کرناٹک میں دوسرے مرحلے کے انتخابات کا پرامن طورپر اختتام؛ 66.66 فیصد پولنگ؛ 227 امیدواروں کی قسمت ووٹنگ مشینوں میں بند؛4 جون کو ہوگی ووٹوں کی گنتی

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 8th May 2024, 10:23 AM | ریاستی خبریں |

بینگلور8/ مئی (ایس او نیوز) کرناٹک میں دوسرے مرحلے کے لوک سبھا انتخابات میں شمالی کرناٹک ، حید آباد کرناٹک سمیت ریاست کے 14 لوک سبھا حلقوں میں منگل کو پولنگ ہوئی۔ جس کے دوران ایک طرف شدت کی گرمی تو دوسری طرف بعض جگہوں پر ووٹنگ مشینوں میں خرابی اور بی جے پی اور کانگریس کارکنوں کے درمیان جھڑپوں وغیرہ جیسے واقعات پیش آئے مگر ان سب کے باوجود مجموعی طور پر 66.66 فیصد پولنگ ریکارڈ کی گئی۔

 شمالی کرناٹک میں شدید دھوپ کی وجہ سے درجہ حرارت میں اضافہ کے باوجود ووٹروں نے صبح سے ہی اپنے حق کے استعمال کے لیے قطار میں کھڑے ہو گئے ۔ سیاسی پارٹیوں کے امیدواروں اور لیڈروں نے اپنے ووٹ ڈالنے سے پہلے مندروں کا دورہ کیا اور پوجا کی۔ الیکشن کمیشن نے ووٹرز کی سہولت کے لیے ہنگامی صورت حال میں صحت کی دیکھ بھال فراہم کرنے کے لئے صحت کے عملے کو تعینات کیاتھا۔ کچھ پولنگ بوتھوں پر ووٹ ڈالنے کے لیےآنے والے ووٹروں کو پھلوں کا رس اور ٹھنڈا پانی مہیا کیا گیا تھا۔ اسی طرح بعض پولنگ بوتھوں پر ووٹ ڈال کر آنے والے غریب افراد کے لیے میڈیکل چیک اپ کا اہتمام بھی کیا گیا تھا۔ اس کے علاوہ بعض جگہوں پر ہوٹلوں میں ووٹرز کو مفت چائے اور اور آئے آئس کریم بھی تقسیم کی گئیں۔

مختلف ریاستوں کے قائدین، سیاسی پارٹیوں کے لیڈروں اور الیکشن میں حصہ لینے والے کل 227 امیدوار جنہوں نے ڈیڑھ ماہ تک انتخابی جلسوں، ریلیوں اور روڈ شوز کا سلسلہ جاری رکھا تھا، اب انہیں ہنگامی حالات سے راحت ملی ہے۔ الیکشن میں حصہ لینے والے تمام امیدواروں کی قسمت ووٹنگ مشینوں میں بند ہو گئی ہے، اور سب کی نظریں 4 جون کو نتائج کے اعلان پر ٹک گئی ہے۔

سابق وزیر اعلیٰ بسواراج بومی ہاویری)، جگدیش شٹر (بیلگاوی)، مرکزی وزراء پر ہلاد جوشی ( دھارواڑ) ، بھگونت کھو با ( بیدر)، ریاستی وزراء کے بچے مرنال ہیبالکر (بیلگاوی)، پرینکا جار کی ہولی (چکوڈی)، سمیتا پاٹل (باگل کوٹ) ساگر کھنڈرے ( بیدر)، ریاستی وزیر ایس ایس ملیکا ر جن کی بیوی ڈاکٹر پر بھا ملیکار جن ( داونگیرے)، سابق نائب وزیر اعلیٰ کے ایس ایشور پا (شیموگہ) اور ڈاکٹر انجلی نمبالکر (اتر کنڑا) اس الیکشن میں مقابلہ کرنے والے اہم امیدوار ہیں۔ منگل کو ہوئے انتخابات میں کل 227 امیدوار میدان میں ہیں جن میں 206 مرد اور 21 خواتین شامل ہیں۔ 14 حلقوں میں داونگیرے میں سب سے زیادہ (30) امیدوار میدان میں ہے، جبکہ وجئے پور اور رائچور میں سب سے(8) امیدوار ہیں۔ چکوڑی میں 18، بیلگاوی میں 13 ، باگل کوٹ میں 22 ، کلبرگی میں 14، بیدر میں 18، کوپل میں 19 ، بلاری میں 10، ہاویری میں 14، دھارواڑ میں 17 ، اتراکنڑ میں 13 اور شیموگہ لوک سبھا حلقوں میں 23 امیدوار اپنی قسمت آزما رہے ہیں۔ ریاست میں 26 اپریل کو ہونے والے انتخابات کے پہلے مرحلے میں اُڈپی، چکمگلورو، دکشن کنڑا، ہاسن، میسور، منڈیا، بنگلور نارتھ، بنگلور ساؤتھ، بنگلور سینٹرل، بنگلور دیہی، کولار، چکبالاپور ٹمکور ، چتر ادد گہ میں پولنگ مکمل ہوچکی ہے۔ ان حلقوں میں کل 69 فیصد ووٹنگ ہوئی تھی۔

ایک نظر اس پر بھی

کرناٹک کے سابق وزیر اعلیٰ یڈ یورپا کے خلاف غیر ضمانتی گرفتاری وارنٹ جاری

کرناٹک کی ایک عدالت نے جمعرات کو سابق وزیر اعلی اور سینئر بی جے پی لیڈر بی ایس یڈیورپا کے خلاف POCSO کیس میں ناقابل ضمانت گرفتاری وارنٹ جاری کیا۔ یدی یورپا کے خلاف بچوں کے تحفظ سے متعلق جنسی جرائم ایکٹ (POCSO) کیس کی جانچ کر رہے کرمنل انویسٹی گیشن ڈیپارٹمنٹ (سی آئی ڈی) نے پہلے انہیں ...

کرناٹک کے سابق وزیر اعلیٰ یڈی یورپا کو سی آئی ڈی کا نوٹس، پوسکو معاملے میں تفتیش کے لیے طلب

سی آئی ڈی نے بی جے پی کے سینئر لیڈر اور کرناٹک کے سابق وزیر اعلیٰ بی ایس یڈ ی یورپا کو ان کے خلاف درج پروٹیکشن آف چلڈرن فرام سیکسوئل افینس ایکٹ (پوسکو) کیس میں تفتیش کے لیے طلب کیا ہے۔

سابقہ حکومت کی نجکاری پالیسی پر کانگریس نے وزارتِ اسٹیل کے نئے وزیر ایچ ڈی کمار سوامی سے پوچھے 5 سوالات

نئی تشکیل شدہ این ڈی اے حکومت میں ایچ ڈی کمار سوامی کو اسٹیل کی وزارت دی گئی ہے۔ ان کے اس عہدے پر فائز ہونے کے بعد کانگریس نے ان سے اس وزارت سے متعلق 5 سوالات پوچھے ہیں۔ کانگریس جنرل سکریٹری جے رام رمیش نے سوشل میڈیا پلیٹ فارم ’ایکس‘ کے اپنے اکاؤنٹ پر ایچ ڈی کمار سوامی سے یہ ...

کرناٹک میں کانگریس کی کارکردگی میں مزید بہتری کی ضرورت: ڈی کے شیوکمار

کانگریس کے زیر اقتدار کرناٹک کے نائب وزیر اعلیٰ ڈی کے شیوکمار نے کرناٹک میں کانگریس کی کارکردگی پر عدم اطمینان کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کرناٹک میں انتخابی نتائج خطرے کی گھنٹی ہیں اور اس میں بہتری کی ضرورت ہے۔ خیال رہے کہ کرناٹک میں کانگریس کو 28 میں سے محض 9 سیٹیں ہی حاصل ...

جنسی استحصال و فحش ویڈیو معاملہ: عدالت نے پرجول ریونا کو 14 دنوں کے لیے عدالتی حراست میں بھیجا

کرناٹک کے فحش ویڈیو معاملے میں پھنسے جنتا دل سیکولر کے معطل لیڈر پرجول ریونا کو 42ویں اے سی ایم ایم کورٹ نے آج 14 دنوں کی عدالتی حراست میں بھیج دیا۔ یعنی اب وہ 24 جون تک جیل میں رہیں گے۔ اس معاملے کی جانچ کر رہی ایس آئی ٹی نے پیر کی صبح پرجول ریوناسے اپنی پوچھ تاچھ مکمل کر لی، اس ...