بھٹکل: مرڈیشور کے سرخاب بنے سمندری ساحل کو دوکانداروں کا تحفظ (وسنت دیواڑیگا کی خصوصی تحریر)

Source: S.O. News Service | By V. D. Bhatkal | Published on 31st October 2016, 4:18 AM | ساحلی خبریں | اسپیشل رپورٹس |

بھٹکل:30/اکتوبر(ایس او نیوز)ملک کا مشہور سیاحتی مقام مرڈیشورکا ساحلی کنارہ ہر روز سیاحوں کے ہجوم میں ڈوب جاتاہے۔ اور یہ  صرف ایک خوب صورت ، دل فریب ساحلی منظر دینے والا مقام ہی نہیں بلکہ روزانہ سیکڑوں  خاندانوں کی کفالت بھی کرتاہے ۔ مگر آج یہ حسین ساحل ایک ایسا سرخاب بن گیا ہے جہاں تک کوئی بھی پہنچ نہیں پارہاہے۔ساحلی کنارے غفلت کا شکار ہوکر دن بدن اپنی خوبصورتی کھوتے جارہے ہیں ایسے میں پیٹ کی مجبوری کے لئے چھوٹے چھوٹے دوکاندار ، باکڑا والوں نے گذشتہ ایک  دہے سے اپنا اسوسی ایشن قائم کرکے یہاں صفائی مہم مناکر اپنے ساتھ ساحل کو بھی زندہ رکھے ہوئے ہیں۔

سال بہ سال مرڈیشور کا ساحل تنگ ہوتا جارہاہے ، سیاحوں کی تعداد بھی لاکھوں کو پہنچ رہی ہے، کروڑوں کا بیوپار ہورہاہے۔ رات کے اوقات میں گھر، دوکان، صحن رہائشی گھروں (لاڈج )میں منتقل ہوجاتے ہیں۔ مختلف قسم کی دوکانیں ساحل پر آجاتے ہیں، کون ؟ کیوں؟ سمجھنا دشوار ہوجاتاہے۔ باکڑوں کو نکال باہرکرنےسےپہلے ضلعی انتظامیہ کاعمارت تعمیر کرنے کا وعدہ سمندر کی لہروں میں بہہ جانے سے دوکاندار دوبارہ اپنی گاڑیوں کونہ صرف  ساحل پر لے آئے ہیں،بلکہ ان کے ساتھ کئی دوکاندار وں نے اپنی جگہ ڈھونڈ لی ہے۔ ساحل کو ہر کوئی اپنی حیثیت اور بساط کے مطابق قبضہ میں لے رکھا ہے، جس کی آواز میں زور ہے ، طاقت ہے  یہاں راج رولنے کی بات سننے میں آرہی ہے۔ ریاست کے مختلف اضلاع سے مرڈیشور کے ساحل پر پہنچ کر باکڑا دوکانوں کے سہارے زندگی کی تلاش میں توہیں لیکن ان کی ڈور کسی اور کے ہاتھ میں ہونے کی وجہ سے مجبور بھی ہیں، مقامی انتظامیہ کافی کمزور ہوچکی ہے، انتظامیہ کو خوف ستائے جارہاہے کہ اگر دوکانداروں کو منظوری دینے کے لئے آگے بڑھیں گے تونئے دوکاندار ساحل کا رخ کرنے کا اندیشہ ہے۔  دوسرے یہ کہ ضلعی انتظامیہ مستقبل کے منصوبہ جات وغیرہ کو لے کر پنچایت انتظامیہ کو ایک طرح سے باندھے رکھی ہوئی ہے۔ مرڈیشور کو ایک مکمل سیاحتی مرکز بنانے کی امید جتانے والی ضلعی انتظامیہ فی الحال خاموش ہے۔ یہاں جو کچھ ہورہاہے اس پر کسی کی بھی پکڑ نہیں ہے۔ ہرکوئی اندر ہی اندر خوف کھارہاہے، مقامی پولس دوکانداروں کے لئے نفع ونقصان کے مہمان بنے بیٹھے ہیں تو مرڈیشور کچرے کا ڈھیر بن گیا ہے، یہاں کی گندگی کو دور کرنا دوکانداروں کی قسمت ہے۔ قریب 100دوکانداروں نے ایک اسوسی ایشن قائم کرکے رجسٹرڈ کروایا ہے، فی دوکاندار یومیہ 10روپئے ادا کرتے ہوئے اپنے آس پاس کے ماحول کو صاف ستھرارکھنے کا فریضہ انجام دے رہاہے۔ پنچایت میں صفائی کا کام کرنےوالے بھدراوتی کے 5مزدوروں کو دوکانداروں کی رقم سے کچھ کام مل جاتاہے، لیکن دوکانوں کی بھر مار سے صفائی کے کام کاج کو منضبط نہیں کرپارہے ہیں، کلی طورپر یہاں کے دوکاندار عجیب صورت حال میں پھنسے ہوئے ہیں، اسی دوران سمندر ی ساحل پر اپنا  حق جتانے کے لئے اوں آں شروع ہوچکی ہے، قبضہ یا حق کسی کا بھی ہو، دوکانداروں کی تعداد میں اضافہ ہوتے جارہاہے ۔ فی الحال کچرا، گندگی وغیرہ کی نکاسی کی ذمہ داری کسی اور کی بتائے جانے کا الزام عائد ہورہاہے۔ اگر یہی حالات رہے تو آئندہ دنوں میں یہاں کا ساحل خطرہ میں گھرجانا تقریبا طے مانا جارہا ہے ۔ 

باکڑا دوکاندار اسوسی ایشن کے صدر وینکٹ رمن نائک نے اپنےپیچیدہ حالات کو بیان کرتے ہوئے کہاکہ گذشتہ کئی سالوں سے ہم باکڑا دوکانداری  پر انحصار کرتے ہوئے زندگی گزاررہے ہیں، ہر ایک دوکاندار یومیہ 10روپئے ادا کر کے آس پاس کا علاقہ صاف ستھرا رکھے ہوئے ہیں۔ اب یہاں پر ادھر ادھر سے کئی نئے دوکاندار آکر بس گئے ہیں، جس سے ہما رے حالات مزید پیچیدہ ہوگئے ہیں۔

باکڑا دوکانداروں کے متعلق ماولی گرام پنچایت کے ترقی جات افسر ایس بی ہتی نے بتایا کہ ہم کسی بھی دوکاندار کو منظوری نہیں دیتے ، ان سے ٹیکس وصول کرنے کے بھی حالات نہیں ہیں، وہاں کے انتظامات ہمارے ذمہ نہیں ہیں، اور نہ ہم ذمہ دار ہیں، ہم صرف ضلع ڈی سی کے احکامات پر عمل کرتے ہیں۔

 

ایک نظر اس پر بھی

منگلورو میں نشہ آور گولیاں فروخت کرنے والی گینگ کے 3 اراکین ہوئے گرفتار

ساحلوں کے کنارے گھوم پھر کر نوجوانوں اور طلبہ کوMDMAنامی نشہ آور گولیاں فروخت کرنے کے الزام میں شہری پولیس نے 3ملزمین کوگرفتار کرلیا ہے ان کے پاس سے’ایکٹیسی‘کے نام سے معروف16گرام گولیاں ضبط کی گئیں جن کی قیمت 80ہزار روپے ہے۔ اس کے علاوہ ملزمین کے پاس سے اسکوٹر، موبائل فون، نقد ...

اڈپی کے ایک گھر میں ہوئی چوری کا معاملہ پولیس نے کیا حل۔ 2ملزمین گرفتار۔ 1.7لاکھ روپے مالیت کا مسروقہ مال برآمد

شہرکے ایک مکان میں 16جولائی کو ہوئی چوری کی واردات کے ملزمین کوپولیس نے کوکّی کٹے علاقے سے گرفتار کرلیا ہے اور ان کے قبضے سے لوٹے گئے66.850گرام سونے کے زیورات سمیت دیگر اشیاء کی شکل میں 1,69,800روپے مالیت کا مسروقہ مال برآمد کیاہے۔

منگلورو میں ڈینگی بخار سے ایک طالبہ ہلاک

منگلورو میں ڈینگی بخار کے بڑھتے معاملات کے ساتھ ایک اور اسکولی طالبہ کی موت واقع ہو گئی ہے، جبکہ گزشتہ چند روز قبل  تیز بخار کی وجہ سیایک سات سالہ لڑکے کی موت ہوئی تھی جس کے بارے میں شک ظاہر کیا گیا تھا کہ اس کو بھی ڈینگی بخار ہواتھا۔ لیکن محکمہ صحت کے ہیلتھ آفیسر نے اس بات کی ...

بھٹکل کے چوتھنی کی  سڑک پھر ہوئی خستہ ، پوچھنے والا کوئی نہیں : جمعہ کی صبح مرمت، شام کو احتجاج

بھٹکل تعلقہ میں ہورہی موسلا دھار بارش کے نتیجےمیں چوتھنی کی سڑک پھر ایک بار بہہ کر خستہ ہوگئی ہے۔ سڑک پر سواریوں کو ہی نہیں ، پیدل راہ گیروں کو چلنا پھرنا دشوار ہورہاہے۔ سڑک کی خستہ حالت کو دیکھ کر علاقے کے نوجوانوں نے جمعہ کی صبح سڑک کی مرمت کی اور شام کو سڑک کے درمیان  پودوں کو ...

مولانا سید بلال حسنی ندوی کے ہاتھوں بھٹکل غوثیہ اسٹریٹ میں پانی کے یونٹ کا خوبصورت افتتاح؛ مسلم یوتھ فیڈریشن کا چھ مزید جگہوں پر یونٹ قائم کرنے کا منصوبہ

بھٹکل مسلم یوتھ فیڈریشن کی جانب سے   شہر کے غوثیہ اسٹریٹ میں  پانی کے یونٹ کا خوبصورت افتتاح  آل انڈیا پیام انسانیت فورم   کے جنرل سکریٹری  مولانا سید بلال عبد الحئ حسنی ندوی  کی دُعا کے ساتھ کیا گیا، جبکہ بھٹکل جماعت المسلمین  کے قاضی مولانا  اقبال مُلا ندوی نے   تالہ کھول ...

کرناٹک : استعفیٰ دینے والوں کی فہرست میں یلاپور رکن اسمبلی ہیبار بھی شامل۔کیاوزارت کے لالچ میں چل پڑے آنند اسنوٹیکر کے راستے پر؟

ریاست کرناٹک  میں جو سیاسی طوفان اٹھ کھڑا ہوا ہے اور اب تک کانگریس، جے ڈی ایس مخلوط حکومت کے تقریباً 13 اراکین اسمبلی اپنا استعفیٰ پیش کرچکے ہیں اس سے مخلوط حکومت پر کڑا وقت آن پڑا ہے اور قوی امکانا ت اسی بات کے دکھائی دے رہے ہیں کہ دونوں پارٹیوں کے سینئر قائدین کی جان توڑ کوشش ...

بھٹکل میں 110 کے وی اسٹیشن کے قیام سے ہی بجلی کا مسئلہ حل ہونے کی توقع؛ کیا ہیسکام کو عوامی تعاون ملے گا ؟

بھٹکل میں رمضان کے آخری دنوں میں بجلی کی کٹوتی سے جو پریشانیاں ہورہی تھی، سمجھا جارہا تھا کہ  عین عید کے  دن  بعض نوجوانوں کے  احتجاج کے بعد  اُس میں کمی واقع ہوگی اور مسئلہ حل ہوجائے گا، مگر  عید الفطر کے بعد بھی  بجلی کی کٹوتی یا انکھ مچولیوں کا سلسلہ ہنوز جاری ہے اور عوام ...

بھٹکل تعلقہ اسپتال میں ضروری سہولتیں تو موجود ہیں مگر خالی عہدوں پر نہیں ہورہا ہے تقرر

جدید قسم کا انٹینسیو کیئر یونٹ (آئی سی یو)، ایمرجنسی علاج کا شعبہ،مریضوں کے لئے عمدہ ’اسپیشل رومس‘ کی سہولت کے ساتھ بھٹکل کے سرکاری اسپتال کو ایک نیا روپ دیا گیا ہے۔لیکن یہاں اگر کوئی چیز نہیں بدلی ہے تو یہاں پر خالی پڑی ہوئی اسامیوں کی بھرتی کا مسئلہ ہے۔ 

آر ایس ایس کی طرح کوئی مسلم تنظیم کیوں نہیں؟ از: ڈاکٹر سید فاضل حسین پرویز

مسٹر نریندر مودی کی تاریخ ساز کامیابی پر بحث جاری ہے۔ کامیابی کا سب کو یقین تھا مگر اتنی بھاری اکثریت سے وہ دوبارہ برسر اقتدار آئیں گے اس کا شاید کسی کو اندازہ نہیں تھا۔ دنیا چڑھتے سورج کی پجاری ہے۔ کل ٹائم میگزین نے ٹائٹل اسٹوری مودی پر دی تھی جس کی سرخی تھی ”India’s Divider in Chief“۔

خود کا حلق سوکھ رہا ہے، مگر دوسروں کو پانی فراہم کرنے میں مصروف ہیں بھٹکل مسلم یوتھ فیڈریشن کے نوجوان؛ ایسے تمام نوجوانوں کو سلام !!

ایک طرف شدت کی گرمی اور دوسری طرف رمضان کا مبارک مہینہ  ۔ حلق سوکھ رہا ہے، دوپہر ہونے تک ہاتھ پیر ڈھیلے پڑجاتے ہیں،    لیکن ان   نوجوانوں کی طرف دیکھئے، جو صبح سے لے کر شام تک مسلسل شہر کے مختلف علاقوں میں پہنچ کر گھر گھر پانی سپلائی کرنے میں لگے ہوئے ہیں۔ انہیں  نہ تھکن کا ...

مودی جی کا پرگیہ سنگھ ٹھاکور سے لاتعلقی ظاہر کرنا ایسا ہی ہے جیسے پاکستان کا دہشت گردی سے ۔۔۔۔ دکن ہیرالڈ میں شائع    ایک فکر انگیز مضمون

 وزیر اعظم نریندرا مودی کا کہنا ہے کہ وہ مہاتما گاندھی کے قاتل ناتھو رام گوڈسے کو دیش بھکت قرار دیتے ہوئے ”باپو کی بے عزتی“ کرنے کے معاملے پر پرگیہ ٹھاکورکو”کبھی بھی معاف نہیں کرسکیں گے۔“امیت شاہ کہتے ہیں کہ پرگیہ ٹھاکور نے جو کچھ کہا ہے(اور یونین اسکلس منسٹر اننت کمار ہیگڈے ...