مرڈیشور نیشنل ہائی اسکول کی میر معلمہ اوراستاد برائے جسمانی تعلیم کی رخصتی پر تہنیتی جلسہ؛ دونوں ٹیچروں کو پیش کیا گیا خراج تحسین

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 11th March 2018, 12:54 AM | ساحلی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

بھٹکل،9؍مارچ(ایس او نیوز) نیشنل ہائی اسکول مرڈیشور کی میرمعلمہ و انگریزی معلمہ محترمہ صادقہ مرزانی اور اسی اسکول کے استاد برائے جسمانی تعلیم جناب محمد شفیع جتی کی سبکدوشی   کے موقع پر اُن  کے اعزاز میں ایک تہنیتی پروگرام  مورخہ 4مارچ بروز اتوار بعد نماز عصر ٹھیک 45؛4 بجے بمقام نیشنل بوائز اسکول کے احاطہ میں منعقد کیا گیا۔ جس کی صدارت اسی اسکول کے سابق میر معلم جناب حسین شریف صاحب بنگلورنے کی۔ 

پروگرام میں دونوں ٹیچروں کی اسکول میں 36 سالوں تک تدریسی خدمات انجام دینے پر سراہنا کی گئی اور ان کی گل پوشی نیز شال پوشی اور سپاس نامہ  پیش کرنے کے ساتھ ساتھ اُن کو زبردست خراج تحسین پیش کیا گیا۔ ان کی بہترین خدمات کو دیکھتے ہوئے  انتظامیہ کے ساتھ ساتھ اسکول کے اساتذہ کی طرف سے بھی سپاس نامہ پیش کیا گیا اور مسلم ایجوکیشنل سوسائٹی کے ساتھ ساتھ استاتذہ کی طرف سے بھی دونوں کو ہدیہ اور تحائف پیش کئے گئے۔

اس موقع پر صادقہ مرزانی نے اپنے تاثرات پیش کرتے ہوئے  اپنے گزرےہوئے سالوں کو یاد کیا ،اپنے سے پہلے جو انکے سرپرست اساتذہ تھے انکا فرداً فرداً شکریہ ادا کیا اور M.E.S کے اراکین و عہدیداران کا بھی شکریہ ادا کیا ،اور حاضرین کو اپنے بچوں کو اردو میڈیم میں تعلیم حاصل کرانے کی طرف توجہ دلائی،انہوں نے  کہا کہ مرڈیشور میں جتنے بھی بڑے بڑے تعلیم یافتہ لوگ ہیں اکثر اسی اردو میڈیم اسکول  سے فارغ ہیں۔

 محمد شفیع جتی نے اپنے تاثرات میں اس ادارےمیں گزرے ہوئے یادوں کو تازہ کیا ،اور اپنے رفقاء اساتذہ کا تذکرہ کیا اور انکے احسانات کو یاد کیا خاص کر انکے خاص دوست ببرکر کا تذکرہ کرتے ہوئےکہا کہ وہ انکے مخلص دوست تھے،لوگ دونوں کو رام رحیم کہہ کر پکارتے تھے۔انہوں نے  M.E.S کے عہدیداران اور انتظامیہ کا تذکرہ کرتے ہوئے کہا  کہ انھوں نے موصوف کا بہت تعاون کیا خاص کر ڈاکٹر امین الدین گوڈا (حالیہ جنرل سکریٹڑی M.E.S) کا نام لیتے ہوئے کہا کہ  انھوں نے انکا بھر پور ساتھ دیا۔ محمد شفیع نے بھی طلبہ کو اردو میڈیم میں داخلہ کرانے کی طرف توجہ دلائی اور اپنے دونوں فرزند (جو کہ انجینئر ہے اور اعلی عہدوں پر فائض ہیں)کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ وہ بھی اسی  اردو میڈیم اسکول سے فارغ ہیں۔موقع کی مناسبت سے انہوں نے طلبہ اور ذمہ داران  کو  چند نصیحتیں بھی کیں اور کہا کہ  جس طرح آج مجھے اس ادارہ سے الوداع کیا جا رہا ہے کل میرا جنازہ بھی اٹھایا جائےگا،انہوں نے موت کی یاد دلاتے ہوئے کہا کہ  سب کو ایک دن مرنا ہے اور اپنے اعمال کا حساب دینا ہے، لہذا ہم کو موت سے پہلے موت کی تیاری کرنی چاہیئے۔

مہمان خصوصی کے طور پرتشریف فرما جماعت المسلمین مرڈیشور کے صدر جناب محمد امین سیف اللہجو ان دونوں کے شاگرد بھی ہیں نے اپنے تاثرات پیش کرتے ہوئے کہا کہ دونوں اساتذہ نے اس اسکول کے لئے بہت کچھ کیا ہے ،لہذا یہ دونوں قاعدہ اور قانون کی وجہ سےجا رہے ہیں ،لیکن انکے دل اسی اسکول سے لگے رہیں گے۔اور مجھے امید ہے کہ آگے بھی ادارہ کی ترقی میں انکا رول رہے گا۔مولانا عبدالصمد ندوی قاضی مرڈیشورنے کہا کہ ان دونوں نے ادارہ ہذا کی ترقی میں اپنی زندگیاں لگائی  ہیں اس لئے انکو الوداع کہنا اچھا نہیں لگتا۔انہوں نے دونوں ٹیچروں کی خدمات کی  ستائش کی۔مولانا محمد حُسین، ڈاکٹر امین الدین گوڈا سمیت مختلف لوگوں نے ان دونوں کی خدمات کو خوب سراہا اور انکی ستائش کی۔

صدارتی خطبہ میں جناب حسین شریف صاحب نے ان دونوں کو طویل خدمات پر مبارکباد دی،اور کہا کہ دونوں نے ایک طویل عرصہ تک انکی ماتحتی میں کام کیا ہے اور دونوں اپنے فن کے ماہر اور محنتی اساتذہ ہیں،اسکے بعد اساتذہ کو بتایا کہ وہ طلبہ کی تعلم کے ساتھ ساتھ تربیت پر بھی زور دیں ،اور اردو اسکول کی ترقی کے لئے انتظامیہ کے ساتھ اہل مرڈیشورسے تعائون کرنے کی  اپیل کرتے ہوئے  کہا کہ  یہاں کے بزرگوں نے اس ادارہ کی ترقی کے لئے  بڑی بڑی قربانیاں دی ہیں ۔

جلسہ کا آغاز محمد رحیق کی تلاوت کلام پاک سے ہوا تھا،  محمد ریان خاں نے نعت پاک پیش کی تھی ۔جناب محمود گنگاولی صاحب نے آخر میں شکریہ ادا کیا ۔ ظہور حاجی امین سکریٹری M.E.S نے نظامت کے فرائض انجام دئے۔ اور تقریبا رات 00؛8 بجے جلسہ اختتام کو پہونچا۔پروگرام میں مسلم ایجوکیشنل سوسائٹی کے کلیدی عہدیداران و اراکین انتظامیہ سمیت  علماء کرام بھی شریک تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

مینگلور کے قریب بنٹوال میں نابالغہ کی عصمت دری کی کوشش : تین ملزم گرفتار

چہارم جماعت میں زیر تعلیم نابالغہ کی عصمت دری کی کوشش کئے جانے کا واقعہ بنٹوال تعلقہ پانے منگلورو کے قریب گوڈینبلی میں پیش آیاہے۔ اس سلسلے میں بنٹوال شہری تھانہ پولس نےمعاملے کو لےکر تین ملزموں کو گرفتار کیا ہے۔

ہانگل کے ہیرور میں ہوئے تشدد کے واقعات اور غریب مسلمانوں کی گرفتاریوں کے بعد اے پی سی آر ٹیم نے کیا ہانگل دورہ؛ ایس پی سے کی ملاقات

ضلع ہاویری کے ہانگل تعلقہ کے ہیرور میں گنیش تہوار کے دوران ہوئے تشدد کے واقعات کے بعد  کئی غریب مسلمانوں کی گرفتاریوں نیز کئی مسلمانوں کے  تشدد میں زخمی ہونے  کی اطلاعات کے بعد  اے پی سی آر (اسوسی ایشن فور پروٹیکشن آف سیول رائٹس) کی ایک ٹیم  ہانگل پہنچی اور متاثرہ علاقہ کا ...

کیا یلاپور کے رکن اسمبلی ہیبار کودی جائے گی وزارت ؟ کیا دیش پانڈے کو ملے گا لوک سبھا کاٹکٹ ؟ ضلع کی سیات میں ہورہی ہے زبردست ہلچل

یلاپور کے کانگریس رکن اسمبلی شیورام ہیبار وزارت کے لئے شروع کی گئی کسرت کے نتیجے میں ضلع کی سیاست میں ہلچل پیدا ہوگئی ہے۔ دوسری مرتبہ رکن اسمبلی کے طورپر منتخب ہونے والے شیورام ہیبار ، وزارت کے لئے بضد معلوم ہوتےہیں۔ انہیں مطمئن کرنے کےلئے کانگریس کے سنئیر وزیر دیش پانڈے کو ...

جیٹ ایئرویز کے سیفٹی آڈٹ کا حکم، پائلٹ صاحب  ہوا کا دباو کم کرنے والا سوئچ آن کرنا ہی بھول گئے

جیٹ ائیرویز کے طیارہ میں پائلٹ ٹیم کی غلطی کی وجہ سے مسافروں کی طبیعت بگڑنے کے معاملہ میں شہری ہوابازی کی وزارت نے ڈی جی سی اے کو ایئر لائن کا سیفٹی آڈٹ کرنے کا حکم دیا ہے۔ شہری ہوابازی کے وزیر سریش پربھو نے اس معاملہ میں جانچ کی ہدایت بھی دی ہے۔

مذہبی تہوار کی آڑ میں ہزاروں یہودیوں کی قبلہ اول میں آمد ورفت جاری

شر پسندیہودی آباد کاروں کی جانب سے قبلہ اول کی بے حرمتی کا سلسلہ جاری ہے۔ مذہبی تہوار ’عید کپور‘ کی مناسبت سے ہزاروں یہودی صبح وشام قبلہ اول میں داخل ہو کر اشتعال انگیز حرکات اورتلمودی تعلیمات کے مطابق مذہبی رسومات ادا کررہے ہیں۔

اسرائیلی ریاستی دہشت گردی، 24 گھنٹے میں 6 فلسطینی شہید

قابض صہیونی فوج نے فلسطین میں ریاستی دہشت گردی کا مظاہرہ کرتے ہوئے گذشتہ چوبیس گھنٹوں کے دوران چھ فلسطینیوں کو بے رحمی کے ساتھ شہید کر دیا۔ شہداء کا تعلق غزہ، غرب اردن اور بیت المقدس سے ہے۔اطلاعات کے مطابق دو فلسطینی کو غزہ کی پٹی میں جنگی طیاروں کے ذریعے بم باری کرکے شہید کیا ...

تین طلاق پر آرڈیننس لانامودی حکومت کی ہٹ دھرمی اورمسلم خواتین کو گمراہ کرنے کی مذموم کوشش:مولانا اسرارالحق قاسمی

معروف عالم دین وممبر پارلیمنٹ مولانا اسرارالحق قاسمی نے تین طلاق پرمودی حکومت کے آرڈیننس لانے کے اقدام کوقطعی نامناسب اور ضدو ہٹ دھرمی پر مبنی قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت کو موقر ایوان اور دستور کی کوئی پروانہیں ہے اور وہ آئندہ عام انتخابات کے پیش نظر مسلم خواتین کو گمراہ ...

طلاق دینے پر صرف مسلم مردوں کو سزاء کیوں؟ ہندومردوں کو سزاء کیوں نہیں؟ کویتا کرشنن کا سوال

ملک کی اپوزیشن جماعتوں اور سرگرم خاتون کارکنوں نے کل جبکہ حکومت ہند ’’ بیک وقت تین طلاق ‘‘ کو ایک تعزیری جرم قراردینے ‘ آرڈیننس جاری کرنے کا راستہ اختیار کیا ہے‘ حکومت سے پوچھا ہے کہ ایسے ہندومَردوں کیلئے مذکورہ نوعیت کی دفعات کیوں نہیں بنائی گئیں جو اپنی بیویوں کو ...