افغانستان میں سیلاب کے باعث 33 افراد ہلاک

Source: S.O. News Service | Published on 15th April 2024, 12:05 PM | عالمی خبریں |

کابل، 15/اپریل (ایس او نیوز /ایجنسی)ا فغانستان کے کچھ حصوں میں گزشتہ تین دنوں میں شدید بارشوں، برف باری اور سیلاب کی وجہ سے 33 افراد کی موت ہو گئی اور 27 دیگر زخمی ہو گئے۔نیشنل ڈیزاسٹر اتھارٹی کے ترجمان ملا جانان سائک نے اتوار کو یہ اطلاع دی۔

کابل سمیت افغانستان کے 34 صوبوں میں سے تقریباً نصف میں جمعہ سے شدید بارش یا برف باری ہو رہی ہے، جس کی وجہ سے ملک کے کچھ حصوں میں سیلاب آ گیا، جس سے جان و مال کا نقصان ہوا۔جانان سائک نے کہا کہ پروان، اروزگان اور پنجشیر سمیت کئی صوبوں میں شدید بارش، برف باری اور سیلاب کی وجہ سے 33 افراد اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے اور 27 دیگر زخمی ہوئے۔

اہلکار نے بتایا کہ سیلاب کی وجہ سے 600 سے زائد مکانات کو نقصان پہنچا ہے۔ مزید برآں، اچانک سیلاب نے ملک میں 1,950 ایکڑ زرعی اراضی اور 75 کلومیٹر سڑکیں بھی تباہ ہوگئیں ہیں۔ اس کے علاوہ 200 سے زائد مویشی بھی مر چکے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ امدادی اداروں نے حکام کے ساتھ مل کر 22,851 سیلاب سے متاثرہ خاندانوں کو انسانی امداد فراہم کی ہے اور متاثرہ علاقوں میں امداد کی فراہمی کا عمل جاری ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ایران میں نئے صدر کا انتخاب 28 جون کو، رئیسی ہیلی کاپٹر حادثے کی تحقیقات شروع

ایرانی صدر ابراہیم رئیسی کے انتقال کے بعد ایران میں نئے صدر کے انتخاب کی تاریخ کا اعلان کر دیا گیا ہے۔ نئے صدر کا  انتخاب 28 جون کو کیا جائے گا۔ ایرانی حکومت نے صدارتی ہیلی کاپٹر حادثے کی تحقیقات کے لیے اعلیٰ حکام کی ایک ٹیم بھی تشکیل دی ہے۔

ایرانی صدرابراہیم رئیسی اور وزیر خارجہ حُسین امیر عبداللہیان ہیلی کاپٹر حادثے میں جاں بحق

ایرانی  صدر ابراہیم رئیسی اور ایرانی وزیرخارجہ حسین امیر عبداللہیان ہیلی کاپٹر حادثے میں جاں بحق ہوگئے۔ بتایا گیا ہے کہ پیر  صبح حادثے کا شکار ہیلی کاپٹر کا ملبہ مل گیا جس کے بعد ایرانی صدر اور ہیلی کاپٹر پر سوار افراد کے بچ جانے کی امیدیں دم توڑ گئیں ۔

افغانستان: سیلابی صورتحال، 300؍ افراد ہلاک، سیکڑوں لاپتہ

بغلان میں نیچرل ڈیزاسٹر مینجمنٹ کے صوبائی ڈائریکٹر ہدایت اللہ ہمدرد کے مطابق، سیلاب نے کئی اضلاع میں گھروں اور املاک کو نقصان پہنچایا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ مرنے والوں کی تعداد ابتدائی تھی اور بہت سے لوگ لاپتہ ہونے کی وجہ سے اس میں اضافہ ہو سکتا ہے۔