پانچ مرتبہ رکن پارلیمان بننے کے بعد بھی پانچ پیسے کا ترقیاتی کام نہیں ہوا۔اننت کمار ہیگڈے کے خلاف ہندو لیڈر چکرورتی سولی بیلے کا حملہ

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 28th December 2017, 8:15 PM | ساحلی خبریں | ریاستی خبریں |

بنگلورو 28؍دسمبر (ایس او نیوز) اننت کمار ہیگڈے جو اپنے متنازعہ بیانات کی وجہ سے ہر حلقے میں اعتراضات اور مذمت کا مرکز بنے ہوئے ہیں ان کے خلاف تبصرہ کرتے ہوئے ہندو دانشور اورنمو بریگیڈ؍یووا بریگیڈ کے بانی چکرورتی سولی بیلے نے سوال کیا ہے کہ اننت کمار کا ایجنڈہ اپنے حلقے کی ترقی ہے یا ہندوتوا کا پروپگنڈہ کرنے والی تقریر کرنا ہے؟
سولے بیلی نے کہا کہ اننت کمار ہیگڈے نے اپنے پارلیمانی حلقے میں کوئی ترقیاتی کام نہیں کیا ہے، اوروہ کسی کام کے لائق بھی نہیں ہیں۔حالانکہ رکن پارلیمان کے طور پر ترقی کے بہت سارے منصوبوں پر عمل کرنے اور اپنے حلقے کو سیاحوں کی دلکشی کا مرکز بنانے کے بے شمار مواقع ان کے پاس موجود تھے، مگر انہوں نے اس میں کوئی دلچسپی نہیں لی۔چکرورتی نے صاف لفظوں میں کہا کہ کوئی چاہے کتنی بار اسمبلی یا پارلیمنٹ کی سیٹ جیت جائے ، اگر وہ اپنے علاقے کی ترقی کے لئے کوشش نہیں کرتا تو پھر اس کا جیتنا اور نمائندگی کرنا فضول ہے۔

اپنے بیان کی مزید وضاحت کرتے ہوئے چکرورتی نے کہا کہ ضلع شمالی کینرا میں قدرتی وسائل کی بھرمار ہے ۔اس ضلع کو پہاڑی سلسلہ،ساحلی علاقہ ، ندیوں کے کنارے، آبشار، جنگلات وغیر ہ کی دولت سے قدرت نے مالامال کررکھاہے۔ مگر میں نے گزشتہ کچھ عرصے پہلے اس کے مختلف شہروں اور دیہاتوں کا دورہ کیا اور یہاں کے حالات دیکھے تو مجھے بہت ہی دکھ ہوا کہ پانچ پانچ مرتبہ پارلیمانی سیٹ جیتنے کے بعد اننت کمار ہیگڈے نے اس علاقے کی ترقی کے لئے کچھ بھی نہیں کیا ہے۔مگر بدقسمتی یہ ہے کہ  اس ضلع کو ایک  بہترین سیاسی لیڈر نصیب نہیں ہوا ہے۔بات صرف اننت کمار ہیگدے کی نہیں ہے ، ملیکا ارجن کھرگے ،دیشپانڈے اورکاگیری جیسے لیڈر بھی اس ضلع کو ترقی کے لحاظ سے اس مقام تک نہیں لے جاسکے، جہاں تک پہنچنا چاہیے تھا۔

چکرورتی نے کہا کہ مذہب سے لگاؤ الگ بات ہے اور صرف الیکشن کے پس منظر میں مذہبی جذبات کا استحصال کرنا دوسری بات ہے۔ گجرات کے الیکشن میں جس طرح نریندر مودی کے ترقیاتی ایجنڈے کے مقابلے میں کانگریس نے مذہب کا کارڈ کھیلا اور مندروں کے دورے شروع کیے ، بالکل اسی طرح اب کرناٹکا میں بھی سیاسی رنگ بدلتا جارہا ہے۔ سدارامیا جیسے لوگ مندروں میں جانے اور سوامی ویویکا نند کی جینتی منانے کی بات کرنے لگے ہیں۔مگر میرا ماننا یہ ہے کہ اس بار کا الیکشن مذہب، ذات پات اور طبقات کو الگ رکھ کر صرف کرناٹکا کی ترقی کو موضوع بناکر ہی لڑا جانا چاہیے۔اور میرا یہ پیغام بی جے پی، کانگریس اور جنتادل جیسی تمام سیاسی پارٹیوں اور لیڈروں کے لئے ہے۔ان سیاسی لیڈروں کو چاہیے کہ وہ اپنے شہر ، گاؤں اور علاقوں کے تعلق سے اپنے ترقیاتی منصوبے کے ساتھ عوام کے سامنے آئیں ، عوام کے دلوں کو توڑنے کے بجائے جوڑنے کی بات پر ووٹ طلب کریں۔پھر عوام جس کو اہل سمجھیں گے انہیں کامیابی سے سرفرا ز کریں گے۔

ایک نظر اس پر بھی

منگلورو کے گمشدہ نوجوان کی لاش تملناڈو میں دستیاب۔ قتل کیے جانے کا شبہ

گنجی مٹھ کے رہنے والے سمیر (35سال) کے والد احمد نے پولیس میں گم شدگی کی شکایت درج کی گئی تھی اور بتایا گیا تھا کہ اپنی بیوی ا وربچی کو ساتھ لے کر ہوائی جہاز کے ذریعے بنگلورو جانے کے بعد وہ لاپتہ ہوگیا ہے اور اس کی بیوی ااپنی بچی کے ساتھ کاپ میں واقع اپنے مائیکے واپس پہنچ گئی تھی۔

بھٹکل تعلقہ میں 24 ستمبر سے ’’سوچھیتا ہی سیوا‘‘ صفائی مہم کا آغاز:تعلقہ انتظامیہ نے کی  عوام سے شرکت کی اپیل

24ستمبر سے 08اکتوبر 2018تک تعلقہ بھر میں تعلقہ انتظامیہ ، بھٹکل بلدیہ اور جالی پنچایت کی طرف سے مشترکہ طورپر  ’’ سوچھیتا ہی سیوا ‘‘  کے عنوان سے عوامی خدمت اور پاکی صفائی پروگراموں کا انعقاد کئے جانے کی تحصیلدار کی طرف سے جاری کردہ پریس ریلیز میں جانکاری دی گئی ہے۔

اتر کنڑاضلع لوک آیوکتہ ایس پی کے ذریعے عوامی شکایات کی سماعت : 24ستمبر کو  بھٹکل کا دورہ

ضلع کے مختلف تعلقہ جات میں 24ستمبر سے 26ستمبر تک لوک آیوکتہ پولس سپرنٹنڈنٹ  اور ڈی وائی ایس پی عوام سے شکایات کی سماعت اور اس تعلق سے تحریر ی عرضیاں حاصل کر نے پریس ریلیز کے ذریعے جانکاری دی گئی ہے۔

سیلاب زدہ کورگ کیلئے اضافی تعاون کا اعلان فی کنبہ 50ہزار روپئے رقم دینے کا فیصلہ

ورگ ضلع میں حال ہی میں ہوئی موسلا دھار بارش اور سیلاب کی وجہ سے کئی گھر تباہ وبرباد ہوگئے ۔ متاثرہ کنبوں کیلئے کپڑے اور روز مرہ کی ضروریات کی خریداری کے مقصد سے وزیر اعلیٰ ریلیف فنڈ کے تحت فی کنبہ 50ہزار روپئے اضافی رقم جاری کرنے کا ریاستی حکومت نے فیصلہ کیا ہے۔

سدارامیا کے دست راست ضمیر احمد خان حکومت کی حفاظت کی خاطر ناراض اراکین اسمبلی کو منانے میں سرگرداں

سابق وزیر اعلیٰ سدارامیا کی ترغیب پر جے ڈی ایس کو خیر باد کہتے ہوئے کانگریس میں شمولیت اختیار کرنے والے بی زیڈ ضمیر احمد خان مخلوط حکومت کی حفاظت پر مامور دکھائی دے رہے ہیں، سدارامیا کے ناراض اراکین اسمبلی کو منانے کی کوشش میں بی زیڈ ضمیر احمد خان سرگرم ہوگئے ہیں، ناراضی کی لہر ...

ریاستی مخلوط حکومت کو گرانے میں بی جے پی بری طرح ناکام لوک سبھا انتخابات پر توجہ مرکوز کرنے کی ہدایت ، آخری دم تک فرقہ پرستی کے خلاف لڑتا رہوں گا:سدارامیا

ریاستی مخلوط حکومت میں ساجھیدار کانگریس اور جے ڈی ایس کے اراکین اسمبلی کے درمیان جن اختلافات کا فائدہ اٹھا کر اپوزیشن بی جے پی نے پچھلے دو ہفتوں سے آپریشن کنول کے ذریعہ مخلوط حکومت کو گرانے کی جو کوشش کی تھی ،اب وہ ناکام ہوچکی ہے۔

ویمن انڈیا موؤمنٹ کی جانب سے 23 ستمبر کو بنگلور سے شروع ہورہی ہے خواتین کے تحفظ کو لے کر ملک گیر مہم

ویمن انڈیا موؤمنٹ (Women India Movement) نے 23ستمبر 2018تا 8 مارچ 2019 " خواتین پر تشدد بند کرو " اور "ّ آئیے ہمارے تحفظ کیلئے لڑائی لڑیں " کے نعروں کے تحت  ایک ملک گیر مہم  شروع  کرنے کا اعلان کیا ہے جس کے لئے  ملک کی خواتین سے اپیل کی گئی  ہے کہ وہ اس ملک گیر تحریک میں شامل ہوکر اپنے حالات ...

جنوبی ہند کے مشہور ومعروف عالم دین حضرت مولانا زکریا والا جاہی کا انتقال

نوبی ہند کے مشہور ومعروف،ممتاز جیدعالم دین زکریا صاحب والا جاہی طویل علالت کے بعد آج صبح 10؍بجے اپنے مالک حقیقی سے جاملے۔ مولانا کو شیواجی نگرکے براڈوے کی ان کی رہائش پر آخری دیدار کے لئے رکھا گیا تھا۔