ہلیال میں ضلع نگراں کاروزیر دیش پانڈے نےمحکمہ آب پاشی کے ترقی جات کاموں کا معائنہ کیا

Source: S.O. News Service | By Abu Aisha | Published on 10th February 2019, 8:15 PM | ساحلی خبریں |

ہلیال:10؍فروری (ایس او نیوز)اترکنڑا ضلع نگراں کار وزیر اور وزیر برائے تحصیل آر وی دیش پانڈے نے ہلیال کے مختلف مقامات کا دورہ کرتے ہوئے تالابوں میں پانی ذخیرہ اندوزی کرنےو الے محکمہ آب پاشی کے کاموں کا معائنہ کرتے ہوئے جائزہ لیا۔

اس موقع پر آب پاشی منصوبوں کے متعلق بتایا کہ کالی ندی سے پائپ لائن کے ذریعے تالابوں کو پانی سپلائی کرنےو الا اہم منصوبہ ہے، منصوبے کے ذریعے ہلیال تعلقہ کے اکثر دیہات کے تالاب پانی سے بھریں گے تو علاقے کے کسانوں کو کافی فائدہ دے گا ۔ انہوں نے موقع پر موجود کرناٹکا آب پاشی بورڈ کے انجنئیر ستیش نائک کو ہدایات دیتے ہوئے کہاکہ منصوبے کے لئے مقامی وسائل کا استعمال کرتے ہوئے اس اہم منصوبے کو جلد ازجلد مکمل کریں۔ چونکہ پائپوں کی تیاری بھی یہی ہورہی ہے جس کے نتیجے میں کام کی تکمیل میں دیری نہیں ہونی چاہئے ۔ اگلے 15مہینوں میں کا م پورا ہوکر تالابوں میں پانی جمع کرنے کا کام شروع ہو۔ ا س موقع پر وددھان پریشد کے رکن شریکانت گھوٹنیکر ، ضلع پنچایت نائب صدر سنتو ش رینکے ، معاون فاریسٹ آفیسر نتیش کمار، تحصیلدار ودیادھر،ہیسکام انجنئیر مٹگوڈ،تعلقہ پنچایت افسر ڈاکٹر مہیش کری موجود تھے۔

ایک نظر اس پر بھی

بھٹکل  رکن اسمبلی نے ریلوے اسٹیشن سڑک تعمیر کی سنگ بنیاد رکھی

تعلقہ کے مٹھلی گرام پنچایت کوبھٹکل  ریلوے اسٹیشن  سے جوڑنے والی سڑک کی تعمیر کے لئے رکن اسمبلی سنیل نائک نے پوجا پاٹ کے ساتھ سنگ بنیاد رکھا۔ اس موقع پر کرشنانائک، شیوانی شانتارام، چندرہاس، آنند نائک وغیرہ موجود تھے۔

بھٹکل میونسپالٹی کی عام میٹنگ میں نئی مچھلی مارکیٹ کے لئے دوبارہ نیلامی کا فیصلہ : کئی دیگر مسائل پر بھی بحث

بھٹکل میونسپالٹی میں منعقدہ عام میٹنگ میں پرانی اور نئی مچھلی مارکیٹ  کے مچھلی بیوپاریوں کو لےکر کافی بحث ہوئی ، بعد میں  اس بات کا فیصلہ لیا  گیا کہ اگلے دو دن کے اندرنئی مچھلی مارکٹ   کی نیلامی کا اعلامیہ شائع کرتے ہوئے  ایک ہفتہ کے اندر  بولی کی  کارروائی انجام دی جائے۔

منگلورو: زیر سماعت قیدیوں نے ڈسٹرکٹ جیل میں سیکیوریٹی اسٹاف پر کیا حملہ

ڈسٹرکٹ جیل میں زیر سماعت قیدیوں کی طرف سے دو سیکیوریٹی اسٹاف پر حملہ کیے جانے کا حیرت انگیز واقعہ پیش آیا ہے۔ موصولہ رپورٹ کے مطابق قتل کے الزام میں قید مشتاق اور اس کے دیگر ساتھیوں نے مل کر سیکیوریٹی اسٹاف پر حملہ کیا ہے۔