رافیل طیارہ سودا معاملہ :جے پی سی کی تشکیل میں پس وپیش کیوں؟کانگریس

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 8th January 2019, 12:30 PM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی،8؍جنوری(ایس او نیوز؍یو این آئی)کانگریس نے رافیل طیارہ سودا معاملہ میں سرکار پر قومی سلامتی سے سمجھوتہ کرنے کا الزام لگاتے ہوئے آج کہا کہ اس کی خریداری میں گڑبڑی ہوئی ہے اور سرکار کچھ چھپانا چاہتی ہے ۔اسلئے مشترکہ پارلیمانی کمیٹی(جے پی سی)کی تشکیل نہیں کی جارہی ہے ۔کانگریس کے سینئر لیڈر اور سابق وزیر دفاع اے کے انٹونی نے پیر کو پارلیمنٹ ہاؤس میں منعقد پریس کانفرنس میں کہا کہ ان کی پارٹی لگاتار اس معاملہ پر جے پی سی کی تشکیل کی مانگ کررہی ہے ۔اس میں اگر کچھ گڑبڑی نہیں ہوئی ہے تو سرکار کو جے پی سی پر اعتراض نہیں ہونا چاہئے ،کیونکہ کمیٹی کی تفتیش میں دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی ہوجائے گا۔بھارتیہ جنتا پارٹی کی اکثریت کی حکومت ہے اور جے پی سی میں اسی کے ممبر ہوں گے ۔اس کے باوجود جے پی سی تشکیل نہیں کی جارہی ہے ۔اس سے شبہ پیدا ہوتا ہے کہ ضرور کچھ ہے جسے چھپایا جارہاہے ۔انہوں نے ہندوستان ایروناٹکس لمٹیڈ (ایچ اے ایل)معاملہ میں وزیر دفاع نرملا سیتا رمن پر پارلیمنٹ میں غلط بیانی کرنے کا الزام لگایا اور کہا کہ انہوں نے ایک لاکھ کروڑ روپے کا کام ایچ اے ایل کو دینے کی بات کی ہے جبکہ تقریباً 26ہزار کروڑ روپے کا ہی معاملہ کاغذوں میں ہے ۔انہوں نے کہا کہ سلامتی سے جڑے 80فیصد طیارے ایچ اے ایل میں تیار کئے جارہے ہیں،لیکن رافیل کے ایشو پر اس کی ساکھ کو نقصان پہنچایا گیا ہے ۔

سابق وزیر دفاع نے کہا کہ رافیل طیارہ خریداری میں گڑبڑی ہوئی ہے ۔یہ شکایت ان سے بھارتیہ جنتا پارٹی کے سینئر لیڈر سبرامنیم سوامی نے بھی کی تھی۔رافیل طیارہ سودے میں جہاں جہاں گڑبڑی ہوئی ہے اس کولے کر سرکار کے سامنے کانگریس پارٹی نے سوال کھڑے کئے ہیں، لیکن اس کا جواب نہیں دیا جارہاہے ۔سرکار ایک جھوٹ کو چھپانے کیلئے سوجھوٹ بولنے کی کوشش کررہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ اس طرح کی بدعنوانی میں بچا نہیں جاسکتا اور وہ جتنا بھاگیں گے ،اتنا ہی پھنسیں گے ۔اسلئے جے پی سی کی تشکیل ضروری ہے ۔

ایک نظر اس پر بھی

راج ناتھ سنگھ نے اپوزیشن کے اتحادکونشانہ بنایا

مرکزی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ نے آج کہا کہ مودی حکومت کی مقبولیت سے خائف ہو کر اپوزیشن جماعتوں نے مہاگٹھ بندھن (عظیم اتحاد) بنایا ہے لیکن انہیں یقین ہے کہ عوامی حمایت بھارتیہ جنتا پارٹی کے حق میں ہی رہے گی۔

مایاوتی پر’غیر اخلاقی‘ تبصرہ کرنے والی بی جے پی ممبر اسمبلی سے خواتین کمیشن نے وضاحت طلب کی

بی ایس پی سربراہ مایاوتی کا موازنہ مبینہ طور پر ہجڑوں سے کرنے سے متعلق بیان کی مذمت کرتے ہوئے قومی خواتین کمیشن نے پیر کو بی جے پی ممبر اسمبلی سادھنا سنگھ کو نوٹس جاری کہا کہ وہ اپنی اس ’غیر اخلاقی، توہین اور غیر ذمہ دارانہ‘تبصرہ پر تسلی بخش وضاحت دیں۔

ملک نئے وزیراعظم کاانتظارکررہاہے،بی جے پی کے پاس کوئی اورہوتوبتائے،ہمارے پاس کئی چوائس ہیں:  اکھلیش یادو

سماج وادی پارٹی (ایس پی) کے صدر اکھلیش یادو نے اپوزیشن جماعتوں کے اتحاد کے رہنما کے بارے میں سوال پوچھ کربی جے پی پر طنز کرتے ہوئے پیر کو کہا کہ ملک کے عوام اگلے انتخابات کے بعد نیا وزیر اعظم چاہتی ہے.

مالیگاؤں2008 بم دھماکہ معاملہ؛ یو اے پی اے قانون کے اطلاق کے خلاف داخل اپیل پر 28؍ جنوری کو ہائی کورٹ میں سماعت متوقع

مالیگاؤں 2008ء بم دھماکہ معاملے کے کلیدی ملزم کرنل پروہیت و دیگر ملزمین کی جانب سے یو اے پی اے قانون کے اطلاق کے خلاف داخل اپیل پر 28؍ جنوری کو ہائی کورٹ میں سماعت ہوسکتی ہے ۔ 

شیرور میں کار کی ٹکر سے بائک سوار کی موت

پڑوسی علاقہ شیرور نیشنل ہائی وے پر ایک کار کی ٹکر میں بائک سوار کی موقع پر ہی موت واقع ہوگئی جس کی شناخت محمد راشد ابن محمد مشتاق (21) کی حیثیت سے کی گئی ہے جو شیرور  بخاری کالونی کا رہنے والا تھا۔

ہائی کمان کہے تو وزارت چھوڑ نے کیلئے بھی تیار : ڈی کے شیو کمار

ریاست میں سیاسی گہما گہمی کا فی تیز ہونے لگی ہے ۔ ایک طرف جہاں کانگریس اور جنتادل( سکیولر) اپنی مخلوط حکومت کو بچانے میں لگے ہیں وہیں بھارتیہ جنتا پارٹی ( بی جے پی ) نے آپریشن کنول کے ذریعہ دیگر پارٹیوں کے اراکین اسمبلی کو خریدکر برسر اقتدار آنے کے حربے جاری رکھے ہیں۔

ملیناڈو کراولی ریلوے لائن منصوبے پر جلد عمل درآمد کے لئے ریاستی وزیر اعلیٰ کمار اسوامی کا مرکزی حکومت سے تقاضہ

شیموگہ، شرنگیری، منگلورو جیسے علاقوں سے گزرنے والی ملیناڈو کراولی ریلوے لائن منصوبے پر جلد عمل درآمد کے لئے ریاستی وزیر اعلیٰ کمار ا سوامی نے مرکزی حکومت سے تقاضہ کیا ہے۔