ہبلی ۔ انکولہ ریل رابطہ کا معاملہ پھر کھٹائی میں۔ نیشنل وائلڈ لائف بورڈ نے دی ریاستی حکومت کو دوبارہ جائزہ لینے کی تجویز

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 9th September 2018, 1:37 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

کاروار 9؍ستمبر (ایس او نیوز)ضلع شمالی کینرا کو ہبلی سے جوڑنے والا ہبلی انکولہ ریلوے لائن منصوبہ پھر ایک بار کھٹائی پڑتا نظر آرہا ہے ، کیونکہ اس منصوبے کے تحت ریلوے لائن کو مغربی گھاٹ سے گزرنا ہے اس لئے اس پر عمل درآمد سے قبل اس سے جنگلات اور وہاں کی زندگی پر پڑنے والے اثرات کا دوبارہ جائزہ لینے کی تجویز ریاستی حکومت کو نیشنل وائلڈ لائف بورڈ نے پیش کی ہے۔

موصولہ رپورٹ کے مطابق وزیر ماحولیات، جنگلات و تبدیلئ موسمیات ڈاکٹر ہرش وردھن کی صدارت میں منعقد ہونے والی نیشنل وائلڈ لائف بورڈ کی اسٹانڈنگ کمیٹی کی میٹنگ میں ریاستی حکومت کو اس منصوبے کا از سرِ نو جائزہ لینے کی تجویز بھیجنا منظور کیا گیا۔آئندہ ریاستی وائلڈ لائف بورڈ کی طرف سے منظوری ملنے کے بعد ہی ریلوے کے منصوبے پر غور کرنے کا فیصلہ ہوا۔

واضح رہے کہ وائلڈ لائف اکٹیوسٹ گریدھر کلکر نی نے کچھ دن پہلے ہی وائلڈ لائف کنزرویشن کے ڈائریکٹر اور ممبر سکریٹری کے علاوہ نیشنل وائلڈ لائف بورڈ کو تفصیلی میمورنڈم بھیجتے ہوئے مطالبہ کیا تھا کہ ریاستی وائلڈ لائف کی منظوری نہ لیے جانے کی وجہ سے اس منصوبے کو مسترد کردیا جائے۔ وزارت ماحولیات، جنگلات و تبدیلئ موسمیات کی طرف سے جاری کیے گئے ضوابط کے مطابق جنگلاتی علاقوں، نیشنل پارکس، سینکچوریز وغیرہ کے اطراف 10کلو میٹر کے احاطے میں کسی بھی غیرجنگلاتی سرگرمی والے منصوبے پر عمل کرنا ہے تو پھر ریاستی وائلڈ لائف بورڈ کی جانب سے منظوری حاصل کرنا ضروری ہے۔پھر اس کے بعد نیشنل وائلڈ لائف بورڈ سے منظوری لینا لازمی ہوجاتا ہے۔

وائلڈلائف اکٹیوسٹ گریدھرکلکرنی کا کہنا ہے کہ اگر اس ریلوے منصوبے پر عمل کیاگیا توضلع شمالی کینرا میں ترقی کے نام پر ختم ہونے کے بعد جو تھوڑا بہت جنگلاتی علاقہ بچا ہوا ہے وہ بھی برباد ہوجائے گا۔اور جنگلی جانوروں کے ٹھکانے ختم ہوجائیں گے۔

ہبلی انکولہ ریل منصوبہ کئی برسوں سے کسی نہ کسی وجہ سے ٹھنڈے بستے میں ڈالنے کی نوبت آتی رہی ہے۔ 2000 ؁ء میں اس وقت کے وزیر اعظم اٹل بہاری واجپئی نے اس منصوبے کا سنگ بنیاد رکھا تھا۔اس کے بعدماحولیات اور جنگلی زندگی کو نقصان ہونے کا اندیشہ جتا کر اس منصوبے کو عدالت میں چیلنج کیاگیا۔ ان تمام مسائل سے نمٹنے کے بعد جلد ہی اس پر عمل درآمد کی امیدیں پیدا ہوگئی تھیں۔اب نیشنل وائلڈ لائف بورڈ نے گیند واپس پھر ریاستی حکومت کے پالے میں ڈال دی ہے۔دیکھنا یہ ہے کہ ریاستی حکومت اس ضمن میں کیا اقدام کرتی ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کاروار: لاپتہ ماہی گیروں کا معاملہ۔ ڈپٹی کمشنر کے دفتر میں خصوصی اجلاس؛ بنگلہ دیشیوں کو ملازم نہ رکھنے ڈپٹی کمشنر کی تاکید

کشتی سمیت لاپتہ ماہی گیروں کے مسئلے پر ایک خصوصی جائزاتی میٹنگ ضلع شمالی کینرا کے ڈپٹی کمشنر ایس ایس نکول کے دفتر میں منعقد کی گئی، جس میں ماہی گیروں کے لیڈر، پولیس افسران اورتحقیقاتی ٹیم کے افسران شریک ہوئے۔ اس اجلاس میں ساحلی علاقے میں تحفظ اور سیکیوریٹی کے مسئلے پر بھی غور ...

ملیناڈو کراولی ریلوے لائن منصوبے پر جلد عمل درآمد کے لئے ریاستی وزیر اعلیٰ کمار اسوامی کا مرکزی حکومت سے تقاضہ

شیموگہ، شرنگیری، منگلورو جیسے علاقوں سے گزرنے والی ملیناڈو کراولی ریلوے لائن منصوبے پر جلد عمل درآمد کے لئے ریاستی وزیر اعلیٰ کمار ا سوامی نے مرکزی حکومت سے تقاضہ کیا ہے۔

ہبلی۔انکولہ ریلوے منصوبہ:سڑکوں پر احتجاج کرنے سے ریل آنے والی نہیں ہے۔ سپریم کورٹ کے فیصلے کا انتظار کیا جارہا ہے۔ اننت کمار ہیگڈے کا بیان

مرکزی وزیر اننت کمار ہیگڈے نے ہبلی۔انکولہ ریلوے منصوبے میں ہورہی تاخیر کے سلسلے میں کہا کہ اس میں کوئی سیاسی کھیل نہیں ہورہا ہے، بلکہ سپریم کورٹ نے اس منصوبے پر اسٹے لگا رکھاہے اس لئے عدالت کے فیصلے کا انتظار کیا جارہا ہے۔ اس تاخیر کے خلاف راستہ روکویا احتجاجی مظاہرے کرنے سے ...

بھٹکل میں ویلفئیر پارٹی آف انڈیا کے زیراہتمام قومی صدر کی آمد پر خطاب عام : مسلمان  جب تک حکمرانی میں شامل نہیں ہونگے کوئی مسائل حل نہیں ہونگے : قاسم رسول الیاس

آزادی کے 70سالوں بعد بھی مسلمان  سیاسی طور پر بے وزن ، بے وقعت اور پسماندگی کا شکار ہیں۔ جو کل تک اقتدار کے مالک تھےآج ملکی سیاست میں ان کاکوئی کردار نہیں ہے، اس کے برعکس پچھڑے طبقات، دلت، اچھوت ، او بی سی ایک سیاسی قوت کے طورپر ابھر کر اپنی طاقت منوانے میں کامیاب ہیں ان کی ایک ...

کاروار: بوٹ سمیت لاپتہ ہونے والے ماہی گیروں کے اہل خانہ کو گزربسر کے لئے ریاستی حکومت کی طرف سے فی کس ایک لاکھ روپے کی امداد

ضلع شمالی کینرا کے ایڈیشنل ڈی سی ڈاکٹر سریش ایٹنال نے بتایا ہے کہ ملپے بندرگاہ سے ماہی گیری کے لئے نکلنے کے بعد مہاراشٹرا کے حدودمیں لاپتہ ہونے والی سوورنا تریبھوجا ماہی گیر کشتی پر موجود 7مچھیروں کے اہل خانہ کو گزربسر کے لئے ریاستی حکومت کی جانب سے عبوری راحت کے طورپر فی کس ...

ہائی کمان کہے تو وزارت چھوڑ نے کیلئے بھی تیار : ڈی کے شیو کمار

ریاست میں سیاسی گہما گہمی کا فی تیز ہونے لگی ہے ۔ ایک طرف جہاں کانگریس اور جنتادل( سکیولر) اپنی مخلوط حکومت کو بچانے میں لگے ہیں وہیں بھارتیہ جنتا پارٹی ( بی جے پی ) نے آپریشن کنول کے ذریعہ دیگر پارٹیوں کے اراکین اسمبلی کو خریدکر برسر اقتدار آنے کے حربے جاری رکھے ہیں۔

ریسارٹ میں اراکین اسمبلی کی تگڑم بازی پر سدارامیا کی برہمی جھگڑے نے ریاست کے 224ایم ایل ایز کوشرمندہ کردیا ہے :یڈیورپا

کانگریس کے اراکین اسمبلی آنند سنگھ ،گنیش اور بھیمانائک کے درمیان ہوئے جھگڑے کے دوران آنند سنگھ زخمی ہوکر شہر کے شیشادری پورم میں واقع اپولو اسپتال میں زیرعلاج ہیں۔

ملیناڈو کراولی ریلوے لائن منصوبے پر جلد عمل درآمد کے لئے ریاستی وزیر اعلیٰ کمار اسوامی کا مرکزی حکومت سے تقاضہ

شیموگہ، شرنگیری، منگلورو جیسے علاقوں سے گزرنے والی ملیناڈو کراولی ریلوے لائن منصوبے پر جلد عمل درآمد کے لئے ریاستی وزیر اعلیٰ کمار ا سوامی نے مرکزی حکومت سے تقاضہ کیا ہے۔

کرناٹک میں ناٹک جاری: یڈی یورپانے بی جے پی ممبران کو بلایا واپس

کرناٹک کے سیاسی ڈرامہ میں ایک نیا موڑآگیا ہے۔ریاست میں سیاسی بحران کے درمیان بی جے پی کے ریاستی صدر بی ایس یدی یرپپا نے بی جے پی پارٹی کے تمام ایم ایل اے کو واپس بلایا۔کرناٹک میں ممبران اسمبلی کی خریدو فروخت کی خبروں کے درمیان ان بی جے پی ممبران اسمبلی کو قومی دارالحکومت سے ...