6 دہائیوں تک تمل سیاست پر راج کرنے والے تمل ناڈو کے سابق وزیر اعلی کروناندھی چل بسے

Source: S.O. News Service | By I.G. Bhatkali | Published on 7th August 2018, 11:39 PM | ملکی خبریں | ان خبروں کو پڑھنا مت بھولئے |

چینائی  7/اگست (ایس او نیوز) ہندوستان کی سیاست پر گہری نظر رکھنے والے جنوبی ہند کے عظیم رہنمااور ڈی ایم کے سربراہ ڈاکٹر ایم کروناندھی کا طویل علالت کے بعد چنئی کے کاویری اسپتال میں انتقال ہوگیا، ان کی عمر 94برس تھی۔

کاویری اسپتال کی طرف سے جاری بیان کے مطابق  کروناندھی نے آج منگل شام 6بج کر 10 منٹ بر آخری سانس لی۔ وہ کافی دنوں سے علیل تھے اور حالت بگڑنے پر انہیں28 جولائی کو اسپتال میں داخل کرایا گیاتھا۔

ان کے انتقال کی خبر پھیلتے ہی پوری ریاست میں غم کی لہر دوڑ گئی۔ کل رات ان کی حالت نازک ہونے کے بعد ہی بڑی تعداد میں لوگ اسپتال کے باہر جمع ہونا شروع ہوگئے تھے اور آج شام یہاں لوگوں کا زبردست ہجوم تھا۔وزیر اعظم نریندر مودی ،  صدر جمہوریہ رام ناتھ کووند ،مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی اور دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کیجریوال سمیت کئی رہنمائوں نے ان کے اتنقال پر رنج و غم کا اظہار کیا۔

مشہور فلمی اداکار کمل ہاسن نے کروناندھی کی موت کو انتہائی تکلیف دہ بتایا۔انہوں نےکہا کہ کروناندھی  سیاسی رہنما کے ساتھ ساتھ بہترین قلمکار بھی تھے۔ان کی رہائش پرپارٹی کے حامیوں اور ان کے مداحوں کی زبردست بھیڑ جمع تھی جس کے پیش نظر رپیڈ ایکشن فورس تعینات کردی گئی۔

 تازہ اطلاعات کے مطابق کرناٹک کی ریاستی ٹرانسپورٹ کارپوریشن نے فی الحال تمل ناڈو  کیلئے اپنی خدمات  بند کر دی۔کانگریس نے اپنے ٹوئٹر پر کروناندھی کو خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے ان کےسیاسی کارناموں کو یاد کیا۔ کانگریس نے کروناندھی کو ڈائنامک لیڈر قرار دیتے ہوئے کہاکہ وہ جمہوریت کے حقیقی علمبردار تھے۔ کانگریس نے لکھا ہے کہ کروناندھی نے تمل ناڈو اور ملک کے لیے جو کچھ کیا ہے اسے کبھی فراموش نہیں کیا جا سکتا۔

کانگریس کے جنرل سکریٹری اشوک گہلوت، کانگریس سینئر لیڈر سی پی جوشی، مشہور و معروف اداکار رجنی کانت اور ہندوستان کے سابق کرکٹر ویریندر سہواگ نے ٹوئٹ کے ذریعہ اظہار افسوس کرتےہوئےڈاکٹرکروناندھی کو خراج عقیدت پیش کیا۔کروناندھی کے جسد خاکی کو ان کی رہائش گوپال پورم لے جایا جائے گاجہاں عوام کے دیدار کیلئے راجہ جی ہال میں رکھا جائے گا۔ ذرائع کے مطابق کل شام ان کی آخری رسومات ادا کی جائیں گی۔ یہ رسومات چنئی کے مرینا بیچ پر ادا کی جائیں گی۔

تمل سیاست پر راج  کرنے والے کروناندھی:

کروناندھی نے محض 14 سال کی عمر میں سیاست میں قدم رکھا تھا۔ جنوبی ہند میں ہندی مخالفت جب زوروں پر تھی تو وہ بھی ’ہندی ہٹاؤ تحریک‘ میں بڑھ چڑھ کر شامل ہوئے تھے۔

تقریباً 6 دہائیوں تک تمل ناڈو کی سیاست پر راج  کرنے والے  کروناندھی نے آخر کار دنیا کو الوداع کہہ دیا۔ 5 بار تمل ناڈو کے وزیر اعلیٰ رہے کروناندھی دراوڑ سیاست کی پیداوار تھے۔ جنوبی ہند میں فلموں سے سیاست میں قدم رکھنے کی روایت بہت قدیم ہے۔ پانچ بار تمل ناڈو کے وزیر اعلیٰ اور 12 مرتبہ رکن اسمبلی  رہے ڈی ایم کے سربراہ کروناندھی بھی اسی طرح سیاست میں آئے۔ ہندوستانی سیاست میں ایک الگ ہی شناخت رکھنے والے کروناندھی تمل فلم انڈسٹری کے ایک ڈرامہ آرٹسٹ اور اسکرپٹ رائٹر تھے۔ اس لیے ان کے چاہنے والے انھیں ’کلینر‘ کہہ کر بلاتے ہیں یعنی تمل آرٹ کا عالم۔

پہلی بار کروناندھی نے 1969 میں وزیر اعلیٰ عہدہ کا حلف لیا تھا۔ اسی سال ڈی ایم کے پارٹی کے بانی سی این انادورائی کی موت کے بعد کروناندھی کے ہاتھ میں پارٹی کی کمان آئی۔ کروناندھی کو تیروچیراپلی ضلع کے کلیتھالائی اسمبلی سے 1957 میں تمل ناڈو اسمبلی کے لیے پہلی بار منتخب کیا گیا۔ 1961 میں وہ ڈی ایم کے خزانچی بنے اور 1962 میں ریاستی اسمبلی میں اپوزیشن کے ڈپٹی لیڈر بنے۔ 1967 میں ڈی ایم کے جب اقتدار میں آئی تب کروناندھی پبلک ورکس کے وزیر بنے۔

کروناندھی نے محض 14 سال کی عمر میں سیاست میں قدم رکھا۔ جنوبی ہند میں ہندی مخالف تحریک پر انھوں نے سخت رخ اختیار کیا اور ’ہندی ہٹاؤ تحریک‘ میں بڑھ چڑھ کر حصہ لیا۔ 1937 میں اسکولوں میں ہندی کو لازمی کرنے پر بڑی تعداد میں نوجوانوں نے مخالفت کی، ان میں کروناندھی بھی ایک تھے۔ اس کے بعد انھوں نے تمل زبان کو ہتھیار بنایا اور تمل میں بھی ڈرامہ اور اسکرپٹ لکھنے لگے۔

ایک نظر اس پر بھی

مرڈیشور میں غیر ضروری بات کو لے کر ماحول خراب کرنے کی کوشش؛ سری رام سینا لیڈر اسپتال میں داخل

تعلقہ کے مرڈیشور میں  سری رام سینا  ضلعی صدر مسلم نوجوانوں سے اُلجھنے کے بعد زخمی ہو کر سرکاری اسپتال میں داخل ہونے کی واردات پیش آئی ہے، جس کے بعد سوشیل میڈیا پر زخمی شخص  کے فوٹو کے ساتھ مسیجس پھیلاکر عوام میں انتشار پیدا کرنے کی کوشش ہورہی ہے۔

گوا کے افسران نے10لاکھ روپے مالیت کی مچھلیاں برباد کردیں۔کاروار کے مچھلی فروش کا الزام

ضلع شمالی کینرا کے ماہی گیروں کے لیڈر نے الزام لگایا ہے کہ گواحکومت انتقامی کارروائی کی راہ اپناتے ہوئے تمام قانونی تقاضے پورے کرنے کے بعدبھی کرناٹکا سے گوا میں لے جائی مچھلیوں کوتباہ کررہی ہے۔

منگلورومیں نوجوان کو اغوا کرکے تاوان وصول کرنے والے نکلے منشیات فروش۔ 2.89لاکھ روپے مالیت کی اشیاء ضبط

چند دن پہلے فالنیر علاقے سے شماق نامی نوجوان کو اغوا کرنے اور بعد میں 50ہزار روپے تاوان وصول کرکے چھوڑنے والے کے الزام میں گرفتار کیے گئے گوتم(۲۸سال) اور لوئی ویگس (۲۶سال)کے بارے میں معلوم ہوا ہے کہ وہ منشیات فروشی کے دھندے میں ملوث ہیں۔

بی جے پی کی ہار سے سرمائی اجلاس میں بڑھے گا ہنگامہ، کانگریس کے پاس تین نکات 

ریاستوں میں بی جے پی کی شکست کا اثر پر سرمائی اجلاس میں بھی نظر آنے والا ہے۔ ویسے تو پہلے ہی اپوزیشن نے حکومت کو گھیرنے کی تیاری کر لی ہے۔ لیکن مدھیہ پردیش، راجستھان اور چھتیس گڑھ کے مینڈیٹ نے کانگریس میں نئی جان پھونک دی ہے۔کانگریس نے رافیل سمیت کئی مسائل پر حکومت کو بیک فٹ پر ...

واٹس ایپ گروپ میں اب اجازت کے بغیر ایڈ نہ کیا جاسکے گا 

واٹس ایپ کے یوزرس کو ہندوستان میں جلد بڑی راحت ملنے والی ہے. منسٹری آف الیکٹرانکس اینڈ انفرمیشن نے پیغام رساں اپلی کیشن واٹس ایپ سے ایک ایسا فیچر لانے کو کہا ہے، جس سے صارف کو کسی بھی واٹس ایپ گروپ میں شامل کرنے سے پہلے اس کی اجازت ضرور لی جائے۔ یعنی، صارف کو کسی بھی واٹس ایپ ...

3 ریاستوں میں ممکنہ شکست سے بی جے پی میں کھلبلی؛ یوگی کو خاموش کروائے پارٹی ہائی کمان : بی جے پی ایم پی 

مدھیہ پردیش، راجستھان اور چھتیس گڑھ میں کانگریس کو ملی واضح برتری کے بعد بی جے پی کے رہنما سنجے کاکڑے نے پارٹی کے قدآور لیڈران پر ناراضگی ظاہر کی ہے۔ انہوں نے کہا کہ میں جانتا تھا کہ راجستھان اور چھتیس گڑھ میں پارٹی کو ہار جھلینی پڑے گی۔لیکن مدھیہ پردیش کے نتائج نے چونکا دیا ...