میرا بیٹا انتخابی دوڑ میں نہیں ہے۔ دیشپانڈے کی وضاحت۔ خود کی اُمیدواری پراختیار کی خاموش

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 13th March 2019, 2:23 PM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

ہلیال13؍مارچ (ایس او نیوز) ضلع انچارج اور ریوینیو منسٹر آر وی دیشپانڈے نے ایک پریس کانفرنس کے دوران واضح کیا ہے کہ ضلع شمالی کینرا میں کانگریسی ٹکٹ پر انتخاب لڑنے کے لئے امیدوارکی تلاش تو ہورہی ہے، لیکن ان کے اپنے فرزند پرشانت دیشپانڈے اس دوڑ میں نہیں ہیں۔اس کے ساتھ ہی انہوں نے اپنے خودکے امیدوار بننے کے سلسلے میں خاموشی اختیار کررکھی ہے۔

یاد رہے کہ سال 2014 میں جو پارلیمانی انتخاب منعقد ہواتھا اس میں پرشانت دیشپانڈے نے کانگریسی امیدوار کے طورپر مقابلہ کیاتھا مگربی جے پی کے اننت کمار ہیگڈے کے ہاتھوں انہیں شکست کا منھ دیکھنا پڑا تھا۔

اس بار کے پارلیمانی انتخابات میں ریاست بھر میں کانگریس اور جنتادل کے مشترکہ امیدوار میدان میں اترنے والے ہیں ۔ ضلع شمالی کینرا میں بھی مشترکہ امیدوار ہونا یقینی ہے۔لیکن یہ امیدوار کانگریس سے ہوگا یا جے ڈی ایس سے ہوگا ، اس تعلق سے ابھی قطعی بات سامنے نہیں آئی ہے۔یہ حلقہ کانگریس کو ملنے کی صورت میں متوقع امیدواروں کی جو فہرست ہے اس میں آر وی دیشپانڈے، بی کے ہری پرساد، بی کے نائک، پرشانت دیشپانڈے، نویدیت آلواوغیرہ کے نام سننے میں آرہے ہیں۔جبکہ یہ سیٹ جنتا دل ایس کو ملنے کی صورت میں امیدوار کے طور پر آنند اسنوٹیکر اور ششی بھوشن ہیگڈے کے علاوہ ڈاکٹر ناگیش نائک اوررویندرا نائک کے نام سامنے آرہے ہیں۔اب دیکھنا یہ ہے کہ کانگریس اور جنتادل کے درمیان سیٹوں کی تقسیم کو لے کر جو الجھنیں ہیں وہ کب ختم ہوتی ہیں اور ضلع شمالی کینرا کا سیاسی اونٹ کس کرو ٹ بیٹھتا ہے۔

 

ایک نظر اس پر بھی

اُترکنڑا سے چھٹی مرتبہ جیت درج کرنے والے اننت کمار ہیگڑے کی جیت کا فرق ریاست میں سب سے زیادہ؛ اسنوٹیکر کو سب سے زیادہ ووٹ بھٹکل میں حاصل ہوئے

پارلیمانی انتخابات میں شمالی کینرا کے بی جے پی امیدوار اننت کمار ہیگڈے نے پوری ریاست کرناٹک میں سب سے زیادہ ووٹوں سے کامیابی حاصل کی ہے۔ انہوں نے 479649 ووٹوں کی اکثریت سے کانگریس  جے ڈی ایس مشترکہ اُمیدور  آنند اسنوٹیکر  کو شکست دی ۔

ریاست میں کبھی ہار کا منھ نہ دیکھنے والے سیاسی لیڈروں کی ذلت بھری شکست

ریاست کرناٹکا میں انتخابی میدان میں کبھی ہار کا منھ نہ دیکھنے والے چند نامورسیاسی لیڈران جیسے ملیکا ارجن کھرگے، دیوے گوڈا، ویرپا موئیلی اورکے ایچ منی اَپا وغیرہ کو اس مرتبہ پارلیمانی انتخاب میں انتہائی ذلت آمیز شکست سے دوچار ہونا پڑا ہے۔ 

منگلورو:کلاس میں اسکارف پہننے پر سینٹ ایگنیس کالج نے طالبہ کو دیا ٹرانسفر سرٹفکیٹ۔طالبہ نے ظاہر کیاہائی کورٹ سے رجوع ہونے اور احتجاجی مظاہرے کاارادہ

کلاس روم میں اسکارف پہن کر حاضر رہنے کی پاداش میں منگلورومیں واقع سینٹ ایگنیس کالج نے پی یو سی سال دوم کی طالبہ فاطمہ فضیلا کو ٹرانسفر سرٹفکیٹ دیتے ہوئے کالج سے باہر کا راستہ دکھا دیا ہے۔

بھٹکل میں رمضان باکڑہ کی نیلامی؛ 40 باکڑوں کے لئے میونسپالٹی کو 1126 درخواستیں

رمضان کے آخری عشرہ کے لئے بھٹکل  میں لگنے والے رمضان باکڑہ کی آج میونسپالٹی کی جانب سے  نیلامی کی گئی۔ بتایا گیاہے کہ 40 باکڑوں کی نیلامی کے لئے  میونسپالٹی کے جملہ 1126 درخواست فارمس فروخت ہوئے تھے۔ 

اسمرتی ایرانی کے قریبی سابق پردھان کا گولی مار کر قتل ، علاقہ میں کشیدگی

اترپردیش کے امیٹھی میں ہفتہ دیر رات اسمرتی ایرانی کے قریبی سابق پردھان کا گولی مار کر قتل کردیا گیا ۔ اطلاعات کے مطابق جامو تھانہ حلقہ کے برولیا گاوں کے سابق پردھان سریندر سنگھ کو نامعلوم بدمعاشوں نے گولی مار کر موت کے گھاٹ اتار دیا ۔ بدمعاشوں نے واقعہ کو اس وقت انجام دیا جب ...

مسلمانوں کے خلاف اشتعال انگیز بیانات دینے والوں کی بھاری اکثریت کے ساتھ جیت

مسلمانوں کے خلاف ہمیشہ اشتعال انگیز بیانات دینے والوں کو اس مرتبہ لوک سبھا انتخابات میں بھاری اکثریت کے ساتھ کامیابی حاصل ہوئی ہے۔ اترکنڑا لوک سبھا حلقے کے بی جے پی اُمیدوار اننت کمار ہیگڈے جنہوں نے کہا تھا کہ جب تک اسلام رہے گا دہشت گردی رہے گی،اسی طرح انہوں نے  دستور کی ...