اُڈپی ضلع کے کوڈؤر کی جامعہ مسجد کی زمین پر غیرقانونی سرگرمیوں کا الزام: اے پی سی آر کی جانب سے انسانی حقوق کمیشن میں شکایت درج

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 20th April 2021, 4:54 PM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

اُڈپی :19؍اپریل(ایس اؤ نیوز)کوڈؤور کلمات مسجد کی رجسٹرڈ زمین پر زور زبردستی داخل ہوکر غیر قانونی سرگرمیوں کو انجام دیا گیا ہے اور مسجد آنے والوں کو رکاوٹ پیدا کرنے کے متعلق اے پی سی آر اُڈپی نے 15اپریل کو کرناٹکا حقوق انسانی کمیشن میں شکایت درج کی ہے۔

سرو ے نمبر 53/06پر گزشتہ 200برسوں سے زائد عرصہ سے کلمات مسجد کا وجود ہے۔ 1908سے ہی جامعہ مسجد کی نگرانی کے لئے سرکاری خزانے سے امداد جاری ہے۔ 28برس پہلے یعنی 1993مارچ 16کو کرناٹکا وقف بورڈ میں مسجد کی جائیداد کی رجسٹریشن ہوئی ہے۔ 16مارچ 2020کو کرناٹکا حکومت کےروینیو ڈپارٹمنٹ کی طرف سے نوٹی فیکشن کراتے ہوئے وقف جائیداد کے طورپر اعلان کیاگیا ہے۔

محکمہ روینیو کے مصدقہ اعلامیہ میں کلمات جامعہ مسجد اور اس کی جائیداد مسجد کےنام سےرجسٹریشن ہوچکی ہے۔ وقف کی مسجد زمین پر ( جن کا زمین سے کوئی تعلق نہیں ہے) غیر قانونی طورپر مورتی کو نصب کرتےہوئے ٹینٹ لگا کر قانون کی خلاف ورزی میں مصروف ہونے کا الزام لگایا گیا ہے۔

13اپریل 2021کو نام نہاد پنچ دھوموتی  ہوراٹ سمیتی کے نام پر بغیر کسی اجازت کے شرپسندوں نے مسجد کی زمین پر غیرقانونی سرگرمیوں کو انجام دیتےہوئےخوف اور بدامنی پیدا کئے جانے کا الزام عائد کرتے ہوئے کہا ہے کہ مقامی مسلمانوں کو نماز کے لئے رکاوٹ پیدا کئے جانے کی بات شکایت میں کہی گئی ہے۔ اس کے علاوہ مسجد کی زمین پر نصب کئے گئے سی سی ٹی وی کیمروں کو پولس کی موجودگی میں نکال پھینکے گئے ہیں۔ایک مقامی میونسپالٹی کا ایک ممبر اس پوری کارستانی کی قیادت کی ہے جس کا کئی لوگوں  نے ساتھ دیا ہے۔ اس طرح مذہبی حقوق کی پامالی ہونے کا الزام لگایا گیا ہے۔

ان سبھی حالات نے مقامی سطح پر خوف کاماحول پیدا کیا ہے۔ آپ قانون کے مطابق کارروائی کرتے ہوئے سرپسندوں کے خلاف سخت قانونی کرنے اور مسجد کو آنے جانے والوں میں اعتماد پیدا کرنے کے لئے متعلقہ محکمہ کو حکم جاری کرنے کا اے پی سی آر اُڈپی چاپٹر کے صدر حسین کوڈی بینگرے نے حقوق انسانی کمیشن سے مطالبہ کیا ہے۔

مسجد کا پیدل راستہ کھولنے کا مطالبہ : کوڈور دیہات کے سروے نمبر 53/6پر موجود کلمات مسجد کے پیدل راستے کو چند سرپسندوں نے باڑ لگاتے ہوئے بند کیا ہے ۔ جس سے مسجد کوآنے  جانےمیں پریشانی ہونے کا الزام لگاتے ہوئے مسجد کا ایک وفد ضلع ایس پی اور اُڈپی تحصیلدار کو میمورنڈم سونپا ہے۔

18اپریل کو دوپہر کی نماز ختم ہونے کے بعد مصلی مسجد سے نکلے تو انہیں راستے میں غیرقانونی طورپر نئی باڑ لگا کر پیدل راستے کو بندکئے جانےکودیکھاگیا ۔ اس سلسلے میں مقامی پولس کو اطلاع دی گئی تو وہاں سے کوئی معقول جواب نہیں مل سکا۔ شرپسندوں کی کرتوت سے رمضان جیسے مبارک مہینےمیں نماز کی ادائیگی میں پریشانی ہورہی ہے۔ اس بے انصافی کو دور کرنے کا مطالبہ کیاگیا ہے۔  مسجد وفد کا کہنا ہے کہ اس طرح کلمات مسجد کے مصلیوں کے بنیادی حقوق کو چھینا گیا ہے۔ جن شرپسندوں نے جس گھناونی حرکت کو انجام دیا ہے اس کے متعلق انہیں سخت سزا دینے اور مسجد کا راستہ کھول دینے کا مطالبہ کیاگیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں کورونا معاملات میں ہورہا ہے اضافہ؛ آج بھی 64 کی رپورٹ آئی پوزیٹیو؛ بھٹکل میں سات علاقوں کوقرار دیا گیا کنٹیمنٹ زون

جس طرح ریاست کرناٹک میں اب ضلع اُترکنڑا میں کورونا کے معاملات میں روز بروز اضافہ دیکھا جارہا ہے اور ضلع اُترکنڑا پوری ریاست میں کورونا پوزیٹیو معاملات میں  تیسرے نمبر پر پہنچ گیا ہے، اُسی طرح بھٹکل میں بھی کورونا کے معاملات میں  تشویش کی حد تک اضافہ دیکھا جارہاہے۔

بھٹکل: شمالی کینرا میں کووڈ وباء کا بدلتا منظر نامہ : سب سے آخری پوزیشن والا ضلع پہنچ گیا سب سے آگے ؛ کون ہے ذمہ دار ؟

کورونا کی دوسری لہر جب ساری ریاست کو اپنی لپیٹ میں لے رہی تھی تو ضلع شمالی کینرا پوزیٹیو معاملات میں گزشتہ لہر کے دوران سب سے آخری پوزیشن پر تھا۔ لیکن پچھلے دو تین دنوں سے بڑھتے ہوئے پوزیٹیو اورایکٹیو معاملات کی وجہ سے اب یہ ضلع ریاست میں سب سے  اوپری درجہ میں پہنچ گیا ہے۔ بس ...

کورونا کرفیو کی وجہ سے لاری ڈرائیوروں کو سفرکے دوران کھانے پینے اور لاری کی مرمت کا مسئلہ درپیش:ڈرائیور، کلینر اور گیاریج والوں کی زندگی پنکچر

کورونا وائرس پر لگام لگانے کے لئے حکومتوں کی طرف سے  نافذ کئے گئے سخت کرفیو کی وجہ سے ہوٹل ، ڈھابے ،گیاریج ، پنکچر کی دکانیں وغیرہ بند ہیں ، جس کے نتیجے میں  ضروری اشیاء سپلائی کرنےوالی لاریوں کے ڈرائیوروں کو سفر کے دوران میں کئی مشکلات درپیش ہیں۔

کرناٹکا میں کورونا کے بڑھتے معاملات کے چلتے سرکاری اسپتالوں میں ڈیالسس کی خدمات بند : حکومت کی خاموشی پر فاؤنڈیشن کا اقدام

پیشگی احتیاطی تدابیر اورمنظم و منضبط نظام کے بغیر  کورونا وائرس پر  کنٹرول کرنے میں ناکامی  اور کووڈ ٹیکہ  کی سپلائی بند ہوجانے سے ایک طرف عوام پہلے سے پریشان ہیں، ایسے میں    حکومت کی ایک  اورنظرا ندازی  نے ریاست کرناٹک کے ہزاروں ڈیالسس کے مریضوں کو مشکلات میں ڈال دیا ہے۔

بھٹکل سمیت ساحلی کرناٹکا میں 'ٹاوکٹے' طوفان کا اثر؛ طوفانی ہواوں کے ساتھ جاری ہے بارش؛ کئی مکانوں کی چھتیں اُڑ گئیں، بھٹکل میں ایک کی موت

'ٹاوکٹے' طوفان جس کے تعلق سے محکمہ موسمیات نے پیشگی  اطلاع دی تھی کہ    یہ طوفان  سنیچر کو کرناٹکا اور مہاراشٹرا کے ساحلوں سے ٹکرارہا ہے،   اس اعلان کے عین مطابق  آج سنیچر صبح سے  بھٹکل سمیت اُترکنڑا اور پڑوسی اضلاع اُڈپی اور دکشن کنڑا میں طوفانی ہواوں کےساتھ بارش جاری ہے جس ...

ساحلی کرناٹکا میں 'ٹاوکٹے' طوفان کی دستک ۔ محکمہ موسمیات نے جاری کیا 16 مئی تک ریڈ الرٹ

ساحلی کرناٹکا کی طرف  بڑھتے  'ٹاوکٹے' طوفان کے پیش نظرمحکمہ موسمیات نے 16مئی تک ریڈ الرٹ جاری کرتے ہوئے مچھیروں اور عوام الناس کو دریا، سمندراورنشیبی و ساحلی علاقوں سے دور رہنے کی ہدایت دی ہے۔

ساحلی کرناٹکا میں 'ٹاوکٹے' طوفان کی دستک ۔ محکمہ موسمیات نے جاری کیا 16 مئی تک ریڈ الرٹ

ساحلی کرناٹکا کی طرف  بڑھتے  'ٹاوکٹے' طوفان کے پیش نظرمحکمہ موسمیات نے 16مئی تک ریڈ الرٹ جاری کرتے ہوئے مچھیروں اور عوام الناس کو دریا، سمندراورنشیبی و ساحلی علاقوں سے دور رہنے کی ہدایت دی ہے۔

بھٹکل میں بڑھ رہے ہیں کورونا پوزیٹیو معاملات؛ آج ایک ہی دن 81 کی رپورٹ آئی پوزیٹو

بھٹکل سمیت ضلع اُترکنڑا میں  کورونا پوزیٹیو کے معاملات میں دن بدن اضافہ دیکھا جارہا ہے، جس سے ذمہ داران میں تشویش پائی جارہی ہے۔ آج بدھ کو ایک ہی دن بھٹکل میں کورونا پوزیٹیو کے 81 معاملات سامنے آئے ہیں  جس کے ساتھ ہی  کورونا کی دوسری لہر میں بھٹکل میں پوزیٹیو معاملات کی تعداد ...

کورونا کا خاتمہ جولائی تک نہیں ہوگا: ایکسپرٹ

جس طرح کورونا کے نئے معاملوں کی تعداد میں کمی درج ہو رہی ہے اس سے یہ امید بنی ہے کہ ہندوستان میں کورونا کی دوسری لہر کا خاتمہ جلد ہو جائے گا لیکن وبائی بیماریوں کے ماہر شاہد جمیل کا کہنا ہے کہ بھلے ہی ابھی کچھ ریاستوں میں کورونا کے کیس کم ہوتے نظر آ رہے ہوں لیکن دوسری لہر کا ...