کووِڈ 19اِپ ڈیٹ: بڑھتی ہوئی مریضوں کی تعدادسے اڈپی ضلع ’ریڈ زون‘ کی طرف بڑھ رہا ہے آگے !! ضلعی انتظامیہ حالات سے نپٹنے کے لئے تیار؛ 31/مئی تک سفر کرنے پر پابندی

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 22nd May 2020, 2:40 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

اُڈپی 22/مئی (ایس او نیوز) ضلع انتظامیہ، محکمہ صحت اور محکمہ پولیس کی کوششوں سے اڈپی ضلع میں کورونا کی وباء پر ایک حد تک قابو پالیا گیا تھا اور دو ہفتے پہلے اس کو ’گرین زون‘ میں شامل کیاگیا تھا۔  لیکن بیرون ملک،بیرون ضلع اور بیرون ریاست سے یہاں آنے والے لوگوں میں کووِڈ 19کی تعدادمیں روزبروز اضافہ ہوتا جارہا ہے جس کے بعد اب یہ ضلع ’ریڈ زون‘ زمرے میں شامل ہونے کی طرف آگے بڑھ رہا ہے۔

 اڈپی ضلع کی تازہ صورت حال یہ ہے کہ یہاں ایک ہی دن میں 28نئے پوزیٹیو کیس سامنے آئے   ہیں جو ریاست کے کسی بھی ضلع میں پہلی بار ہوا ہے۔ ضلع انتظامیہ اور دیگر محکمہ جات کے ساتھ عوام  بھی اتنی بڑی تعداد میں کورونا کے معاملات سامنے آنے پر ہکا بکا رہ گئے ہیں اور صورتحال  بڑی ہی حیران کن اور خوفناک ہوکر رہ گئی ہے۔جانکاروں نے اندازہ لگایا ہے کہ دیگر اضلاع اور ریاستوں سے جس بڑی تعداد میں لوگ اڈپی ضلع میں واپس لوٹ رہے ہیں اس کی وجہ سے پوزیٹیو معاملات کی تعداد سیکڑوں میں بدل سکتی ہے۔اور یہ بات ضلع انتظامیہ کی تیاری اور مرض پر قابوپانے کی صلاحیت کے لئے ایک بڑا چیلنج بن گئی ہے۔ایک سوال یہ بھی اٹھ رہا ہے کہ باہر سے آنے والے افراد کو جن کوارنٹین مراکز میں رکھا گیا ہے وہاں پر صفائی ستھرائی اور حفظان صحت کے اصولوں پربھی سوالات اُٹھ رہے ہیں کہ آیا وہاں  ٹھیک طریقے سے دھیان دیا جارہا ہے یا وہاں پر کوتاہیاں ہورہی ہیں۔کیونکہ کوارنٹین کیے گئے لوگوں کو گھروں سے کھانا پہنچانے اور ان کے کپڑے اپنے اپنے گھروں کو لے جانے کی بات سننے میں آئی ہے جس کی وجہ سے گھروں میں رہنے والوں کے اندر بھی مرض پھیلنے اور کمیونٹی سطح پر وباء عام ہونے کا خدشہ پیدا ہوگیا ہے۔

 تاحال 7ہزار سے زائد لوگ دوسرے اضلاع سے اڈپی میں داخل ہوچکے ہیں۔اڈپی ضلع میں ایک ہی کووِڈ اسپتال ہے جہاں 70بستروں کا انتظام ہے۔ گزشتہ ایک ہفتے میں کووِڈ مریضوں کی تعداد یہاں پر 3سے بڑھ کر 48ہوگئی ہے۔ اس اسپتال میں فی الحال 43مریض داخل ہیں اور صرف27بستر اسپتال میں خالی ہیں۔ اور جس رفتار سے مریضوں کی تعداد بڑھ رہی ہے اسے دیکھ کر لگتا ہے کہ آئندہ دوچار دنوں میں شاید اسپتال کے اندر بستروں کی قلت کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے۔

 تازہ وبائی حالات کو ویکھتے ہوئے ہیبری اور کوچورو علاقے کو مکمل سیل ڈاؤن کیا گیا ہے۔کیونکہ یہاں کے ایک ہوٹل میں ممبئی سے آنے والوں کو کوارنٹین کیا گیا تھا اور ان میں سے دو افراد کی رپورٹ پوزیٹیو آئی ہے۔اس ہوٹل کے علاقے میں 300میٹر تک کی سڑک کو سیل ڈاؤن کیا گیا ہے۔اور اس کے اطراف میں لوگوں کی چہل پہل پر پابندی لگادی گئی ہے۔

ایڈیشنل ڈپٹی کمشنرسدا شیوا پربھو نے کہا ہے کہ بیرون ضلع سے آنے والوں میں پوزیٹیو معاملات کی زیادتی ایک تشویش ناک پہلو ہے لیکن ضلع انتظامیہ تمام حالات کا سامنا کرنے کے لئے تیار ہے۔ انہوں نے کوارنٹین میں رکھے گئے لوگوں سے اپیل کی ہے کہ وہ لوگ خود اپنے ذاتی حفظان صحت کا پورا پورا خیال رکھیں۔فی الحال بیندور کوارنٹین سینٹر میں 2,243، کنداپور میں 2,119اور کارکلا میں 1,028افراد کو کوارنٹین کے لئے رکھا گیا ہے۔

 تازہ حالات کے پیش نظراڈپی ضلع میں اندرون ضلع سفر کرنے اور ایک جگہ سے دوسری جگہ جانے  کے لئے پابندی لگادی گئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھاری برسات کے وقت منگلوروایئر پورٹ پر طیاروں کو اترنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ ایئر پورٹ ڈائریکٹر راؤ کا بیان

منگلورو انٹر نیشنل ایئر پورٹ کے دائریکٹر وی وی راؤ نے ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھاری برسات اور خراب موسم کی وجہ سے چیزیں صاف دکھائی نہ دینے کی صورت میں ایئر پورٹ پر طیاروں کو لینڈنگ کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

بھاری برسات کے وقت منگلوروایئر پورٹ پر طیاروں کو اترنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔ ایئر پورٹ ڈائریکٹر راؤ کا بیان

منگلورو انٹر نیشنل ایئر پورٹ کے دائریکٹر وی وی راؤ نے ایک بیان جاری کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھاری برسات اور خراب موسم کی وجہ سے چیزیں صاف دکھائی نہ دینے کی صورت میں ایئر پورٹ پر طیاروں کو لینڈنگ کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

کیرالہ میں پیش آیا چٹان کھسکنے کا خطرناک حادثہ۔ 15ہلاک اور60سے زائدافراد ہوگئے لاپتہ۔ ملبے میں دب گئیں 30جیپ گاڑیاں 

کیرالہ کے مشہور تفریحی مقام ’مونار‘ سے قریب ’ایڈوکی‘ میں چٹان کھسکنے کا ایک خطرناک حادثہ پیش آیا جس میں تاحال 15افراد ہلاک ہونے اور 60سے زیادہ لوگ لاپتہ ہونے کے علاوہ 30جیپ گاڑیاں چٹان کے ملبے میں دب کر رہ جانے کی خبر ہے۔

کورونا کی وبا اور دعوت رجوع الی اللہ، اس عنوان کے تحت جماعت اسلامی ہند، کرناٹک کی 15 روزہ مہم کا آغاز

  کورونا کی وبا سے اس وقت پوری انسانیت پریشان ہے۔ اس مرض کا مقابلہ کرنے کیلئے حفاظتی اور احتیاطی تدابیر اختیار کرتے ہوئے لوگ اپنے رب سے رجوع ہوں۔ کورونا جیسی بیماریوں پر قابو پانے کیلئے طبی علاج کے ساتھ روحانی اور اخلاقی طاقت کا ہونا بھی ضروری ہے۔

کرناٹک سے 40 امیدوار سیول سرویسز امتحان میں کامیاب

کرناٹک سے زائداز 40 امیدواروں نے 2019 کے یونین پبلک سرویس کمیشن (یو پی ایس سی ) سیول سرویس امتحان میں کامیابی حاصل کی اور اب آئی اے ایس ، آئی ایف ایس اور آئی پی ایس اور دیگر میں ملازمت حاصل کریں گے۔