دو طرفہ تجارتی تعاون کے فروغ سمیت اہم امور پر تبادلہ خیال

Source: S.O. News Service | Published on 12th April 2017, 9:26 PM | خلیجی خبریں |

ریاض،12اپریل(ایس اونیوز/آئی این ایس انڈیا)گذشتہ روز فلپائن کے صدر روڈو ریگو دو تیرتے نے ریاض میں سعودی عرب کے فرمانروا شاہ سلمان بن عبدالعزیز آل سعود سے ان کے شاہی محل میں ملاقات کی۔دونوں رہ نماؤں کے درمیان ہونے والی ملاقات میں دو طرفہ تعاون کے فروغ، مختلف شعبوں میں تعلقات کو مستحکم کرنے، تجارتی روابط بڑھانے کے ساتھ سلگتے عالمی مسائل پربھی تبادلہ خیال کیا گیا۔خادم الحرمین الشریفین اور فلپائنی صدر کی موجودگی میں باہمی تعاون کی متعدد یادداشتوں کی بھی منظوری دی گئی۔ اس موقع پر سعودی عرب۔ فلپائن تعاون پروگرام کا بھی اعلان کیا گیا۔اس موقع پر سعودی وزارت لیبر اور سماجی بہبود کا فلپائنی حکام کے ساتھ فلپائنی شہریوں کی ملازمت کا بھی ایک معاہدہ طے پایا۔ اس معاہدے پر سعودی عرب کی طرف سے وزیر برائے لیبر و سماجی ترقی ڈاکٹر علی بن ناصر الغفیس اور فلپائن کے قائم مقام وزیرخارجہ انریکی مانالو نے دستخط کئے۔اس موقع پر دونوں ملکوں کے وزراء خارجہ کے درمیان سیاسی مشاورت کی ایک یاداشت پر بھی دستخط کیے گئے۔ علاوہ ازیں شہزادہ سعودی الفیصل ڈپولومیٹک اسٹڈی سینٹر اور فلپائن کے خارجہ سروسز انسٹیٹیوٹ کے درمیان بھی دو طرفہ تعاون کا ایک معاہدہ طے پایا۔ اس پر سعودی عرب کے وزیرمملکت برائے خارجہ امور ڈاکٹر نزار بن عبید مدنی اور فلپائن کے قائم مقام وزیرخارجہ انریکی مانالو نے دستخط کیے۔
 

ایک نظر اس پر بھی

ولی عہد دبئی کی جانب سے’فٹ نس چیلنج‘ میں شرکت کی دعوت

متحدہ عرب امارات کی قیادت بڑے بڑے چیلنجز کا خود مقابلہ کرنے کے ساتھ مملکت کے عوام اور امارات میں مقیم شہریوں کو نئے چیلنجز کا مقابلہ کرنے اور انہیں زندگی کے ہرشعبے میں آگے نکلنے کی صلاحیت پیدا کرنے کے لیے کوشاں ہے۔

اخوانی پروفیسروں پر سعودی یونیورسٹیوں کے دروازے بند،اخوانی نظریات سے دہشت گرد پیدا ہو رہے ہیں: ڈاکٹر سلیمان ابا الخلیل

سعودی عرب کی ایک بڑی دینی درس گاہ جامعہ الامام کے ڈائریکٹر اور سپریم علماء کونسل کے رکن ڈاکٹر سلیمان ابا الخلیل نے کہا ہے کہ یونیورسٹی نے اخوان المسلمون کے افکار سے متاثر تمام شخصیات سے معاہدے ختم کردیے ہیں۔

ولی عہد کا فلاحی تنظیموں کو 50 لاکھ ریال کا عطیہ

سعودی عرب کے ولی عہد، نائب وزیراعظم اور وزیر دفاع شہزادہ محمد بن سلمان بن عبدالعزیز نے اپنے ذاتی جیب سے حائل کے علاقے میں فلاحی شعبے میں سرگرم تنظیموں کو پچاس لاکھ ریال کی رقم عطیہ کی ہے۔