دو طرفہ تجارتی تعاون کے فروغ سمیت اہم امور پر تبادلہ خیال

Source: S.O. News Service | Published on 12th April 2017, 9:26 PM | خلیجی خبریں |

ریاض،12اپریل(ایس اونیوز/آئی این ایس انڈیا)گذشتہ روز فلپائن کے صدر روڈو ریگو دو تیرتے نے ریاض میں سعودی عرب کے فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود سے ان کے شاہی محل میں ملاقات کی۔دونوں رہ نماؤں کے درمیان ہونے والی ملاقات میں دو طرفہ تعاون کے فروغ، مختلف شعبوں میں تعلقات کو مستحکم کرنے، تجارتی روابط بڑھانے کے ساتھ سلگتے عالمی مسائل پربھی تبادلہ خیال کیا گیا۔خادم الحرمین الشریفین اور فلپائنی صدر کی موجودگی میں باہمی تعاون کی متعدد یادداشتوں کی بھی منظوری دی گئی۔ اس موقع پر سعودی عرب۔ فلپائن تعاون پروگرام کا بھی اعلان کیا گیا۔اس موقع پر سعودی وزارت لیبر اور سماجی بہبود کا فلپائنی حکام کے ساتھ فلپائنی شہریوں کی ملازمت کا بھی ایک معاہدہ طے پایا۔ اس معاہدے پر سعودی عرب کی طرف سے وزیر برائے لیبر و سماجی ترقی ڈاکٹر علی بن ناصر الغفیس اور فلپائن کے قائم مقام وزیرخارجہ انریکی مانالو نے دستخط کئے۔اس موقع پر دونوں ملکوں کے وزراء خارجہ کے درمیان سیاسی مشاورت کی ایک یاداشت پر بھی دستخط کیے گئے۔ علاوہ ازیں شہزادہ سعودی الفیصل ڈپولومیٹک اسٹڈی سینٹر اور فلپائن کے خارجہ سروسز انسٹیٹیوٹ کے درمیان بھی دو طرفہ تعاون کا ایک معاہدہ طے پایا۔ اس پر سعودی عرب کے وزیرمملکت برائے خارجہ امور ڈاکٹر نزار بن عبید مدنی اور فلپائن کے قائم مقام وزیرخارجہ انریکی مانالو نے دستخط کیے۔
 

ایک نظر اس پر بھی

شارجہ میں ابناء علی گڑھ مسلم یونیورسٹی کی خوبصورت تقریب؛ یونیورسٹی میں میڈیکل تعلیم صرف 60 ہزار میں ممکن!

علی گڈھ مسلم یونیورسٹی جسے بابائے قوم مرحوم سر سید احمد خان نے دو سو سال قبل قائم کیا تھا آج تناور درخت کی شکل میں ملک میں تعلیم کی روشنی عام کررہا ہے۔اس یونیورسٹی میں میڈیکل کے طلبا کے لئے پانچ سال کی تعلیمی فیس صرف 60,000 روپئے ہے، حالانکہ دوسری یونیورسیٹیوں میں میڈیکل کے طلبا ...

متحدہ عرب امارات میں حفظ قرآن جرم، حکومت کی منظوری کے بغیر کوئی شخص قرآن حفظ نہیں کرسکتا، مساجد میں مذہبی تعلیم اور اجتماع پر بھی پابندی

مشرقی وسطیٰ کے مختلف ممالک میں داخل اندازی اور عرب کی اسلامی تنظیموں کو دہشت گرد قرار دینے کے بعد متحدہ عرب امارات قانون کے ایسے مسودہ پر کام کررہا ہے جس کی رو سے حکومت کی منظوری کے بغیر قرآن شریف کا حفظ بھی غیرقانونی ہوگا۔