ہبلی ۔ انکولہ ریل رابطہ کا معاملہ پھر کھٹائی میں۔ نیشنل وائلڈ لائف بورڈ نے دی ریاستی حکومت کو دوبارہ جائزہ لینے کی تجویز

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 9th September 2018, 1:37 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

کاروار 9؍ستمبر (ایس او نیوز)ضلع شمالی کینرا کو ہبلی سے جوڑنے والا ہبلی انکولہ ریلوے لائن منصوبہ پھر ایک بار کھٹائی پڑتا نظر آرہا ہے ، کیونکہ اس منصوبے کے تحت ریلوے لائن کو مغربی گھاٹ سے گزرنا ہے اس لئے اس پر عمل درآمد سے قبل اس سے جنگلات اور وہاں کی زندگی پر پڑنے والے اثرات کا دوبارہ جائزہ لینے کی تجویز ریاستی حکومت کو نیشنل وائلڈ لائف بورڈ نے پیش کی ہے۔

موصولہ رپورٹ کے مطابق وزیر ماحولیات، جنگلات و تبدیلئ موسمیات ڈاکٹر ہرش وردھن کی صدارت میں منعقد ہونے والی نیشنل وائلڈ لائف بورڈ کی اسٹانڈنگ کمیٹی کی میٹنگ میں ریاستی حکومت کو اس منصوبے کا از سرِ نو جائزہ لینے کی تجویز بھیجنا منظور کیا گیا۔آئندہ ریاستی وائلڈ لائف بورڈ کی طرف سے منظوری ملنے کے بعد ہی ریلوے کے منصوبے پر غور کرنے کا فیصلہ ہوا۔

واضح رہے کہ وائلڈ لائف اکٹیوسٹ گریدھر کلکر نی نے کچھ دن پہلے ہی وائلڈ لائف کنزرویشن کے ڈائریکٹر اور ممبر سکریٹری کے علاوہ نیشنل وائلڈ لائف بورڈ کو تفصیلی میمورنڈم بھیجتے ہوئے مطالبہ کیا تھا کہ ریاستی وائلڈ لائف کی منظوری نہ لیے جانے کی وجہ سے اس منصوبے کو مسترد کردیا جائے۔ وزارت ماحولیات، جنگلات و تبدیلئ موسمیات کی طرف سے جاری کیے گئے ضوابط کے مطابق جنگلاتی علاقوں، نیشنل پارکس، سینکچوریز وغیرہ کے اطراف 10کلو میٹر کے احاطے میں کسی بھی غیرجنگلاتی سرگرمی والے منصوبے پر عمل کرنا ہے تو پھر ریاستی وائلڈ لائف بورڈ کی جانب سے منظوری حاصل کرنا ضروری ہے۔پھر اس کے بعد نیشنل وائلڈ لائف بورڈ سے منظوری لینا لازمی ہوجاتا ہے۔

وائلڈلائف اکٹیوسٹ گریدھرکلکرنی کا کہنا ہے کہ اگر اس ریلوے منصوبے پر عمل کیاگیا توضلع شمالی کینرا میں ترقی کے نام پر ختم ہونے کے بعد جو تھوڑا بہت جنگلاتی علاقہ بچا ہوا ہے وہ بھی برباد ہوجائے گا۔اور جنگلی جانوروں کے ٹھکانے ختم ہوجائیں گے۔

ہبلی انکولہ ریل منصوبہ کئی برسوں سے کسی نہ کسی وجہ سے ٹھنڈے بستے میں ڈالنے کی نوبت آتی رہی ہے۔ 2000 ؁ء میں اس وقت کے وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی نے اس منصوبے کا سنگ بنیاد رکھا تھا۔اس کے بعدماحولیات اور جنگلی زندگی کو نقصان ہونے کا اندیشہ جتا کر اس منصوبے کو عدالت میں چیلنج کیاگیا۔ ان تمام مسائل سے نمٹنے کے بعد جلد ہی اس پر عمل درآمد کی امیدیں پیدا ہوگئی تھیں۔اب نیشنل وائلڈ لائف بورڈ نے گیند واپس پھر ریاستی حکومت کے پالے میں ڈال دی ہے۔دیکھنا یہ ہے کہ ریاستی حکومت اس ضمن میں کیا اقدام کرتی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل : دوست کو بچانے کی کوشش میں شیرور کا نوجوان خود جھلس گیا؛ شدید زخمی

اپنے دوست کو بچانے کی کوشش میں بھٹکل کے پڑوسی علاقہ شیرور  کا ایک نوجوان خود بری طرح جھلس جانے کی  واردات گوا کے مڈگائوں میں پیر کو پیش آئی ہے، مگر نوجوان کے بقول وہ  کسی نہ کسی طرح آج بدھ شام کو بھٹکل سرکاری اسپتال پہنچنے میں کامیاب ہوگیا، جہاں سے اُسے اب اُڈپی شفٹ کیا گیا ...

ڈوبتے دوستوں کوبچا کر خود موت کا شکار ہونے والے سرسی کے لڑکے کوحکومت کی طرف سے ’ہوئیسلا‘ بہادری ایوارڈ

ندی میں تیرنے کے دوران  ڈوبنے والے  2 دوستوں کی حفاظت کرتے ہوئے موت کا شکار ہو ئے  سرسی کے   ہیمنت ایس ایم نامی لڑکے کو  کرناٹکا حکومت نے ’ہوئیسلا‘ایوارڈ سے نوازے جانے کا اعلان کیا ہے۔

شیرور توحید پبلک اسکول میں مستقبل کے معمار ’یوم ِ اطفال ‘ کا خوبصورت پروگرام

بچے پھولوں کی طرح معصوم ہوتے ہیں ،بڑے  جو کرتے ہیں بچے بھی  وہی سیکھتے ہیں اسی لئے بڑوں کو بہترین و مثالی  نمونہ  پیش کرنا چاہئے تاکہ مستقبل میں  بچے بھی انہی  کے نقش قدم پر چل کر  بڑے بنیں۔ان خیالات کا اظہار اسکول کے استاد مولوی ضیاء الرحمن رکن الدین ندوی نےکیا۔

بھٹکل :’حضرت محمدﷺبنی نوع انسان کے عظیم رہنما ‘عنوان کے تحت جماعت اسلامی ہند کرناٹک کی 16نومبر سے ریاست گیر سیرت مہم : ہرایک انسان کو نبی ﷺ کی سیرت کا مطالعہ ضروری

آپسی عدم اعتماداور نفرت کی فضا کو دور کرتے ہوئے امن وسلامتی ، بھائی چارگی اور انسانیت کا پیغام پہنچانے جیسے  نیک مقاصد کو لے کر جماعت اسلامی ہند حلقہ کرناٹکا کے زیراہتمام 16نومبر سے 30نومبر تک ’’حضرت محمد ﷺ بنی نوع انسان کے عظیم رہنما‘‘ کے عنوان سے ریاست گیرسیرت مہم ...

جمہوریت اوردستورکے تحفظ کے لیے ووٹر فہرست میں ناموں کا اندراج لازمی سی آر ڈی ڈی پی کی ملک گیر جدوجہد

مسلمانوں کے لیے ایوان میں کم ہورہی مسلم نمائندگی سے زیادہ تشویشناک صورتحال یہ ہے کہ ملک بھر میں ووٹرس فہرست سے کروڑوں مسلمانوں کے نام غائب ہیں۔ ایک سروے کے مطابق ملک میں تقریباً 25 فیصد سے زائد اہل ووٹروں کے نام فہرست سے غائب ہیں۔ اس اہم مسئلے پر ماہر معاشیات و سچر کمیٹی کے ممبر ...