کاروار: جعلی رسید بک کے ذریعے سرکاری رقم کا غلط استعمال : بلدیہ ملازم کو 3 سال کی سزا اور جرمانہ

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 10th October 2018, 6:24 PM | ساحلی خبریں |

کاروار:10/اکتوبر(ایس اؤ نیوز) شہری بلدیہ کا ایک اسٹاف آشریا یوجنا کے مستفیدین سے رقم لےکر انہیں جعلی رسید سونپ کر حکومت سے دھوکہ کرنے والے معاملےمیں عدالت نے تین برس کی سزا اور جرمانہ عائد کرتےہوئے فیصلہ صادر کیا ہے۔

کاروار شہری بلدیہ کے سکینڈ ڈویزن کلرک ونود پرسو نائک   کو  سزا دی گئی ہے۔ اس معاملےمیں بتایاگیا ہے سال 2002سے  2003کی میعاد میں بلدیہ کی طرف سے منظور کردہ 25ہزارروپئے سود سمیت وصول کرنے کے لئے بلدیہ کی طرف سے ونود کو ذمہ داری دی گئی تھی۔ اس دوران ملزم ونود نے منصوبے کے مستفیدین سے رقم لیا اور نقلی رسید بک چھپواکر اس کی رسید انہیں دیا کرتاتھا۔ اس طرح کل 63809روپئے ذاتی طورپر خرچ کیا تھا۔ جب محکمہ کے  افسران حسابات کی جانچ کررہے تھے تو اس دوران گھپلہ کا پتہ چلا تھا۔ ملزم ونود نے 2004میں رقم حکومت کو ادا کردی تھی۔ اسی وجہ سے ملزم ونود کے خلاف کاروار شہری پولس تھانہ میں کیس داخل کیا گیا تھا  اور پی ایس آئی انیس مجاور نے عدالت کو چارج شیٹ سونپی تھی۔

سی جے ایم عدالت  کے منصف شیوکمار نے معاملے کی سنوائی کرتے ہوئے ملزم ونود نائک کو 2سال کی سزا اور 5000روپئے جرمانہ اور 1سال کی سزا اور 3ہزار روپئے جرمانہ عائد کرکے فیصلہ سنایا۔ حکومت کی طرف سے سی جے ایم کے سنئیر معاون پراسیکیوٹر مہا دیو گڈد نے پیروی کی۔

ایک نظر اس پر بھی

ایران میں گرفتار اُترکنڑا کے ماہی گیروں کی فوری رہائی کا مطالبہ کرتے ہوئے کرناٹکا این آر آئی فورم کا دبئی میں ہندوستانی سفارت کار سے ملاقات

  ریاست کرناٹک کے ضلع اُترکنڑا کے 18 ماہی گیروں کی ایران میں گرفتاری کے بعد اُن کی رہائی کی کوششیں تیز ہوگئی ہیں۔ اس تعلق سے تازہ اطلاع یہ ہے کہ  دبئی میں موجود ماہی گیروں کے رشتہ داروں نے  کرناٹکا این آر فورم کے  اہم ذمہ دار اور قائد قوم جناب ایس ایم سید خلیل الرحمن صاحب سے ...