بھٹکل میں عید کے فوری بعد شروع ہوگی گاڑیوں کے کاغذات اور لائسنس چیکنگ؛ کم عمر بچے پکڑے جانے پر والد یا والدہ کے خلاف ہوگا معاملہ درج

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 14th June 2018, 1:32 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل 14/جون (ایس او نیوز) عید کے فوری بعد بھٹکل میں گاڑیوں کے کاغذات، لائسنس، ہیلمیٹ اور رکشہ ڈرائیوروں کا یونیفارم وغیرہ کی چیکنگ شروع کی جائے گی۔ تیز رفتاری کے ساتھ اور بے پرواہ ہوکر ڈرائیونگ کرنے والوں سمیت ہیلمٹ نہ پہننے والوں اور بغیر لائسنس گاڑی چلانے والوں کے خلاف سخت کاروائی کی جائے گی۔ اس بات کی وارننگ بھٹکل ڈی وائی ایس پی ویلنٹائن ڈیسوزا  نے دی۔ بدھ کو  بھٹکل میں منعقدہ پیس میٹنگ میں ہندو اور مسلم جماعتوں کےذمہ داران سے مخاطب ہوتے ہوئے انہوں نے تعائون کرنے کی اپیل کرتے ہوئے  کہا کہ ذمہ داران  بھٹکل کے نوجوانوں کو اس تعلق سے آگاہ کریں۔

پیس میٹنگ میں کچھ لوگوں نے کم عمر بچوں کے تیز رفتاری کے ساتھ بائک چلانے  اوراُن کو  بائک ہاتھ میں دینے کے تعلق سے  ڈی وائی ایس پی کی توجہ مبذول کرائی  تھی  اور کہا تھا کہ پولس کسی بھی طرح کی کوئی کاروائی نہیں کررہی ہے۔  پولس سے کہا گیا تھا کہ بچے بغیر لائسنس گاڑیاں چلاتے ہیں ، کسی کو ٹکر مارتے ہیں اور تیزی کے ساتھ فرار ہوجاتے ہیں، زخمی ہونے والے  کراہتے رہ جاتے ہیں وہ ٹکر دینے والی بائک کا نمبر  بھی دیکھ نہیں پاتے۔ ان کی باتوں پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ڈی وائی ایس پی نے بتایا کہ وہ عید کے فوری بعدان سب پر روک لگائیں گے۔

ڈی وائی ایس پی نے متنبہ کیا کہ  ڈرائیونگ کرتے ہوئے  18 سال سے کم عمر  کے بچے  اگر پکڑے جاتے ہیں تو اُن کے والد یا  والدہ کے خلاف معاملہ درج کیا جائے گا انہوں نے بچوں کے والدین سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ وہ اپنے بچوں کو  گاڑیاں دینے سے باز آئیں ورنہ بچوں کے پکڑے جانے کی صورت میں بائک دینے والے ذمہ دار ٹہرائیں جائیں گے۔ انہوں نے ہیلمیٹ کی چیکنگ کے ساتھ ساتھ رکشہ ڈرائیوروں کے لائسنس ، کاغذات اور یونیفارم کی چیکنگ شروع کرنے کی بھی بات کہی اور کہا کہ قانون کی خلاف ورزی کرنے والوں کو بخشا نہیں جائے گا۔

ڈی وائی ایس پی نے مزید بتایا کہ اگلے چند دنوں میں محکمہ پولس کی جانب سے  نوجوانوں میں سیف ڈرائیونگ کے تعلق سے  بیداری پیدا کرنے  مختلف پروگرام بھی منعقد کئے جائیں گے جس میں مختلف کالجوں کا دورہ اور کالجوں میں جاکر بچوں سے راست کلاس لینا بھی شامل ہے۔ 

اس موقع پرمختلف  اداروں کے ذمہ داران موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

منگلورو وینلاک اسپتال کے روبرو پرائیویٹ میڈیکل کالج کے طلبا ڈاکٹروں کااحتجاج : تعلیمی وظیفہ کی  ادائیگی کی مانگ

سرکاری اسپتالوں میں کلینکل سہولیات پانے والے  پرائیویٹ میڈیکل کالج کے سرکاری کوٹہ کے گھریلو ڈاکٹر اور پوسٹ گریجویٹ  ڈاکٹرس کو گزشتہ 8مہینوں سے تعلیمی وظیفہ ادا نہیں کیاگیا ہے ، تعلیمی وظیفہ کی مانگ کرتے ہوئے طلبا ڈاکٹروں نے شہر کے وینلاک اسپتال کے روبرو احتجاج کیا۔

سورتکل میں ٹول گیٹ فیس وصولی  لائسنس کی تجدیدکاری کے خلاف غیر معینہ مدت کا دھرنا

ریاستی حکومت کی پیش کش کے باوجود  نیشنل ہائی وے اتھارٹی کی طرف سے  سورتکل کے غیر قانونی ٹول گیٹ کے  فیس وصولی لائسنس کی تجدید کئے جانے کی مخالفت کرتے ہوئے آج سے ٹول گیٹ مخالف ہوراٹ سمیتی کی قیادت میں سورتکل جنکشن پر دن رات کا غیر معینہ مدت کا دھرنا شروع کیاگیا

کاروار میں سرکاری انجینئرنگ کالج پرنسپال کی غفلت۔ بی ای سیکنڈ کو نہیں ملی لیاٹرل اینٹری۔ طلبہ کا خسارہ

سرکاری انجینئرنگ کالج کے پرنسپال کی غفلت کی وجہ سے بی ای سال دوم میں طلبہ کو داخلے کے لئے لیاٹرل اینٹری کی جو سہولت ہے وہ دستیاب نہیں ہوسکی ہے۔ لیاٹرل اینٹری سسٹم کے ذریعے ڈپلومہ پورا کرنے والے طلبہ براہ راست انجینئرنگ کے سال دوم میں ایک امتحان کے ذریعے داخلہ لے سکتے ہیں۔