آندھیرے میں ڈوبا ہے بھٹکل نیشنل ہائی وے؛ حکام سمیت سماجی اداروں کے ذمہ داران کوبھی نظرنہیں آرہی ہےعوام کی مشکلات

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 18th September 2023, 1:27 AM | ساحلی خبریں | اسپیشل رپورٹس | اداریہ |

بھٹکل 18/ستمبر (ایس او نیوز) قلب شہر شمس الدین سرکل سے رنگین کٹہ، نوائط کالونی، مدینہ کالونی اور وینکٹاپوراور دوسری طرف موڈ بھٹکل، موگلی ہونڈا، سرپن کٹہ اورگورٹے تک چار کلومیٹر نیشنل ہائی وے سے بجلی کے قمقمے غائب ہیں۔ جس کی وجہ سے پورا نیشنل ہائی وے اندھیرے میں ڈوب گیا ہے۔ شام ہوتے ہی ہائی وے کنارے پرلائٹوں کا نظام نہ ہونے سے  لوگوں کا رات کے اوقات میں ہائی وے کنارے سے پیدل چلنا دشوار ہوگیا ہے، بالخصوص خواتین اور بچوں کا اندھیرے میں پیدل چلنا گویا جان جوکھم میں ڈالنے کے برابر ہے۔ 

شمس الدین سرکل اوربس اسٹائنڈ کے باہرنصب کردہ ٹاوروں پر بڑی بڑی لائٹس لگی ہوئی تھی جس سے لگتا تھا کہ پورا شہر اُجالے میں نہارہا ہو، مگر یہاں پر لگی ہوئی لائٹیں بھی غائب ہوکر ڈھائی سال بیت چکے ہیں، لیکن اس کو لے کرعوام پریشان ہیں توعوامی نمائندے خاموش ہیں۔ عوام کا کہنا ہے کہ شہر کے ہائی وے پر اندھیرا اتنا گہرا ہے کہ حکام کے ساتھ ساتھ کونسلرس، پنچایت ممبرس یہاں تک کہ سماجی اداروں کے ذمہ داروں کو بھی عوام کی مشکلات اوراُن کی پریشانیاں اس اندھیرے میں نظرنہیں آرہی ہیں۔ عوام کا کہنا ہے کہ زوردار بارش کے دوران جب ہائی وے کے بعض جگہوں پرپانی جمع ہوا تھا تو بڑی بڑی میٹنگیں بلائی گئی تھی، ہائی وے آفسران، آئی آر بی کمپنی کے حکام یہاں تک کہ ڈی سی اور وزیر کے ساتھ بھی زوردار میٹنگیں منعقد ہوئی تھیں، کچھ دن جے سی بی مشینیں بھی ہائی وے پر کام کرتی نظر آئی تھی، مگر جیسے ہی بارش کاسلسلہ تھما، سب واپس اپنے اپنے کاموں میں مگن ہوگئے، مگر قریب ڈھائی سال سے ہائی وے کنارے نصب کردہ بجلی کے قمقمے غائب ہیں لیکن یہ اندھیرا اور اندھیرے سے ہونے والی پریشانیاں ذمہ داران کو نظر نہیں آرہی ہے تو لوگ تعجب کا اظہار کررہے ہیں۔

دن کے اُجالے میں بھی سواریوں اورعوام کی چہل پہل کے درمیان بھٹکل ہائی وے پرجانور آرام فرما رہے ہوتے ہیں، ایسے میں لوگوں بالخصوص دوپہیہ سواروں کو جانوروں سے بچ کرنکلنا مشکل ہوجاتا ہے، دن  کے اُجالے میں ہی جانوروں کو ٹکرمارنے سے بچنے کی کوشش میں حادثات ہوتے رہتے ہیں اور لوگ اپنے ہاتھ پیر تُڑواتے رہتے ہیں، اگر رات کے اندھیرے میں دوپہیہ سواری کسی جانور سے ٹکراجائے تو اُس کی کیا حالت ہوگی،  وہ زندہ بچ پائے گا بھی یا نہیں اس طرف ذمہ داران کی توجہ نہیں جارہی ہے۔

بتاتے چلیں کہ نیشنل ہائی وے فورلائن کے تعمیری کام کے دوران قریب ڈھائی سال پہلے سڑک کنارے کے تمام بجلی کے کھمبوں کونکال دیا گیا تھا اب کھمبوں کی جگہ پر بڑے اور اونچے الیکٹرک ٹاور لگائے گئے ہیں۔ بتایاجارہا ہے کہ نیشنل ہائی وے فورلائن کا تعمیری کام مکمل ہونے کے بعد لائٹیں بھی لگائی جائیں گی، لیکن شہر کے بیچوں بیچ  ہائی وے کا تعمیری کام  ہی رُکا ہوا ہے ایسے میں کام شروع کب ہوگا اور ختم کب ہوگا، اس سوال کا ہی کسی کے پاس جواب نہیں ہے۔ 

سورج ڈھلنے کے ساتھ ہی لوگ ہائی وے کنارے سے پیدل چلنے کے لئے گاڑیوں کی لائٹوں کا سہارا یا پھر قریبی دکانوں سے ہونے والی روشنی کا سہارالے کر آگے بڑھنے پرمجبور ہیں، مگرآندھی کی رفتار سے گاڑیاں چلنے والے اِس ہائی وے پرکیا رات کے اندھیرے میں ہائی وے کو کراس کرنا موت کو دعوت دینے کے مترادف نہیں ہے۔ ذمہ داران کو اس تعلق سے سوچنے کی ضرورت ہے اور اس مسئلہ کو حل کرنے کے لئے فوری ایکشن لینے کی ضرورت ہے۔

Darkness descends on Bhatkal's National Highway, posing grave risks for pedestrians

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں موسلادھار بارش کا سلسلہ جاری؛ عیدگاہ میں نہیں ہوگی نماز عیدالاضحیٰ؛ جامع مساجد میں صبح سات اور سوا سات بجے ہوگی عید کی دوگانہ

بھٹکل  سمیت ساحلی کرناٹکا میں گذشتہ ایک ہفتہ سے موسلادھار بارش کا سلسلہ جاری ہے جس کو دیکھتے ہوئے بھٹکل میں عیدگاہ کمیٹی نے عیدالاضحیٰ کی نماز  شہر کی تمام جامع مساجد میں ادا کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

بھٹکل میں عدالت کے تعمیری منصوبے کے لئے 12 کروڑ روپے کی منظوری - بار ایسو سی ایشن نے کی وزیر منکال وئیدیا کی تہنیت

بھٹکل میں عدالت کی نئی عمارت تعمیر کرنے کے لئے بھٹکل کے ایم ایل اے اور وزیر منکال وئیدیا کی خصوصی دلچسپی اور کوششوں سے حکومت کی طرف سے 12 کروڑ روپے کا فنڈ منظور کیا گیا ہے ۔

جوئیڈا کے رام نگر میں خود سوزی کی وجہ سے نوجوان کی موت - پولیس پر ہراسانی کا الزام - کُونبی سماج کا احتجاج 

تعلقہ کے رام نگر پولیس تھانے کے افسران کی طرف سے ہراسانی کا الزام لگاتے ہوئے کُونبی سماج کے جس نوجوان نے پولیس اسٹیشن کے احاطے میں اپنے جسم پر پٹرول چھڑک کر خود سوزی کی تھی ، اس نے بیلگام کے اسپتال میں دم توڑ دیا ۔ جس کے بعد قصوروار پی ایس آئی اور عملے کے خلاف کارروائی کا مطالبہ ...

تجارتی اور تعلیمی میدان کی ایک نامور شخصیت : منگلورو یونیورسٹی سے اعزازی ڈاکٹریٹ کی ڈگری پانے والے تُمبے محی الدین کی خدمات پر ایک نظر

منگلورو یونیورسٹی سے اعزازی ڈاکٹریٹ کی ڈگری پانے والے  ڈاکٹر تُمبے محی الدین صاحب کی شخصیت کا جائزہ لیا جائے تو پتہ چلتا ہے کہ آج خلیجی ممالک میں تجارتی اور تعلیمی میدان ایک بڑی شخصیت کے طور پر پہنچانے جا رہے تمبے محی الدین صاحب نے 21 سال کی عمر میں ہی تجارتی دنیا میں قدم رکھا ...

منگلورو یونیورسٹی کی جانب سے ڈاکٹر تُمبے محی الدین ، ڈاکٹر رونالڈ کولاسو اور کے پرکاش کو تفویض کی گئی اعزازی ڈاکٹریٹ کی ڈگری

مشہور و معروف غیر مقیم ہندوستانی تاجر ڈاکٹر تُمبے محی الدین، ڈاکٹر رونالڈ کولاسو اور پرکاش شیٹی کو منگلورو یونیورسٹی کی جانب سے اعزازی ڈاکٹریٹ (پی ایچ ڈی) کی ڈگری تفویض کی گئی ۔  

بولیار مسجد کے سامنے اشتعال انگیزی کی طرح خاطیوں پر حملہ بھی غلط، سوشیل میڈیا پر جعلی پیغامات وائرل کرنے والوں پر بھی کارروائی : یوٹی قادر

ریاستی قانون ساز  اسمبلی کے اسپیکر یوٹی قادر نے کہا کہ منگلور و اسمبلی حلقہ کا   بولیار گرام ہم آہنگی کی ایک مثال ہے، جہاں مقامی لوگ اور  پولیس حالیہ واقعہ سے متعلق معاملے کو حل کرنے جا رہے  ہیں۔ یوٹی  قادر نے کہا کہ اگر باہر کے لوگ اپنا منہ بند رکھیں  تو یہ ملک سے حقیقی دیش ...

کیا وزیر اعظم سے ہم تیسری میعاد میں خیر کی اُمید رکھ سکتے ہیں؟ ........... از : ناظم الدین فاروقی

18ویں لوک سبھا الیکشن 24 کے نتائج پر ملک کی ڈیڑھ بلین آبادی اور ساری دنیا کی ازبان و چشم لگی تھیں ۔4 جون کے نتائج حکمران اتحاد اور اپوزیشن INDIA کے لئے امید افزاں رہے ۔ کانگریس اور اس کے اتحادی جماعتوں نے اس انتخابات میں یہ ثابت کر دیا کہ اس ملک میں بادشاہ گر جمہورہیں عوام کی فکر و ...

کاروار: بی جے پی کے کاگیری نے لہرایا شاندار جیت کا پرچم - کانگریس کی گارنٹیوں کے باوجود ووٹرس نے چھوڑا ہاتھ کا ساتھ  

اتر کنڑا سیٹ پر لوک سبھا انتخاب میں بی جے پی امیدورا وشویشورا ہیگڑے کاگیری کی شاندار جیت یہ بتاتی ہے کہ ان کی پارٹی کے سیٹنگ ایم پی اننت کمار اور سیٹنگ رکن اسمبلی شیو رام ہیبار کی بے رخی دکھانے اور انتخابی تشہیر میں کسی قسم کی دلچسپی نہ لینے کے باوجود یہاں ووٹروں کے ایک بڑے حصے ...

کون بنے گا 'کنگ' اور کون بنے گا ' کنگ میکر'؟! - لوک سبھا کے نتائج کے بعد سب کی نظریں ٹک گئیں نتیش اور نائیڈّو پر

لوک سبھا کے اعلان شدہ انتخابی نتائج نے منگل کو یہ ثابت کر دیا کہ پوسٹ پول سروے ہمیشہ درست نہیں ہوتے  کیونکہ این ڈی اے اتحاد کی بھاری اکثریت سے کامیابی حاصل کرنے کے بارے میں جو توقعات بنی یا بنائی گئی تھیں وہ پوری طرح  خاک میں مل گئیں۔

بھٹکل میں حل نہیں ہو رہا ہے برساتی پانی کی نکاسی کا مسئلہ - نالیوں کی صفائی پر خرچ ہو رہے ہیں لاکھوں روپئے

برسات کا موسم سر پر کھڑا ہے اور بھٹکل میں ہر سال کی طرح امسال بھی برساتی پانی کی نکاسی کے لئے سڑک کنارے بنائی گئی نالیاں مٹی، پتھر اور کچرے سے بھری پڑی ہیں جس کا نتیجہ یہ ہوا ہے کہ مانسون سے قبل برسنے والی ایک دن کی بارش میں پانی نالیوں کے بجائے سڑکوں پر بہنے اور گھروں میں گھسنے ...

بھٹکل میں چل رہی بجلی کی آنکھ مچولی سے  کب ملے گا صارفین کو چھٹکارہ ؟

برسہا برس سے بھٹکل کے عوام کو بجلی کی آنکھ مچولی راحت دلانے کے اقدامات کا اطمینان بخش نتیجہ اب تک نہیں نکلا ہے ۔ عام دنوں کے علاوہ برسات کا موسم میں ذرا سی ہوا اور بارش کے ساتھ  بجلی کا غائب ہونا، کبھی کم اور کبھی تیز بجلی کی سپلائی کی وجہ سے گھروں کے ساز و سامان کا نقصان یہاں کی ...

بھٹکل جالی پٹن پنچایت کی ادھوری عمارت - ضائع ہو رہے ہیں کروڑوں روپئے

تقریباً 9 سال پہلے بھٹکل   جالی گرام پنچایت  کا درجہ بڑھاتے ہوئے اُسے  پٹن پنچایت میں تبدیل کیا گیا تھا مگر آج تک پٹن پنچایت کے دفتر کی عمارت تعمیری مرحلے میں ادھوری پڑی ہے اور اس پر خرچ ہوئے ایک کروڑ روپے ضائع ہوتے نظر آ رہے ہیں ۔

یہ الیکشن ہے یا مذاق ؟ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔آز: ڈاکٹر مظفر حسین غزالی

ایک طرف بی جے پی، این ڈی اے۔۔ جی نہیں وزیر اعظم نریندرمودی "اب کی بار چار سو پار"  کا نعرہ لگا رہے ہیں ۔ وہیں دوسری طرف حزب اختلاف کے مضبوط امیدواروں کا پرچہ نامزدگی رد کرنے کی  خبریں آرہی ہیں ۔ کھجوراؤ میں انڈیا اتحاد کے امیدوار کا پرچہ نامزدگی خارج کیا گیا ۔ اس نے برسراقتدار ...

اُترکنڑا میں جنتا دل ایس کی حالت نہ گھر کی نہ گھاٹ کی ! کمارا سوامی بن کر رہ گئے بغیر فوج کے کمانڈر !

ایسا لگتا ہے کہ جنتا دل ایس نے بی جے پی کے ساتھ شراکت کا جو فیصلہ کیا ہے اس سے ریاستی سطح پر ایک طرف کمارا سوامی بغیر فوج کے کمانڈر بن کر رہ گئے ہیں تو دوسری طرف ضلعی سطح پر کارکنان نہ ہونے کی وجہ سے پارٹی کے نام پر محض چند لیڈران ہی اپنا دربار چلا رہے ہیں جسے دیکھ کر کہا جا سکتا ہے ...

انتخابی سیاست میں خواتین کی حصہ داری کم کیوں ؟ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ڈاکٹر مظفر حسین غزالی

ملک کی پانچ ریاستوں کی ہواؤں میں انتخابی رنگ گھلا ہے ۔ ان میں نئی حکومت کو لے کر فیصلہ ہونا ہے ۔ کھیتوں میں جس طرح فصل پک رہی ہے ۔ سیاستداں اسی طرح ووٹوں کی فصل پکا رہے ہیں ۔ زندگی کی جدوجہد میں لگے جس عام آدمی کی کسی کو فکر نہیں تھی ۔ الیکشن آتے ہی اس کے سوکھے ساون میں بہار آنے کا ...

کیا کینرا پارلیمانی سیٹ پر جیتنے کی ذمہ داری دیشپانڈے نبھائیں گے ؟ کیا ضلع انچارج وزیر کا قلمدان تبدیل ہوگا !

پارلیمانی الیکشن قریب آنے کے ساتھ کانگریس پارٹی کی ریاستی سیاست میں بھی ہلچل اور تبدیلیوں کی ہوا چلنے لگی ہے ۔ ایک طرف نائب وزیر اعلیٰ ڈی کے شیو کمار اور وزیر اعلیٰ سدا رامیا کے بیچ اندرونی طور پر رسہ کشی جاری ہے تو دوسری طرف پارٹی کے اراکین اسمبلی وقتاً فوقتاً کوئی نہ کوئی ...

کانگریس بدلے گی کیا راجستھان کی روایت ؟ ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔ ڈاکٹر مظفر حسین غزالی

ملک کی جن پانچ ریاستوں میں انتخابات ہو رہے ہیں راجستھان ان میں سے ایک ہے ۔ یہاں کانگریس اور بی جے پی کے درمیان اقتدار کی ادلا بدلی ہوتی رہی ہے ۔ اس مرتبہ راجستھان میں دونوں جماعتوں کی دھڑکن بڑھی ہوئی ہیں ۔ ایک کی اقتدار جانے کے ڈر سے اور دوسری کی اقتدار میں واپسی ہوگی یا نہیں اس ...

غزہ: پروپیگنڈے سے پرے کچھ اور بھی ہے! ۔۔۔۔۔۔۔ از: اعظم شہاب

غزہ و اسرائیل جنگ کی وہی خبریں ہم تک پہنچ رہی ہیں جو سامراجی میڈیا ہم تک پہنچانا چاہتا ہے۔ یہ خبریں عام طورپر اسرائیلی فوج کی بمباریوں اور غزہ میں جان و مال کی تباہیوں پرمبنی ہوتی ہیں۔ چونکہ جنگ جیتنے کا ایک اصول فریقِ مخالف کو اعصابی طور پر کمزور کرنا بھی ہوتا ہے، اس لیے اس طرح ...