بنگلہ دیش: جماعت اسلامی کے سرکردہ رہنما گرفتار

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 10th October 2017, 11:30 PM | عالمی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

ڈھاکہ،10؍اکتوبر(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)بنگلہ دیش میں جماعت اسلامی کے سرکردہ رہنماؤں کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔ بنگلہ دیشی حکومت جماعت اسلامی پر الزام عائد کرتی ہے کہ وہ ملک میں عسکریت پسندی کو ہوا دے رہی ہے۔خبر رساں ادارے اے ایف پی کے مطابق پولیس نے ڈھاکا کے شمالی علاقے اْتارا میں ایک مکان پر چھاپہ مار کر اپوزیشن پارٹی جماعت اسلامی کے نو اراکین کو گرفتار کیا ہے، جن میں جماعت اسلامی کے امیر مقبول احمد، نائب امیر شفیق الرحمان اور سابق رکن پارلیمان غلام پرور بھی شامل ہیں۔ڈھاکا پولیس کے ڈپٹی کمشنر شیخ نظم العالم نے اے ایف پی کو بتایا، ’’ہمیں خفیہ ذریعے سے اطلاع ملی کہ یہ افراد اْتارا کے سیکٹر نمبر چھ کے ایک مکان میں ایک خفیہ ملاقات کر رہے ہیں۔ ہمیں چھاپے کے دوران اس جگہ سے کچھ کاغذات بھی ملے ہیں۔‘‘ نظم العالم نے یہ تو نہیں بتایا کہ ان رہنماؤں کو کس الزام کے تحت گرفتار کیا گیا ہے تاہم ان کا کہنا تھا، ’’ان میں سے زیادہ تر مختلف جرائم میں پولیس کو مطلوب تھے اور مفرور تھے۔‘‘بنگلہ دیش کے سب سے بڑے اخبار ’پروتھوم الو‘‘ کے مطابق جماعت اسلامی کے ان رہنماؤں کو سبوتاڑ کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے۔اے ایف پی کے مطابق یہ گرفتاریاں ایک ایسے موقع پر عمل میں آئی ہیں جب بنگلہ دیشی حکومت نے اپوزیشن جماعتوں کے خلاف کریک ڈاؤن شروع کر رکھا ہے۔ یہ کریک ڈاؤن میانمار سے جانیں بچا کر بنگلہ دیش پناہ کے لیے آنے والے روہنگیا مسلمانوں کے ساتھ بنگلہ دیشی حکومت کے سلوک کے سبب وہاں ہونے والے مظاہروں کے بعد شروع کیا گیا۔اس سے قبل پیر نو اکتوبر کو بنگلہ دیشی عدالت نے ملک کی مرکزی اپوزیشن رہنما خالدہ ضیاء4 کے وارنٹ گرفتاری بھی جاری کر دیے۔ انہیں 2015ء4 میں پیش آنے والے ایک واقعے کے سلسلے میں عدالت میں پیش ہونا تھا جس میں ایک بس کو آگ لگائے جانے کے سبب آٹھ افراد ہلاک ہو گئے تھے۔ عدالت میں پیش نہ ہونے کے سبب ان کے وارنٹ گرفتاری جاری کیے گئے۔اعلیٰ بنگلہ دیشی عدالت نے سن 2013 میں جماعت اسلامی کے پارلیمانی انتخابات میں حصہ لینے پر پابندی عائد کر دی تھی کیونکہ اس کا چارٹر ملک کے سیکولر دستور کے منافی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

روہنگیا کے خلاف بدھ بھکشوؤں کا مظاہرہ

اتوار کے روز ہزاروں سخت گیر نظریات کے حامل بدھ بھکشوؤں نے روہنگیا مسلمانوں کے خلاف مظاہرے میں مطالبہ کیا کہ علاقہ چھوڑ کر جانے والے روہنگیا کو قبول نہ کیا جائے۔

ہبلی : جنگ آزادی میں مسلمانوں کا کردار اہم:ٹیپو سلطان جنگِ آزادی کاعظیم مجاہد : ضلع نگراں کاروزیر ونئے کلکرنی

کیا مسلمانوں میں کوئی بھی اچھا ہے ہی نہیں؟کیا تمام ہندو اچھے ہیں؟ ہندو سماج میں پیدا ہونے والے تمام اچھے ہی ہوتے ہیں؟اس ملک میں بے شمار ذاتیں ہیں،ہر ذات میں کچھ اچھے ہوتے ہیں اور چند خراب بھی رہتے ہیں، بی جےپی والوں کو سمجھنا چاہئے۔ ان خیالات کا اظہار دھارواڑ ضلع نگراں کار وزیر ...

کرناٹک میں مسلمان دوسری بڑی آبادی، تعلیم پر خصوصی توجہ دینے ٹمکور متولی کانفرنس سے عمائدین کا خطاب

’وقف جائیداد خدائی جائیداد کتاب کا اجراءکرنے کے بعد کرناٹک پردیش کانگریس کے صدر و رکن کونسل ڈاکٹر جی پرمیشور نے اپنے خطاب میں  مردم شمار کی غیر معلنہ رپورٹ کے مطابق مسلمان دوسری بڑی آبادی کے طورپر تسلےم کئے گئے ہے،

مسلمان خوفزدہ ہونے کی بجائے حالات کامقابلہ کریں:مولاناعمرین محفوظ رحمانی

اصلاح معاشرہ کمیٹی آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ(اورنگ آباد)کی جانب سے مسجد اولیاء ، عیدگاہ میدان ،روضہ باغ میں بعدنماز عشاء حضرت مولانا محفوظ الرحمن فاروقی صاحب(رکن تاسیسی آل انڈیا مسلم پرسنل لا بورڈ) کی نگرانی میں ایک جلسۂ اصلاح معاشرہ کا انعقاد کیا گیا،

بہارمیں بس ڈرائیور اور بس عملہ نے مسافر خاتون کے ساتھ کی اجتماعی عصمت دری 

ملک میں جہاں ایک نئے بھارت کا خواب دیکھا جا رہا ہے ، خواتین کے تحفظ کیلئے نئے نئے نعرے لگائے جا رہے ہیں ،نئی نئی عبارت لکھی جا رہی ہے اور ہمارے ملک کے بر سراقتدار لیڈران عوام کو ’’ اتم بھارت ‘‘ کے سبز باغ دکھلا رہے ہیں

عاسکر فرنانڈیز کریں گے منکی کو اڈوپٹ ؛ منکی کی بنیادی مسائل حل کرنے اور ترقیاتی کاموں کو انجام دینے اتحاد و ملن پروگرام میں اعلان

منکی کے ساتھ میرا خاص تعلق رہا ہے اور منکی والوں کے ساتھ بھی میرے ہمیشہ سے اچھے تعلقات رہے ہیں، شیرور کو میں نے اڈوپٹ کیا تھا اور اپنے فنڈ سے شیرور میں ترقیاتی کام کئے تھے، اب میں منکی کے بنیادی مسائل حل کرنے اور وہاں ترقیاتی کاموں کو انجام دینے منکی کو اپنے اختیار میں لے رہا ...