اُترکنڑا رکن پارلیمان اننت کمار ہیگڈے کو سوشیل میڈیا پر بنایاجارہا ہے تنقید کا نشانہ

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 20th June 2019, 7:15 PM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بھٹکل 20/جون (ایس او نیوز)ضلع شمالی کینرا کے ایم پی اننت کمار ہیگڈے نے جب پارلیمنٹ میں سنسکرت زبان میں حلف اٹھایا تو سوشیل میڈیا پر ان کے خلاف نکتہ چینی اور تنقید کا سلسلہ چل پڑا ہے۔

 اننت کمار ہیگڈے کو تنقید کا نشانہ بنانے کا اصل سبب یہ بتایا جاتا ہے کہ انہوں نے ضلع شمالی کینرا میں سوپراسپیشالٹی اسپتال قائم کرنے کے لئے چلائی جارہی مہم پر کوئی توجہ نہیں دی تھی اور اپنا کوئی رد عمل ظاہر نہیں کیا تھا۔جبکہ کرناٹکا کے وزیر اعلیٰ کمارا سوامی تک نے اس مہم پر اپنا مثبت ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ضروری اقدام کرنے کا تیقن دیا تھا۔ اننت کمار ہیگڈے نے جدید ترین سہولتوں والے اسپتال کی مانگ کرنے والوں کو اپنے ٹویٹر اکاؤنٹ پر بلاک بھی کردیا تھا جس سے عوام اور خاص کرکے اسپتال کے لئے مہم چلانے والے نوجوان اننت کمار کے خلاف برہم ہوگئے تھے۔

 اننت کمارہیگڈے نے جب پارلیمان میں سنسکرت میں حلف لیا تو سوشیل میڈیا پر فقرے بازی کا سلسلہ چل پڑا جس میں طنزیہ طورپر یہ بات بھی کہی گئی ہے کہ اننت کمار صرف سنسکرت جانتے ہیں اور کنڑا اورانگلش سے بابلد ہیں اس لئے انہوں نے اسپتال کے مطالبے والی مہم کا کوئی جواب نہیں دیا ہوگا۔ بعض افراد نے ٹویٹر پراننت کمار کے سامنے سنسکرت میں ہی اسپتال کی مانگ رکھی ہے۔لیکن اننت کمار نے اس تعلق سے ابھی تک کوئی ردعمل ظاہر نہیں کیا ہے۔


 

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں کورونا سے لڑنے تنظیم کےذمہ داران بھی نہایت متحرک؛ پوری ٹیم میدان میں کام کررہی ہے؛ چوطرفہ ہورہی ہے ستائش

اس وقت نہ صرف شہر بھٹکل بلکہ پوری دنیا کورونا وائرس کی وباء سے  حیران وپریشان ہے ایک طرح سے اس وباء سے  پوری دنیا کا نظام درہم برہم ہوگیا ہے جبکہ لاک ڈاؤن کے اعلان کے بعد جس طرح سے ملک بھر میں غریب عوام اور یومیہ مزدور طبقہ کو دقتوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے اس سے ہرکوئی واقف ہیں ...

بھٹکل میں شدت کی گرمی کے بعدوقت سے پہلے ہی برسی بارش؛ساحلی علاقوں میں بجلیوں اور بادلوں کی گڑگڑاہٹ کے ساتھ لوگوں کی ہوئی صبح

بھٹکل سمیت ساحلی کرناٹک میں گذشتہ کچھ دنوں سے شدت کی گرمی سے عوام پریشان تھے، درجہ حرارت بڑھتے ہوئے بھٹکل میں پیر کو 37 ڈگری سیلسیس تک پہنچ گیا تھا، مگر منگل صبح قریب 5 بجے  اچانک آسمان میں بجلیوں کی زبردست چمک اور  بادلوں کی گڑگڑاہٹ کے ساتھ بارش شروع ہوگئی اور دیکھتے ہی ...

بھٹکل سے مزید تھوک کے نمونے جانچ کے لئے روانہ؛ آج موصول ہونے والی تمام رپورٹس بھی نیگیٹیو؛ کیا کسی کی رپورٹ پوزیٹیوآنے کا خدشہ ہے ؟

کورونا وائرس کو لے کر شہر سمیت پورے ملک میں لاک ڈاون جاری ہے اور ہر روز مشکوک لوگوں کے تھوک کے نمونے جانچ کے لئے روانہ کئے جارہے ہیں۔اب تک بھٹکل سے جن لوگوں کے تھوک کے نمونے  جانچ کے لئے روانہ کئے جارہے تھے،  راحت کی خبریں موصول ہورہی تھیں یہاں تک کہ مینگلور اور کاروار میں ...

بھٹکل میں کورونا وائرس کو لے کر کیاسوشیل میڈیا میں کسی طرح کی سازش رچی جارہی ہے ؟ مسلمانوں سے دور رہنے اورکسی بھی طرح کا لین دین نہ رکھنے کے مسیجس وائرل

ایسا لگتا ہے کہ کورونا وائرس کی وباء فسطائی اور فرقہ وارانہ ذہنیت والے غیر مسلموں کے لئے مسلمانوں کے خلاف اپنی بھڑاس نکالنے کا نیا ہتھیار بن گئی ہے۔ ایک طرف کورونا وائرس کے نام پر مسلمانوں سے دوری رکھنے کی تلقین کی جارہی ہے  اور مسلمانوں سے کسی بھی طرح کی خریداری کرنے کی ...

کورونا کے نام پر مسلمانوں پر حملہ؛ باگلکوٹ میں تین مسلم لوگوں کو ایک گاوں میں داخل ہونے سے روکنے کی واردات

باگلکوٹ کے مدھول پولیس اسٹیشن کے حدود میں آنے والے ایک گاؤں میں چند شرپسندوں نے مسلمانوں کو اپنے گاؤں میں داخل ہونے سے عملاً روکتے ہوئے ان پر حملہ کرنے کی واردات پیش آئی ہے  جس کی ویڈیو کلپ بھی سوشیل میڈیا پر  وائرل ہوگئی ہے۔

بھٹکل میں شدت کی گرمی کے بعدوقت سے پہلے ہی برسی بارش؛ساحلی علاقوں میں بجلیوں اور بادلوں کی گڑگڑاہٹ کے ساتھ لوگوں کی ہوئی صبح

بھٹکل سمیت ساحلی کرناٹک میں گذشتہ کچھ دنوں سے شدت کی گرمی سے عوام پریشان تھے، درجہ حرارت بڑھتے ہوئے بھٹکل میں پیر کو 37 ڈگری سیلسیس تک پہنچ گیا تھا، مگر منگل صبح قریب 5 بجے  اچانک آسمان میں بجلیوں کی زبردست چمک اور  بادلوں کی گڑگڑاہٹ کے ساتھ بارش شروع ہوگئی اور دیکھتے ہی ...

مینگلور کے قریب بنٹوال میں دیپ جلاؤ مہم کے دوران اقلیتوں کے گھروں پر پتھراؤ۔ پولیس میں درج کی گئی شکایت

کورونا وائرس کے خلاف متحدہ طور پر جدوجہد کی علامت کے طور پر وزیر اعظم نریندرا مودی نے دیپ جلانے کی جو آواز دی تھی، اس کے دوران بنٹوال میں اقلیتوں کے گھروں پتھراؤ کرنے اور پٹاخے پھینکنے کی واردات پیش آئی ہے۔