جموں کشمیر: سجاد لون کو وزیر اعلیٰ بنانے کے بیان سے منحرف ہوئے گورنر

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 28th November 2018, 1:44 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی27نومبر ( آئی این ایس انڈیا )  جموں و کشمیر کے گورنر ستیہ پال ملک نے کہا ہے کہ مرکزی سرکار سجاد لون کو وزیر اعلی بنوانا چاہتی تھی۔ اگر میں ایسا کرتا تو یہ بے ایمانی ہوتی۔ اس بیان پر ہنگامہ ہوتے ہی ستیہ پال ملک نے کہا کہ ان کے بیان کو غلط تناظر میں پیش کیا گیا ہے۔ انہوں نے ایسی کوئی بات ہی نہیں کی تھی۔

دو دن پہلے گوالیار کی ایک پرائیویٹ یونیورسٹی کے کانووکیشن میں ستیہ پال ملک نے کہا تھا کہ مرکز سے سجاد لون کو سی ایم بنانے کے لئے کہا گیا تھا۔ اگر میں ایسا کرتا تو یہ بے ایمانی ہوتی۔ اس کے باعث میں نے حکومت ہی تحلیل کر دی۔ میرے اس فیصلے پر کچھ لوگ چلا ئیں گے تو چلائیں ،میرا فیصلہ درست ہے۔اس بیان پر ہنگامہ ہوا تو اب انہوں نے کہا کہ دہلی کی طرف سے کوئی دباؤ یا مداخلت نہیں تھی ۔ آج وہ دو دن پہلے دیئے اپنے بیان سے انحراف کر گئے ہیں۔ آج انہوں نے کہا کہ دہلی سے نہ تو کوئی دباؤ تھا اور نہ ہی کسی طرح کی کوئی مداخلت تھی ۔نجی ٹی وی آج تک سے بات چیت میں ستیہ پال ملک نے کہا کہ اگر مرکز کا مجھ پر دباؤ ہوتا تو مجھے سجاد لون کو سی ایم بنانا پڑتا۔ مجھے تو اشارہ تک نہیں کیا گیا۔ مرکز کو اس معاملے میں میں 100 میں سے 110 نمبر دوں گا۔ آج تک پر آڈیو سنانے پر گورنر نے کہا کہ وہ بات میں نے کسی اور تناظر میں کہی تھی۔گورنر کے بیان پر ریاست کے سابق نائب وزیر اعلی نے کہا کہ گورنر پر کوئی دباؤ نہیں تھا، وہ صرف شہ سرخیوں میں رہنے کے لئے ایسا بیان دے رہے ہیں ۔ اس معاملہ میں نیشنل کانفرنس لیڈر دیویندر رانا نے کہا کہ یہ بہت ہی سنگین معاملہ ہے۔ مرکزی حکومت کو اس معاملہ میں اپنا رخ صاف کرنا چاہئے۔ مرکز ی سرکار سجادلون کو وزیر اعلی کیوں بنوانا چاہتی تھی۔ ستیہ پال ملک نے کہا تھا کہ اگر محبوبہ مفتی اور عمر عبداللہ حکومت بنانے کے تئیں سنجیدہ ہوتے تو فون کر سکتے تھے، کسی کے ہاتھوں خط بھیج سکتے تھے۔ میرا فون ہمیشہ کھلا رہتا ہے، رات کو دو بجے بھی، حتیٰ کہ میں واٹس ایپ پر بھی میسج آنے پر مسائل حل کرنے کی کوشش کرتا ہوں۔ ستیہ پال ملک نے کہا تھا کہ محبوبہ مفتی نے مجھ ایک ہفتے پہلے کہا تھا کہ ان کے ممبران اسمبلی کو دھمکایا جا رہا ہے۔ ستیہ پال ملک نے کہا کہ سجاد لون بھی کہہ رہے تھے کہ ان کے پاس بھی کافی ممبر اسمبلی ہیں۔ ان کے ممبران اسمبلی کو بھی دھمکایا جا رہا ہے۔ ایسے میں لون کو موقع دے کر میں تعصب نہیں کرنا چاہتا تھا۔واضح ہو کہ جموں و کشمیر میں بی جے پی نے پی ڈی پی سے حمایت واپس لے لی تھی،جس کے بعدسے وہاں گورنر راج نافذ ہے۔ گورنر راج کی میعاد پوری ہونے جا رہی تھی، جس کے پیش نظر ریاست میں حکومت بنانے کو لے کر جوڑ توڑ چل رہی تھی، اسی کے باعث گورنر ستیہ پال ملک نے اسمبلی تحلیل کرنے کا فیصلہ کیاہے ۔ 

ایک نظر اس پر بھی

جے پی سی سے جانچ کرانے کا راستہ ا بھی کھلا ہے، عام آدمی پارٹی نے کہا،عوام کی عدالت اورپارلیمنٹ میں جواب دیناہوگا،بدعنوانی کے الزام پرقائم

آپ کے راجیہ سبھا رکن سنجے سنگھ نے کہا ہے کہ رافیل معاملے میں جمعہ کو آئے سپریم کورٹ کے فیصلے کے باوجود متحدہ پارلیمانی کمیٹی (جے پی سی) سے اس معاملے کی جانچ پڑتال کرنے کا اراستہ اب بھی کھلا ہے۔

رافیل پر سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد ، راہل گاندھی معافی مانگیں: بی جے پی

فرانس سے 36 لڑاکا طیارے کی خریداری کے معاملے میں بدعنوانی کے الزامات پر سپریم کورٹ کی کلین چٹ ملنے کے بعد کانگریس پر نشانہ لگاتے ہوئے بی جے پی نے جمعہ کو کہا کہ کانگریس پارٹی اور اس کے چیئرمین راہل گاندھی ملک کو گمراہ کرنے کیلئے معافی مانگیں۔

بھٹکل کے مرڈیشور میں دو لوگوں پر حملے کی پولس تھانہ میں دو الگ الگ شکایتیں

تعلقہ کے مرڈیشور میں کل جمعرات کو  دو لوگوں پر حملہ اور پھر جوابی حملہ کے تعلق سے آج مرڈیشور تھانہ میں دو الگ الگ شکایتیں درج کی گئی ہیں اور پولس نے دونوں پارٹیوں کی شکایت درج کرتے ہوئے چھان بین شروع کردی ہے۔

مرڈیشور میں غیر ضروری بات کو لے کر ماحول خراب کرنے کی کوشش؛ سری رام سینا لیڈر اسپتال میں داخل

تعلقہ کے مرڈیشور میں  سری رام سینا  ضلعی صدر مسلم نوجوانوں سے اُلجھنے کے بعد زخمی ہو کر سرکاری اسپتال میں داخل ہونے کی واردات پیش آئی ہے، جس کے بعد سوشیل میڈیا پر زخمی شخص  کے فوٹو کے ساتھ مسیجس پھیلاکر عوام میں انتشار پیدا کرنے کی کوشش ہورہی ہے۔

گوا کے افسران نے10لاکھ روپے مالیت کی مچھلیاں برباد کردیں۔کاروار کے مچھلی فروش کا الزام

ضلع شمالی کینرا کے ماہی گیروں کے لیڈر نے الزام لگایا ہے کہ گواحکومت انتقامی کارروائی کی راہ اپناتے ہوئے تمام قانونی تقاضے پورے کرنے کے بعدبھی کرناٹکا سے گوا میں لے جائی مچھلیوں کوتباہ کررہی ہے۔

منگلورومیں نوجوان کو اغوا کرکے تاوان وصول کرنے والے نکلے منشیات فروش۔ 2.89لاکھ روپے مالیت کی اشیاء ضبط

چند دن پہلے فالنیر علاقے سے شماق نامی نوجوان کو اغوا کرنے اور بعد میں 50ہزار روپے تاوان وصول کرکے چھوڑنے والے کے الزام میں گرفتار کیے گئے گوتم(۲۸سال) اور لوئی ویگس (۲۶سال)کے بارے میں معلوم ہوا ہے کہ وہ منشیات فروشی کے دھندے میں ملوث ہیں۔