کووِڈ 19اِپ ڈیٹ: بڑھتی ہوئی مریضوں کی تعدادسے اڈپی ضلع ’ریڈ زون‘ کی طرف بڑھ رہا ہے آگے !! ضلعی انتظامیہ حالات سے نپٹنے کے لئے تیار؛ 31/مئی تک سفر کرنے پر پابندی

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 22nd May 2020, 2:40 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

اُڈپی 22/مئی (ایس او نیوز) ضلع انتظامیہ، محکمہ صحت اور محکمہ پولیس کی کوششوں سے اڈپی ضلع میں کورونا کی وباء پر ایک حد تک قابو پالیا گیا تھا اور دو ہفتے پہلے اس کو ’گرین زون‘ میں شامل کیاگیا تھا۔  لیکن بیرون ملک،بیرون ضلع اور بیرون ریاست سے یہاں آنے والے لوگوں میں کووِڈ 19کی تعدادمیں روزبروز اضافہ ہوتا جارہا ہے جس کے بعد اب یہ ضلع ’ریڈ زون‘ زمرے میں شامل ہونے کی طرف آگے بڑھ رہا ہے۔

 اڈپی ضلع کی تازہ صورت حال یہ ہے کہ یہاں ایک ہی دن میں 28نئے پوزیٹیو کیس سامنے آئے   ہیں جو ریاست کے کسی بھی ضلع میں پہلی بار ہوا ہے۔ ضلع انتظامیہ اور دیگر محکمہ جات کے ساتھ عوام  بھی اتنی بڑی تعداد میں کورونا کے معاملات سامنے آنے پر ہکا بکا رہ گئے ہیں اور صورتحال  بڑی ہی حیران کن اور خوفناک ہوکر رہ گئی ہے۔جانکاروں نے اندازہ لگایا ہے کہ دیگر اضلاع اور ریاستوں سے جس بڑی تعداد میں لوگ اڈپی ضلع میں واپس لوٹ رہے ہیں اس کی وجہ سے پوزیٹیو معاملات کی تعداد سیکڑوں میں بدل سکتی ہے۔اور یہ بات ضلع انتظامیہ کی تیاری اور مرض پر قابوپانے کی صلاحیت کے لئے ایک بڑا چیلنج بن گئی ہے۔ایک سوال یہ بھی اٹھ رہا ہے کہ باہر سے آنے والے افراد کو جن کوارنٹین مراکز میں رکھا گیا ہے وہاں پر صفائی ستھرائی اور حفظان صحت کے اصولوں پربھی سوالات اُٹھ رہے ہیں کہ آیا وہاں  ٹھیک طریقے سے دھیان دیا جارہا ہے یا وہاں پر کوتاہیاں ہورہی ہیں۔کیونکہ کوارنٹین کیے گئے لوگوں کو گھروں سے کھانا پہنچانے اور ان کے کپڑے اپنے اپنے گھروں کو لے جانے کی بات سننے میں آئی ہے جس کی وجہ سے گھروں میں رہنے والوں کے اندر بھی مرض پھیلنے اور کمیونٹی سطح پر وباء عام ہونے کا خدشہ پیدا ہوگیا ہے۔

 تاحال 7ہزار سے زائد لوگ دوسرے اضلاع سے اڈپی میں داخل ہوچکے ہیں۔اڈپی ضلع میں ایک ہی کووِڈ اسپتال ہے جہاں 70بستروں کا انتظام ہے۔ گزشتہ ایک ہفتے میں کووِڈ مریضوں کی تعداد یہاں پر 3سے بڑھ کر 48ہوگئی ہے۔ اس اسپتال میں فی الحال 43مریض داخل ہیں اور صرف27بستر اسپتال میں خالی ہیں۔ اور جس رفتار سے مریضوں کی تعداد بڑھ رہی ہے اسے دیکھ کر لگتا ہے کہ آئندہ دوچار دنوں میں شاید اسپتال کے اندر بستروں کی قلت کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

 تازہ وبائی حالات کو ویکھتے ہوئے ہیبری اور کوچورو علاقے کو مکمل سیل ڈاؤن کیا گیا ہے۔کیونکہ یہاں کے ایک ہوٹل میں ممبئی سے آنے والوں کو کوارنٹین کیا گیا تھا اور ان میں سے دو افراد کی رپورٹ پوزیٹیو آئی ہے۔اس ہوٹل کے علاقے میں 300میٹر تک کی سڑک کو سیل ڈاؤن کیا گیا ہے۔اور اس کے اطراف میں لوگوں کی چہل پہل پر پابندی لگادی گئی ہے۔

ایڈیشنل ڈپٹی کمشنرسدا شیوا پربھو نے کہا ہے کہ بیرون ضلع سے آنے والوں میں پوزیٹیو معاملات کی زیادتی ایک تشویش ناک پہلو ہے لیکن ضلع انتظامیہ تمام حالات کا سامنا کرنے کے لئے تیار ہے۔ انہوں نے کوارنٹین میں رکھے گئے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ لوگ خود اپنے ذاتی حفظان صحت کا پورا پورا خیال رکھیں۔فی الحال بیندور کوارنٹین سینٹر میں 2,243، کنداپور میں 2,119اور کارکلا میں 1,028افراد کو کوارنٹین کے لئے رکھا گیا ہے۔

 تازہ حالات کے پیش نظراڈپی ضلع میں اندرون ضلع سفر کرنے اور ایک جگہ سے دوسری جگہ جانے  کے لئے پابندی لگادی گئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک میں تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے کورونا؛ 122 نئے کیسس، صرف گلبرگہ میں ہی 29 پوزیٹو کی تصدیق، دکشن کنڑا اور اُڈپی میں بھی بڑھ رہے ہیں معاملات

ریاست کرناٹک میں  کورونا کیسس تھمنے کا نام نہیں رہے ہیں اور ہرروز سو سے زائد معاملات درج کئے جارہےہیں ۔ آج بدھ کو ریاست میں 122 کورونا پوزیٹو کیسس کی تصدیق کی گئی ہے جس میں سب سے زیادہ گلبرگہ سے 28 معاملات سامنے آئے ہیں، یادگیر سے16، ہاسن سے 15جبکہ ضلع اُترکنڑا میں چھ،  پڑوسی ضلع ...

انکولہ ۔ہبلی ریلوے منصوبہ : ماہرین ماحولیات کے خلاف اسنوٹیکر گرم

انکولہ۔ ہبلی ریلوے لائن منصوبے کو لے کر ماہرین ماحولیات کے خلاف  جے ڈی ایس لیڈر آنند اسنوٹیکر نے سخت اعتراض جتاتے ہوئے کہا ہے کہ اس منصوبے کے تعلق سے مداخلت یا مخالفت نہ کریں تو بہتر ہے ورنہ ماہرین ماحولیات کی طرف سے فاریسٹ کی جتنی زمین ہتھیائی گئی ہے ثبوت کے ساتھ پیش کرنے کی ...

اترکنڑا کے کمٹہ میں پی یو دوم کے سالانہ  پرچوں کے جانچ مرکز کے قیام کا مطالبہ

اترکنڑا کے کمٹہ تعلقہ  میں پی یو سال دوم کے سالانہ پرچوں کے جانچ مرکز کے قیام کا مطالبہ لے کر اترکنڑا پی یو لکچررس اسوسی ایشین نے ضلع ایڈیشنل ڈی سی ناگراج سنگریر کی معرفت ریاستی وزیر تعلیم سریش کمار کو   میمورنڈم سونپا۔

ضلع اُترکنڑا میں کورونا کےپھر 6 معاملات؛سداپور میں بھی پہنچ گیا کورونا

ضلع اُترکنڑا میں آج بدھ کو مزید چھ  کورونا پوزیٹو معاملات سامنے آنے کے ساتھ ہی  ضلع میں کورونامتاثرین کی تعداد بڑھ کر 73 ہوگئی ہے۔  ضلع میں انکولہ، ہلیال اور سداپور  ایسے تعلقہ جات تھے جہاں اب تک کورونا نے دستک نہیں دی تھی، مگر آج سداپور کے ایک شخص میں بھی کورونا کے اثرات ...

بھٹکل میں خدمات انجام دینے والے کورونا کے خصوصی آفسر ڈاکٹر شرتھ نائیک اب ہوں گے ضلع ہیلتھ آفسر

بھٹکل میں کورونا وباء پر قابو پانے کے لئے کاروار سے ڈاکٹر شرتھ نائیک کو بھٹکل روانہ کرکے انہیں نوڈل آفسر کی ذمہ داری سونپی گئی تھی، اُنہیں اب ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفسر کے طور پر نامزد کیا گیا ہے۔ ذرائع سے ملی اطلاع کے مطابق  ڈسٹرکٹ ہیلتھ آفسر کے طور پرخدمات انجام دینے والے  ڈاکٹر ...

بھٹکل میں ایک شخص نے کی خودکشی

یہاں آزادنگر فورتھ کراس میں ایک 22 سالہ نوجوان نے گھر کے ایک کمرے میں ہی  چھت سے لٹک کر خودکشی کرلی جس کی شناخت محمد مستقیم شیخ کی حیثیت سے کی گئی ہے۔

کرناٹک میں تھمنے کا نام نہیں لے رہا ہے کورونا؛ 122 نئے کیسس، صرف گلبرگہ میں ہی 29 پوزیٹو کی تصدیق، دکشن کنڑا اور اُڈپی میں بھی بڑھ رہے ہیں معاملات

ریاست کرناٹک میں  کورونا کیسس تھمنے کا نام نہیں رہے ہیں اور ہرروز سو سے زائد معاملات درج کئے جارہےہیں ۔ آج بدھ کو ریاست میں 122 کورونا پوزیٹو کیسس کی تصدیق کی گئی ہے جس میں سب سے زیادہ گلبرگہ سے 28 معاملات سامنے آئے ہیں، یادگیر سے16، ہاسن سے 15جبکہ ضلع اُترکنڑا میں چھ،  پڑوسی ضلع ...

گجرات کے سورت سے نکلی ٹرین ، بہار کے چھپرا کے بجائے پہنچی کرناٹک کے بنگلورو: مزدورں کا حال بے حال

لاک ڈاؤن کی مدت میں مزدوروں کو ان کے وطن لوٹانے گجرات سے نکلی ایک مزدور ٹرین (شریمک ریل ) بہار پہنچنے کے بجائے کرناٹکا کے بنگلورو پہنچ کر سب کو حیرت میں ڈال دیا ہے۔ گرچہ یہ ایک مذاق لگتا ہے مگر ہے حقیقت۔ اسی طرح اور ایک خصوصی مزدور ریل گجرات کے سورت سے 1200مزدوروں کو لے کر بہار کے ...

ہائی کورٹ فیصلے کے بعد ہی ایس ایس ایل سی امتحانات

ایس ایس ایل سی امتحانات منسوخ کئے جانے کی اپیل کرتے ہوئے ہائی کورٹ میں ایک مفاد عامہ عرضی داخل کی گئی ہے۔ اس عرضی پر سماعت اور تصفیہ کے بعد ہی امتحان کے تعلق سے مزید تفصیلات پیش کی جاسکیں گی۔

کیا کرناٹکا میں یکم جون سے مسجد، گرجا گھر اور مندروں کو کھولنے کی دی جائے گی اجازت ؟

کورونا وائرس کے انفیکشن کو پھیلنے سے روکنے کے لئے ملک میں لاک ڈاؤن لاگو ہے۔لاک ڈاؤن 4.0 میں حکومت کی جانب سے بہت سی مراعات دی گئی ہیں، تاہم مندر، مسجد کو لے کر پابندیاں جاری ہیں لیکن حکومت نے لاک ڈاؤن میں رعایت کو لے کر ریاستوں کو بھی فیصلہ لینے کا حق دیا تھا۔دریں اثنا کرناٹک ...