کاروار:جنگی جہاز ’وکرم آدتیہ‘ میں لگی ہوئی آگ بجھانے کی کوشش میں نیوی کاآفیسر ہلاک

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 27th April 2019, 12:39 PM | ساحلی خبریں |

کاروار 27/اپریل (ایس اونیوز) کاروار کی بندرگاہ میں داخل ہوتے وقت بحریہ کے طیارہ بردار جنگی جہاز ’وکرم آدتیہ‘ میں اچانک بھڑکی آگ پر قابو پانے کی کوشش کے دوران   نیوی کا ایک آفیسر ہلاک ہونے کی واردات پیش آئی ہے۔

 بحریہ کی طرف سے جاری ایک بیان کے مطابق جہاز کے عملے نے پوری مستعدی کے ساتھ آگ پر قابو پالیا تھا اور آگ کی وجہ سے بحری جہاز کی جنگی صلاحیت کو کسی قسم کا نقصان نہیں پہنچا ۔ مگر لیفٹیننٹ کمانڈر ڈی ایس چوہان جو   آگ بجھانے والی ٹیم کی قیادت کررہے تھے، اس کوشش میں جان سے ہاتھ دھو بیٹھے۔ بتایا گیا گیا ہے  جب آگ قابو میں آ گئی تو آفیسر چوہان دھویں سے دم گھٹنے کی وجہ سے بے ہوش ہوکر گرپڑے۔انہیں فوری طورپر کاروار میں واقع بحریہ کے اسپتال میں منتقل کیا گیا مگر ان کی جان بچائی نہیں جاسکی۔ 

پتہ چلا ہے کہ قریب تین ماہ قبل ہی ان کی شادی ہوئی تھی ۔

معلوم ہوا ہے کہ اس واقعے کی تحقیقات کے لئے ایک بورڈ آف انکوائری کی تشکیل عمل میں لائی گئی ہے۔

یاد رہے کہ آئی این ایس وکرما دتیہ بحری جہاز کو  نومبر 2013  میں  انڈین نیوی میں شامل کیا گیا جو ریاست کرناٹک کے کاروار بندرگاہ پر لنگر انداز ہے۔یہ  284 میٹر لمبی اور 60 میٹر ، یعنی قریب 20 مالہ جتنی اونچی عمارت جیسی جہاز ہے۔ اس جہاز کا وزن 40 ہزار ٹن ہے اور یہ انڈین نیوی کی سب سے بڑی اور  سب سے بھاری جہاز ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل تعلقہ کے دوپنچایتوں کے جھگڑےمیں  مٹدہتلو اور مرڈیشور کا راستہ یتیم : عوامی نمائندوں پر عوام کی نظر

بھٹکل تعلقہ مرڈیشور کے ماولی -2 اور کائی کنی گرام پنچایتوں کی سرحد کی پیچیدگیوں چلتے مٹدہتلو اور مرڈیشور کے درمیان والی سڑک کا ایک ٹکڑا  یتیم ہوکر راہ گیروں اور بائک سواروں کے لئے مشکلات پیدا کئے ہوئے ہے۔