی واپسی کے لئے مرکزی حکومت اور تہران میں واقع ہندوستانی سفارت خانے کی جانب سے کی جا رہی کوششوں پراظہار اطمینان کرتے ہوئے متعلقہ پٹیشن کو نمٹا دیا ہے۔

جلد ہی کورونا متاثرین کی تعداد 10 لاکھ اور اموات 50 ہزار سے زیادہ ہوگی: ڈبلیو ایچ او

پوری دنیا میں کورونا وائرس کے بڑھتے اثرات کے درمیان عالمی صحت ادارہ (ڈبلیو ایچ او) کے سربراہ کا کہنا ہے کہ آنے والے کچھ ہی دنوں میں دنیا کووڈ-19 انفیکشن کی وجہ سے 10 لاکھ سے زیادہ کیسز دیکھے گی۔ ساتھ ہی ڈبلیو ایچ او کا کہنا ہے کہ اس وبا کی وجہ سے چند دنوں کے بعد اموات کی تعداد 50 ہزار ...

ریلوے اسٹیشنوں پر مفت وائی فائی سروس بند کرے گا گوگل

کمپنی گوگل دنیا بھر میں ریلوے اسٹیشنوں میں مفت وائی فائی سروس بند کرنے جا رہی ہے۔گوگل نے کہا ہے کہ وہ 2020 تک اپنے سرخیوں میں چھائے پروگرام ’اسٹیشن‘ کو بند کرنے جا رہا ہے۔اس میں ہندوستان بھی شامل ہے،اگرچہ ہندوستان کے تقریبا 5600 ریلوے سٹیشنوں پر ریلوے سواریوں کو مفت وائی فائی ...

 چین اگلے سال روبوٹک گاڑی مریخ  کی سطح پر اتارے گا

چین اگلے سال مریخ پر اپنی راکٹ گاڑی اتارنے کی تیاریاں کر رہا ہے۔ اس سلسلے میں اس نے جمعرات کو مریخ میں بھیجی جانے والی روبوٹک گاڑی کو ناہموار سطح پر اتارنے کا مشکل تجربہ کامیابی سے مکمل کر لیا۔یہ تجربہ شمالی صوبے ہبائی میں کیا گیا۔چین کے ’نیشنل سپیس ایڈمنسٹریشن‘ کے سربراہ ...

سات موبائل ایپس میں ملا خطرناک وائرس، لسٹ میں الارم، کیلکولیٹراور فلش لائٹ جیسے ایپ بھی شامل

گوگل پلے اسٹور پر فرضی ایپس کی خبریں ہر دوسرے دن آرہی ہیں۔ اب اس پر موجود 7 اینڈرائڈ ایپس میں خطرناک وائرث پایا گیا ہے۔ وانڈیرا نام کی سکیورٹی کمپنی کے محققین نے پلے اسٹور پر سات ایسی ایپس کو ڈسکور کیا ہے جو یوزر کے فون کو کنٹرول کرتی تھیں۔ یہ ساتوں ایپ 3 الگ۔الگ ڈیولپر نے ضرور ...

گوگل رازداری سے دیکھ رہا ہے آپ کا مستقبل؛ گوگل صرف آپ کا لوکیشن ہی نہیں آپ کے ڈیٹا سےآپ کے مستقبل کا بھی اندازہ لگاتا ہے

ان دنوں، یورپ کے  ایک ملک میں اجتماعی  عصمت دری کی وارداتیں بڑھ گئی تھیں. حکومت فکر مند تھی. حکومت نے ایسے لوگوں کی جانکاری  Google سے مانگی  جو لگاتار اجتماعی  عصمت دری سے متعلق مواد تلاش کررہے تھے. دراصل، حکومت اس طرح ایسے لوگوں کی پہچان  کرنے کی کوشش کر رہی تھی. ایسا اصل ...