اتر پردیش میں خواتین کے ساتھ درندگی جاری، ایٹاوا میں 2 بہنوں سے اجتماعی عصمت دری، 3 گرفتار

Source: S.O. News Service | Published on 14th September 2021, 12:05 AM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

ایٹاوا،14؍ستمبر (ایس او نیوز؍ایجنسی) اتر پردیش میں خواتین کے خلاف جرائم تھمنے کا نام نہیں لے رہے ہیں۔ اب ایٹاوا میں دو بہنوں کے ساتھ اجتماعی عصمت دری کے واقعہ نے انسانیت کو شرمسار کر دیا ہے۔ جرائم پیشوں نے نہ صرف اجتماعی عصمت دری کی، بلکہ دونوں بہنوں کی بے رحمی سے پٹائی بھی کی۔ پولیس نے اس تعلق سے تین ملزمین کو گرفتار کر لیا ہے۔

واقعہ کے بارے میں ملی جانکاری کے مطابق اتر پردیش کے ایٹاوا ضلع میں اتوار کی شب ایک لیڈی تھانہ سے لوٹ رہی دو بہنوں کو مبینہ طور پر تین لوگوں نے اغوا کر لیا اور ایک سنسان جگہ لے جا کر دونوں سے اجتماعی عصمت دری کی۔ اس دوران جرائم پیشوں نے دونوں کی بے رحمی سے پٹائی کی۔ اتوار کے واقعہ میں شامل تینوں ملزمین کو پولیس نے گرفتار کر لیا ہے۔ دونوں بہنوں نے تینوں ملزمین کے خلاف ایٹاوا ضلع کے سیفئی تھانہ میں شکایت درج کرائی ہے۔

سیفئی تھانہ انچارج محمد حامد صدیقی نے اس تعلق سے جانکاری دیتے ہوئے کہا کہ ’’ہماری ٹیم ایک ریلوے اوور بریج کے نیچے گشت کر رہی تھی، تبھی ہم نے تین لوگوں کو دیکھا جو پولیس وین دیکھ کر بھاگنے لگے۔ ہم نے نشے کی حالت میں تینوں کو گرفتار کر لیا۔‘‘ پولیس افسر نے کہا کہ جب انھوں نے تین لوگوں کو گرفتار کیا تو انھیں پاس کی ایک دکان سے چیخ پکار سنائی دی جو آدھی بند تھی۔ پولیس افسر نے بتایا کہ دکان میں داخل کرنے پر ہم نے دو خواتین کو روتے ہوئے دیکھا اور وہ نیم عریاں حالت میں تھیں۔ ان کے ساتھ ہوئے واقعہ کے بارے میں جان کر ہم انھیں میڈیکل جانچ کے لیے ایٹاوا ضلع اسپتال لے گئے۔

دونوں خواتین نے الزام عائد کیا ہے کہ جس شخص نے انھیں لفٹ دی تھی اس نے اور اس کے ساتھیوں نے انھیں شراب پینے کے لیے مجبور کیا۔ انھوں نے دونوں بہنوں کو مدد کے لیے پکارنے کی کوشش کرنے پر سنگین نتیجہ بھگتنے کی دھمکی دی۔ اغوا کرنے والے نوجوان دونوں بہنوں کو ایک دکان پر لے گئے اور ان کے ساتھ عصمت دری کی۔ ایک شکایت دہندہ کے مطابق ملزمین نے دونوں بہنوں کی بے رحمی سے پٹائی بھی کی۔

ایک نظر اس پر بھی

سول سروسز امتحان میں 27 مسلم امیدوار کامیاب، صدف چودھری کو ملک بھر میں 23 واں مقام حاصل

  ملک کے سب سے اہم قرار دیئے جانے والے یو پی ایس سی کے سول سروسز امتحان کے نتائج جاری کر دیئے گئے ہیں۔ اس مرتبہ مسلم طبقہ سے تعلق رکھنے والے کل 27 امیدواروں نے کامیابی حاصل کی ہے، جن میں سے 7 خواتین شامل ہیں۔

سول سروسز امتحان 2020 کے حتمی نتائج کا اعلان، بہار کے شبھم کمار کو اول مقام حاصل

  یونین پبلک سروس کمیشن (یو پی ایس سی) کی جانب سے جنوری 2021 میں منعقدہ سول سروسز امتحان 2020 کے تحریری حصے اور اگست-ستمبر 2021 میں منعقد پرسنالٹی ٹیسٹ (شخصیت) کے لیے انٹرویو کے نتائج کی بنیاد پر انڈین سول سروسز، انڈین فارن سروسز، انڈین پولیس سروسز اور سینٹرل سروسز میں تقرری کے لیے ...

راکیش ٹکیت کاامریکی صدرجوبائیڈن کو ٹیوٹ 11مہینے میں 700کسانوں کی موت، مانگی مدد

وزیر اعظم نریندر مودی اپنے امریکی دورے پر ہیں، جہاں انہوں نے امریکی نائب صدر کملا ہیرس سے ملاقات کی- اب پی ایم مودی صدر جو بائیڈن کے ساتھ اپنی پہلی ملاقات کرنے والے ہیں، جس میں کئی امور پر بات چیت ہونی ہے- لیکن اس دوران کسان رہنما اور بی کے یو کے ترجمان راکیش ٹکیت نے امریکی صدر جو ...

پسماند ہ طبقہ سے اتنی نفرت کیوں؟ ذات پرمبنی مردم شماری سے مرکزکے انکارپرلالویادوکاحملہ

بہارمیں ذات کی مردم شماری کے معاملے پر سیاست جاری ہے۔ آر جے ڈی کے سربراہ لالو پرساد یادو نے مرکزی حکومت کو نشانہ بنایا ہے کہ اس نے سپریم کورٹ میں حلف نامہ داخل کر کے 2021 میں ذات پرمبنی مردم شماری سے انکار کیا۔

اب مدھیہ پردیش میں راجہ مہر بھوج کی ذات کو لے کر ہنگامہ، پتھراؤ اور توڑ پھوڑ

اتر پردیش کی بی جے پی حکومت میں راجہ مہر بھوج کی ذات پر تنازعہ ابھی ختم بھی نہیں ہوا ہے اور اب مدھیہ پردیش کے گوالیر-چنبل علاقے میں راجہ مہر بھوج کی ذات کو لے کر دو طبقات کے درمیان تنازعہ کھڑا ہو گیا ہے۔

ملی ٹنٹوں کے ساتھ روابط ہونے کے بہانے کشمیریوں کی توہین کی جا رہی ہے: محبوبہ مفتی

 پی ڈی پی صدر اور سابق وزیر اعلیٰ محبوبہ مفتی کا کہنا ہے کہ جموں و کشمیر کے لوگوں کو کمزور کرنے کے لئے حکومت ہند کی طرف سے فرمان جاری ہونے کا سلسلہ ختم ہی نہیں ہو رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ لوگوں کے لئے سرمایہ کرکے روزگار کے موقعے فراہم کرنے کی بجائے سرکاری ملازموں کو نوکریوں سے ...

بھٹکل : بلدیہ ملازمین کے لئے مکانات کی تعمیر سست روی کا شکار

بھٹکل ٹاون میونسپالٹی میں صفائی کرمچاری کی ذمہ داری انجام دینے والے ملازمین کے لئے رہائشی اسکیم کے تحت جو مجوزہ مکانات کی تعمیر سست رفتاری کا شکار ہوگئی ہے اور ملازمین کے لئے گھروں کا بندوبست ابھی تک ادھورا خواب بنا ہوا ہے۔