مینگلور کے مضافاتی علاقہ اُلائی بیٹو میں معصوم بچی کی عصمت دری کے بعد قتل کے معاملے میں پولس نے کیا چار لوگوں کو گرفتار؛ اُسی فیکٹری کے مزدور نکلے ملزم

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 24th November 2021, 2:50 PM | ساحلی خبریں |

مینگلور 24/ نومبر (ایس او نیوز) مینگلور کے مضافاتی علاقہ اُلائی بیٹّو میں تین روز قبل ایک آٹھ سالہ معصوم بچی کی عصمت دری کے بعد قتل کی واردات پیش آئی تھی جس پر کاروائی کرتےہوئے مینگلور پولس نے چار لوگوں کو گرفتار کرلیا ہے جس میں سے تین  اُسی فیکٹری کے مزدور ہیں جس فیکٹری میں معصوم بچی کے والدین بھی کام کرتے ہیں، جبکہ چوتھا پتور کی ایک فیکٹری میں مزدوری کرتا ہے۔

گرفتارشدگان کی شناخت مدھیہ پردیش، پنّا ضلع کے  جئے سنگھ (21) ، مُنیم سنگھ (20) اور  مُکیش سنگھ (20) جبکہ  ایک اور کی شناخت ریاست  جھارکھنڈ کےرانچی ضلع کے منیش تِرکی (33)  کی حیثیت سے کی گئی ہے۔ گرفتار شدگان میں تین لوگ اُسی ٹائل فیکٹری کے مزدور ہیں ، البتہ مُنیم سنگھ پتور کی ایک فیکٹری میں مزدوری کرتا تھا۔ مُنیم اپنے تین دوستوں سے ملنے کے لئے 21 نومبر کو متعلقہ فیکٹری  آیا تھا ۔

پریس کانفرنس کا انعقاد کرتےہوئے مینگلور پولس کمشنر این ششی کمار نے بتایا کہ  دو ملزم پہلے سے ہی بچی کو چاکلیٹ  وغیرہ دے کر اپنے کمرے میں لے جارہے تھے،  21 نومبر کو بھی  ان دونوں نے  معصوم بچی کو دوپہر کے وقت  اپنے کمرے میں لے گئے، پھر چاروں نے مل کر اس کے ساتھ زبردستی کی، جب بچی خون بہنے کی وجہ سے درد سے رونے اور چلانے لگی تو ایک نے معصوم کا بے رحمی کے ساتھ گلہ دبا کر کام تمام کردیا اور پھر فیکٹری کے قریب نالے میں  اس کو پھینک دیا۔  کمشنر نے بتایا کہ جب  بچی کے والدین  اور دیگر ورکرس بچی کو تلاش کرنے لگے تو یہ چار بھی اُن کے ساتھ تلاش کرنے میں شامل ہوگئے اور ایسا محسوس کرانے لگے جیسے اُن کو کچھ  پتہ ہی نہ ہو۔شام قریب چھ بجے بچی کی نعش نالے سے برآمد کی گئی۔ 

کمشنر نے بتایا کہ  اس معاملے کو سلجھانے کے لئے پولس کی چار ٹیمیں تشکیل دی گئی تھی، پوری چھان بین، سی سی ٹی وی فوٹیج اور عینی شاہدین اور ملزموں کے اعتراف وغیرہ کے بعد ان چاروں کو گرفتار کیا گیا ہے۔

 

اس نیوز کے متعلق پہلے شائع شدہ خبر:

مینگلور میں آٹھ سالہ بچی کی نعش قریبی نالے سے برآمد؛ عصمت دری کے بعد نالے میں پھینکنے کا شبہ

ایک نظر اس پر بھی

ہوناور: مقتول پریش میستا کے خاندان والوں کوسابق وزیر  دیش پانڈے کی طرف سے دی گئی امدادی رقم آخر کس کے پاس ہے ؟

پریش میستا کا قتل ہونےکے بعدپریش میستا خاندان کو ہمدردی کےناطے اس وقت کے ضلع نگراں کاروزیر آر وی دیش پانڈے نے ذاتی طورپر 50ہزارروپئے نقد مدد کئے تھے۔ ابھی تک وہ رقم دیش پانڈے تک نہیں پہنچنے سے معاملے کو لےکر چہ میگوئیاں شروع ہوگئی ہیں۔

منگلورو : طلبہ کے درمیان گروہی تصادم - کئی طلبہ ہوئے زخمی -  پولیس نے مارا ہاسٹل پر چھاپہ - 6 طالب علم گرفتار ۔ مقامی لوگوں کا احتجاج ۔ ہاسٹل خالی کروانے کا مطالبہ  

شہر کے ایک ڈگری کالج میں زیر تعلیم اور گوجرکیرے علاقے میں واقع ہاسٹل میں قیام پزیر طلبہ کے دو گروہ آپس میں لڑ پڑے جس کے نتیجے میں بعض طلبہ زخمی بھی ہوگئے ۔ مار پیٹ اور تصادم کی اطلاع ملنے پر پولیس نے دیر رات ہاسٹل پر چھاپہ مار کر کئی طالب علموں کو گرفتار کر لیا ۔

کاروار: ریاستی گورنر تھاور چند گہلوت کا کدمبا بحریہ اڈے پر پرتپاک استقبال :بحریہ دستہ کی طرف سے  گارڈآف آنر

ریاست کرناٹکا کے گورنر عزت مآب تھاورچندگہلوت 3دسمبر 2021 بروزجمعہ مرڈیشور، گوکرن سےہوتےہوئے کاروار کے کدمبا نول بیس پہنچے تو رئیر ایڈمرل مہیش سنگھ ، این ایم فلیگ آفیسر کمانڈنگ نے پرتپاک استقبال کیا۔ اور آئی این ایس کدمبا پریڈگراؤنڈ میں انہیں گارڈ آف آنر دیاگیا۔

بھٹکل میں’ نمَّا ناڈا اوکوٹا‘ کا تعارفی پروگرام : ملت کی سماجی وفلاحی خدمت ادارے کا اہم مقصد

ملت کے نوجوانوں کی روزگار حاصل کرنے  اور سرکاری سہولیات سےاستفادہ کرنےمیں رہنمائی اور عملی کام کرنےکا مقصد لےکر مینگلورو میں ایک سال پہلے بنیاد ڈالے گئے ’’نمَّا ناڈا وکوٹا‘‘ نامی ادارے کا تعارفی پروگرام بھٹکل کے گرین پیراڈائز میں 2نومبر 2021بروز جمعرات کی شام منعقد ہوا۔