کورگ میں بارش کی بھاری تباہی ، تین اموات،زمین کھسکنے کے متعدد واقعات 

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 17th August 2018, 8:30 PM | ریاستی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بنگلورو،17؍اگست(ایس او نیوز) جنوبی ہند کا کشمیر کہلانے والے ریاست کے کورگ ضلع میں بارش نے زبردست تباہی مچادی ہے۔ ایک طرف بارش کا سلسلہ رکنے کا نام نہیں لے رہا ہے تو دوسری طرف پڑوسی ریاست کیرلا میں طوفانی بارش کے سبب وہاں کی ندیوں کا پانی بھی کرناٹک کی طرف بہادیا گیا ہے، اس سے کورگ اور آس پاس کے علاقوں کے لوگوں پر مصیبتوں کا دوہرا پہاڑ ٹوٹ پڑا ہے۔

میسور سے کورگ کی طرف جانے والی سڑکوں پر جابجا زمین کھسکنے کے واقعات کے سبب یہ علاقہ کرناٹک کے دیگر علاقوں سے تقریباً کٹ چکا ہے۔موسلادھار بارش کے سبب ایک طرف نشیبی علاقے زیر آب آگئے ہیں تو ڈھلانوں پر موجود مکانات زمین کھسکنے کے سبب تباہ ہوچکے ہیں۔ ضلع میں زمین کھسکنے کے نتیجے میں اب تک تین لوگوں کی موت ہوچکی ہے، یہاں کے گھاٹ سیشن میں ہزاروں کی تعداد میں درخت اکھڑگئے ہیں۔ راحت کاری کا کام بھی اس لئے ناممکن ہوچکا ہے کہ بارش بالکل نہیں تھم رہی ہے۔

ضلع بھر میں کئی پرانے مکانات کمزور ہوچکے ہیں ، ان میں مقیم لوگوں کو محفوظ مقامات پر منتقل ہوجانے کی ہدایت دے دی گئی ہے۔ نشیبی علاقوں کے لوگوں کو راحت کاری کیمپوں میں ٹھہرایا گیا ہے۔ ضلعی انتظامیہ کی طرف سے یہاں پر ان لوگوں کے لئے کھانے کا انتظام کیا گیا ہے۔ ریاست کے ایک اہم سیاحتی مرکز کے طور پر مشہور کورگ اور مرکیرہ میں مسلسل بارش نے تقریباً تمام سیاحتی مقامات کو بھاری نقصان پہنچایا ہے۔ یہاں کی تمام سڑکیں زمین کھسکنے کی وجہ سے مٹی سے بھر چکی ہیں۔ راحت کاری کے لئے کئی تنظیمیں کام کررہی ہیں۔ مسلسل بارش اور زمین کھسکنے کی وجہ سے کئی مکانات اپنی جگہ سے سو تا دیڑھ سو فیٹ کھسک کر دو ر چلے گئے ہیں۔اور ان مکانوں کے کسی بھی وقت منہدم ہونے کا خطرہ بڑھ گیا ہے۔ حالانکہ ان واقعات کی وجہ سے کوئی جانی نقصان نہیں ہوا ہے، لیکن بھاری مالی نقصانات کی اطلاع موصول ہوئی ہے۔

ضلع کے سوموار پیٹ تعلق کے کئی دیہاتوں سے لوگوں کو احتیاطی طور پر باہر نکال لیا گیا ہے او ر یہ دیہات پانی سے لبریز ہوچکے ہیں۔ ریاستی وزیر مالگزاری آر وی دیش پانڈے نے متاثرہ علاقوں کا دورہ کیا اور یہاں اعلیٰ افسروں کے ساتھ راحت کاری کے کاموں کو تیزی سے آگے بڑھانے کے سلسلے میں سخت احکامات صادر کئے۔ ضلع انچارج وزیر سارا مہیش کی نگرانی میں راحت کاری کا کام چل رہا ہے۔ کورگ کے متاثرین کی راحت کاری کے لئے میسور میں ایک مرکز قائم کیا گیا ہے۔ امدادی اشیاء کا ذخیرہ میسور کے ٹاؤن ہال میں کیا جارہا ہے۔ میسور سٹی کارپوریشن کی طرف سے طبی خدمات مہیا کرائی جارہی ہیں۔ ضلع کے ڈپٹی کمشنر ابھی رام شنکر کی نگرانی میں یہ راحت کاری مسلسل جاری ہے۔ 

ایک نظر اس پر بھی

آئی ایم اے معاملہ:منصورخان نے کی خودسپردگی کی پیشکش،ویڈیو پیغام میں جان کے خطرے کے خدشے کا اظہار-پولیس کمشنر کے سامنے تمام تفصیلات رکھنے کی یقین دہانی

ای ڈی کے ذریعہ سمن جاری ہونے کے تین دن کے بعد گذشتہ 8 جون سے مفرور آئی ایم اے کے منیجنگ ڈائرکٹر محمدمنصورخان نے اپنی زندگی کا ثبوت دیتے ہوئے ایک ریکارڈ ویڈیو پیغام پولیس کمشنر الوک کمار اوردیگر سرمایہ کاروں کے لئے ریلیز کیا -

لوگوں کا دکھ درد جاننے دیہات کے دورے پر نکلے وزیراعلی کمارسوامی، اسکول کی فرش پر گزاری رات

کرناٹک کے وزیر اعلی ایچ ڈی کمارسوامی گرام قیام پروگرام کے تحت دیہاتوں  کا دورہ کر رہے ہیں،وہ جمعہ کو جنوبی کرناٹک میں یادگیر ضلع میں گرمیتکل تعلقہ میں آنے والے چندرکی گاؤں پہنچے جہاں گاؤں والوں نے جم کر ان کا استقبال کیا۔ ...

دُبئی میں 18 برس سے کم عمر بچوں کی ویزہ مفت؛ 15 جولائی سے 15 ستمبر تک رہے گی سہولیت

 متحدہ عرب امارات میں سیاحتی سیزن کے دوران غیر مُلکی سیاحوں کے 18 برس سے کم عمر بچوں کے لیے مفت ویزے کی سہولت فراہم کی جا رہی ہے۔ یہ اعلان فیڈرل اتھارٹی فار آئیڈینٹٹی اینڈ سٹیزن شپ کی جانب سے کیا گیا ہے۔ دُبئی میں ہر سال سیاحتی سیزن کا آغاز 15 جولائی سے ہوتا ہے جو 15 ستمبر تک جاری ...

اسپتال قائم کرنا میری ذمہ داری نہیں ہے: کاروار میں ایم پی اننت کمار ہیگڈے کا تکبرانہ بیان

ضلع شمالی کینرا میں ایک ٹراما سینٹر اور سوپر اسپیشالٹی ہاسپٹل تعمیر کرنے کے لئے سوشیل میڈیا جو مہم چلائی جارہی ہے اور متعلقہ محکمہ جات کے افسران کو میمورنڈم دئے جارہے ہیں اس سلسلے میں ضلع کے رکن پارلیمان اننت کمار ہیگڈے نے اب تک کسی قسم کاردعمل ظاہر نہیں کیاتھا۔ الٹے سوشیل ...

کاروار میں شراب کے نشے میں دُھت کار چلانے کے دوران چار سواریوں کو ٹکر دینے کے بعد عوام نے نیوی اہلکار کی لی خوب خبر

نیوی اہلکار کو کاروار میں  اُس وقت عوام  کے ہاتھوں بری طرح    پٹنا پڑا جب  شراب کے نشے میں ڈرائیونگ کرنے کے دوران اس کی کار  یکے بعد دیگرے چار کاروں سے ٹکرا گئی۔ واردات  کاروار کے بِنگا میں کدمبا نیوی کے گیٹ کے قریب سنیچر شب کو  پیش آیا۔