ہبلی ۔ انکولہ ریل رابطہ کا معاملہ پھر کھٹائی میں۔ نیشنل وائلڈ لائف بورڈ نے دی ریاستی حکومت کو دوبارہ جائزہ لینے کی تجویز

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 9th September 2018, 1:37 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

کاروار 9؍ستمبر (ایس او نیوز)ضلع شمالی کینرا کو ہبلی سے جوڑنے والا ہبلی انکولہ ریلوے لائن منصوبہ پھر ایک بار کھٹائی پڑتا نظر آرہا ہے ، کیونکہ اس منصوبے کے تحت ریلوے لائن کو مغربی گھاٹ سے گزرنا ہے اس لئے اس پر عمل درآمد سے قبل اس سے جنگلات اور وہاں کی زندگی پر پڑنے والے اثرات کا دوبارہ جائزہ لینے کی تجویز ریاستی حکومت کو نیشنل وائلڈ لائف بورڈ نے پیش کی ہے۔

موصولہ رپورٹ کے مطابق وزیر ماحولیات، جنگلات و تبدیلئ موسمیات ڈاکٹر ہرش وردھن کی صدارت میں منعقد ہونے والی نیشنل وائلڈ لائف بورڈ کی اسٹانڈنگ کمیٹی کی میٹنگ میں ریاستی حکومت کو اس منصوبے کا از سرِ نو جائزہ لینے کی تجویز بھیجنا منظور کیا گیا۔آئندہ ریاستی وائلڈ لائف بورڈ کی طرف سے منظوری ملنے کے بعد ہی ریلوے کے منصوبے پر غور کرنے کا فیصلہ ہوا۔

واضح رہے کہ وائلڈ لائف اکٹیوسٹ گریدھر کلکر نی نے کچھ دن پہلے ہی وائلڈ لائف کنزرویشن کے ڈائریکٹر اور ممبر سکریٹری کے علاوہ نیشنل وائلڈ لائف بورڈ کو تفصیلی میمورنڈم بھیجتے ہوئے مطالبہ کیا تھا کہ ریاستی وائلڈ لائف کی منظوری نہ لیے جانے کی وجہ سے اس منصوبے کو مسترد کردیا جائے۔ وزارت ماحولیات، جنگلات و تبدیلئ موسمیات کی طرف سے جاری کیے گئے ضوابط کے مطابق جنگلاتی علاقوں، نیشنل پارکس، سینکچوریز وغیرہ کے اطراف 10کلو میٹر کے احاطے میں کسی بھی غیرجنگلاتی سرگرمی والے منصوبے پر عمل کرنا ہے تو پھر ریاستی وائلڈ لائف بورڈ کی جانب سے منظوری حاصل کرنا ضروری ہے۔پھر اس کے بعد نیشنل وائلڈ لائف بورڈ سے منظوری لینا لازمی ہوجاتا ہے۔

وائلڈلائف اکٹیوسٹ گریدھرکلکرنی کا کہنا ہے کہ اگر اس ریلوے منصوبے پر عمل کیاگیا توضلع شمالی کینرا میں ترقی کے نام پر ختم ہونے کے بعد جو تھوڑا بہت جنگلاتی علاقہ بچا ہوا ہے وہ بھی برباد ہوجائے گا۔اور جنگلی جانوروں کے ٹھکانے ختم ہوجائیں گے۔

ہبلی انکولہ ریل منصوبہ کئی برسوں سے کسی نہ کسی وجہ سے ٹھنڈے بستے میں ڈالنے کی نوبت آتی رہی ہے۔ 2000 ؁ء میں اس وقت کے وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی نے اس منصوبے کا سنگ بنیاد رکھا تھا۔اس کے بعدماحولیات اور جنگلی زندگی کو نقصان ہونے کا اندیشہ جتا کر اس منصوبے کو عدالت میں چیلنج کیاگیا۔ ان تمام مسائل سے نمٹنے کے بعد جلد ہی اس پر عمل درآمد کی امیدیں پیدا ہوگئی تھیں۔اب نیشنل وائلڈ لائف بورڈ نے گیند واپس پھر ریاستی حکومت کے پالے میں ڈال دی ہے۔دیکھنا یہ ہے کہ ریاستی حکومت اس ضمن میں کیا اقدام کرتی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بیلتھنگڈی میں غیر قانونی ریت کا ذخیرہ ؛ تحصیلدار کی قیادت میں چھاپہ : کشتیاں ضبط

بیلتھنگڈی تحصیلدار کی قیادت میں تعلقہ کے دھرمستھل ، اجکوری نامی مقام پر چھاپہ مارتے ہوئے افسران نے ندی کنارے جاری غیر قانونی ریت سپلائی کے ذخیرے اور کشتیوں کو ضبط کرلینے کا واقعہ پیش آیا ہے۔

منگلورمیں سواریوں کی تلاشی کے دوران غیر قانونی ریت سپلائی کرنے والی ٹپر لاریاں ضبط

منگلورو جنوبی زون کے اے سی پی ، جنوبی زون راؤڑی نگراں دستہ کے ساتھ مشترکہ طورپر کنکناڑی شہری پولس تھانہ حدود کے پڈیل جنکشن اور پمپ ویل قومی شاہراہ پر سواریوں کی تلاشی کے دوران غیر قانونی طورپر ریت سپلائی کرنےو الی لاریوں کا پتہ چلنے پر سواریوں کو ضبط کرنے کا واقعہ پیش آیا ہے۔

ہوناور شراوتی ندی سے ریت سپلائی کے انتظار میں مزدور، ٹھیکدار اور سواری مالکان :کیا حکومت اس طرف توجہ دے گی ؟

گذشتہ جون سے بند ریت سپلائی ستمبر ختم ہونےکو ہے شروع ہونے کے کوئی آثار نظر نہیں آنے  سے ریت پر انحصار کرنے والے مزدور، سواری مالکان، ٹھیکدار سب پریشان ہیں۔ سرکاری عمارات سمیت کئی پرائیویٹ عمارات کی تعمیر ریت نہیں ملنے کی وجہ سے رکی ہوئی ہیں، ترقی کو گرہن لگاہے۔

مینگلور کے قریب بنٹوال میں نابالغہ کی عصمت دری کی کوشش : تین ملزم گرفتار

چہارم جماعت میں زیر تعلیم نابالغہ کی عصمت دری کی کوشش کئے جانے کا واقعہ بنٹوال تعلقہ پانے منگلورو کے قریب گوڈینبلی میں پیش آیاہے۔ اس سلسلے میں بنٹوال شہری تھانہ پولس نےمعاملے کو لےکر تین ملزموں کو گرفتار کیا ہے۔

جنوبی ہند کے مشہور ومعروف عالم دین حضرت مولانا زکریا والا جاہی کا انتقال

نوبی ہند کے مشہور ومعروف،ممتاز جیدعالم دین زکریا صاحب والا جاہی طویل علالت کے بعد آج صبح 10؍بجے اپنے مالک حقیقی سے جاملے۔ مولانا کو شیواجی نگرکے براڈوے کی ان کی رہائش پر آخری دیدار کے لئے رکھا گیا تھا۔

یڈیورپا میرے صبر کا امتحان نہ لیں؛ حکومت کو گرانے کی بارہا کوشش بی جے پی کو زیب نہیں دیتی: کمار سوامی کا بیان

وزیر اعلیٰ ایچ ڈی کمار سوامی نے ریاستی بی جے پی صدر یڈیورپا کو متنبہ کیا ہے کہ بارہا ریاستی حکومت کو گرانے کی کوشش کرکے وہ ان کے صبر کا امتحان نہ لیں۔اگر یہ کوشش جاری رہی تو یڈیورپا کو اس کی بھاری قیمت ادا کرنی پڑے گی۔

ارکان اسمبلی کو خریدنے کی کوشش پرسدرامیا نے کہا؛ اپوزیشن کار ول ادا کرنے کی بجائے بی جے پی بے شرمی پر اتر آئی ہے

سابق وزیر اعلیٰ اور ریاستی  حکمران اتحاد کی رابطہ کمیٹی کے چیرمین سدرامیا نے کہا ہے کہ ریاست میں بی جے پی کو ایک تعمیری اپوزیشن پارٹی کا رول ادا کرنا چاہئے، لیکن ایسا کرنے کے  بجائے انتہائی بے شرمی سے یہ پارٹی ریاستی حکومت کو گرانے کی کوششوں کو اپنا معمول بناچکی ہے۔