اُترکنڑا سے چھٹی مرتبہ جیت درج کرنے والے اننت کمار ہیگڑے کی جیت کا فرق ریاست میں سب سے زیادہ؛ اسنوٹیکر کو سب سے زیادہ ووٹ بھٹکل میں حاصل ہوئے

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 25th May 2019, 3:41 AM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

بھٹکل 24/مئی(ایس او  نیوز) پارلیمانی انتخابات میں شمالی کینرا کے بی جے پی امیدوار اننت کمار ہیگڈے نے پوری ریاست کرناٹک میں سب سے زیادہ ووٹوں سے کامیابی حاصل کی ہے۔ انہوں نے 479649 ووٹوں کی اکثریت سے کانگریس  جے ڈی ایس مشترکہ اُمیدور  آنند اسنوٹیکر  کو شکست دی ۔

اننت کمار ہیگڈے نے 786042 ووٹ حاصل کئے جبکہ آنند اسنوٹیکر  نے 306393 ووٹ حاصل کئے۔حیرت کی بات یہ رہی کہ شمالی کینرا حلقہ میں تیسرے نمبر پر سب سے زیادہ ووٹ نوٹا کو پڑا۔  نوٹا کو جملہ 16017 ووٹ پڑے۔

آننت کمار ہیگڈے کو بھٹکل میں 94560، کمٹہ میں 99609، سرسی میں 103904، یلاپور میں 84649،  ہلیال میں 81629، کاروار میں 113135، خانہ پور میں 113386 اور کتور میں 92339 ووٹ حاصل ہوئے ۔ جبکہ ان کے مقابلے میں کانگریس۔ جے ڈی ایس مشترکہ اُمیدوار آنند اسنوٹیکر   کو  بھٹکل میں 51290، کمٹہ میں 33179، سرسی میں38996، یلاپور میں  43006،  ہلیال میں 39865، کاروار میں 37349، خانہ پور میں 25108 اور کتور میں 37337 ووٹ پڑے۔ اس حساب سے دیکھا جائے تو  آنند اسنوٹیکر کو سب سے زیادہ ووٹ 51290 بھٹکل میں حاصل ہوئے، جبکہ اُن کے خود کے اسمبلی حلقہ کاروار میں بھی اُنہیں زیادہ ووٹ حاصل نہیں ہوسکے۔ سمجھا جارہا تھا کہ اسنوٹیکر کا تعلق مراٹھا طبقہ  سے ہونے کی بناء پر انہیں خانہ پور اور کتور میں اچھے ووٹ حاصل ہوں گے، مگر وہاں بھی  اُن کا پرفارمینس نہایت کمزور رہا۔ دوسری طرف آننت کمار ہیگڈے تمام  حلقوں میں  اسنوٹیکر سے دوگنا  اور تین گنا زیادہ ووٹ حاصل کرنے میں کامیاب رہے۔

ریاست بھر میں سب سے کم ووٹوں سے جیت درج کرنے والے چامراج نگر حلقہ کے بی جےپی اُمیدوار سرینواس پرساد رہے، جنہوں نے  کانگریس کے آر دھرونارائن سے کانٹے کا مقابلہ کرتے ہوئے  صرف  1256 ووٹوں کے فرق سے جیت درج کی۔

ایک لاکھ سے کم ووٹوں کے فرق سے کامیاب ہونے والے بی جے پی کے امیدواروں میں بلاری کے وائی دیندرپا 55707 ووٹوں کے فرق سے بنگلور سنٹرل میں پی سی موہن 70968 ووٹوں کے فرق سے چتردرگہ میں اے نارائن سوامی  80178 ووٹوں کے فرق سے کوپل میں کرڈی سنگما 38397 ووٹوں سے اور ٹمکور میں دیوے گوڑا کے مقابلہ جی ایس بسواراج 13339 ووٹوں کے فرق سے کامیاب ہوئے ہیں۔ 

ایک نظر اس پر بھی

اڈپی ڈکیتی معاملہ پولیس نے 24گھنٹے کے اندر کیا حل۔ دو ملزمین گرفتار۔مسروقہ نقدی اور چاندی بر آمد

اڈپی ضلع کے اولاکاڈو علاقے میں 12ستمبر کو ڈکیتی کی جو واردات پیش آئی تھی اور چوروں نے 22لاکھ روپے نقد اور آدھا کلو چاندی پر جو ہاتھ صاف کیا تھا اس معاملے کو پولیس نے 24گھنٹے کے اندر حل کرتے ہوئے دو ملزمین کو مہاراشٹرا اور مڈگاؤں ریلوے اسٹیشن سے گرفتار کرلیاہے۔ 

بھٹکل تعلقہ فاریسٹ زمین حق کے لئے اتی کرم دارہوراٹ گارر ویدیکے کی جانب سے 17ستمبر کو میٹنگ

بھٹکل تعلقہ کے تحصیل اور فاریسٹ اتی کرم داروں کے علاقے میں شیموگہ جنگلات زون میں شامل کئے جانے کے پس منظر میں 17ستمبر 2019بروز منگل کی صبح 10بجے شہر کے ستکار ہوٹل کے صحن میں تعلقہ فاریسٹ اتی کرم داروں کی میٹنگ انعقاد کئے جانے کی بھٹکل تعلقہ فاریسٹ ہوراٹ گارر ویدیکے کے تعلقہ صدر ...

سرسی کے پی یو کالج میں منایا گیا’موبائل ہیمرنگ ڈے‘۔ چوری چھپے کلاس روم میں لائے گئے موبائل فون پر چلایا گیا ہتھوڑا!

پری یونیورسٹی بورڈ کی طرف سے کالجوں میں زیر تعلیم طلبہ کے لئے کالج احاطے میں موبائل لانے اوراس کے استعمال پر پابندی لگائی گئی ہے۔ لیکن ریاست بھر میں تقریباً ہر پی یو سی کالج میں طلبہ اساتذہ کی نظریں بچاکر موبائل فون استعمال کرتے ہوئے پائے جاتے ہیں۔

کاروار:مساجد اور گھروں میں جاکر امداد مانگنے والے کشمیری نوجوانوں کو پولیس نے لیاحراست میں۔ گہری تفتیش کے بعد ہوئی رہائی

کاروار کی لاڈج میں کشمیری نوجوان کے قیام اور ان کے ذریعے با ر بار کشمیر سے ٹیلی فون پر رابطہ کیے جانے کی اطلاع سرکاری خفیہ ایجنسی کی طرف سے ملنے کے بعد پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے جمعرات کے دن آدھی رات کو مذکورہ تین کشمیری نوجوانوں کو اپنی حراست میں لیا۔ پھر گہری چھان بین اور ...

بنگلورو کی خواتین اب بھی ”گلابی سارتھی“ سے واقف نہیں ہیں

بنگلورو میٹرو پالیٹن ٹرانسپورٹ کارپوریشن (بی ایم ٹی سی) نے اسی سال جون کے مہینہ میں خواتین کے تحفظ کے پیش نظر اور ان پر کی جانے والے کسی طرح کے ظلم یا ہراسانی سے متعلق شکایت درج کرانے اور فوری اس کے ازالہ کے لئے 25 خصوصی سواریاں جاری کی تھی جنہیں ”گلابی سارتھی“ کا نام دیا گیا،

بی ایم ٹی سی کے رعایتی بس پاس کے اجراء کی کارروائی اب بھی جاری مگر کارپوریشن نے اب تک 38,000 درخواستیں مسترد کی ہے

بنگلور میٹرو پالیٹن ٹرانسپورٹ کارپوریشن (بی ایم ٹی سی) نے طلباء کی طرف سے رعایتی بس پاس حاصل کرنے کے لئے داخل کردہ کل 38,224 درخواستوں کو اب تک رد کر دیا ہے اور اس کے لئے یہ وجہ بیان کی گئی ہے کہ ان کے تعلیمی اداروں کی طرف سے ان طلباء کی تفصیلات مناسب انداز میں فراہم نہیں کی گئی ہیں۔