بھٹکل نیو شمس اسکول میں عالمی یوم ِ مادری زبان کا پروگرام :زبانیں معاشرے کی خیر سگالی اور بھائی چارگی میں اہم رول ادا کرتی ہیں

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 21st February 2020, 8:23 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل:21؍فروری(ایس اؤ نیوز)مادری زبان کسی بھی شخص کو پیدائش سے لےکر آخر تک اس کی ہمہ جہت ترقی میں اہم رول ادا کرتی ہے۔ بھارت ایک ہمہ لسانی ملک ہے، یہاں بے شمار زبانیں بولی جاتی ہیں، ہرایک زبان اپنی تہذیب کی نمائندگی کرتی ہے۔پرارتھنا پرتشٹھان کے صدر گنگادھر نائک نے ان خیالات کا اظہار کیا۔

وہ یہاں تربیت ایجوکیشن سوسائٹی کے نیو شمس اسکول کے  ڈاکٹر ایم ٹی حسن باپا ہال میں عالمی ’یوم مادری زبان ‘کی مناسبت سے منعقدہ پروگرام میں مہمان خصوصی کی حیثیت سے خطاب کررہے تھے۔ انہوں نے کہاکہ  اردو والے زیادہ سے زیادہ کنڑا زبان استعمال کرتے ہوئے زبان سیکھنےکی کو شش کریں اور بتایا کہ ایک ہماری مادری زبان ہوتی ہے تو ایک علاقہ کی مادری زبان ہوتی ہے ،ہم اپنی مادری زبان پرجہاں فخر کرتے ہیں وہیں دیگر زبانوں کے متعلق احترام کا جذبہ رکھنے کی بات کہی۔

انجمن پی یو کالج بھٹکل کے شعبہ اردو کے پروفیسر عبدالروؤف سونور نے اردو زبان کی اہمیت پر روشنی ڈالتے ہوئے کہاکہ جس طرح خالق کائنات نے تمام انسانوں کو پیدا کیا ہے اسی طرح دنیا میں بولی جانے والی کرڑوں بولیاں اور لاکھوں زبانیں بھی اللہ کی ہی پیدا کردہ ہیں۔ کوئی زبان کسی مذہب  کی نہ نمائندگی کرتی ہیں نہ اس سے کوئی تعلق ہے۔ دنیا میں ہم دیکھتے ہیں کہ انسان کو جینے کے لئے زبان کی ضرورت نہیں ہے  ایک گونگا بھی ساری دنیاکی سیر کرتاہے اور زندگی جی لیتاہے۔ مگر انسان کو اپنے دل کے جذبات، خواہشات کی ترسیل کے لئے زبان کی ضرورت ہوتی ہے۔ مادری زبان کے ساتھ ساتھ دیگر زبانوں کو سیکھنا بہت ضروری ہے خاص کر سماج میں بھائی چارہ ،خیر سگالی پیدا کرنے کے لئے زبانیں اہم رول ادا کرتی ہیں۔ ہر زبان کی طرح کنڑا زبان کا ادب بھی اپنے اندر کئی خصوصیات رکھتاہے، کوئمپو، تیجسوی ، بیندرے جیسے کئی کنڑا شعرا ء کاکلام انسانیت کی تعلیمات سے بھرپور ہے۔ جب ہم کرناٹک میں رہتے ہیں تو کنڑا زبان کی طرف توجہ دینا، سیکھنا لازمی ہونے کی بات کہی۔

ادارے کے صدر محمد اسماعیل محتشم نے پروگرام کی صدارت کرتےہوئے کہاکہ ہر پروگرام کا ایک مقصد ہوتاہے، اس پروگرام سے ہمیں کنڑا زبان کی اہمیت کا پتہ چلتاہے ، ہم اپنے دیگر افراد کے ساتھ کنڑا میں بات چیت کرنے کی صلاح دی۔ اسکول کی پرنسپال فہمیدہ ملا نے افتتاحی کلمات پیش کئے۔ سنئیر استاد محمد رضا مانوی نے استقبال کرتےہوئے مہمانوں کا تعارف پیش کیا۔ استانی ماہِ جبین نے نظامت کے فرائض انجام دئیے تو استاد مولانا عبداللہ ربیع نے شکریہ اداکیا۔ ڈائس پر ادارے کے سید غفران لنکا اور اسکول سکریٹری انم اعلیٰ ایم ٹی موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

کیرالہ میں پیش آیا چٹان کھسکنے کا خطرناک حادثہ۔ 15ہلاک اور60سے زائدافراد ہوگئے لاپتہ۔ ملبے میں دب گئیں 30جیپ گاڑیاں 

کیرالہ کے مشہور تفریحی مقام ’مونار‘ سے قریب ’ایڈوکی‘ میں چٹان کھسکنے کا ایک خطرناک حادثہ پیش آیا جس میں تاحال 15افراد ہلاک ہونے اور 60سے زیادہ لوگ لاپتہ ہونے کے علاوہ 30جیپ گاڑیاں چٹان کے ملبے میں دب کر رہ جانے کی خبر ہے۔