میرے دور میں منظور کیے گئے منصوبوں پر عمل اب شروع ہوا ہے۔بھٹکل کے سابق رکن اسمبلی منکال وئیدیا کا بیان

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 11th August 2019, 1:10 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل 11/فروری (ایس او نیوز) بھٹکل کے سابق رکن اسمبلی منکال وئیدیا نے در پردہ موجودہ رکن اسمبلی پر نشانہ سادھتے ہوئے کہا ہے کہ اب جو تعمیری منصوبوں پر عمل کیا جارہاہے، وہ ان کے اپنے دور میں منظور کیے گئے منصوبے ہیں، جنہیں نئے منصوبے بناکر پیش کیا جارہا ہے۔اور عوام اس بات سے پوری طرح واقف ہیں۔

 منکال وئیدیانے مرڈیشور میں منعقدہ کانگریس پارٹی کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے یہ بات کہی۔ انہوں نے کہا کہ میں نے اپنی میعاد کے دوران مکمل غیر جانبداری اور بغیر کسی تفریق کے ساتھ کام کیا،لیکن آج کانگریس کے کارکنان کو تکلیف دی جارہی ہے۔ان کے لئے رکاوٹیں پیدا کی جارہی ہیں۔ انہوں نے پارٹی اراکین سے کہا کہ ”میں آپ لوگوں کے ساتھ کھڑا ہوں، آپ کو کسی سے ڈرنے کی ضرورت نہیں ہے۔“ منکال وئیدیا نے پوچھا کہ میری میعاد کے دوران غیر معیاری تعمیری کام ہونے کا الزام لگانے والے اب کیا کہیں گے؟

    بھٹکل کانگریس کے صدر سنتوش نائک نے کہا کہ کانگریس پارٹی اس وقت مشکل دور سے گزر رہی ہے۔لیکن پارٹی کے اراکین اور کارکنان کو ہمت نہیں ہارنی چاہیے۔ کانگریس کے بعض لیڈران اور کارکنان کاکہنا تھاکہ بی جے پی والے تمام تعمیری منصوبوں پر عمل درآمد اپنے دور میں ہی ہونے کی بات کہتے ہوئے غلط پروپگنڈا کررہے ہیں اور کانگریس سے منتخب عوامی نمائندے اس کی تردید کرنے اور صحیح معلومات عوام تک پہنچانے کی کوشش نہیں کررہے ہیں۔ اگر معاملہ یونہی چلتا رہا تو پھر اس سے کانگریس پارٹی کو مزید بھاری نقصان ہوگا۔ کانگریس اقلیتی مورچے کے ضلع صدر عبدالمجید، نارائن نائک وغیر ہ نے پارٹی اراکین سے خطاب کیا۔

    اس موقع پرضلع پنچایت صدر جئے شری موگیر، تعلقہ پنچایت صدر ایشور نائک، ضلع پنچایت رکن سندھو بھاسکرنائک، تعلقہ پنچایت نائب صدر رادھا اشوک وئیدیا،اور پارٹی کے کئی اہم لیڈران اسٹیج پر موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل: مرڈیشور میں راہ چلتی خاتون کو اغوا کرنے کی کوشش ہوگئی ناکام؛ علاقہ میں تشویش کی لہر

تعلقہ کے مرڈیشور میں ایک خاتون کو اغوا کرنے کی کوشش اُس وقت  ناکام ہوگئی جب اُس نے ہاتھ پکڑ کھینچتے وقت چلانا اور مدد کے لئے پکارنا شروع کردیا،  وارات  منگل کی شب قریب نو بجے مرڈیشور کے نیشنل کالونی میں پیش آئی۔واقعے کے بعد بعد نہ صرف مرڈیشور بلکہ بھٹکل میں بھی تشویش کی لہر ...

کیا شمالی کینرا سے شیورام ہیبار کے لئے وزارت کا قلمدان محفوظ رکھا گیا ہے؟

کرناٹکاکے وزیراعلیٰ  ایڈی یورپا نے دو دن پہلے اپنی کابینہ کی جو تشکیل کی ہے اس میں ریاست کے 13اضلاع کو اہمیت دیتے ہوئے وہاں کے نمائندوں کو وزارتی قلمدان سے نوازا گیا ہے۔اور بقیہ 17اضلاع کو ابھی کابینہ میں نمائندگی نہیں دی گئی ہے۔

ساگر مالا منصوبہ: انکولہ سے بیلے کیری تک ریلوے لائن بچھانے کے لئے خاموشی کے ساتھ کیاجارہا ہے سروے۔ سیکڑوں لوگوں کی زمینیں منصوبے کی زد میں آنے کا خدشہ 

انکولہ کونکن ریلوے اسٹیشن سے بیلے کیری بندرگاہ تک ’ساگر مالا‘ منصوبے کے تحت ریلوے رابطے کے لئے لائن بچھانے کا پلان بنایا گیا اور خاموشی کے ساتھ اس علاقے کا سروے کیا جارہا ہے۔

ماڈرن زندگی کا المیہ: انسانوں میں خودکشی کا بڑھتا ہوا رجحان۔ ضلع شمالی کینرا میں درج ہوئے ڈھائی سال میں 641معاملات!

جدید تہذیب اور مادی ترقی نے جہاں انسانوں کو بہت ساری سہولتیں اور آسانیاں فراہم کی ہیں، وہیں پر زندگی جینا بھی اتنا ہی مشکل کردیا ہے۔ جس کے نتیجے میں عام لوگوں اور خاص کرکے نوجوانوں میں خودکشی کا رجحان بڑھتا جارہا ہے۔

منگلورو پولیس نے ایک اور مشکوک کار کو پکڑا؛ پنجاب نمبر پلیٹ والی کار کے تعلق سے پولس کو شکوک و شبہات

دو دن دن پہلے لٹیروں اور جعلسازوں کی ایک ٹولی کے قبضے سے منگلورو پولیس نے ایسی کار ضبط کی تھی جس پر نیشنل کرائم انویسٹی گیشن بیوریو، گورنمنٹ آف انڈیا لکھا ہوا تھا۔اب مزید ایک مشکوک کار کو پولیس نے اپنے قبضے میں لیا ہے۔ جس پر بھی گورنمینٹ آف انڈیا لکھا ہوا ہے۔