جنوبی کینراکے ایس پی سدھیر کمار کا تبادلہ۔روی کانتے گوڈا نئے ایس پی

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 20th January 2018, 8:12 PM | ساحلی خبریں |

منگلورو،20؍جنوری (ایس او نیوز)ریاستی حکومت کی جانب سے جاری احکامات کے مطابق جنوبی کینراکے سپرنٹنڈنٹ آف پولیس سدھیر کمارریڈی کا تبادلہ بیلگاوی کے لئے کردیا گیا ہے اور ان کی جگہ پرروی کانتے گوڈا کو نیا ایس پی نامزد کیا گیا ہے۔

سدھیر کمار نے جون 2017میں جنوبی کینر ا کے ایس پی کا عہدہ سنبھالاتھا۔ اب ان کی جگہ لینے والے بی آر روی کانتے گوڈا آئی پی ایس افیسر ہیں اور تاحال بیلگاوی کے ایس پی کاعہدہ سنبھال رہے تھے۔روی کانتے گوڈا کو اینکاؤنٹر اسپیشلسٹ کے طور پر جانا جاتا ہے اور وہ چھوٹی کہانیوں (شارٹ اسٹوریز) کے مشہور مصنف بیسرگاہلّی رامنّا کے فرزند ہیں۔خود روی کانتے گوڈا شاعری کرتے ہیں۔ اچھے گلوکار ہیں اور ہندوستانی موسیقی کے شوقین ہیں۔اس کے علاوہ انہوں نے لٹریچر میں ڈاکٹریٹ کی ڈگری بھی حاصل کی ہے۔

روی کانتے گوڈا جب ڈی سی پی کے طور پر بنگلورو میں متعین تھے تو اس وقت تین غنڈوں کاانہوں نے اینکاؤنٹر کیا تھا۔ اس کے ساتھ ہی فرقہ پرست طاقتوں اور انڈر ورلڈ سے منسلک عناصر کو کنٹرول میں انہیں ماہر ماناجاتا ہے۔

ایک نظر اس پر بھی

ہوناور:پریش میستاکی پراسرار موت کے معاملے میں نیا خلاصہ۔ واردات سے پہلے بند کردیا گیا تھا سی سی کیمرہ !

ہوناور میں فرقہ وارانہ کشیدگی کے دوران پریش میستانامی نوجوان کی پراسرار موت کو سنگھ پریوار کی طرف سے فرقہ وارانہ قتل قرار دیا جارہا تھا۔لیکن سی بی آئی کی تحقیقات دوران اس معاملے نے اب ایک نیا رخ لے لیا ہے۔

بھٹکل میں تنظیم میڈیا ورکشاپ کا شاندار اختتامی اجلاس۔ میڈیا کی معتبر شخصیات اور علماء کا خطاب۔ ورکشاپ کے شرکاء کو انعامات اور اسناد کی تقسیم

صحافت کے پیشے میں دلچسپی رکھنے والوں کے لئے مجلس اصلاح وتنظیم کی میڈیا واچ کمیٹی کی نگرانی میں منعقد ہونے والے ہونے پانچ روزہ ورکشاپ کے اختتام پر ایک شاندار اختتامی اجلاس بندر روڈ سیکنڈ کراس پر واقع المدینہ ہال میں منعقد ہوا۔

بھٹکل میں گھر کی چھت سے گرنے والا بچہ علاج کارگر نہ ہونے سے ہلاک۔ڈاکٹر پر غفلت برتنے کا الزام۔ ڈاکٹر نے طلب کی معذرت

بھٹکل سرکاری اسپتال میں بدھ کو  عوام نے بچے کی ایک نعش لے کر ایک ڈاکٹر کا گھیراو کیا اور اُس پر غفلت  برتنے کا الزام عائد کرتے ہوئے  اُسے  آڑے ہاتھوں لیا۔ عوام کا الزام تھا کہ ڈاکٹر کی لاپرواہی سے اس بچے کی جان گئی ہے۔