مسلم قبرستانوں کے انفراسٹرکچر کیلئے 15 کروڑ منظور،روشن بیگ کے ہاتھوں ٹیانری روڈ اور السور قبرستانوں میں یل ای ڈی لائٹوں کی تنصیب

Source: S.O. News Service | By Shahid Mukhtesar | Published on 7th December 2017, 11:03 AM | ریاستی خبریں |

بنگلورو،6؍ دسمبر (ایس او نیوز؍عبدالحلیم منصور) ریاستی وزیر برائے شہری ترقیات و حج آر روشن بیگ کی ایما پر بی بی یم پی ٹیکس اینڈ فائنانس کمیٹی کے سابق چیرمین یم کے گنا شیکھر کے دور میں شہر کے مسلم قبرستانوں میں یل ای ڈی لائٹوں کی تنصیب کے علاوہ بنیادی انفراسٹرکچر کی فراہمی کیلئے تقریباً 15 کروڑ روپوں کی منظوری حاصل ہوئی ہے، جس کے پیش نظر آج محمد ضمیر شاہ کی نمائندگی والے یس کے گارڈن وارڈ میں آنے والے ٹیانری روڈ قبرستانمیں مولانا زین العابدین صاحب کی دعاؤں سے یل ای ڈی لائٹوں کی تنصیب کا آغاز ہوا۔ علاوہ ازیں ٹیانری روڈ قبرستان میں بنیادی انفراسٹرکچر کی فراہمی کیلئے 5.64 کروڑ روپئے منظور ہوئے ہیں، اور ان کیلئے ٹنڈر کا عمل بھی شروع ہوگیا ہے۔ اس موقع پر جناب روشن بیگ نے بتایا کہ جب یم کے گنا شیکھر بی بی یم پی ٹیکس اینڈ فائنانس کمیٹی کے چیرمین تھے، تب انہوں نے شہر کے مسلم قبرستانوں کو بنیادی انفراسٹرکچر فراہم کرنے کیلئے انہیں تجویز پیش کی تو اس پر عمل کرتے ہوئے انہوں نے نندی درگا روڈ قبرستان، ولسن گارڈن قبرستان اور میسور روڈ قبرستان میں یل ای ڈی لائٹوں کی تنصیب کے ساتھ ساتھ بنیادی انفراسٹرکچر کی فراہمی کیلئے تقریباً 15 کروڑ روپوں کا فنڈ منظور کیا ہے، اور ان منصوبوں کی تکمیل کیلئے ٹنڈر کا عمل بھی شروع ہوگیا، عنقریب اس کیلئے سنگ بنیاد عمل میں آئیگا۔ اس موقع پر کارپوریٹر محمد ضمیر شاہ، یم کے گنا شیکھر، جواں سال قائد آر رومان بیگ، مقامی کانگریس رہنما ورون پرسنا کمار، بلاک کانگریس صدر اسماعیل شریف، عیدہ جدید ٹرسٹ کے صدر ابراہیم، سکریٹری رشید اور دیگر عمائدین موجود تھے۔ ٹیانری روڈ قبرستان میں جملہ 203 یل ای ڈی لائٹ نصب ہوں گے۔ بعد ازاں جناب روشن بیگ صاحب نے السور قبرستان میں یل ای ڈی لائٹوں کی تنصیب کیلئے سنگ بنیاد رکھا، دعائیہ تقریب کے ساتھ لائٹوں کی تنصیب کا آغاز ہوا۔ اس موقع پر مقامی لوگوں اور قبرستان کے ذمہداران نے جناب روشن بیگ کا شکریہ ادا کرتے ہوئے بتایا کہ قبرستان کو روشنی فراہم کرکے انہوں نے کارنامہ انجام دیا ہے۔ جامع مسجد السور کے صدر سمیع اللہ پٹھان نے اس موقع پر بتایا کہ وہ جناب روشن بیگ کی شخصیت کے معترف ہیں اور انہوں نے ایسے سکیولر لیڈر کو آج تک نہیں دیکھا ہے جو تمام طبقات میں یکساں مقبول ہیں۔ پہلی مرتبہ شہر بنگلورو میں جناب روشن بیگ کی ایما پر قبرستانوں میں یل ای ڈی لائٹوں کی تنصیب اور انفراسٹرکچر کی فراہمی کیلئے جو پہل ہوئی ہے وہ قابل تقلید ہے۔ اس موقع پر چاند خان کے علاوہ السور کی تمام مساجد کیے ذمہ داران اور عمائدین نے جناب روشن بیگ، جواں سال قائد آر رومان بید اور کارپوریٹر یم کے گنا شیکھر کو تہنیت پیش کرتے ہوئے شکریہ ادا کیا۔ السور قبرستان میں تقریباً 62 یل ای ڈی لائٹوں کی تنصیب ہوگی۔

ایک نظر اس پر بھی

ہمیں اپنی چھٹیوں سے لطف اندوزہونے دیجئے : جسٹس سیکری

کرناٹک میں اقتدار کو لے کر تنازعہ پر سماعت مکمل کرتے ہوئے سپریم کورٹ نے آج کہا کہ اب ہمیں اپنی چھٹیوں سے لطف اندوز ہونے دیجئے۔ عدالت عظمیٰ میں تین ججوں کے ایک بنچ کی صدارت کر رہے جسٹس اے کے سیکری نے جب عجیب انداز میں یہ تبصرہ کیا اس وقت عدالتی کمرہ قہقہوں سے گونج اٹھا۔

کرناٹک سیاسی بحران: یہ آئین اور دستور کی جیت ہے :ملی کونسل

کرناٹک میں جاری سیاسی ہنگامہ آرائی پر آج پہلی مرتبہ ملک کی معروف تنظیم آل انڈیا ملی کونسل کے جنرل سکریٹری ڈاکٹر محمد منظور عالم نے اپنے ردعمل کا اظہا رکرتے ہوئے کہاکہ مرکز میں برسر اقتدار بی جے پی حکومت نے وہاں دستور کی دھجیاں اڑانے کی کوشش کی تھی

کرناٹک کے عوام نے تینوں پارٹیوں کو خوش کردیا

تمام ہنگامی حالات کا سامنا کرنے کے بعد کرناٹک کی سیاست ایک اطمینان بخش مرحلہ تک پہنچ گئی ہے ۔ ایڈی یورپا نے استعفیٰ دے دیا ، جے ڈی ایس اور کانگریس کی مخلوط حکومت کا بننا تقریباًطے ہے۔

بی جے پی کی حکومت گرنے کے بعد اب کمارا سوامی ہوں گے نئے وزیراعلیٰ، چہارشنبہ کو لیں گے حلف

بی جے پی رہنما بی ایس ایڈی یورپا کے استعفیٰ کے ساتھ ہی جے ڈی ایس کے ریاستی سربراہ ایچ ڈی کمارسوامی کی قیادت میں کرناٹک میں تین دن پرانی بی ایس ایڈی یورپا حکومت بلاخر آج ختم ہوگئی جب چیف منسٹر ایڈی یورپا نے اعلان کیا کہ وہ ایوان میں اکثریت کے امتحان میں سامنا نہیں کرگے بلکہ اس سے ...

ہندوستانی سیاست کے لئے تاریخی دن: سدارمیا، چندرابابو نائیڈو، ممتابنرجی اوردیگر لیڈروں نے جمہوریت کی جیت قرار دیا

کرناٹک اسمبلی میں اکثریت ثابت کرنے سے پہلے بی جے پی لیڈر یدی یورپا نے وزیراعلیٰ عہدہ سے استعفیٰ دے دیا۔ یدی یورپا کے استعفیٰ پر تمام لیڈروں نے ردعمل ظاہر کیا۔