کرناٹک میں لگاتار تیسرے دن کورونا نے پار کیا پانچ ہزار کا ہندسہ؛ وزیراعلیٰ، وزیر داخلہ اور تمام وزراء سمیت اپوزیشن پارٹیوں کے سربراہ بسیرا کرنے والےشہر میں ہی کورونا پر قابو پانے میں حکام ناکام

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 26th July 2020, 1:47 AM | ریاستی خبریں |

بنگلور  25 جولائی (ایس او نیوز) کرناٹک میں کورونا متاثرین کی بڑھتی تعداد کا سلسلہ جاری ہے اور آج تیسرے دن لگاتار کورونا متاثرین کی تعداد کا ہندسہ پانچ ہزار کو پار کرگیا جس سے عوام کی تشویش میں بھی اضافہ بڑھتا جارہاہے۔ حیرت کی بات یہ ہے کہ وزیراعلیٰ، وزیر داخلہ اور ریاست کے تمام وزراء سمیت اپوزیشن پارٹیوں کے سربراہ بھی جس شہر میں قیام  کرتے ہیں اور چوبیسوں گھنٹے جس شہر پر نظر رکھتے ہیں، اُسی بنگلور شہر میں آج بھی کورونا کے سب سے زیادہ معاملات سامنے آئے ہیں اور حکام اس پر قابو پانے میں بری طرح ناکام ہیں۔ 

آج پانچویں دن لگاتار بنگلور میں  کورونا متاثرین کی تعداد دو ہزار کے ہندسے کو پار کرگئی ہے اور تعجب کی بات یہ ہے کہ  بنگلور میں کورونا متاثرین کی تعداد  کم ہونے کے بجائے دن بدن بڑھتی جارہی ہے۔ آج سنیچر کو یہاں کورونا کے 2036 معاملات درج ہوئے ہیں جبکہ آج اس مرض سے بنگلور میں 30 لوگ ہلاک بھی ہوئے ہیں۔

اس مہلک وباء سے آج ایک ہی دن   ریاست کے مختلف حصوں سے  72 لوگوں کی جانیں گئیں  جبکہ آج ایک ہی دن 2403 لوگ صحت مند ہوکر اپنے گھروں میں بھی لوٹنے میں کامیاب رہے۔

25 جولائی کی شام تک ملنے والی اطلاع کے مطابق  ریاست میں 90,942 کوویڈ۔19 کے معاملات کی تصدیق ہوچکی ہے جس میں 1796 ہلاک ہوئے ہیں،  33750 اسپتال سے ڈسچارج بھی ہوئے ہیں۔  محکمہ صحت کی جانب سے دی گئی اطلاع کے مطابق  فی الحال ریاست بھر میں 55,388 کیسس ایکٹیو ہیں،  جس میں سے 54,777 مریض مختلف اسپتالوں یا کوویڈ کیئر سینٹروں   میں الگ تھلگ کرکے رکھے گئے ہیں اور یہ سبھی لوگ صحت مند ہیں، البتہ 611 مریض آئی سی یو میں ایڈمٹ ہیں۔

آج ریاست میں جو  72  اموات درج ہوئیں اُس میں بنگلور میں  29،  دکشن کنڑا  اور میسور میں  آٹھ آٹھ، بیلگام میں پانچ، کلبرگی اور دھارواڑ میں  چار، چار، ہاسن، چکبالاپور، ہاویری، شموگہ اور کوپل میں دو، دو اور داونگیرے، یادگیر، گدگ اور  ٹمکور میں ایک ایک کی موت واقع ہوئی ہے۔

آج جس طرح بنگلور میں ایک ہی دن کورونا کے 2036 معاملات درج ہوئے، اسی طرح  بیلگام میں 341، بلاری میں 222،  دکشن کنڑا  میں 218، میسور میں 187، کلبرگی اور دھارواڑ میں 183، اُڈپی میں 182، وجئے پورا میں 175، اُترکنڑا میں 155، بنگلور مضافات میں 154، ہاسن میں 151، اور  چکبالاپور میں 101 معاملات ریکارڈ کئے گئے ہیں۔

ایک نظر اس پر بھی

کاروار: سابق وزیر آنند اسنوٹیکر کے سامان میں پستول۔ بنگلورو ایئر پورٹ پر تفتیش کے بعد جانے کی دی گئی اجازت

بنگلورو سے بذریعہ ہوائی جہاز گوا ہوتے ہوئے کاروار کے لئے نکلے سابق وزیر اور جنتا دل لیڈر آنند اسنوٹیکر کو سنٹرل انڈسٹریل سیکیوریٹی فورس  نے سنیچر کو  بنگلورو ایئر پورٹ پراپنی تحویل میں لیا گیا تھا  کیونکہ ان کے سامان میں پستول  موجود تھا جسے ساتھ لے جانے کی اجازت انہوں نے ...

جے ڈی ایس لیڈر رمیش بابو کانگریس میں شامل

جنتادل(سکیولر) کے سینئر لیڈر اور سابق وزیر اعظم ایچ ڈی دیوے گوڑا کے اقرباء میں شامل سابق رکن کونسل رمیش بابو نے ہفتہ کے روز اپنی پارٹی چھوڑ کر کانگریس میں باضابطہ شمولیت اختیار کرلی۔