دو پاکستانیوں کے حج کی ادائیگی میں 25سال کی تاخیر کیوں ہوئی؟

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 5th September 2017, 7:54 PM | خلیجی خبریں |

ریاض،5ستمبر(ایس او نیوز؍آئی این ایس انڈیا)پاکستان سے تعلق رکھنے والے رواں سال حج کی سعادت حاصل کرنے والے خوش نصیبوں میں دو عمر رسیدہ دوست بھی شامل ہیں جن کی عمریں 80سال سے زائد ہیں، مگر ان دونوں کی پرخلوص باہمی محبت فریضہ حج کی ادائیگی میں 25سال کی تاخیر کا موجب بھی بنی ہے۔ دراصل دونوں پاکستانی شہریوں نے دوستی کی لاج رکھتے ہوئے ایک ساتھ فریضہ حج ادا کرنے کا تہیہ کر رکھا تھا مگر ان میں سے ایک کے پاس حج کے لیے وسائل نہیں تھے۔ اس کے دوسرے دوست نے پچیس سال ایک ساتھ حج کے لیے دوسرے دوست کی تیاریوں کا انتظار کیا یہاں تک کہ دونوں کی عمریں اسی سال سے تجاوز کرگئیں۔

حاجی اعجاز دلالی احمد اور اس کے دوست احمد دلو راج کا بچپن سے یارانہ چلا آ رہا تھا۔ دلالی احمد تو کئی سال قبل حج کے وسائل جمع کرنے میں کامیاب ہوگیا مگر اس نے یہ کہہ کرحج سے انکار کردیا تھا کہ جب تک اس کا دوست احمد دلو راج بھی حج کے وسائل مہیا نہیں کر لیتا وہ حج پر نہیں جائے گا۔ چنانچہ اس کے دوست کو حج کی تیاری کیلئے 25سال کا عرصہ لگا اور انہوں نے رواں سال حال ہی میں ایک ساتھ فریضہ حج ادا کرنے کا خواب شرمندہ تعبیر کرلیا۔

اعجاز دلالی نے منیٰ میں رمی جمرات کے بعد اپنے دوست راج کے بارے میں بات کرتے ہوئے کہا کہ یہ میرا زندگی بھر کا دوست ہے۔ آج اس کی بینائی بھی جا چکی ہے۔ ہم دونوں کئی سال سے ایک ساتھ حج کرنے کا منصوبہ بنا رہے تھے۔ میرے دوست کے پاس مالی وسائل ایسے نہ تھے کہ وہ حج کرسکتے جب کہ میرے پاس حج کی مکمل تیاری تھی۔ میں نے پچیس سال اپنے دوست کا انتظار کیا ہے۔ دونوں حجاج کرام نے بیت اللہ کی زیارت اور حج کا فریضہ ادا کرنے کی توفیق اور اللہ کی مدد پر شکر ادا کیا۔
 

ایک نظر اس پر بھی

شارجہ میں ابناء علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی خوبصورت تقریب؛ یونیورسٹی میں میڈیکل تعلیم صرف 60 ہزار میں ممکن!

علی گڈھ مسلم یونیورسٹی جسے بابائے قوم مرحوم سر سید احمد خان نے دو سو سال قبل قائم کیا تھا آج تناور درخت کی شکل میں ملک میں تعلیم کی روشنی عام کررہا ہے۔اس یونیورسٹی میں میڈیکل کے طلبا کے لئے پانچ سال کی تعلیمی فیس صرف 60,000 روپئے ہے، حالانکہ دوسری یونیورسیٹیوں میں میڈیکل کے طلبا ...

متحدہ عرب امارات میں حفظ قرآن جرم، حکومت کی منظوری کے بغیر کوئی شخص قرآن حفظ نہیں کرسکتا، مساجد میں مذہبی تعلیم اور اجتماع پر بھی پابندی

مشرقی وسطیٰ کے مختلف ممالک میں داخل اندازی اور عرب کی اسلامی تنظیموں کو دہشت گرد قرار دینے کے بعد متحدہ عرب امارات قانون کے ایسے مسودہ پر کام کررہا ہے جس کی رو سے حکومت کی منظوری کے بغیر قرآن شریف کا حفظ بھی غیرقانونی ہوگا۔

سعودیہ میں مقیم غیر قانونی تارکین وطن میں سب سے زیادہ تعداد پاکستانیوں کی نکلی

سعودی عرب کی وزارت داخلہ کے ترجمان میجر جنرل منصور الترکی نے واضح کیا ہے کہ اقامہ و محنت قوانین اور سرحدی سلامتی کے ضوابط کی خلاف ورزی کرنے والے 140 مما لک کے 758570 غیر ملکیوں نے شاہی مہلت سے فائدہ اٹھایا۔