"بیٹی بچاؤ "، نریندر مودی کا ایک اور منافقانہ ڈرامہ ہے ۔ایس ڈی پی آئی

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 14th April 2018, 4:06 PM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی (ایس او نیوز/ پریس ریلیز) سوشیل ڈیموکریٹک پارٹی آف انڈیا (SDPI) نے وزیر اعظم نریندر مودی اور اتر پردیش کے وزیر اعلی یوگی آدتیا ناتھ کی اس بے نیاز خاموشی پر حیرت کا اظہار کیاہے کہ جموں کشمیر اور اتر پردیش کے اناؤ کے عصمت دری کے واقعات جس میں ایک قتل کا واقعہ بھی شامل ہےاور  ان دونوں واقعات نے مہذب دنیا کے ضمیر کو جھنجوڑ دیا ہے۔

ایس ڈی پی آئی نے  ملک میں ہوئے دو بڑے جرم پر وزیر اعظم اور اتر پردیش وزیر اعلی کے رویئے کو پورے ملک کے لیے شرمناک قرار دیاہے۔اور اپنے جاری کردہ اخباری بیان میں اس بات کی یاددہانی کرائی ہے  کہ بی جے پی نے خواتین کی حفاظت کے تعلق سے بار بار وعدہ کیا تھا۔ لیکن ان کا یہ وعدہ بھی ان کے ہر وعدے کی طرح جھوٹا ثابت ہوا ہے۔ ریلیز میں ایس ڈی پی اائی نے بتایا ہے کہ اب خواتین کی سلامتی اور حفاظت کا وعدہ بھی ایک اور سیاسی نوٹنکی ثابت ہورہا ہے۔

پریس ریلیز میں نیشنل کرائم ریکارڈس بیوریو کے اعداد و شمار کے حوالہ سے بتایا گیا ہے کہ خواتین کے خلاف جرائم کے چارٹ میں اتر پردیش سر فہرست ہے۔ یوگی آدتیا ناتھ کے پہلے دو ماہ کے اقتدار کے دوران 803عصمت دری کے واقعات اور 729قتل کے واقعات رونما ہوئے ہیں۔ ایس ڈی پی آئی قومی صدر اے سعید نے اس بات کی طرف نشاندہی کرتے ہوئے کہا ہے کہ دسمبر 2012کے نر بھیا معاملے کو کس طرح بی جے پی نے سیاسی طور پر استحصال کیا تھا۔ لیکن اب بی جے پی کے دور اقتدار میں خواتین کے خلاف بہت زیادہ جرائم ہورہے ہیں۔ چاہے وہ جموں کشمیر کے کتھواہ میں ایک آٹھ سال کی بچی کی عصمت دری اور قتل کا معاملہ ہو یا کچ میں نالیہ کی عصمت دری کا واقعہ ہو یا اتر پردیش میں اناؤ کا واقعہ ہو۔  اے سعید نے مزید کہا ہے کہ جموں کشمیر اور اترپردیش ان دونوں معاملات میں سیاسی مفادات، انتظامیہ، پولیس یا وکیل نے مجرم کو بچانے کی کوشش کی ہے اور دوسری طرف ہندتواطاقتیں ایک جرم کو بہانہ بنا کر فرقہ وارانہ آگ لگانے کی کوشش کررہی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ اس سے قبل کبھی ایسا نہیں ہوا تھا کہ سرکاری افسران اور سیاسی مفاد پرست کی ملی بھگت سے Rapistsکی حمایت کی گئی  ہو ۔ اب یہ بات واضح ہوگئی ہے کہ وزیر اعظم نریندر مودی نے بیٹی بچاؤ مہم کا جوآغاز کیا تھا وہ صرف ایک سیاسی ہتھکنڈا تھا۔ کتھوہ اور اناؤ میں جو ہوا ہے اس سے ہندتوا حکومتوں کی اصلیت سامنے آرہی ہے۔

ریلیز میں بتایا گیا ہے کہ جب سے یوگی آدتیا ناتھ اترپردیش کے وزیر اعلی بنے ہیں اب تک ایک ہزار سے زائد انکاؤنٹرس کئے جاچکے ہیں۔ مبینہ طور پر حکومت سابق وزیر سوامی چنا مایانند اور مظفر نگر فسادات کے مقدمات کو واپس لے رہی ہے۔ یوگی آدتیا ناتھ حکومت اب جنگل راج جیسے حکومت کا مظاہر ہ کررہی ہے۔ بھارت ایک ایسا ملک ہے جو ترقی کی تلاش میں ہے۔ اس کے لیے بھارت کے شہریوں کے درمیان اتحاد و اتفاق کی ضرورت ہے۔ یہ صرف تب ہی ممکن ہوگا  جب ذات، مذہب، سیاست کے تعصب کے بغیر قانون کی حکمرانی قائم ہو اور مجرموں کو بغیر کسی تاخیر کے سزا دی جائے۔

ایک نظر اس پر بھی

رام مندرپراپنا رخ واضح کرے، تین ریاست جیتنے پرخوش نہ ہوں: اندریش کمار

آرایس ایس لیڈراورمسلم راشٹریہ منچ کے سربراہ اندریش کمارنے کہا ہے کہ اپوزیشن رام مندرپراپنا موقف واضح کرے، یہ نہ سوچیں کہ دوتین ریاست جیت لیا ہے، تو آنے والے دنوں میں بھی انہیں جیت ملے گی۔ انہوں نے واضح لفظوں میں وارننگ دیتے ہوئے کہا کہ 2019 لوک سبھا الیکشن میں ایسا کچھ نہیں ...

سکھ مخالف فسادات: سجن کمار کو عمرقید، فیصلہ سناتے ہوئے رو پڑے جج۔ یہ معاملہ اس وقت کی وزیر اعظم اندرا گاندھی کے قتل کے بعد یکم نومبر 1984 کا ہے

 1984 کے سکھ مخالف فسادات معاملے پر دلی ہائی کورٹ نے فیصلہ الٹ دیا ہے۔ کانگریس لیڈر سجن کمار کو عمرقید کی سزا سنائی گئی ہے۔ انہیں 31 دسمبر تک خودسپردگی کرنا ہوگی۔ عمرقید کے علاوہ سجن کمار پر پانچ لاکھ روپئے کا جرمانہ کا بھی عائد کیا گیا ہے۔ اس کے علاوہ باقی مجرموں کو جرمانہ کے طور ...

رافیل معاملہ: جھوٹی رپورٹ کی بنیاد پرسپریم کورٹ کا آیا فیصلہ، مرکز پرتوہین عدالت کا معاملہ درج ہو: کانگریس

فرانس کے ساتھ ہوئے رافیل لڑاکو جہاز سودے کو لے کرسیاسی رسہ کشی میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ کانگریس نے مرکزی حکومت کی طرف سے سپریم کورٹ کے فیصلے میں حقائق میں سدھارکرنے والی عرضی کو لے کرایک بارپھرسے تنقید کی ہے۔

کانگریس کے تین لیڈران آج وزیر اعلیٰ کی حیثیت سے لیں گے حلف، نظر آئے گی حزب مخالف کی طاقت

مدھیہ پردیش، راجستھان اور چھتیس گڑھ میں کانگریس کے تین لیڈران آج وزیر اعلی کا حلف لیں گے۔ مدھیہ پردیش میں کمل ناتھ، چھتیس گڑھ میں بھوپیش بگھیل اور راجستھان میں اشوک گہلوت وزیر اعلیٰ کے عہدہ کے لئے حلف لیں گے۔

ہندوسماج اتسوا کے بعد کاسرگوڈ میں فرقہ وارانہ تشدد۔ پولیس نے کیا لاٹھی چارج

اتوار کے دن یہاں منعقدہ ہندوسماج اتسوا میں شرکت کے بعدواپس لوٹنے والوں پر سنگ باری کا الزام لگاتے ہوئے شرپسندوں نے مختلف مقامات پرموٹر گاڑیوں پر پتھراؤ شروع کیا جس کے بعد پولیس نے مداخلت کرتے ہوئے لاٹھی چارج کیااور صورتحال پر قابو پالیا۔

احمد پٹیل نے کی اوپیندر کشواہا سے ملاقات، چھ سے سات نشست پر بنی بات، کل اعلان متوقع : ذرائع 

پانچ ریاستوں کے انتخابات کے نتائج میں جیت سے کافی خوش کانگریس نے ملک بھر میں مہا گٹھ بندھن کا عمل تیز کردیا ہے ۔ اسی ترتیب میں آج کانگریس کے قدآور لیڈر احمد پٹیل نے قومی لوک سمتا پارٹی کے سربراہ اوپیندر کشواہا سے دہلی میں واقع رہائش گاہ میں ملاقات کی۔ ذرائع کے مطابق 6 سے 7 سیٹوں ...

باگلکوٹ شکر کارخانے میں دھماکہ؛ چھ ہلاک؛ کئی زخمی

  کرناٹک کے باگلكوٹ ضلع کے مدھول میں نراني شوگر لمیٹڈ میں بوائلر میں  دھماکہ   ہونے کے نتیجے  میں 6 افراد کی جان چلی گئی، جبکہ نو سالہ بچہ سمیت  آٹھ  لوگ شدید زخمی ہو گئے۔ شکر کا یہ  کارخانہ  نرانی  یونٹ کا حصہ ہے اوریہ  نراني بھائیوں اورسابق بی جے پی وزیر مرگیش  نراني اور ...

بھٹکل انجمن کا طالب العلم میسور میں منعقدہ اسٹیٹ لیول پرتیبھا کارنجی مقابلے میں دوم

میسور میں منعقدہ ریاستی سطح کے پرتیبھا کارنجی اُردو تقریری مقابلہ میں بھٹکل انجمن ہائی اسکول کا طالب العلم  خبیب احمد اکرمی ابن مولانا خواجہ معین اکرمی مدنی دوسرا مقام حاصل کرنے میں کامیاب ہوگیا ہے۔