منگلورو:ڈاکٹرمریم انجم بن گئیں خواتین سے متعلقہ کینسرکے علاج میں ایم سی ایچ ڈگری پانے والی جنوبی کینرا کی پہلی ماہر ڈاکٹر 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 17th August 2019, 9:25 PM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

منگلورو17/اگست (ایس او نیوز) ڈاکٹر مریم انجم نے خواتین سے متعلقہ کینسر کے شعبے میں خصوصی مہارت والی ایم سی ایچ کی ڈگری حاصل کی ہے۔ جس کے ساتھ انہیں جنوبی کینرا میں اس طرح کی مہارت پانے والی پہلی ڈاکٹر ہونے کا اعزاز ملا ہے۔

ڈاکٹر مریم انجم سابق وزیر جناب یو ٹی قاد ر کے بھائی ڈاکٹر یو ٹی افتخار کی اہلیہ ہیں۔ ڈاکٹر مریم نے خواتین کے بعض اہم اعضاء میں ہونے والے مختلف  کینسرس کی سرجری کے لئے یہ خصوصی ڈگری امریتا انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسس کوچی سے حاصل کی ہے۔

ڈاکٹر مریم انجم کے بارے میں معلوم ہوا ہے کہ وہ اسکولی زمانے سے ہی بہت ذہین طالبہ رہی ہیں اور ہمیشہ انہوں نے صلاحیتوں (میرٹ) کی بنیاد پر اعلیٰ تعلیم کے لئے داخلہ پایاہے۔منگلورو کے فادرمولر س میڈیکل کالج سے ایم بی بی ایس کرنے کے بعد خواتین کے علاج (گائناکولوجی اینڈ آبسٹیٹرکس) میں اینا پویا میڈیکل کالج سے سرجری کی ڈگری ایم ایس مکمل کی۔ پھرقدوائی انسٹی ٹیوٹ آف آنکولوجی (کینسر) بنگلوروسے فیلو شپ کیا۔انہوں نے کینسر کے علاج میں دواؤں سے علاج (کیموتھیراپی) میں بھی خصوصی تربیت پائی ہے۔وہ روبوٹ کے ذریعے سرجری کرنے میں بڑی مہارت رکھتی ہیں۔

ڈاکٹر مریم انجم کے تحقیقی مقالے نیشنل اور انٹرنیشنل رسالوں میں شائع ہوتے ہیں۔ انہوں نے جب جنوبی کوریا میں منعقدہ میڈیکل سمپوزیم میں اپنا تحقیقی مقالہ پیش کیاتھا تو انہیں برازیل میں منعقد ہونے والی انٹرنیشنل میڈیکل کانفرنس میں شرکت کی دعوت اور اسکالر شپ کی پیش کش کی گئی تھی۔ڈاکٹر مریم کے بارے میں معلوم ہوا ہے کہ راجیو گاندھی یونیورسٹی آف میڈیکل سائنس کی سنڈیکیٹ ممبر بھی ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

کاروار اسپتال سے 12 مزید لوگ ڈسچارج

بھلے ہی  ضلع اُترکنڑا میں کورونا پوزیٹیو کے معاملے ہر روز سامنے آرہے ہوں، لیکن کاروار اسپتال میں ایڈمٹ کورونا کے متاثرین  روبہ صحت ہوکر ڈسچارج ہونے کا سلسلہ بھی برابر جاری ہے۔

اُترکنڑا میں پھر 36 کورونا پوزیٹیو؛ بھٹکل میں بھی کورونا کے بڑھنے کا سلسلہ جاری؛ آج ایک ہی دن 19 معاملات

اُترکنڑا میں کورونا کے معاملات میں روز بروز اضافہ کا سلسلہ جاری ہے اور آج منگل کو بھی ضلع کے مختلف تعلقہ جات سے 36 کورونا کے معاملات سامنے آئے ہیں جس میں صرف بھٹکل سے پھر ایک بار سب سے زیادہ  یعنی 19 معاملات سامنے آئے ہیں۔ کاروار میں 6،  ہلیال میں 3،  کمٹہ، ہوناور ...

دبئی سے بھٹکل و اطراف کے 181 لوگوں کو لے کر آج آرہی ہے دوسری چارٹرڈ فلائٹ؛ رات کو مینگلور ائرپورٹ میں ہوگی لینڈنگ

کورونا وباء اور اس کے بعد ہوئے لاک ڈاون سے  دبئی اور امارات میں پھنسے ہوئے 181 لوگوں کو لے کر آج دبئی سے دوسری چارٹرڈ فلائٹ مینگلور پہنچ رہی ہے۔ اس بات کا اطلاع بھٹکل کے معروف اورقومی سماجی ادارہ مجلس اصلاح و تنظیم کے نائب صدر  جناب عتیق الرحمن مُنیری نے دی۔

منگلورو:گروپور میں منڈلارہا ہے مزید پہاڑی کھسکنے کا خطرہ۔ قریبی گھروں کو کروایا گیاخالی۔ مکینوں میں مایوسی اور دہشت کا عالم

گروپور میں اتوار کے دن بنگلے گُڈے میں پہاڑی کھسکنے سے جہاں  تین  مکان زمین بوس اور دو بچے، صفوان (16سال) اور سہلہ (10سال) جاں بحق ہوگئے تھے وہاں پر مزید پہاڑی کھسکنے کا خطرہ لوگوں کے سر پر منڈلا رہا ہے۔

بھٹکل میں اب کورونا کا قہر؛ 45 معاملات سامنے آنے کے بعدحکام کی اُڑ گئی نیند؛ انتظامیہ نےکیا دوپہر دوبجے سے ہی لاک ڈاون کا اعلان

بھٹکل میں کورونا کو لے کر گذشتہ چار پانچ دنوں سے جس طرح کے خدشات ظاہر کئے جارہے تھے، بالکل وہی ہوا، آج ایک ہی دن 45 کورونا کے معاملات سامنے آنے سے نہ صرف حکام  کی نیندیں اُڑ گئیں بلکہ عوام میں بھی خوف وہراس کی لہر دوڑ گئی۔  حیرت کی بات یہ رہی کہ آج جن لوگوں کے رپورٹس پوزیٹیو ...

خطرے میں اسپین، 95 فیصد آبادی ہو سکتی ہے کورونا کا شکار: تحقیق

کورونا وائرس یعنی کووڈ-19 کے حوالہ سے اسپین میں کی گئی اسٹڈی میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ اسپین کی آبادی کا صرف 5فیصد ہی اینٹی باڈیز تیار کرسکا ہے، جس سے یہ بات ثابت ہوتی ہے کہ کورونا سے بچاؤ کے لیے ’ہرڈ امیونٹی‘ حاصل نہیں کی جاسکتی۔

کاروار اسپتال سے 12 مزید لوگ ڈسچارج

بھلے ہی  ضلع اُترکنڑا میں کورونا پوزیٹیو کے معاملے ہر روز سامنے آرہے ہوں، لیکن کاروار اسپتال میں ایڈمٹ کورونا کے متاثرین  روبہ صحت ہوکر ڈسچارج ہونے کا سلسلہ بھی برابر جاری ہے۔