منگلورو:کلاس میں اسکارف پہننے پر سینٹ ایگنیس کالج نے طالبہ کو دیا ٹرانسفر سرٹفکیٹ۔طالبہ نے ظاہر کیاہائی کورٹ سے رجوع ہونے اور احتجاجی مظاہرے کاارادہ

Source: S.O. News Service | Published on 23rd May 2019, 11:17 AM | ساحلی خبریں |

منگلورو23/مئی (ایس او نیوز) کلاس روم میں اسکارف پہن کر حاضر رہنے کی پاداش میں منگلورومیں واقع سینٹ ایگنیس کالج نے پی یو سی سال دوم کی طالبہ فاطمہ فضیلا کو ٹرانسفر سرٹفکیٹ دیتے ہوئے کالج سے باہر کا راستہ دکھا دیا ہے۔

 اس واقعہ کے خلاف کیمپس فرنٹ آف انڈیا کے دفتر میں منعقدہ پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے فاطمہ فضیلا نے کہا کہ اسکارف پہن کر کالج میں حاضر رہنے کی اجازت کے لئے وہ اور اس کے والدین نے بارہا کالج انتظامیہ سے درخواستیں کی تھیں۔اس کے علاوہ مسلم طبقہ کے لیڈروں نے بھی کالج انتظامیہ سے ملاقات کرکے اسکارف پہننے کی رعایت دینے کی گزارش کی تھی مگر انتظامیہ اس پر غور کرنے کے لئے تیار نہیں ہوئی۔ پی یو سی سال اول میں نمایاں درجے سے کامیاب ہونے کے بعد فاطمہ جب سال دوم میں داخلہ لینے کے لئے پہنچی تو کالج والوں نے اسے داخلہ دینے سے نہ صرف انکار کیا بلکہ ٹرانسفر سرٹفکیٹ بھی اس کے ہاتھ میں تھمادیا۔

فاطمہ کا کہنا ہے کہ دستورہند کی دفعہ25اور28کے تحت اپنے اپنے مذہبی شعائر پر عمل کرنے کی آزادی دی گئی ہے۔ اس کے علاوہ پی یو سی محکمہ تعلیمات کی طرف سے طلبہ کے لئے یونیفارم لاگو نہ کیے جانے کا سرکیولر جاری ہوچکا ہے اس کے باوجود کالج انتظامیہ نے غیر دستوری اور غیر قانونی طور پر کلاس میں اسکارف پہننے پر پابندی لگارکھی ہے۔فاطمہ نے مزید کہا کہ ضلع انتظامیہ، محکمہ تعلیمات اور ضلع انچارج کو اس معاملے میں مداخلت کرتے ہوئے مسئلہ حل کردینا چاہیے تھا، مگر سب لوگ خاموشی اختیار کیے ہوئے ہیں جس سے لگتا ہے کہ یہ سب لوگ کالج انتظامیہ کے فیصلے کی حمایت کررہے ہیں۔فاطمہ نے کالج انتظامیہ فیصلے کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ وہ اس کے خلاف ہائی کورٹ سے شکایت کرنے کا پروگرام بنارہی ہے۔ اس کے علاوہ ریاست گیر پیمانے پر اس کے خلاف احتجاجی مظاہرے کرنے کا بھی منصوبہ بنایا جارہا ہے۔ پریس کانفرنس کے دوران فاطمہ کی والدہ ممتاز اور اس کے بھائی نوال وغیرہ موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں موسلادھار بارش؛ بندر روڈ پر کمپاونڈ کی دیوار گر گئی؛ بائک کو نقصان؛ بارش سے دو بجلی کے کھمبوں پر بھی درخت گرگئے

شہر میں گذشتہ کچھ دنوں سے بارش  کا سلسلہ جاری ہے، البتہ  پیر اور منگل کی درمیانی شب سے  آج منگل شام تک کافی اچھی بارش ریکارڈ کی گئی ہے، ایسے میں  شام کو  ایک مکان کے کمپاونڈ کی دیوار گرنے کی واردات بھی پیش آئی ہے۔

کاروار میں کرناٹکا جرنالسٹ یونین اترکنڑا کے زیراہتمام یکم جولانی کو ہوگا یوم صحافت کا ضلعی پروگرام

کرناٹکا جرنالسٹ یونین اترکنڑا ضلعی شاخ کے زیر اہتمام یکم جولائی کو ضلع پتریکابھون میں ’’یوم صحافت ‘‘ کا پروگرام منعقد کیا جائے گا جس میں سورنا نیوز کے کرنٹ آفیرس ایڈیٹر جئے پرکاش شٹی کو ہرسال دئیے جانے والا ’ہرمن موگلنگ ‘ریاستی ایوارڈ سے نوازا جائے گا۔

بھٹکل اور اطراف کے عوام توجہ دیں: دبئی اور امارات میں حادثات کے بڑھتے واقعات؛ ہندوستانی قونصل خانہ نے جاری کی سفری انشورنس کی ایڈوائزری

دبئی سمیت متحدہ عرب امارات کے مختلف شہروں اور قصبوں  میں  مختلف حادثات میں شدید  طور پر زخمی ہوکر اسپتالوں میں ایڈمٹ ہونے کی  تعداد میں  اضافہ کو دیکھتے ہوئے  اور اسپتالوں  میں اُن کا کوئی پرسان حال نہ ہونے  کے واقعات کا مشاہدہ کرنے کے بعد  ہندوستانی سفارت خانہ کی طرف سے  عرب ...

جانوروں پر حکومت کی مہربانی۔اب دوپہر 12تا3بجے کے دوران رہے گی کھیتی باڑی کی مشقت پر پابندی

کھیتی باڑی اور دیگر محنت و مشقت کے کاموں میں استعمال ہونے والے مویشیوں پر ریاستی حکومت نے بڑے مہربانی دکھاتے ہوئے ایک سرکیولر جاری کیا ہے کہ گرمی کے موسم میں تپتی دھوپ کے دوران دوپہر 12سے 3بجے تک کسان اپنے جانوروں کو کھیت جوتنے یا دوسرے مشقت کے کاموں میں استعمال نہیں کرسکیں گے۔