سعودی عرب میں دنیا کے سب سے بڑے سیاحتی منصوبے کا اعلان

Source: S.O. News Service | Published on 1st August 2017, 9:36 PM | خلیجی خبریں |

ریاض،یکم اگست(ایس او نیوز/آئی این ایس انڈیا)سعودی عرب کے ولی عہد اور نائب وزیراعظم شہزادہ محمد بن سلمان نے بحر الاحمر کے نام سے ملک کے بڑے اور بین الاقوامی نوعیت کے سیاحتی پروجیکٹ کا اعلان کیا ہے۔ اس منصوبے کا مقصد دنیا بھرکے سیاحوں کو سعودی عرب کے تفریحی، قدرتی،تاریخی، ثقافتی اور مذہبی مقامات کی سیر کے بھرپور مواقع فراہم کرنا ہے۔
 ولی عہد کے منظور کردہ پروجیکٹ میں نہ صرف سعودی عرب کی مقامی سیاحتی کمپنیاں سرمایہ کاری کررہی ہیں بلکہ بین الاقوامی سیاحتی فرمیں اس میں بڑھ چڑھ کر حصہ لے رہی ہیں۔ یہ کمپنیاں سعودی عرب میں تفریح گاہوں میں ڈویلپمنٹ اور ہوٹلنگ کے ساتھ ساتھ 50قدرتی جزیروں، املج اور الوجہ شہروں میں پائے جانے والے قدرتی مقامات کی تعمیرو ترقی میں حصہ لیں گی۔ اس منصوبے کے تحت مرکزی ساحل سمندر سے مختصر مسافت پر حرۃ الرعاۃ کے علاقے میں پائے جانے والے قدرتی حسن سے مالا مال مقامات کی سیر و سیاحت کا بھی بھرپور موقع ملے گا۔
اس شاندار ساحلی سیاحتی منصوبے کے ذریعے دنیا بھر کے سیاحوں کو جزائر البکر کی سیر کے ساتھ ساتھ قدرتی، تعمیراتی اور تاریخی اہمیت کے حامل مدائن صالح شہر کی جانب بھی مبذول کرایا جائے گا۔
خیال رہے کہ سعودی عرب میں دنیا کے سب سے بڑا سیاحتی منصوبہ شہزادہ محمد بن سلمان کے اقتصادی ترقی کے پروگرام ویژن 2030ء کا حصہ ہے جس کا مقصد ملک بھر میں سیاحت کے فروغ کے ساتھ ساتھ سیاحتی شعبے کو ملکی معیشت کی ترقی کے لیے استعمال میں لانا ہے۔منصوبے کے تحت ملک کے تمام اہم سیاحتی اور تاریخی اہمیت کے حامل مقامات میں سائنسی بنیادوں پر جدید ترین سہولیات فراہم کی جائیں گی تاکہ زیادہ سے زیادہ زائرین کو سعودی عرب میں سیاحت کی طرف مائل کیا جا سکے۔
منصوبے کا باقاعدہ افتتاح 2019ء کی چوتھی سہ ماہی میں ہوگا جو کہ 2022ء میں پایہ تکمیل کو پہنچ جائے گا۔ بحر الاحمر سیاحتی پروجیکٹ کے تحت سیاحتی مقامات پر بہترین سہولیات سے آراستہ رہائش گاہیں، ہوٹل، آمد ورفت کے لیے سڑکوں کی تعمیر، بنیادی ڈھانچہ، بندرگاہ، ہوائی اڈے۔ کشتیوں اور آبی ٹریفک کی سہولت جیسے منصوبوں پر جلد کام شروع کیا جائے گا۔
بحر الاحمر سیاحتی منصوبے پر سرمایہ کاری کا آغاز سعودی عرب کے سرمایہ فنڈ کی جانب سے کیا جا رہا ہے مگر اس میں کئی بین الاقوامی کمپناں بھی سرمایہ کاری کریں گی۔

ایک نظر اس پر بھی

سعودی حج پروازوں کو دوحہ میں اترنے سے روکنے پر افسوس ہے،دوحہ عازمین حج کے سفر میں رکاوٹ نہ ڈالے:الشیخ عبداللہ آل ثانی

قطری حجاج کرام کے حوالے سے سعودی حکام کے ساتھ مصالحت کے لیے کوشاں قطر کے شاہی خاندان کے رکن الشیخ عبداللہ بن علی آل ثانی نے قطری حکومت کی جانب سے سعودی فضائی کمپنی کی خصوصی حج پروازوں کو دوحہ میں اترنے سے روکنے جانے پر افسوس کا اظہار کیا ہے۔

سعودی ایئرلائن کی دوحہ کے لیے حج پروازیں روک دی گئیں،قطر کی ہٹ دھرمی عازمین حج کے سفر میں رکاوٹ بن گئی

سعودی عرب کی جنرل ایئر لائن آرگنائزیشن کی جانب سے کہا گیا ہے کہ قطر کی طرف سے حمد بین الاقوامی ہوائی اڈے پر اترنے کی اجازت نہ ملنے کے بعد دوحہ کے لیے حج پروازیں روک دی گئی ہیں۔

مغربی ممالک کے حجاج کرام خصوصی توجہ کے مستحق کیوں؟نومسلم غیرمسلموں اور مسلمان اقلیت میں پل کا کردار ادا کرتے ہیں

ویسے تو سعودی حکومت کی جانب سے پوری دنیا سے حج اورعمرہ کی غرض سے مملکت میں آنے والوں کی خدمت میں کوئی کسرباقی نہیں چھوڑتی مگر مغربی ممالک سے آنے والے عازمین حج کو مسلمان ممالک سے آنے والے حجاج کرام کی نسبت زیادہ اہمیت دی جاتی ہے۔

میرا مقصد قطری حجاج کے امور کو آسان بنانا ہے :شیخ عبداللہ آل ثانی

قطر کے حکمراں شاہی خاندان کی سینئر شخصیت شیخ عبداللہ علی آل ثانی کا کہنا ہے کہ خادم حرمین شریفین شاہ سلمان بن عبدالعزیز اور سعودی ولی عہد شہزادہ محمد بن سلمان سے ان کی ملاقات کا مقصد قطری عازمینِ حج کے امور کی سہولت کاری اور قطری عوام کی سعودی عرب میں اپنے عزیزوں اور خاندان ...