اُڈپی میں بندروں کی اچانک ہلاکت کا سلسلہ جاری۔بندروں کا بخار پھیلنے کے خدشے سے ساحلی کرناٹکا کے عوام میں دہشت

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 12th January 2019, 1:41 PM | ساحلی خبریں |

بھٹکل 12؍جنوری (ایس او نیوز)پڑوسی ضلع شموگہ کے ساگر تعلقہ میں  منکی فیور سے آٹھ افراد کی ہلاکت کے بعداب  اڈپی ضلع کے کنداپور اور کارکلا تعلقہ جات میں مختلف مقامات پر بندروں کے اچانک ہلاک ہونے کے واقعات پیش آنے سے پورے ساحلی علاقہ کے  عوام میں دہشت پھیل گئی ہے کہ کہیں بندروں کے بخار(منکی فیور) کی وبااس علاقے میں نہ پھیل جائے۔

بتایاجاتا ہے کہ ضلع اُڈپی کے    کارکلاکے ہیرگانا،کے علاوہ کنداپور تعلقہ کے کنڈلور اور ہوسانگڈی کرناٹکا پاور سپلائی عمارت کے احاطے میں جمعرات کے دن بھی بیمار بندر اچانک آکر گرنے کی اطلاعات ملی ہیں ۔ بتایا گیا ہے کہ  بندروں  کے منھ سے بڑی مقدار میں جھاگ نکل رہاتھا۔ پھروہ تڑپ تڑپ کرمر ہوگئے۔ڈسٹرکٹ ہیلتھ اینڈ فیملی ویلفیئر آفیسر ڈاکٹر روہنی نے بتایا کہ:’’ بندروں کی ہلاکت کا اصل سبب ابھی معلوم نہیں ہوسکا ہے۔ ہلاک ہونے والے بندروں کا پوسٹ مارٹم کرکے ان کے اعضاء کے نمونے شیموگہ میں موجود وائرس تشخیص کرنے والی لیباریٹری میں بھیج دئے گئے ہیں۔اس کے علاوہ مردہ بندروں کے جسم پر پائے گئے کھٹمل نما کیڑے (پِسُّو) بھی جانچ کے لئے لیباریٹری میں بھیج دئے گئے ہیں ۔ لیباریٹری کی رپورٹ دوچار دن میں مل جائے گی ۔ اس کے بعد ہی کچھ کہا جاسکے گا۔‘‘

خیال رہے کہ اس بیماری کو ’کیاسانور فاریسٹ ڈیسیز‘(کے ایف ڈی) بھی کہاجاتا ہے کیونکہ 1957میں شیموگہ کے کیاسانور جنگلاتی علاقے سے پہلی مرتبہ یہ بیماری دیکھنے میں آئی تھی جس میں سنکڑوں بندر ہلاک ہوگئے تھے جس کے بعد   یہ وبا انسانوں میں عام ہوگئی تھی۔  اب پچھلے کچھ ونوں سے شیموگہ ضلع کے ساگر میں بندر کے بخارکے معاملے سامنے آئے ہیں۔ ایک رپورٹ کے مطابق ساگر میں اب تک اس بخار سے آٹھ افراد کی موت ہوچکی ہے اور بہت سارے افراد اس کے وائرس سے متاثر پائے گئے ہیں۔اس کے بعد اب شیموگہ سے متصلہ ضلع اڈپی  میں اس طرح بیمار بندروں کی موت واقع ہونے سے عوام کا خوفزدہ ہونا فطری بات ہے۔ جس کے بعد ضلع اُتر کنڑا کے  ہوناور، سداپور اور بھٹکل میں بھی  اس بیماری کو لے کر تشویش پائی جارہی ہے۔

اُڈپی کی ڈسٹرکٹ ملیریا ریگیولیٹری آفیسر ڈاکٹر پرشانت بھٹ نے بتایا کہ :’’ہم نے انسانوں میں اس بیماری کے اثرات پھیلنے کے تعلق سے معلومات اکٹھا کرنی شروع کردی ہے۔ابھی تک ایسا کوئی بھی معاملہ سامنے نہیں آیا ہے۔ہم نے احتیاطی طور پر ریڈ الرٹ جاری کردیا ہے اور عوام کو چوکنا کیا جارہا ہے۔‘‘   معلوم ہوا ہے کہ محکمہ صحت کے علاوہ دیگرمختلف محکمہ جات کے اشتراک سے جنگلاتی علاقے سے قریب رہنے والوں کو محتاط رہنے کے لئے کہا گیا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ہوناور میں تمام سہولیات سے آراستہ پہلے "سٹی سنٹر " کا شاندار افتتاح : کئی برانڈڈ کمپنیوں کے اسٹال؛ خریداری کی ہر چیز ہوگی دستیاب

 ہوناورسمیت اطراف کے  عوام  کو اپنی ضروریات کی خریداری کے لئے  دور دراز شہروں میں جانے کی ضرورت  نہیں ہوگی کیونکہ شہر میں  ایک شاندار  ’’سٹی سنٹر  ‘‘ کا افتتاح عمل میں آیا ہے۔ کرناٹکا مائنارٹی ڈیولپمنٹ بورڈ کے سابق چیرمن سلیمان یو تلکھنی کے ہاتھوں آج  بروز پیر اس پہلے ...

بھٹکل انجمن انسٹی ٹیوٹ آف ٹکنالوجی اینڈ مینجمنٹ کے 26طلبا کیمپس انٹرویو کے ذریعے منتخب

انجمن انسٹی ٹیوٹ آف ٹکنالوجی اینڈ مینجمنٹ بھٹکل کے کل 26طلبا بنگلورو کی انفوٹک پرائیویٹ لمیٹیڈ کمپنی میں بحیثیت انجنئیر منتخب ہونےکی کالج کے پلیسمنٹ آفیسر پروفیسر توفیق نے پریس ریلیز کے ذریعے جانکاری  دی ہے۔

کمٹہ میں آنند اسنوٹیکر کی پریس کانفرنس :ہندونوجوانوں کو جیل بھیجنا ہی اننت کمار کی بہت بڑی ترقی ؛ نجی تجارت میں مسلمانوں کے ساتھ لین دین

5میعاد کے لئے پارلیمانی رکن منتخب ہوئے اننت کمار ہیگڈے اشتعال انگیز بیانات کے سوا ایک پیسہ کا نالج نہیں ہے۔خلیجی ممالک سے تارکول کا بزنس کرنے والے اننت کمار ہیگڈے  پرائیویٹ بزنس میں مسلمانوں کے ساتھ لین دین کرتےہیں بھارت میں انہیں مسلمانوں کی ضرورت نہیں ہے۔ اترکینرا ...

بغیر لائسنس کا ریوالوررکھنے پر سابق وزیر آنند اسنوٹیکراوران کے 2 ساتھیوں پر کیس درج۔ ریوالور اور کار ضبط

لائسنس رینیو کیے بغیرریوالور رکھنے کے الزام میں سابق ریاستی وزیر اور درپیش پارلیمانی انتخاب میں جنتا دل اور کانگریس کے مشترکہ امیدوار سمجھے جانے والے آنند اسنوٹیکر اور ان کے دیگر ساتھیوں پر کیس درج کیا گیا ہے۔