پی ایف آئی کارکنان کے دفاتر میں این آئی اے کے چھاپے ؛ بھٹکل ، مینگلور، اُڈپی، کنداپور اور سرسی سمیت کئی علاقوں میں احتجاجی مظاہرہ ؛ ہائی وے بلاک کرنے کی کوشش

Source: S.O. News Service | Published on 22nd September 2022, 9:05 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

بھٹکل 22/ستمبر (ایس او نیوز)    علی الصباح   تین اور چار  بجے ملک کے مختلف حصوں میں  پی ایف آئی  اور ایس ڈی پی آئی کے دفاتر اور لیڈران کے گھروں  میں این آئی اے کی چھاپہ ماری اور  سو سے زائد لیڈران و کارکنان کی گرفتاری کے بعد   ملک کے کئی حصوں میں پی ایف آئی  کارکنان نے احتجاجی مظاہرہ کیا ہے اور این آئی اے سمیت بی جے پی  حکومت کے خلاف نعرے بازی  کی ہے۔ اسی طرح کا احتجاجی مظاہرہ  آج جمعرات  بعد نماز عصر بھٹکل میں بھی  کیا گیا جس کے دوران پی ایف آئی کارکنان نے  نیشنل ہائی وے کو بلاک کرنے کی کوشش کی، مگر پولس نے مداخلت کرتے ہوئے انہیں ہائی وے کو بلاک کرنے  سے روک دیا۔

سرکیوٹ ہاوس کے باہر ہاتھوں میں  پی ایف آئی (پاپولر فرنٹ آف انڈیا) کے جھنڈے لے کر  کارکنان نے  این آئی اے گو بیک کے نعرے لگائے ، ساتھ ساتھ  سنگھ پریوار، بجرنگ دل اور بی جے پی سرکار مردہ باد کے بھی نعرے لگائے۔ اس دوران جب  کارکنوں نے اچانک سڑک کنارے سے آگے بڑھتے ہوئے نیشنل ہائی وے کو بلاک کرنے کی کوشش کی تو موقع پر موجود پولس فورس نے انہیں  آگے بڑھ کر روک لیا اور انہیں پیچھے ڈھکیلا۔ اس موقع پر جب سرکل پولس انسپکٹر دیواکر نے  مظاہرین سے کہا کہ  وہ پرامن احتجاج کرسکتے ہیں مگر ہائی وے کو بند کرنا غیر قانونی ہے، تو پی ایف آئی کارکنان نے سوال کیا کہ  کیا رات کے اندھیرے میں پی ایف آئی لیڈران کے گھروں میں گھسنا اور لیڈران کو گرفتار کرنا غیر قانونی  نہیں ہے، اس موقع پر کچھ دیر کے لئے پولس اور مظاہرین کے درمیان  لفظی جھڑپ  ہوئی۔ پی ایف آئی کے ضلعی صدرمولوی عبدالکریم نے متنبہ کرایا کہ اگر گرفتار پی ایف آئی لیڈران کے خلاف نا انصافی ہوتی ہے اور اُنہیں غیر قانونی طور پر حراست میں رکھا جاتا ہے  تو پھر ہم بڑی تعداد میں اپنے کارکنوں کو منظم کریں گے اور   ضلعی سطح پر بہت بڑا احتجاجی مظاہرہ درج کرایا جائے گا۔ ڈسٹرکٹ جنرل سکریٹری  مقصود، سلمان، ضمان اور دیگر کافی کارکنان موجود تھے۔

اُدھر سرسی میں  بھی آج پی ایف آئی دفتر میں  این آئی اے کا چھاپہ پڑا ہے اور بعض چیزوں کو   ضبط کرکے لے جایا گیا ہے ،  جس کی مخالفت میں سرسی میں  پی ایف آئی کارکنوں نے احتجاجی مظاہرہ کیا  اور پی ایف آئی لیڈران کی جلد رہائی کا مطالبہ کیا ۔ یہاں جب ہائی وے کو بند کرنے کی کوشش کی گئی تو پولس نے انہیں روک دیا، اس دوران کچھ دیر کے لئے دھکا مُکی  ہوئی۔ پتہ چلا ہے کہ پولس نے 32 مظاہرین کو گرفتار کیا ہے۔

ہبلی ، اُڈپی، کنداپور اور  مینگلور میں مظاہرہ  :      ایس ڈی پی آئی اور پی ایف آئی  کے دفاتر  میں این آئی اے کے چھاپوں سمیت کئی   قائدین کی گرفتاری کی   مذمت کرتے ہوئے مینگلور، ہبلی ، کنداپوراور اُڈپی میں بھی  احتجاجی مظاہرے کئے گئے اور ان جگہوں پر ہائی وے کو بلاک کرنے کی کوشش کی گئی۔ اس دوران  ہبلی اور اُڈپی میں  مظاہرین کو منتشر کرنے کے لئے پولس کو ہلکی لاٹھی چارج کا بھی سہارا لینا پڑا۔ جبکہ  مینگلور، اُڈپی، کنداپور اور ہبلی میں کئی مظاہرین کو گرفتار  کیا گیا۔

ہبلی سے ملی اطلاع کے مطابق  وہاں احتجاجی مظاہرین نے کول پیٹ کے قریب بینگلور ہائی وے کی  سڑک کو  اچانک  بند  کرنے کی کوشش کی اور ہیومین چین بناتے ہوئے    مظاہرہ کیا جس پر پولس نے انہیں روکنے کی کوشش کی، اچانک سڑ ک کو بند کئے جانے سے  ٹریفک نظام متاثر ہوا۔  بعد میں پولس نے ہلکی لاٹھی چارج کرتے ہوئے مظاہرین کو  منتشر کردیا۔ اس موقع پر قریب پچاس مظاہرین کو پولس نے گرفتار بھی کیا۔ پتہ چلا ہے کہ دھکا مکُی کو دیکھتے ہوئے کچھ دیر کے لئے یہاں حالات کشیدہ بھی  ہوئے۔  اسی طرح کا احتجاجی مظاہرہ  کنداپور اور اُڈپی میں بھی کیا گیا اُڈپی میں  ڈائن سرکل پر جمع ہوکر پی ایف آئی کارکنا ن نے  سڑک جام کرنے کی کوشش کی، جس پر پولس نے ہلکی لاٹھی چارج کرتے ہوئے مظاہرین کو منتشر کیا۔ مینگلور میں نیلّی کائی روڈ پر   ایس ڈی پی آئی کارکنان نے احتجاجی مظاہرہ کرتے ہوئے  این آئی اے کے خلاف نعرے بازی کی،  یہاں بھی پولس نے کئی مظاہرین کو گرفتار کیا۔ اسی طرح پی ایف آئی کارکنا ن نے کنداپور میں  کچھ دیر کے لئے نیشنل ہائی وے کو بند کرتے ہوئے سڑک کے بیچ پر ہی دھرنے پر بیٹھ گئے۔  موقع پر پہنچی پولس نے  فوری انہیں ہائی وے ہٹاتے ہوئے ہائی وے کو سواریوں کے لئے خالی کرایا جبکہ کئی مظاہرین کو گرفتار بھی کیا گیا۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل: ایس پی کے تبادلے کی افواہوں کو ڈسٹرکٹ انچارج منسڑ نے دی مزید ہوا، کہا؛ افسران کے تبادلے کوئی نئی بات نہیں!

ایماندار افسر کے طورپر مشہور اترکنڑا ضلع ایس پی ڈاکٹر سمن پنیکر کے تبادلے کی افواہوں کو ہوا دیتےہوئے ضلع نگراں کار وزیر پجاری نے کہاکہ افسران کے تبادلے کوئی نئی بات تو نہیں ہے۔

بھٹکل: معاوضہ تقسیم میں تفریق پر رکن اسمبلی کا سخت اعتراض : وزیر شری نواس پجاری نے افسران کو کی فوری کارروائی کی تاکید

گذشتہ ماہ 2اگست کو برسی موسلا دھاربارش سےنقصان اٹھانے والےمتاثرین میں امداد تقسیم کےدوران تفریق کی گئی ہے اور غریبوں کو امداد فراہم کرنےمیں افسران پس و پیش کئے جانے پر رکن اسمبلی سنیل نائک نے سخت اعتراض جتایا ۔

ہلیال:  آوارہ کتوں کو پکڑنے کا معاملہ - چیف آفیسر کے خلاف کیس درج 

آوارہ کتوں کو پکڑ کر جنگل میں چھوڑنا ہلیال ٹی ایم سی کے چیف آفیسر پرشورام شیندے کو مہنگا پڑا کیوںکہ اس کارروائی کو ظالمانہ انداز میں انجام دئے جانے کا الزام لگاَتے ہوئے چیف آفیسر کے خلاف پولیس میں معاملہ درج کیا گیا ہے ۔

صدر جمہوریہ دروپدی مرمو نے میسور و کے دس روزہ دسہرہ تقریبات کا افتتاح کیا

دوماہ کی تیاریوں کے بعد آج بروز پیر صدر جمہوریہ دروپدی مرمو نے میسور کے چامنڈی پہاڑ پر دس روزہ دسہرہ تقریبات کا چامنڈیشوری دیوی کی مورتی پر پھول نچھاور کرکے افتتاح کیا۔ پہلے صدر جمہوریہ نے چامنڈیشوری دیوی کے درشن کئے اور اس مندر کی تاریخ کے تعلق سے تفصیل سے جانکاری حاصل کی۔

ذہنی دباؤ بیسویں صدی کا ایک مہلک مرض؛ آئیٹا گلبرگہ کے ورک شاپ سے ڈاکٹر عرفان مہا گا وی کا خطاب

نئے دور کی شدید ترین بیماریوں میں ذہنی دباؤ اور اس سے پیدا ہونے والے اثرات کو مہلک امراض میں شمار کیا جاتا ہے ۔ روز مرہ کی مشینی زندگی میں ذہنی دباؤ  میں بہت زیادہ اضافہ ہوا ہے ۔ لیکن اس کو کیسے کم کیا جائے اس پر غور کر نے اور اس سلسلے میں کوشش کرنے کی ضرورت ہے ۔

پی ایف آئی پر ای ڈی اور این آئی اے کے کریک ڈاون کے بعد ایس ڈی پی آئی نے کہا؛ ایجنسیوں نے کبھی بھی آر ایس ایس اور اس سے منسلک تنظیموں پر چھاپہ نہیں مارا

 سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا (SDPI) کرناٹک یونٹ نے بنگلور میں اپنے ریاستی مرکزی دفتر میں ایک پریس کانفرنس کا انعقاد کرتے ہوئے الزام لگایا کہ ای ڈی اور این آئی اے نے کبھی بھی آر ایس ایس اور اس سے منسلک تنظیموں پر چھاپہ نہیں مارا بلکہ صرف پاپولرفرنٹ آف انڈیا کو ہی نشانہ بنایا ...