کاروارمیں ایکسائز ڈپارٹمنٹ افسران نے 15کلو میٹر تک کیا اسمگلروں کاپیچھا ۔ 1.5لاکھ روپے مالیت کی شراب ضبط 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 14th September 2018, 11:20 AM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

کاروار 13؍ستمبر (ایس او نیوز)گوا سے شراب اسمگل کرنے کی کوشش ناکام بنانے میں محکمہ آبکاری کے افسران کو اس وقت بڑی کامیابی جب 15کلو میٹر تک پیچھا کرنے کے بعد شراب کا اسمگلر ان کے ہاتھ لگااور1.5لاکھ روپے مالیت کی شراب ضبط کرلی گئی۔

موصولہ رپورٹ کے مطابق شراب کی اسمگلنگ میں ملوث ملزم کا نام یوگیش ایس ہے جو کہ کاروار ماجالی کا رہنے والاہے۔ ایکسائز افسران کو مصدقہ اطلاع ملی تھی کہ شراب ایک بڑ ی کھیپ گوا سے شمالی کینرا میں اسمگل کی جانے والی ہے۔ اس لئے منگل کی آدھی رات سے ہی افسران تاک لگاکر بیٹھ گئے۔ صبح 2.30کے قریب ایک کار مینگینی گاؤں سے کاروار مین روڈ کی طرف آتی ہوئی دکھائی دی۔ ڈرائیور کو کار روکنے کا اشارہ کرنے پر اس نے کار نہیں روکی تو ایکسائز افسران نے اس کا پیچھا کرنا شروع کیا۔ کچھ کلو میٹر تک پیچھا کرنے کے بعد ایکسائز ڈپارٹمنٹ کی ایک اور کار ملزم کا پیچھا کرنے میں شامل ہوگئی۔اور 15کلومیٹر تک مسلسل پیچھا کرنے کے بعد ملزم کو دبوچنے میں افسران کامیاب ہوگئے۔

محکمہ آبکاری کے ڈپٹی کمشنر ایل اے منجو ناتھ نے بتایا کہ کاروار گوا چیک پوسٹ پر شراب اسمگلنگ روکنے کے لئے سخت بندوبست کیا گیا ہے۔ اس لئے اب شراب اسمگلروں نے جنگلی علاقے سے ہوتے ہوئے کاروار میں شراب لانے کے نئے راستے ڈھونڈنکالے ہیں۔اب وہ لوگ گوا سے شراب خرید کرکچے راستے سے کاروار سے قریب جنگلی علاقے میں واقع مینگینی گاؤں میں لے آتے ہیں۔ کاروار میں بیٹھا ہوا شراب کا ایک بڑا اسمگلریہ سارا کاروبار چلا رہا ہے۔ جب شراب مینگینی گاؤں میں پہنچ جاتی ہے تو پھر وہ اپنے دیگر ساتھیوں کی مدد سے وہاں سے شہر میں اسمگل کروالیتا ہے۔اس پورے ریکیٹ کے تعلق سے ایکسائز ڈپارٹمنٹ کو تفصیلات مل گئی ہیں اور جلد ہی مزید گرفتاریاں عمل میں آئیں گی۔‘‘

ایک نظر اس پر بھی

کیا شمالی کینرا سے شیورام ہیبار کے لئے وزارت کا قلمدان محفوظ رکھا گیا ہے؟

کرناٹکاکے وزیراعلیٰ  ایڈی یورپا نے دو دن پہلے اپنی کابینہ کی جو تشکیل کی ہے اس میں ریاست کے 13اضلاع کو اہمیت دیتے ہوئے وہاں کے نمائندوں کو وزارتی قلمدان سے نوازا گیا ہے۔اور بقیہ 17اضلاع کو ابھی کابینہ میں نمائندگی نہیں دی گئی ہے۔

ساگر مالا منصوبہ: انکولہ سے بیلے کیری تک ریلوے لائن بچھانے کے لئے خاموشی کے ساتھ کیاجارہا ہے سروے۔ سیکڑوں لوگوں کی زمینیں منصوبے کی زد میں آنے کا خدشہ 

انکولہ کونکن ریلوے اسٹیشن سے بیلے کیری بندرگاہ تک ’ساگر مالا‘ منصوبے کے تحت ریلوے رابطے کے لئے لائن بچھانے کا پلان بنایا گیا اور خاموشی کے ساتھ اس علاقے کا سروے کیا جارہا ہے۔

ماڈرن زندگی کا المیہ: انسانوں میں خودکشی کا بڑھتا ہوا رجحان۔ ضلع شمالی کینرا میں درج ہوئے ڈھائی سال میں 641معاملات!

جدید تہذیب اور مادی ترقی نے جہاں انسانوں کو بہت ساری سہولتیں اور آسانیاں فراہم کی ہیں، وہیں پر زندگی جینا بھی اتنا ہی مشکل کردیا ہے۔ جس کے نتیجے میں عام لوگوں اور خاص کرکے نوجوانوں میں خودکشی کا رجحان بڑھتا جارہا ہے۔

منگلورو پولیس نے ایک اور مشکوک کار کو پکڑا؛ پنجاب نمبر پلیٹ والی کار کے تعلق سے پولس کو شکوک و شبہات

دو دن دن پہلے لٹیروں اور جعلسازوں کی ایک ٹولی کے قبضے سے منگلورو پولیس نے ایسی کار ضبط کی تھی جس پر نیشنل کرائم انویسٹی گیشن بیوریو، گورنمنٹ آف انڈیا لکھا ہوا تھا۔اب مزید ایک مشکوک کار کو پولیس نے اپنے قبضے میں لیا ہے۔ جس پر بھی گورنمینٹ آف انڈیا لکھا ہوا ہے۔

مرڈیشور ساحل پر ماہی گیروں اور انتظامیہ افسران کے درمیان پارکنگ جگہ کو لےکر تنازعہ: ماہی گیروں کا احتجاج  

مرڈیشور میں مچھلی شکار پیشہ کے لئے جگہ مختص کرنے اور ماہی گیر کشتیوں کو  محفوظ رکھنے کےلئے جگہ متعین کرنے کے متعلق   ماہی گیروں اور مقامی انتظامیہ کے درمیان پھر ایک بار تنازعہ پیدا ہوگیا ہے۔

کاروارمیں ریڈ الرٹ کے باوجود کوسٹل سیکیوریٹی پولیس کی انٹر سیپٹر کشتیاں نہیں اتریں سمندر میں!

ابھی دو دن پہلے ملک کی خفیہ ایجنسی نے سمندری راستے سے دہشت گردانہ حملہ ہونے کا خدشہ ظاہر کیا تھا جس کے بعد پوری ریاست کرناٹکا میں اور بالخصوص ساحلی کرناٹکا میں ریڈ الرٹ جاری کیا گیا ہے۔

منگلورو:ڈاکٹرمریم انجم بن گئیں خواتین سے متعلقہ کینسرکے علاج میں ایم سی ایچ ڈگری پانے والی جنوبی کینرا کی پہلی ماہر ڈاکٹر 

ڈاکٹر مریم انجم نے خواتین سے متعلقہ کینسر کے شعبے میں خصوصی مہارت والی ایم سی ایچ کی ڈگری حاصل کی ہے۔ جس کے ساتھ انہیں جنوبی کینرا میں اس طرح کی مہارت پانے والی پہلی ڈاکٹر ہونے کا اعزاز ملا ہے۔