جامعہ کے طلبہ پر پولیس کا تشدد اور ’وائس چانسلر کی بے بسی‘

Source: S.O. News Service | Published on 14th January 2020, 11:39 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

نئی دہلی، 14/جنوری (ایس او نیوز/ایجنسی) جامعہ ملیہ اسلامیہ کی وائس چانسلر کا کہنا ہے کہ پولیس کے خلاف ایف آئی آر درج کروانے کی ہر ممکن کوشش کی گئی لیکن انہیں اب تک کامیابی نہیں مل سکی۔ گزشتہ پندرہ دسمبر کو دہلی پولیس کے اہلکار جامعہ ملیہ اسلامیہ کے کیمپس میں داخل ہو گئے تھے اور انہوں نے لائبریری میں پڑھنے والے طلبہ پر اندھا دھند لاٹھیاں برسائیں، انہیں بری طرح زدوکوب کیا، کھڑکیاں اورکتابوں کے شیلف توڑ ڈالے اور آنسو گیس کے شیل بھی برسائے۔ اس واقعے میں درجنوں طلبا اور طالبات زخمی ہوئے، جب کہ ایک طالب علم کی ایک آنکھ بھی ضائع ہوئی۔

پولیس کا کہنا تھا کہ وہ شہریت ترمیمی قانون کے خلاف پرتشدد مظاہرہ کرنے والے طلبہ کو تلاش کرتے ہوئے یونیورسٹی کیمپس میں داخل ہوئی تھی اور یونیورسٹی انتظامیہ نے کیمپس میں داخل ہونے کی اجازت دی تھی۔ دوسری جانب یونیورسٹی انتظامیہ پولیس کے اس دعوے کی تردید کرتی ہے، جبکہ پولیس کے پاس اس سوال کا بھی کوئی جواب نہیں ہے کہ لائبریری میں مطالعہ کرنے والے طلبہ کیوں مارا پیٹا گیا؟

پولیس کی زیادتی کے خلاف کارروائی کے مطالبہ پر زور دینے کے لیے جامعہ ملیہ اسلامیہ کے طلبہ گزشتہ تقریباً ایک ماہ سے مسلسل پرامن احتجاجی دھرنا دے رہے ہیں۔ گو کہ انہیں سماج کے تمام طبقات سے تعلق رکھنے والی اہم شخصیات اور عوام کی بھرپور حمایت مل رہی ہے لیکن پولیس اہلکاروں کے خلاف اب تک کوئی کارروائی نہیں کی گئی ہے۔

پندرہ دسمبرکے واقعے کے بعد یونیورسٹی بند کر دی گئی تھی۔ آج جب یونیورسٹی کھلی تو ناراض طلبہ نے وائس چانسلر کے دفتر کا گھیراو کیا۔ طلبہ کے دو گھنٹے تک کے گھیراؤ اور نعرے بازی کے بعد وائس چانسلر نجمہ اختر اپنے دفتر سے باہر آئیں اور طلبہ کو سمجھانے کی کوشش کی۔ انہوں نے بے بسی کے لہجے میں کہا،”ہمارے کیمپس میں پولیس بلا اجازت داخل ہوئی تھی۔ معصوم طلبہ کو پیٹا گیا۔ پولیس ہماری ایف آئی آر بھی درج نہیں کر رہی ہے۔ ہم اس سے آگے کچھ نہیں کر سکتے کیوں کہ ہم سرکاری ملازم ہیں۔ ہم نے اس سلسلے میں حکومت سے بھی شکایت کی ہے۔ ضرورت پڑنے پر ہم ہائی کورٹ بھی جائیں گے۔"

جامعہ نے بعد میں ایک بیان جاری کر کے کہا،”یونیورسٹی ایف آئی آر درج کرانے کے لیے تمام ممکنہ اقدامات پر عمل کر چکی ہے۔ اس نے اپنی درخواست جامعہ نگر تھانے میں دی اور اس کی نقول دہلی کے پولیس کمشنر اور جنوب مشرقی دہلی کے ڈپٹی پولیس کمشنر کو بھی دیں۔

ناراض طلبہ نے وائس چانسلر سے کئی سوالات پوچھے۔ اس سوال پر کہ وہ پولیس اہلکاروں کے خلاف کارروائی کے لیے عدالت سے کب رجوع کر رہی ہیں؟ نجمہ اختر کا کہنا تھا،”آپ مجھ سے تاریخ مت پوچھیے، میں نے آپ سے کہہ دیا تو یہ ہوکر رہے گا۔ ہم کوشش ہی کر سکتے ہیں اور کوشش ہی کر رہے ہیں۔ آپ لوگ تھوڑا ٹائم دیجیے۔ ہم عدالت جائیں گے اور عدالت کی تاریخیں ہم طے نہیں کر سکتے۔"

طلبہ نے اپنا احتجاج جاری رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ انہیں وائس چانسلر کی باتوں پر یقین نہیں ہے۔ طلبہ کا کہنا تھا کہ پولیس کے بجائے مظاہرے کے دوران اپنے حقوق کا مطالبہ کرنے والے طلبہ کے خلاف ہی مقدمہ درج کروا دیا گیا ہے۔

خیال رہے کہ بھارتیہ جنتا پارٹی کی مربی تنظیم آر ایس ایس کی مسلم ونگ 'راشٹریہ مسلم منچ‘ کے سربراہ اندریش کمار کے ساتھ وائس چانسلر نجمہ اختر کے تعلقات پر بھی سوالات اٹھتے رہے ہیں۔ نجمہ اختر وائس چانسلر بننے کے بعد اندریش کمار سے ملاقات کے لیے گئی تھیں اور اندریش کمار کے سامنے سر جھکا کر آشیرواد لیتے ہوئے ان کی ایک تصویر وائرل ہو گئی تھی۔ اس کے بعد نجمہ اختر پر آر ایس ایس کے ساتھ مبینہ تعلقات کے الزامات بھی عائد کیے گئے تھے۔ اندریش کمار وہی شخص ہیں، جن کا نام سمجھوتہ ایکسپریس بم دھماکا معاملے میں بھی آ چکا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

راجستھان: کوٹہ میں بھی خواتین نے بنایا ’شاہین باغ‘، احتجاج کا سلسلہ 9 دنوں سے جاری

دہلی کے شاہین باغ سے تحریک لیکر ملک کے مختلف طول و عرض میں شہریت ترمیمی قانون، این آر سی اور این پی آر کے خلاف خواتین کے مظاہروں کا سلسلہ لگاتار جاری ہے۔ ت تکنیکی تعلیمی اداروں کے لیے مشہور راجستھان کے شہر کوٹہ میں بھی خواتین نے ایک ’شاہین باغ‘ قائم کر لیا ہے اور گذشتہ 9 روز سے ...

میری بیٹیوں پر مقدمہ درج ہوا تو امت شاہ پر کیوں نہیں؟ منور رانا

شہریت ترمیمی قانون (سی اے اے) کے خلاف مظاہرے میں شامل ہونے کی پاداش میں اپنی بیٹیوں کے خلاف مقدمہ درج لکھے جانے کے بعد اردو کے نامور شاعر منور رانا نے امت شاہ کی لکھنؤ ریلی پر سوال اٹھایا ہے۔ انہوں نے کہا کہ مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ نے جلسہ عام سے خطاب کر کے انتظامیہ کی طرف سے ...

ملک گیر احتجاج: ’شاہین باغ کی دبنگ دادیوں کو گمراہ کر کے ایل جی کے پاس لے جایا گیا‘

قومی شہریت ترمیمی قانون، این آر سی اور این پی آر کے خلاف شاہین باغ مظاہرین انتظامیہ نے واضح کیا ہے کہ احتجاج جاری رہے گا۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ دبنگ دادیوں کو گمراہ کر کے لیفٹننٹ گورنر سے ملاقات کرائی گئی تھی اور جو لوگ انہیں وہاں لے کر گئے تھے وہ شاہین باغ خواتین مظاہرین کی ...

بی جے پی ترقیاتی ایجنڈے کے بغیر ملک کو ہندو راشٹر بنانے کی کوشش: ششی تھرور

کانگریس کے ممبر پارلیمنٹ ششی تھرور نے کہا کہ ترقیاتی ایجنڈے کے بغیر بھارتیہ جنتاپارٹی ملک کو ہندو راشٹربنانا چاہتی ہے۔ ششی تھرور کلکتہ لٹریری میٹ کے دوران تبادلہ خیال کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ اصل میں حکمراں جماعت ہی ٹکر ے ٹکرے کینگ ہے ۔جو ملک کو مذہب اور ذات پات کی بنیاد پر ...

کشمیر: انسداد ملی ٹینسی کاروائیاں تیز، یوم جمہوریہ کے انتظامات مکمل، پولیس سربراہ

جموں وکشمیر پولیس کے سربراہ دلباغ سنگھ نے کہا کہ سیکورٹی فورسز نے وادی میں انسداد ملی ٹینسی کاروائیاں تیز کردی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ جنوبی کشمیر میں گزشتہ چند ہفتوں کے دوران آدھ درجن آپریشن کامیاب ثابت ہوئے۔

سی اے اے-این آرسی پر اویسی نے امت شاہ کودیا بحث کا چیلنج،  کہا داڑھی والے سے بحث کرنے پر ٹی آرپی بھی آئے گی

سی اے اے، این آرسی اور این پی آر کو لے کر حیدرآباد سے ایم پی اوراے آئی ایم چیف اسد الدین اویسی آغازسے ہی جم کر مخالفت کر رہے ہیں۔وہیں، اب انہوں نے سی اے اے، این آرسی اور این پی آر کو لے کر وزیر داخلہ امت شاہ کو بحث کرنے کے چیلنج دے دیا ہے۔

کاغذ مانگیں تو کہو، چارمینار میرے باپ نے بنوایا ہے تیرے باپ نے نہیں:اکبرالدین اویسی کی مودی حکومت کو پھٹکار

آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین (اے آئی ایم آئی ایم) کے لیڈر اور رکن پارلیمنٹ اسد الدین اویسی کے بھائی اکبر الدین اویسی نے پیر کو حیدرآباد میں ایک بار پھر ایک بیباک تبصرہ کیا۔حیدرآباد کے ایک اجتماع میں اویسی نے شہریت ترمیم قانون کی مخالفت کرتے ہوئے مرکز پر نشانہ لگایا۔اویسی نے ...

نصابی کتابوں سے ٹیپوسلطان کا سبق ہٹایا نہیں جائے گا: ریاستی وزیر تعلیم سریش کمار

وزیر اعلیٰ ایڈی یورپا کے اعلان کے بعد اب ریاستی وزیر برائے پرائمری و سکینڈری تعلیم سریش کمار نے بھی آج باقاعدہ اعلان کردیا ہے کہ میسور کے حکمران ٹیپو سلطان کا سبق نصابی کتابوں سے ہٹایا نہیں جائے گا۔

بھٹکل کے بیلکے میں ہوئی چوری کا ملزم گرفتار؛ 38.54گرام سونے کے زیورات برآمد

گزشتہ 4جنوری کو دن دہاڑے تعلقہ کے بیلکے کنچی کیری کےمکین ناگراج گنپتی ہیگڈے کے گھر کا دروازہ توڑ کر نقد رقم اور زیورات چراکر فرار ہونے کے الزام میں پولس نے ایک شخص کو گرفتارکرلیا ہے اور اُس کے پاس موجود 38.54گرام  سونے کے زیورات برآمد کرنے میں  پولس کامیاب ہوگئی ہے۔