پوری دنیا میں کورونا کا قہر جاری، متاثرین کی تعداد 63 لاکھ سے تجاوز

Source: S.O. News Service | Published on 2nd June 2020, 1:05 PM | ملکی خبریں | عالمی خبریں |

بیجنگ؍جنیوا؍نئی دہلی،2؍جون (ایس او نیوز؍ایجنسی) پوری دنیا میں عالمی وبا کورونا وائرس کا قہر جاری ہے اور ہر روز متاثرین اور اس سے ہونے والی ہلاکتوں کی تعداد میں مستقل اضافہ ہو رہا ہے۔تازہ اعداد و شمار کے مطابق کورونا متاثرین کی تعداد 63لاکھ سے زیادہ ہوگئی ہے جبکہ اس وبا سے اب تک 3.73لاکھ سے زیادہ لوگوں کی موت ہوچکی ہے۔

ہندستان میں بھی کورونا وائرس کا قہر بڑھتا جارہا ہے اور یہ دنیا میں سب سے زیادہ معاملات ممالک کی فہرست میں ساتویں مقام پر پہنچ گیا ہے۔ہندوستان میں کورونا متاثرین کی تعداد دو لاکھ کے قریب پہنچ گئی ہے۔

ادھر امریکہ میں سیاہ فام فلائید لائیڈ کی موت کے بعد سے پورے ملک میں نسل پرستی کے خلاف احتجاج و مظاہرہ جاری ہیں لیکن اس کے ساتھ کورونا کا قہر بھی رکنے کا نام نہیں لے ۔ امریکہ میں تازہ اعداد و شمار ملنے تک کورونا کی وبا سے اب تک ساڑے 18 لاکھ افراد سے زیادہ لوگ متاثر ہوچکے ہیں جبکہ ایک لاکھ چھہ ہزار سے زیادہ لوگوں کی موت ہوچکی ہے۔ برازیل میں متاثرین کی تعداد پانچ لاکھ سے زیادہ ہو گئی ہے اور یہاں 30 ہزار سے زیادہ لوگوں کی موت ہوچکی ہے۔

روس میں بھی کورونا کا قہر بڑھتا جارہا ہے اور یہاں اس وائرس سے ا ب تک 4لاکھ سے زیادہ لوگ متاثر ہو چکے ہیں جبکہ 4855لوگوں نے جان گنوائی ہے۔ برطانیہ میں بھی اس وائرس کی وجہ سے حالات مسلسل خراب ہوتے جارہے ہیں۔ وہاں اب تک اس بیماری سے پونے تین لاکھ لوگوں سے زیادہ متاثر ہو چکے ہیں اور اس وبا سے ہلاک ہونے والوں کی تعداد 39 ہزار سے تجاوز کر گئی ہے ۔

اٹلی میں اب تک اس وائرس سے ہلاک ہونے والوں کی تعداد 33ہزار لوگوں سے زیادہ ہو چکی ہے۔اسپین میں ہلاک ہونے والوں کی تعداد 27ہزار سے زیادہ ہو چکی ہے۔

چین میں متاثرین کی تعداد 84 ہزار سے زیادہ ہے اور ترکی میں کورونا متاثرین کی تعداد ایک لاکھ 64 ہزار سے زیادہ ہو گئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

معروف عالم دین اور جمعیۃ علما ہند کے نائب صدر مولانا امان اللہ قاسمی کا انتقال

 کوہ کن کے معروف عالم دین اور جمعیۃ علما ء ہند کے نائب صدر مولانا امان اللہ قاسمی نے سنیچر کے روز مختصر علالت کے بعد 84 سال کی عمر میں داعی اجل کو لبیک کہہ دیا۔ موصوف قدیم دینی و علمی درسگاہ دار العلوم حسینیہ شری وردھن ضلع رائے گڑھ (مہاراشٹرا) کے مہتمم بھی تھے۔

’کیا چین کا ہندوستانی سرزمین پر قبضہ نہیں ہے؟ مودی جی کو بتانا چاہیے‘

 کانگریس نے کہا ہے کہ چین نے وادی گلوان میں ہندوستانی حدود میں دراندازی کی ہے اور اس کے فوجی دستے ملک کے اسٹریٹجک نقطہ نظر سے متعدد اہم علاقوں میں تعینات ہیں، اس لیے اب وزیر اعظم نریندر مودی کو یہ بتانا چاہiے کہ کیا چین کا ہندوستانی سرزمین پر قبضہ نہیں ہے۔