کنڑا فلموں سمیت بالی ووڈ فلموں کی مشہور شخصیت گریش کارناڈ انتقال کرگئے؛ کرناٹک میں سبھی اسکولوں اور سرکاری دفاتر میں چھٹی کا اعلان

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 10th June 2019, 2:33 PM | ریاستی خبریں | ملکی خبریں |

بنگلور 10/جون (ایس او نیوز) مشہور اداکار، ڈرامہ نگار ، کنڑا ادیب اور گیان پيٹھ ایوارڈ سے سرفراز گریش كرناڈ کا آج صبح 81 سال کی عمر میں بنگلور میں انتقال ہو گیا، وہ کافی دنوں سے بیمار چل رہے تھے، ان کے انتقال سے فلم اور ادب کی دنیا میں غم کی لہر دوڑ گئی  ہے۔ ان کے انتقال کی اطلاع ملتے ہی  کرناٹک میں  تین دنوں تک کے لئے  سوگ کا اعلان کیا گیا ہے جبکہ آج پیر کو اسکولوں، کالجوں اور سرکاری دفاتر میں چھٹی دے دی گئی ہے ۔

گریش کرناڈ کی پیدائش 19 مئی 1938 کو مہاراشٹرا کے ماتھیران میں ہوئی تھی ، ان کو بچپن سے ہی ڈرامے میں دلچسپی تھی، کرنارڈ ایک معاصر مصنف تھے جنہوں نے کنڑا  زبان اور ہندوستانی تھیٹر کے میدان میں بہت اہم کردار ادا کیا تھا۔ انہوں نے اپنی  تعلیم کرناٹک کے اترکنڑا اور دھارواڑ میں حاصل کی تھی ۔ انہوں نے اسکول کے وقت سے ہی تھیٹر میں کام کرنا شروع کر دیا تھا۔ گریش كرناڈ نے 1970 میں کنڑا فلم 'سنسکار' سے بطور اسکرپٹ رائٹر اپنے کیریئر کی شروعات کی تھی۔

گریش كرناڈ نے کرناٹک کے آرٹ کالج سے گریجویشن کی تعلیم حاصل کی، اس کے بعد انہوں نے انگلینڈ میں آگے کی تعلیم مکمل کی اور پھر ہندوستان لوٹ آئے، چنئی میں آکسفورڈ یونیورسٹی پریس میں 7 سال تک انہوں کام کیا، اس دوران جب ان کا دل کام میں نہیں لگا تو انہوں نے نوکری سے استعفی دے دیا، اس کے بعد انہوں نے تھیٹر میں کام کرنا  شروع کر دیا۔

گریش كرناڈ  تھیٹر میں کچھ دنوں تک کام کرنے کے بعد شکاگو چلے گئے، انہوں نے امریکہ کے شکاگو یونیورسٹی میں وزیٹنگ پروفیسر کے طور پر بھی کام کیا۔ حالانکہ کچھ ہی دنوں بعد انہوں نے وہاں بھی  کام چھوڑ دیا اور ہندوستان واپس لوٹ آئے، ہندوستان لوٹنے کے بعد وہ مکمل طور پر ادب اور فلموں سے جڑ گئے، اس دوران انہوں نے علاقائی زبانوں میں بہت فلمیں بنائیں۔

ان کے مشہور ڈراموں میں1961 میں بننے والا  یایاتی، 1964 کا تُغلق، ہے  1971کا حیاودانا کافی مشہور ہوا تھا،  وہ کنڑا میں لکھتے تھے اور بعد میں ان  کی تحریروں کا   انگریزی اور دیگر زبانوں میں  ترجمہ  ہوتا تھا۔  ان کے لکھے ہوئے  ڈراموں اور افسانوں کو تھیٹر کے ماہر ابراہیم الکاضی، علیق پدمسی اور سیتیہ دیو ڈوبے ڈائرکٹ کرتے تھے۔ 

گریش کارناڈ نے فلموں میں کام کرنے کی شروعات 1970 میں کنڑا فلم "سمسکارا" سے کی تھی۔ ویسے کرنارڈ کنڑا کے ماہر تھے مگر انہوں نے  کئی  ساری ہندی فلموں میں بھی کام کیا جس میں نشانت، منتھن وغیرہ معروف ہیں، گریش کرنارڈ نے  کئی فلموں کو ڈائرکٹ بھی کیا جس میں ومشا وریکشا اور اُتسوا شامل ہیں۔

ٹی وی کے ناظرین گریش کرنارڈ کو "مالگوڈی ڈیس" اور "اندرا دھنش"   نامی سیریل سے یاد کرتے ہیں ۔ وہ 2017 میں ریلیز ہوئی سلمان خان کی   دھماکہ خیز فلم " ٹائیگر زندہ ہے" میں آخری بار  نظر آئے تھے۔ سلمان خان کی 2012 میں ریلیز "ایک تھا ٹائیگر" میں بھی گریش کرنارڈ نے  کام کیاہے۔

ایک نظر اس پر بھی

آئی ایم اے میں سرمایہ کاری کرکے دھوکہ کھانے والے متاثرین کی قانونی مدد کے لئے اے پی سی آر کی خدمات دستیاب

آئی ایم اے میں سرمایہ کاری کرکے دھوکہ کھانے والے متاثرین کی قانونی رہنمائی اور اُن کی  مدد کے لئے  اسوسی ایشن فور پروٹیکشن آف سیول رائٹس  (اے پی سی آر)  کی خدمات حاصل کی جاسکتی ہے۔جن  لوگوں نے  اپنی چھوٹی چھوٹی سرمایہ  کاری  اس کمپنی میں کی تھی اور اب وہ کنگال ہوچکے ہیں، اے پی ...

جندال اسٹیل کمپنی معاملہ سے متعلق حکومت نے سب کمیٹی تشکیل دی، کے پی سی سی سے استعفیٰ دینے کی خبرو ں میں کوئی سچائی نہیں: دنیش گنڈو راؤ

پردیش کانگریس کمیٹی(کے پی سی سی) صدر دنیش گنڈو راؤ نے کہا کہ جندال کمپنی کے لئے زمین فروخت کرنے کے معاملہ میں ریاستی حکومت نے سب کمیٹی تشکیل دی ہے۔

آئی ایم اے معاملہ میں نرم رویہ اختیار کرنے کاسوال پیدا نہیں ہوتا: ضمیر احمد خان

آئی مانیٹری اڈوائزری (آئی ایم اے) نامی پونزی کمپنی کے دھوکہ دہی معاملہ میں نرم رویہ اختیار کئے جانے کا سوال پیدا نہیں ہوتا۔ خصوصی تحقیقاتی ٹیم (ایس آئی ٹی) کی جانب سے تحقیقات جاری ہیں۔اس پس منظر میں بی جے پی کی جانب سے عائد کئے جارہے الزامات بکواس ہیں۔