شرنگیری:پولس تھانےمیں کیس درج ہونے کو لے کر بی کام کے متعلم ، اے بی وی پی کارکن نےکی خود کشی

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 12th January 2017, 12:14 AM | ساحلی خبریں |

چکمگلور:11/جنوری  (ایس او نیوز)نمو برگیڈ کے سولی بیلے چکرورتی پروگرام کو لے کر پولس تھانے میں درج ہوئے کیس میں بطور ملزم اپنا نام پیش ہونے پر دلی  بیزار گی کا اظہار کرتے ہوئے اے بی وی پی کے ایک کارکن، بی کام کے طالب علم نے خودکشی کرنے کی واردات چکمگلور ضلع شرنگیری میں پیش آئی ہے۔

مہلوک اے بی وی پی کارکن کی شناخت  شرنگیری جے سی بی ایم کالج شعبہ بی کام کے طالب علم ابھیشک (21)بتائی گئی ہے۔موصولہ اطلاعات کے مطابق7جنوری کو شرنگیری میں شہید فوجیوں کی یاد میں  ’’ فوجیوں کو سلام ‘‘ نامی منعقدہ پروگرام میں نمو برگیڈ کے سولی بیلے چکرورتی کو شریک ہونا تھا۔ لیکن این ایس یو آئی نامی طلبا تنظیم نے سولی بیلے چکرورتی کی پروگرام میں شرکت کی مخالفت کرتے ہوئے پریس کانفرنس کی تھی۔ اسی وجہ سے اے بی وی پی اور این ایس یو آئی کارکنان کے درمیان جھگڑا بھی ہوا تھا۔ معاملے کو شرنگیری پولس تھانے میں اے بی وی پی کے 4کارکنوں کے خلاف کیس درج ہواتھا، ان چار کارکنوں میں ایک ابھیشک بھی ہونے کی اطلاع موصول ہوئی ہے۔ اپنے ڈیتھ نوٹ میں ابھیشک نے لکھا ہے کہ معاملے کو لے کر داخل ہوئے کیس میں میرانام ہونے کی وجہ سے میری زندگی برباد ہوگئی ۔ شرنگیری پولس تھانےمیں کیس درج ہوا ہے۔ ابھیشک کی خود کشی کو لے کر اے بی وی پی کے کارکنان شرنگیری تعلقہ کے کالجوں کے طلبا کلاسوں کا بائیکاٹ کرتے ہوئے احتجاج پر اتر آئے ہیں۔ احتجاجیوں نے ابھیشک خود کشی کے لئے وجہ سبب بننے والوں کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

کاروار:بس کے ذریعے غیرقانونی سپلائی کی جارہی شراب ضبط :دوخواتین پولس کی تحویل میں

کے ایس آرٹی سی بس میں غیر قانونی طورپر شراب سپلائی کے دوران چھاپہ مار کر ڈی سی بی پولس نے 20ہزار روپئے مالیت کی شراب ضبط کرلی ہے اور دو خاتون ملزموں کو گرفتارکرکے کیس درج کرلینے کا واقعہ پیش آیاہے۔

اُڈپی میں دستور بچاؤ ،ملک بچاؤ اجلاس : اقلیتوں کو منصوبہ بند طریقے سے کچلنے کی سازش کی جارہی ہے: پرکاش رائی کا خطاب

اکثریت بہت ہی منصوبہ بند سازش کے ذریعے اقلیت کو کچلنے کی کوشش کررہی ہے،ایسی گہری فریبی سازشیں ہورہی ہیں کہ شرفاء تصور بھی نہیں کرسکتے،آج ایسے فریبی بہت بڑے انسان بن گئے ہیں۔دستور کو تشکیل دینےو الے ڈاکٹر امبیڈکر کی مورتی کو زنجیروں کو جکڑ کر رکھا گیا ہے۔ مشہور فلمی ایکٹر ...