منگلورو:کلاس میں اسکارف پہننے پر سینٹ ایگنیس کالج نے طالبہ کو دیا ٹرانسفر سرٹفکیٹ۔طالبہ نے ظاہر کیاہائی کورٹ سے رجوع ہونے اور احتجاجی مظاہرے کاارادہ

Source: S.O. News Service | Published on 23rd May 2019, 11:17 AM | ساحلی خبریں |

منگلورو23/مئی (ایس او نیوز) کلاس روم میں اسکارف پہن کر حاضر رہنے کی پاداش میں منگلورومیں واقع سینٹ ایگنیس کالج نے پی یو سی سال دوم کی طالبہ فاطمہ فضیلا کو ٹرانسفر سرٹفکیٹ دیتے ہوئے کالج سے باہر کا راستہ دکھا دیا ہے۔

 اس واقعہ کے خلاف کیمپس فرنٹ آف انڈیا کے دفتر میں منعقدہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے فاطمہ فضیلا نے کہا کہ اسکارف پہن کر کالج میں حاضر رہنے کی اجازت کے لئے وہ اور اس کے والدین نے بارہا کالج انتظامیہ سے درخواستیں کی تھیں۔اس کے علاوہ مسلم طبقہ کے لیڈروں نے بھی کالج انتظامیہ سے ملاقات کرکے اسکارف پہننے کی رعایت دینے کی گزارش کی تھی مگر انتظامیہ اس پر غور کرنے کے لئے تیار نہیں ہوئی۔ پی یو سی سال اول میں نمایاں درجے سے کامیاب ہونے کے بعد فاطمہ جب سال دوم میں داخلہ لینے کے لئے پہنچی تو کالج والوں نے اسے داخلہ دینے سے نہ صرف انکار کیا بلکہ ٹرانسفر سرٹفکیٹ بھی اس کے ہاتھ میں تھمادیا۔

فاطمہ کا کہنا ہے کہ دستورہند کی دفعہ25اور28کے تحت اپنے اپنے مذہبی شعائر پر عمل کرنے کی آزادی دی گئی ہے۔ اس کے علاوہ پی یو سی محکمہ تعلیمات کی طرف سے طلبہ کے لئے یونیفارم لاگو نہ کیے جانے کا سرکیولر جاری ہوچکا ہے اس کے باوجود کالج انتظامیہ نے غیر دستوری اور غیر قانونی طور پر کلاس میں اسکارف پہننے پر پابندی لگارکھی ہے۔فاطمہ نے مزید کہا کہ ضلع انتظامیہ، محکمہ تعلیمات اور ضلع انچارج کو اس معاملے میں مداخلت کرتے ہوئے مسئلہ حل کردینا چاہیے تھا، مگر سب لوگ خاموشی اختیار کیے ہوئے ہیں جس سے لگتا ہے کہ یہ سب لوگ کالج انتظامیہ کے فیصلے کی حمایت کررہے ہیں۔فاطمہ نے کالج انتظامیہ فیصلے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ وہ اس کے خلاف ہائی کورٹ سے شکایت کرنے کا پروگرام بنارہی ہے۔ اس کے علاوہ ریاست گیر پیمانے پر اس کے خلاف احتجاجی مظاہرے کرنے کا بھی منصوبہ بنایا جارہا ہے۔ پریس کانفرنس کے دوران فاطمہ کی والدہ ممتاز اور اس کے بھائی نوال وغیرہ موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

اڈپی ڈکیتی معاملہ پولیس نے 24گھنٹے کے اندر کیا حل۔ دو ملزمین گرفتار۔مسروقہ نقدی اور چاندی بر آمد

اڈپی ضلع کے اولاکاڈو علاقے میں 12ستمبر کو ڈکیتی کی جو واردات پیش آئی تھی اور چوروں نے 22لاکھ روپے نقد اور آدھا کلو چاندی پر جو ہاتھ صاف کیا تھا اس معاملے کو پولیس نے 24گھنٹے کے اندر حل کرتے ہوئے دو ملزمین کو مہاراشٹرا اور مڈگاؤں ریلوے اسٹیشن سے گرفتار کرلیاہے۔ 

بھٹکل تعلقہ فاریسٹ زمین حق کے لئے اتی کرم دارہوراٹ گارر ویدیکے کی جانب سے 17ستمبر کو میٹنگ

بھٹکل تعلقہ کے تحصیل اور فاریسٹ اتی کرم داروں کے علاقے میں شیموگہ جنگلات زون میں شامل کئے جانے کے پس منظر میں 17ستمبر 2019بروز منگل کی صبح 10بجے شہر کے ستکار ہوٹل کے صحن میں تعلقہ فاریسٹ اتی کرم داروں کی میٹنگ انعقاد کئے جانے کی بھٹکل تعلقہ فاریسٹ ہوراٹ گارر ویدیکے کے تعلقہ صدر ...

سرسی کے پی یو کالج میں منایا گیا’موبائل ہیمرنگ ڈے‘۔ چوری چھپے کلاس روم میں لائے گئے موبائل فون پر چلایا گیا ہتھوڑا!

پری یونیورسٹی بورڈ کی طرف سے کالجوں میں زیر تعلیم طلبہ کے لئے کالج احاطے میں موبائل لانے اوراس کے استعمال پر پابندی لگائی گئی ہے۔ لیکن ریاست بھر میں تقریباً ہر پی یو سی کالج میں طلبہ اساتذہ کی نظریں بچاکر موبائل فون استعمال کرتے ہوئے پائے جاتے ہیں۔

کاروار:مساجد اور گھروں میں جاکر امداد مانگنے والے کشمیری نوجوانوں کو پولیس نے لیاحراست میں۔ گہری تفتیش کے بعد ہوئی رہائی

کاروار کی لاڈج میں کشمیری نوجوان کے قیام اور ان کے ذریعے با ر بار کشمیر سے ٹیلی فون پر رابطہ کیے جانے کی اطلاع سرکاری خفیہ ایجنسی کی طرف سے ملنے کے بعد پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے جمعرات کے دن آدھی رات کو مذکورہ تین کشمیری نوجوانوں کو اپنی حراست میں لیا۔ پھر گہری چھان بین اور ...