بھٹکل میں عید کے فوری بعد شروع ہوگی گاڑیوں کے کاغذات اور لائسنس چیکنگ؛ کم عمر بچے پکڑے جانے پر والد یا والدہ کے خلاف ہوگا معاملہ درج

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 14th June 2018, 1:32 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل 14/جون (ایس او نیوز) عید کے فوری بعد بھٹکل میں گاڑیوں کے کاغذات، لائسنس، ہیلمیٹ اور رکشہ ڈرائیوروں کا یونیفارم وغیرہ کی چیکنگ شروع کی جائے گی۔ تیز رفتاری کے ساتھ اور بے پرواہ ہوکر ڈرائیونگ کرنے والوں سمیت ہیلمٹ نہ پہننے والوں اور بغیر لائسنس گاڑی چلانے والوں کے خلاف سخت کاروائی کی جائے گی۔ اس بات کی وارننگ بھٹکل ڈی وائی ایس پی ویلنٹائن ڈیسوزا  نے دی۔ بدھ کو  بھٹکل میں منعقدہ پیس میٹنگ میں ہندو اور مسلم جماعتوں کےذمہ داران سے مخاطب ہوتے ہوئے انہوں نے تعائون کرنے کی اپیل کرتے ہوئے  کہا کہ ذمہ داران  بھٹکل کے نوجوانوں کو اس تعلق سے آگاہ کریں۔

پیس میٹنگ میں کچھ لوگوں نے کم عمر بچوں کے تیز رفتاری کے ساتھ بائک چلانے  اوراُن کو  بائک ہاتھ میں دینے کے تعلق سے  ڈی وائی ایس پی کی توجہ مبذول کرائی  تھی  اور کہا تھا کہ پولس کسی بھی طرح کی کوئی کاروائی نہیں کررہی ہے۔  پولس سے کہا گیا تھا کہ بچے بغیر لائسنس گاڑیاں چلاتے ہیں ، کسی کو ٹکر مارتے ہیں اور تیزی کے ساتھ فرار ہوجاتے ہیں، زخمی ہونے والے  کراہتے رہ جاتے ہیں وہ ٹکر دینے والی بائک کا نمبر  بھی دیکھ نہیں پاتے۔ ان کی باتوں پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے ڈی وائی ایس پی نے بتایا کہ وہ عید کے فوری بعدان سب پر روک لگائیں گے۔

ڈی وائی ایس پی نے متنبہ کیا کہ  ڈرائیونگ کرتے ہوئے  18 سال سے کم عمر  کے بچے  اگر پکڑے جاتے ہیں تو اُن کے والد یا  والدہ کے خلاف معاملہ درج کیا جائے گا انہوں نے بچوں کے والدین سے مخاطب ہوتے ہوئے کہا کہ وہ اپنے بچوں کو  گاڑیاں دینے سے باز آئیں ورنہ بچوں کے پکڑے جانے کی صورت میں بائک دینے والے ذمہ دار ٹہرائیں جائیں گے۔ انہوں نے ہیلمیٹ کی چیکنگ کے ساتھ ساتھ رکشہ ڈرائیوروں کے لائسنس ، کاغذات اور یونیفارم کی چیکنگ شروع کرنے کی بھی بات کہی اور کہا کہ قانون کی خلاف ورزی کرنے والوں کو بخشا نہیں جائے گا۔

ڈی وائی ایس پی نے مزید بتایا کہ اگلے چند دنوں میں محکمہ پولس کی جانب سے  نوجوانوں میں سیف ڈرائیونگ کے تعلق سے  بیداری پیدا کرنے  مختلف پروگرام بھی منعقد کئے جائیں گے جس میں مختلف کالجوں کا دورہ اور کالجوں میں جاکر بچوں سے راست کلاس لینا بھی شامل ہے۔ 

اس موقع پرمختلف  اداروں کے ذمہ داران موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

کاروار:انکولہ ۔ہبلی ریلوے لائن کی سدراہ بنے ماحولیاتی این جی اوز کو ملنے والی مالی امداد کی جانچ کریں : رکن اسمبلی روپالی نائک کامرکزی ریلوے وزیر سے مطالبہ

ریاست کے ساحلی علاقے سے شمالی کرناٹک  کو جوڑنے والی ’قسمت کی ریکھا‘ انکولہ ۔ ہبلی ریلوے لائن کی تعمیرمیں جو ماحولیاتی اداروں ، این جی اوزاور ماہرین سدراہ بنے ہوئے ہیں دراصل یہ تمام  بیرونی ممالک کی  کروڑوں دولت کے تعاون سے بےبنیاد چیخ وپکار کررہے ہیں کاروار انکولہ کی رکن ...

کاروار میں انکولہ ۔ہبلی ریلوے لائن منصوبےکو جاری کرنےعوامی احتجاج : قومی شاہراہ بند کرنے پر احتجاجی پولس کی تحویل میں

انکولہ۔ ہبلی ریلوے لائن منصوبہ، سرحد علاقہ کاروار میں صنعتوں کا قیام سمیت مختلف مانگوں کو لے کر لندن برج پر قومی شاہراہ کو بند کرتے ہوئے احتجاج کی تیاری میں مصروف کنڑا چلولی واٹال پارٹی کے واٹال ناگراج سمیت 21جہدکاروں کو پولس نے گرفتار کرنے کے بعد رہاکردیا۔

لوک سبھاانتخابات کی تیاری میں مصروف الیکشن کمشن :اتراکنڑا  ضلع میں 11.40 لاکھ رائے دہندگان : 14ہزار ووٹرس آؤٹ تو 12ہزار ووٹرس اِن

الیکشن کمیشن  آئندہ ہونےو الے لوک سبھا انتخابات کی تیاری میں مصروف ہے۔اندراج و اخراج   اور ترمیم کے بعد تشکیل دی گئی  رائے دہندگان کی  فہرست کے مطابق ضلع کے 6ودھان سبھا حلقہ جات میں کل 11،40،316 ووٹر ہیں۔ چونکہ انتخابات کے قریب تک ووٹروں کے اندراج کے لئے موقع دیا گیا ہے تو رائے ...

شرالی میں قومی شاہراہ کی توسیع کو لےکر ہزاروں عوام  شاہراہ روک کیا  احتجاج : مجموعی استعفیٰ کا انتباہ اور الیکشن بائیکاٹ کا اعلان

تعلقہ کے شرالی میں دن بدن قومی شاہراہ کی توسیع کو لےکر معاملہ گرم ہوتا جارہاہے۔ شرالی میں قومی شاہراہ کی توسیع 45میٹر سے کم کرکے 30میٹر کئے جانےکی مخالفت کرتے ہوئے جمعرات کو ہزاروں لوگو ں نے قومی شاہراہ روک کر سخت احتجاج درج کیا۔ اس دوران عوامی مانگوں کو منظوری نہیں دی گئی تو ...