پی یو کامرس سال دوم کے امتحانات میں جنوبی کینرا کے 2طلبہ نے حاصل کیا ریاستی سطح پر پہلا رینک۔ دوسرا اور تیسرا مقام بھی جنوبی کینرا کو ملا

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 15th April 2019, 7:33 PM | ساحلی خبریں |

منگلورو15؍اپریل (ایس او نیوز) پی یو سی سال دوم کے نتائج کے اعلان کے بعد یہ بات سامنے آئی ہے کہ اس مرتبہ کامرس فیکلٹی میں جنوبی کینرا ضلع کے دو طلبہ نے 99.33% مارکس کے ساتھ ریاستی سطح کا پہلارینک حاصل کیا ہے۔

ان خوش نصیب طلبہ میں موڈبیدری کے آلواس پی یو کالج کی طالبہ اولویٹا انیلّا ڈیسوزا اور وٹلا الیکے ستیہ سائی لوک سیوا پی یو کالج کے طالب علم شری کرشنا شرما کے نام شامل ہیں۔ ان دونوں نے مجموعی طور پر 596مارکس حاصل کیے ہیں۔

اولویٹا کے بارے میں معلوم ہوا ہے کہ اس نے بزنس اسٹڈیز، اکاؤنٹس، بیسک میاتھس اور اسٹیٹی اسٹکس میں 100%مارکس حاصل کیے اور انگلش اورہندی میں اسے 98مارکس ملے۔اس کے علاوہ رینک کینراپی یوکالج منگلورو کی طالبہ شیریا شینئی نے 595(99.16)مارکس کے ساتھ ریاستی سطح کا دوسرا رینک حاصل کیا ہے۔ریاستی سطح کا تیسرا مقام سینٹ فلومینا کالج پتور کی طالبہ سواستک پی کے علاوہ مزید 6طلبہ نے حاصل کیا ہے جنہوں نے 594مارکس کے ساتھ 99% کا نشانہ پارکرلیا۔

طلبہ کی اس عمدہ کارکردگی پر کالج کے پرنسپال، اسٹاف اور عملے کی طرف سے بھرپور ستائش کی گئی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کاروار میں ’سوچھ رتھ ‘موبائیل سواری کا اجراء: ضلع کو پاکیزہ بنانا ہم سب کی ذمہ داری ہے: جئے شری موگیر

اترکنڑا ضلع کو ’پاکیزہ ضلع‘ کی حیثیت سے ترقی دینا ہم سب کی ذمہ داری ہے۔ ضلع کو ریاست کا پہلا گندگی سے پاک ضلع بنانے کے لئے ہم سب کو کام کرنا ہے۔ اترکنڑا ضلع پنچایت کی صدر جئے شری موگیر نے ان خیالات کا اظہار کیا۔

شرالی میں پنچایت افسران کا دکانوں پر چھاپہ :28.45کلوگرام پلاسٹک ضبط

بھٹکل تعلقہ کے شرالی میں پلاسٹک کے استعمال سے غلاظت بھرے کچرے کا مسئلہ پیدا ہونے کے پیش نظر اور ضلع پنچایت سی ای اؤ کی ہدایات پر پیر کو شرالی گرام پنچایت حدود کے کئی دکانوں پر چھاپہ ماری کرتے ہوئے 28.45 کلوگرام وزنی پلاسٹک کی تھیلیاں ضبط کرنے کا واقعہ پیش آیاہے۔

ملکی معیشت  کے برے اثرات سے ہر شعبہ کنگال؛ بھٹکل میں بھی سونا اور رئیل اسٹیٹ زوال پذیر؛ کیا کہتے ہیں جانکار ؟

ملک میں نوٹ بندی  اور جی ایس ٹی کی وجہ سے ملکی معیشت پر سنگین اثرات مرتب ہونےکے متعلق ماہرین نے بہت پہلے سے چوکنا کردیا  تھا۔ اب اس کے نتائج بھی  ظاہر ہونے لگے ہیں۔ رواں سال کے دوچار مہینوں سے جو خبریں آرہی ہیں، اُس سے اندازہ لگایا جاسکتا ہے کہ ہمارے  ملک میں روزگاروں کا بےروز ...