کاروار بیچ پر ساگر مالا منصوبے کے تحت تعمیراتی کام دوبارہ شروع: ماہی گیروں کا سخت احتجاج :شہر میں غیر اعلانیہ بند؛ حالات کشیدہ

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 13th January 2020, 7:02 PM | ساحلی خبریں |

کاروار:13؍ جنوری (ایس اؤ نیوز)ماہی گیروں اور مقامی لوگوں کی مخالفت کے باوجود ساگر مالامنصوبے کے تحت یہاں کے تجارتی بندرگاہ کی توسیع کاتعمیری کام پیر کوزبردست پولس بندوبست کے چلتے  دوبارہ شروع ہوا۔  صبح جب  تعمیراتی کام کو روکنے کے لئے  ماہی گیر آگے بڑھے تو پولس اور احتجاجیوں کے درمیان دھکم دھکا ہونے کی اطلاعات موصول ہوئی ہیں۔ احتجاج کے دوران پولس نے   70سے زائد احتجاجیوں کو اپنی تحویل میں لے کردوپہر کو رہا کر نے کی ذرائع نے خبر دی ہے۔ اسی میں  احتجاج کررہی ماہی گیر خواتین  میں سے تین عورتیں بے ہوش ہونے کی بھی خبر ملی ہے۔ حالات کو کشیدہ ہوتے دیکھ کر جائے وقوع پر زائد پولس فورس تعینات کی گئی ۔ اور جس علاقے میں تعمیراتی کام جاری ہے اس کے اطراف پولس نے بیری کیڈ لگا کر داخلے پر پابندی لگادی  ہے ۔

سمندری ساحل پر صبح سے ہی ماہی گیروں اور مقامی افراد کا  احتجاج جاری رہا، اس دوران احتجاجیوں نے سمندر میں اتر کر اپنی جدوجہد جاری رکھی ، خبر ملی ہے کہ صبح کے وقت ایک اور دوپہر بعد  دو عورتیں بے ہوش ہوگئیں تو انہیں فوری طورپر اسپتال میں داخل کیاگیا۔

بتایا جارہا ہے کہ منصوبے کے تحت شہر کے رویندرناتھ ٹیگور بیچ پر بچوں کی تفریح گاہ کے نزدیک قریب 800میٹر لمبی تحفظاتی دیوار کی تعمیر ہوگی ، جس سے ماہی گیر کشتیوں کے لئے مشکلات پیدا ہونگی ، تجارتی بندرگاہ کی توسیع سے ماہی گیر صنعت کاری کو نقصان ہوگا اس کے علاوہ شہر  کاروار کے واحد ساحلی کنارے پر واقع بیچ کی اور شہری خوبصورت کو نقصان پہنچنے کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے ماہی گیر تعمیراتی کام کی مخالفت کر رہے ہیں۔ منصوبے کی مخالفت کرتے ہوئے اتوار کی شام ٹیگور بیچ پر ماہی گیروں اور سیکڑوں مقامی افراد نے قریب دو کلومیٹر لمبی انسانی زنجیر تشکیل دیتے ہوئے اپنی برہمی کااظہار کیا تھا۔ اس موقع پر کانگریس لیڈر  ستیش سئیل اور مقامی لیڈران نے احتجاجیوں سے ملاقات کرتےہوئے ان سے گفتگو کی ہے۔

شہر میں غیر اعلانیہ بند :کاروار شہر کا ماحول غیر اعلانیہ بند کی مانند ہے، ماہی گیر لیڈران اور مختلف تنظیموں نے شہر کے دکانداروں اور ہوٹل مالکان سے اپنا کاروبار بند رکھنے کی اپیل کی تھی ۔ ان کی اپیل کی حمایت میں دکانداروں اور ہوٹل مالکان نے اپنا کاروبار بند رکھاتھا۔ جس کی بنا پر شہر میں ہلچل اور عوام کی چہل پہل نہ کے برابر تھی۔

خیال رہے کہ کچھ دن پہلے جب تعمیرا تی کام شروع کیاگیا تھاتو اس وقت بھی ماہی گیروں نے احتجاج کیاتھا، اس کے بعد وزیر برائے ماہی گیر کوٹا شری نواس پجاری کی قیادت میں میٹنگ کا انعقاد کیا گیا تھا۔  جس میں وزیر موصوف نے ماہی گیروں کے سبھی خد شات کو دورکرتے ہوئے یقیین دلایا تھا کہ  انہیں کسی تکلیف یا پریشانی  میں مبتلا نہیں کیا جائے گا۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل میں اب کورونا کا قہر؛ 45 معاملات سامنے آنے کے بعدحکام کی اُڑ گئی نیند؛ انتظامیہ نےکیا دوپہر دوبجے سے ہی لاک ڈاون کا اعلان

بھٹکل میں کورونا کو لے کر گذشتہ چار پانچ دنوں سے جس طرح کے خدشات ظاہر کئے جارہے تھے، بالکل وہی ہوا، آج ایک ہی دن 45 کورونا کے معاملات سامنے آنے سے نہ صرف حکام  کی نیندیں اُڑ گئیں بلکہ عوام میں بھی خوف وہراس کی لہر دوڑ گئی۔  حیرت کی بات یہ رہی کہ آج جن لوگوں کے رپورٹس پوزیٹیو ...

منگلورو: رکن اسمبلی یوٹی قاد ر کی مداخلت کے بعد نجی اسپتال ہوا پوزیٹیو حاملہ خاتون کے علاج پر راضی

ایک نجی اسپتال میں زچگی کے لئے داخل ہونے والی خاتون کی کورونا جانچ رپورٹ پوزیٹیو آنے کے بعد اسپتال نے اس کاعلاج اور زچگی کرنے سے انکار کردیا۔ مگر رکن اسمبلی یوٹی قادر کی مداخلت کے بعداسپتال انتظامیہ اس خاتون کی زچگی اور علاج کے لئے راضی ہوگئی۔

کورونا سے متاثرہ لوگوں کو بھٹکل ویمن سینٹر کیا گیا شفٹ؛ مزید بستروں کی ہوگی ضرورت

بھٹکل ویمن سینٹر کو کوویڈ۔19 سینٹر میں منتقل کرنے کے بعد  آج اتوار کو بھٹکل سرکاری اسپتال سے تمام کورونا سے متاثرہ لوگوں کو منتقل کیا گیا۔ اس موقع پر قومی سماجی ادارہ مجلس اصلاح و تنظیم  بھٹکل کی جانب سے محمد صادق مٹا  موجود تھے۔ انہوں نے بتایا کہ کل سنیچر رات کو سونارکیری ...

سنڈے لاک ڈاون؛ بھٹکل میں مکمل خاموشی، راستوں کی چہل پہل مکمل بند؛ بازاراور دکانوں پر نظر آئے تالے

ریاست کرناٹک میں  کورونا کے  معاملات میں  روز بروز اضافہ کو دیکھتے ہوئے  ریاستی حکومت نے سنڈے لاک ڈاون کا اعلان کیا تھا، جس کے تحت کل سنیچر شام پانچ بجے سے کل پیر صبح پانچ بجے تک  مکمل لاک ڈاون  نافذ کیا گیا ہے، جس کے دوران آج بھٹکل  کی سڑکیں خاموش رہیں، عوامی چہل پہل مکمل بند ...