کورونا معاملات کو لے کر بھٹکل لاک ڈاون کی صورتحال کا جائزہ لینے کاروار ایس پی کا بھٹکل دورہ؛ تعلقہ اسپتال پہنچ کر بھی لیا جائزہ؛ کل کریں گے مشتبہ مریضوں کو انجمن ہوسٹل میں منتقل

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 31st March 2020, 2:04 AM | ساحلی خبریں |

بھٹکل 30/مارچ(ایس او نیوز) بھٹکل میں کورونا متاثرین کی سنگین صورتحال کے بعد لاک ڈاون کا جائزہ لینے اور حفاظتی انتطامات  کے تعلق سے جانکاری حاصل کرنے ضلع اُترکنڑا کے ایس پی شیوپرکاش دیوراج نے آج پیر کو بھٹکل کا دورہ کیا ، پولس کو ضروری ہدایات دینے اور اخباری نمائندوں سے  بات چیت کرنے اور یہاں کے حالات سے واقفیت حاصل کرنے کے بعد وہ  تعلقہ اسپتال پہنچے اور اسپتال نیز بالمقابل والے ہوسٹل کا بھی جائزہ لیا، پھر ڈاکٹروں سمیت  قومی سماجی ادارہ مجلس اصلاح و تنظیم  کے ذمہ داران سے بھی گفتگو کی جو اسپتال کے باہر ہی موجود تھے۔

اس موقع پر جناب عنایت اللہ شاہ بندری نے ایس پی کو  بتایا کہ بھٹکل میں لاک ڈاون کے دوران  پولس نے کچھ زیادہ لاٹھیاں برسائی ہیں اور غیر ضروری طور پرلوگوں کو ہراساں کیا ہے۔پولس  کی لاٹھیاں کھانے کی وجہ سے  بہت سارے  لوگ ضروری اشیاء گھروں میں پہنچانے میں بھی خوف کھارہے ہیں انہوں نے ایس پی سے درخواست کی کہ وہ بھٹکل پولس کو ہدایت دیں کہ جو لوگ کسی ایمرجنسی کی غرض سے گھر سے باہر نکلتے ہیں تو اُن کا استقبال لاٹھیوں کے ذریعے نہ کریں۔  پہلے سمجھنے کی کوشش کریں کہ سامنے والا کہاں جارہا ہے اور کیا واقعی اس کا جانا ضروری ہے یا نہیں، لیکن پولس کچھ پوچھے بغیر ہی ڈنڈےبرسانا شروع کردیتی ہے، جو بالکل مناسب نہیں ہے۔ 

امتیاز اُدیاور نے اس موقع پرایس پی کو بتایا کہ ہمیں محکمہ کی  طرف سے کسی طرح کا تعاون نہیں مل رہا ہے،  انہوں نے مزید یہ بھی بتایا کہ  سرکاری اسپتال میں ایڈمٹ مریضوں کو اسپتال کے سامنے والے ہوسٹل  میں شفٹ کرنے کے لئے کہا گیا ہے جو بالکل مناسب نہیں ہیں۔ امتیاز نے بھی  پولس کی زیادتیوں کے تعلق سے   ایس پی سے شکایت کی اور کہا کہ بھٹکل میں پولس غیر ضروری طور پر ڈر اور خوف کا ماحول پیدا کررہی ہے، جن کے ڈنڈوں کو قابو میں رکھنا چاہئے۔ ایس پی نے تمام شکایتوں کو سننے کے بعد بتایا کہ آج پورے ملک میں بھٹکل  پر سب کی نظریں لگی ہوئی ہیں کیونکہ یہاں کے زیادہ تر لوگ بیرون ملک میں مقیم ہیں اور واپس آئے لوگوں میں اب تک  سات مریض کورونا وائرس سے متاثر پائے گئے ہیں۔ ایس پی نے ذمہ داروں کو بتایا کہ یکم اپریل سے 4/اپریل بہت ہی اہم ہے، ہمیں اس مدت میں  بھٹکل پر اپنا پورا فوکس رکھنا  ہے کہ اس مدت میں یہاں کورونا کے مریضوں کی تعداد بڑھنے نہ پائے، انہوں نے ذمہ داروں سے کہا کہ آپ لوگوں نے اتنا صبر کیا ہے  مزید چار،پانچ دن صبر کریں، ہمیں ہر حال میں یہاں سے کورونا کا خاتمہ کرانا ہے اور اس وباء کو مزید پھیلنے سے روکنے کے لئے ضروری ہے کہ لوگ ایک دوسرے سے دور رہیں اور ہرکوئی اپنے اپنے گھروں میں بند رہیں۔ ایس پی نے بتایا کہ بھٹکل میں جو بھی اقدامات اُٹھائے جارہے ہیں وہ  یہاں کے لوگوں کی بہتری کے لئے اُٹھائے جارہے ہیں لہٰذا وہ انتظامیہ کے ساتھ تعاون کریں۔انہوں نے ذمہ داروں کو اس بات کی اجازت دی کہ وہ تمام مریضوں کو انجمن ہوسٹل میں شفٹ کرائیں۔

انجمن انجینرنگ ہوسٹل میں صاف صفائی کے بعد کل کی جائی گی مریضوں کی شفٹنگ:  کورونا وائرس سے متاثرہ لوگوں کا پتہ لگانے اور مشتبہ لوگوں کا کورنٹائن کرنے انجمن انجینرنگ کالج  کے ہوسٹل کو  ضلع انتظامیہ نے اپنے ہاتھ  میں لے لیا ہے۔ خبر ملی ہے کہ انجمن انتظامیہ نے ہوسٹل کو قومی سماجی ادارہ مجلس اصلاح و تنظیم کے حوالے کیا جن کی نگرانی اور دیکھ ریکھ میں ہوسٹل ضلعی انتظامیہ کے حوالے کیا گیا۔ آج  بھٹکل میونسپالٹی کی جانب سے ہوسٹل کی صفائی ستھرائی کی گئی  جبکہ تنظیم کی طرف سے  کمروں میں  بجلی سپلائی وغیرہ کی مرمت بھی کی گئی۔ خبر ملی ہے کہ کل منگل کو یہاں مشتبہ مریضوں کو شفٹ کیا جائے گا۔

کورنٹائن کے لئے ہوسٹل کی دو عمارتیں دی گئی ہیں، ایک عمارت میں قریب 60  چھوٹے چھوٹے کمرے ہیں ، ہر کمرے میں ایک شخص کے رہنے کی گنجایش ہے، جبکہ دوسری عمارت میں چار بڑے بڑےاور فرنیش   بلاک ہیں اور ہر بلاک میں تین باتھ روم ہیں۔ ایک ہی خاندان کے تین چار لوگ اگر مشتبہ پائے جاتے ہیں تو اُنہیں ان کمروں میں رکھا جاسکتا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

بیرون ریاست سے بھٹکل آنے والوں کو سرکاری طور پر مقرر کردہ مراکز میں کیا جائے گا کوارنٹین۔ اسسٹنٹ کمشنر بھرت کا بیان

بھٹکل کے اسسٹنٹ کمشنر بھرت ایس نے بتایاہے کہ جو بھی افراد بیرون ریاست سے بھٹکل آئیں گے انہیں نئے پروٹو کول کے مطابق سرکار کی طر ف سے مقرر کردہ مراکز میں ہی کوارنٹین کیا جائے گا۔

کرناٹک میں کورونا کے اب تک کے سب سے زیادہ معاملات؛ ایک ہی دن سامنے آئے 515 معاملات؛ صرف اُڈپی میں ہی 204 کورونا پوزیٹو

ملک بھر میں لاک ڈاون میں  ڈھیل دی جارہی ہے اور پورے ملک میں لاک ڈاون کے بعد اب  اگلے چند دنوں میں  حالات نارمل ہونے کے امکانات  نظر آرہے ہیں مگر دن گذرنے کے ساتھ ہی کرناٹک میں کورونا کے معاملات میں کمی آنے کے بجائے  اُس میں مزید اضافہ ہی دیکھا جارہا ہے۔

بھٹکل میں ایک خاتون کی رپورٹ آئی کورونا پوزیٹو؛ یلاپور کے چھ اور کاروار سے ایک کی رپورٹ بھی کورونا پوزیٹو

کافی دنوں کے وقفے کے بعد آج بھٹکل میں ایک اور کی رپورٹ کورونا پوزیٹو آئی ہے، جبکہ ضلع اُترکنڑا کے یلاپور سے چھ اور کاروار سے ایک کورونا کے معاملات بھی سامنے آئے ہیں۔ یاد رہے کہ بھٹکل سے کورونا کا آخری معاملہ 17 مئی کو سامنے  آیا تھا اور وہ شخص  یکم جون کو  ڈسچارج ہوگیا ...

کیرالہ سے داخل ہوتے ہوئے ساحلی کرناٹکا میں مانسون نے دی دستک۔ کرناٹکا میں پوری طرح مانسون شروع ہونے میں ہوسکتی ہے تاخیر

حسب معمول جون کے آغاز میں ہی مانسون نے کیرالہ میں داخلہ لیااور پھر وہاں سے ہوتے ہوئے دودن پہلے ساحلی کرناٹکا میں دستک دی۔ جس کے ساتھ ہی مینگلور، اُڈپی، بھٹکل، کمٹہ اور کاروار وغیرہ علاقوں میں  موسلادھار بارش، طوفانی ہواؤں اور بادلوں کی گھن گھرج کے ساتھ مانسون نے اپنی آمد کا ...

اُڈپی میں کوویڈ کے بڑھتے معاملات پر بھٹکل کے عوام میں تشویش؛ پڑوسی علاقہ سے بھٹکل داخل ہونے والوں پر سخت نگرانی رکھنے ضلعی انتظامیہ سے مطالبہ

بھٹکل کورونا فری ہونے کے بعد اب پڑوسی ضلع اُڈپی میں روزانہ پچاس اور سو کورونا معاملات کے ساتھ  پوری ریاست میں اُڈپی میں سب سے  زیادہ کورونا کے معاملات سامنے آنے پر بھٹکل میں بھی تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے۔ عوام اس بات کو لے کر پریشان ہیں کہ اُڈپی سے کوئی بھی شخص آسانی کے ساتھ ...